PIB Headquarters

کووڈ -19 سے متعلق پی آئی بی کا یومیہ بلیٹن

Posted On: 18 JUN 2020 6:20PM by PIB Delhi

 

 

 

گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کووڈ19 سے متلعق پریس ریلیز سوشل میڈیا کی سرگرمیو ں سے حاصل معلومات اور پی آئی  بی کے  ذریعہ حقائق پر مبنی جانچ پڑتال پر  مبنی ہیں۔

  • ابھی تک کووڈ-19کے 194324 مریضوں کے صحت یاب ہونے کے ساتھ ہی صحتیابی کی شرح بڑھ کر 52.96 فی صد کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں میں 7390 کووڈ 19 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔
  • فی الحال 160384 کووڈ-19 کے سرگرم  معاملے میڈیکل سپرینٹنڈنٹ  کے تحت  رکھے گئے ہیں۔
  • ڈاکٹر ہرش وردھن نے ملک کے  دور دراز، اندرونی اور دشوار قابل رسائی حصوں تک کووڈ-19 جانچ کے لئے آئی لیب پہلی موبائل ایپ کا آغاز کیا۔
  • وزیراعظم نے کہا  کہ ہندستان کووڈ -19 وبا پر  عبور پالے گا اور ملک اس بحران کو ایک موقع میں تبدیل کردے گا۔
  • سی ایس آئی آر سی ڈی آئی آر کی متوقع  دوا اومیفینووز کی کووڈ-19 مرحلہ 3 کلنیکل  ڈرگ  کے لئے ڈرگ  کنٹرولز  کی منظوری حاصل
  • وزیراعظم ، دیگر مقامات اور ریاستوں سے اپنے اپنے گاؤں میں لوٹنے والے تارکین مزدوروں اور دیہی  شہریوں  کو بااختیار  بنانے اور روزگار  اور گزر بسر کےمواقع  فراہم کرانے کے لئے ایک بڑی دیہی کام کاج اسکیم ’’غریب  کلیان  روزگار ابھیان‘‘  کا آغاز کریں گے۔

 

۔۔

صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت سے جاری کووڈ-19 پر اپ ڈیٹس:

صحتیابی شر ح بہتر ہوئی اور 59.96 فی صد پہنچی۔ ڈاکٹر ہرش وردھن ہندستان کی پہلی موبائل اائی لیپ (متعدد بیماری کی تشخیص لیبارٹری)  کا آغاز کریں گے۔

 گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران کووڈ-19 کے 7390 مریض صحت یاب ہوئے ہیں۔ اب تک مجموعی  طور پر ٹھیک ہونے کی شرح 53.96 فی صد تک پہنچ گئی ہے۔ فی الحال 60384 1سرگرم معاملے  سامنے آئے ہیں، جنہیں طبی نگرانی کے تحت رکھا گیا ہے اور ان کا علاج چل رہا ہے۔سرکاری لیبارٹریز کی تعداد بڑھاکر 699 اور نجی لیبارٹریوں کی تعداد 254  (دونوں ملاکرکل 953) کردی گئی ہے۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 165412  نمونوں کی جانچ کی گئی ہے۔ اس طرح اب تک جانچ کئے گئےکل نمونوں کی تعداد 6249668 ہوگئی ہے۔

 صحت اور خاندانی بہبود کے مرکزی وزیر ڈاکٹر ہرش وردھن نے ملک کے دور دراز  اور اندرونی علاقوں میں آخری شخص تک کووڈ-19 جانچ کی سہولت فراہم کرانے کےلئے ہندستان کی پہلی آئی-لیب (متعددی) بیماری کی تشخیص لیب کا آغاز کیا ہے۔ اس کو ملک کے دور دراز ، اندرونی اور ناقابل رسائی حصوں تک جانچ سہولت بہم پہنچانے کے لئے شروع کیا گیا ہے اور سی جی ایچ ایس شرحوں کے مطابق ، اس میں 25 کووڈ19 آئی ٹی پی سی آر ٹسٹ یومیہ ایلیز ا ٹسٹ یومیہ اور ٹی بی اور ایچ آئی وی وغیرہ کے اضافہ ٹسٹ کرانے کی صلاحیت ہے۔

مزید تفصیلات  کے لئے پڑھیںhttps://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1632320

وزیراعظم  نے کمرشیل  کانکنی  کے لئے کوئلہ بلاکوں کی نیلامی کے عمل کا آغاز کیا

وزیراعظم نریندر مودی نے آج  نئی دہلی سے ویڈیو کانفرنسنگ   کےذریعہ  کمرشیل کان کنی کے لئے 41  کوئلہ بلاکوں کی نیلامی عمل کا آغاز  کیا۔ یہ دراصل آتم نربھر  (خود  انحصار)  بھارت مہم کے  تحت حکومت ہند کے ذریعہ کئے گئے متعدد اعلانات کے سلسلہ کا ایک حصہ ہے۔ کوئلہ کانوں کی تقسیم کاری کے لئے دو مراحل والے الیکٹرانک نیلامی عمل کو اپنایا جارہا ہے۔ اس موقع پر جناب نریندر مودی نے کہا کہ بھارت کووڈ-19وبا پر لازمی طور پر فتح حاصل کرے گا اور ہمارا  ملک اس  بحران کو ایک موقع کی شکل میں تبدیل کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس بحران سے ہندستان نے خود انحصار  (آتم نربھر) بننے کا سبق سیکھا ہے۔  انہوں نے کہاکہ  آتم نربھر بھارت کے  معنی امپورٹ پر انحصار کوکرنا اور اس کے ساتھ ہی امپورٹ پر  خرچ ہونے والی غیر ملکی کرنسی کی بچت  کرنا ہے۔ اس کے تحت یہ ضروری ہے کہ ہندستان وسائل کو گھریلو سطح پر ہی فروغ دے، تاکہ  ملک کو درآمد پرمنحصر نہ رہنا پڑے۔

مزید معلومات کے لئے پڑھیں۔https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1632231

کمرشیل کان کنی کے لئے کوئلہ کانوں کے آغاز کے موقع پر وزیراعظم کے خطاب کا متن

مزید معلومات کے لئے پڑھیں۔https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1632288

ملک کے دیہات میں گذر بسر کے مواقع کو بڑھانے کےلئے وزیراعظم مودی 20 جون کو غریب کلیان روزگار کا آغاز کریں گے

 دیہات  میں واپس لوٹے تارکین وطن مزدوروں اور گاؤں کے لوگوں کو بااختیار  بنانے اور روزگار  کے مواقع فراہم کرنے کے لئے حکومت ہند نے ایک وسیع  دیہی سرکاری  منصوبہ عمل غریب کلیان ابھیان شروع کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔

 پی ایم مودی 20 جون 2020 کو صبح 11 بجے  بہار کے وزیراعلی اور نائب وزیراعلی  کی موجودگی میں ویڈیو کانفرنسنگ  کے ذریعہ اس مہم کی شروعات کریں گے۔ یہ مہم بہار کے کھگڑیا ضلع کے گرام تیلہیار  بلاک بیلدور سے لانچ کیا جائے گا۔5 دیگر  اضلاع کے وزیراعلی اور متعلقہ  وزارتوں کے مرکزی وزرا بھی اس ورچول لانچ میں حصہ لیں گے۔

125  دنوں میں یہ مہم  مشن  موڈ  میں چلی جائےگی۔ 50 ہزار  کروڑ وپے کے فنڈ سے ایک طرف تارکین مزدوروں کو روزگار  دینے کے لئے مختلف قسم کے 25  کاموں کا تیز رفتار اور مرکوز نفاذ کیا جائے گا اور دوسری طرف دیہی علاقوں  کے بنیادی  ڈھانچے  کی تعمیر کی جائےگی۔ 116 اضلاع  کے 25 ہزا رے زیادہ تارکین مزدوروں کے ساتھ اس مہم میں بہار ، اترپردیش ، مدھیہ پردیش  ، راجستھان  ، جھارکھنڈ اور اڈیشہ  ، ان چھ  ریاستوں کو چنا گیا ہےجس میں 27 امید افزا  اضلاع بھی شامل ہیں۔

 وزیراعظم جناب نریندر مودی کےذریعہ  20 جون  2020 کو شروع کی جانے والی  غریب کلیان  روزگار  مہم  پر روشنی ڈالنے کے لئے پریس کانفرنس کا انعقاد

وزیراعظم جناب نریندر مودی کے ذریعہ شروع کی جانے والی غریب کلیان روزگار مہم پر روشنی ڈالنے کے لئے آج ایک پریس کانفرنس  کا انقعاد کیا گیا۔ پریس کانفرنس  سےخطاب کرتے ہوئے  وزیر خزانہ محترمہ نرملا سیتار من نےکہا کہ  کووڈ-19 لاکھ ڈاؤن کے بعد بڑی تعداد میں پورےملک کے مزدور  ، مردا ور کواتین دونوں  اپنے اپنے گاؤں  لوٹ چکے ہیں،۔ حکومت ہند   کے ذریعہ  ریاستی حکومتوں کے ساتھ ملکر ان اضلاع کی پیمائش  کی گئی ہے۔ جہاں پریہ تارکیں وطن   بہت حد تک لوٹ کر آچکے ہیں۔  اور یہ دیکھا گیا ہے کہ بہار اترپردیش،  مدھیہ پردیش،  راجستھان ، جھارکھنڈ اور اڈیشہ جیسے 6 ریاستوں میں  پھیلے تقریباً  116 اضلاع میں  گھر لوٹنےوالوں کی تعداد کافی زیادہ ہے۔ محترمہ نرملا سیتا رمن نے کہاکہ  حکومت  ہند کےذریعہ متعلقہ حکومت کے ساتھ ملکر ان تارکین مزدوروں کی اسکل میپنگ  (ہند کی درجہ بندی) کی گئی ہے اور ان میں سے زیادہ تر  کو کسی نہ کسی  طرح کےکام میں ہنر مند  پایا گیا ہے۔ اس کی بنیاد پر  اور چارہ ماہ کے دوران انکی دشواریوں کو کم کرنے کے لئے ، حکومت ہند نے واپس لوٹنے  والے تارکین مزدوروں  اور دیہی  شہریوں کو روزگار کے مواقع فراہم کرنےکے لئے بڑے پیمانے پر ایک دیہی سرکاری کام کی اسکیم غریب کلیان روزگار  ابھیان شروع کرنےکا فیصلہ کیا ہے۔

مزید معلومات کےلئے پڑھیں

 

مرکزی وزیر داخلہ جناب امت شاہ  کے ذریعہ  دہلی میں کووڈ کی صورتحال   کا جائزہ لینے کے لئے   منعقدہ  اجلاس میں  لئے گئےفیصلوں پر عمل کرتے ہوئے    حالات پر قابو پانے کے لئے  کئی اقدام اٹھائے گئے۔

مرکزی وزیر داخلہ  جناب امت شاہ کے ذریعہ    دہلی میں کووڈ-19 کی صورتحال  سے نمٹنے کے لئے 14-15 جون کو منعقدہ  میٹنگوں کے دوران لئے گئے فیصلوں پر عمل کرتے ہوئے دہلی میں کووڈ-19 جانچ کی جانچ کو   فوری طور پر  دو گنا کردیا گیا۔ 15 اور 16 جون کو  کووڈ ٹیسٹنگ کے لئے     کل 16 ہزار 618   نمونے لئے گئے۔  اس سےقبل 14 جون تک ہر روز   4 ہزار سے ساڑھے چار ہزار نمونے لئے جارہے تھے۔  دہلی کے 242 کنٹرول علاقوں میں  رہنے والے لوگوں کا  گھر گھر جاکر   صحت سےمتعلق   سروے کیا گیا۔   وزیر داخلہ کی ہدایات پر  کورونا جانچ کے لئے   ٹسٹنگ لیب کے ذریعہ    لئےجارہے  چارجیز کے لئے   ڈاکٹر وی کےپال کی قیادت میں   تشکیل دی  گئی اعلی سطحی   ماہرین کی  کمیٹی   کی رپورٹ    خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کو  مل گئی ہے  اور  اسے    آگے کی ضروری کاررروائی کے لئے   دہلی سرکار کو بھیج دیا گیا ہے۔

کمیٹی نے  کووڈ کی جانچ کے لئے  2400 روپےکی شرح مقرر کی ہے۔ دہلی میں اس کے لئے نمونے اکٹھا کرنے   اور   ا ن کی جانچ کے لئے   169 مراکز بنائے گئے ہیں۔

مزید معلومات کے لئے پڑھیں۔ https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632196

سی ایس  آئی آر –سی ڈی آر آئی ایس   امیدوار  دوا  اومیفینوویر   کو  کووڈ -19 کے علاج کے لئے   مرحلہ ۔III کنیکل ٹرائل   (معالج جانچ)   کے لئے   ڈرگ کنٹرول حکومت ہند   ڈی سی  جی آئی  کو اجازت ملی

سی ایس آئی آر کی   لیباٹری    سی ایس آئی آر  -سینٹرل  ڈرگ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ  (سی ڈی آر آئی)  لکھنؤ  کو اینٹی وائرل ڈرگ  امیفونویر کو    اس کے اثر ، تحفظ  اور برداشت کرنے کی قوت کے لئے    جانچ  کرنے  کے لئے تیسرے مرحلے سے   گندم ،  ڈبل بلائنڈ ، پلیسبو کنٹرل  کیمیکل ٹسٹ کرنے کی اجازت    ڈرگ کنٹرولر  ،  حکومت ہند  (ڈی سی جی آئی) کو   مل گئی ہے۔  سی جی آر آئی   یہ مرحلہ تین  کمیکل جانچ    لکھنؤ کے   کنگ جارج میڈیکل یونیورسٹی (کے جی  ایم یو) ، ڈاکٹر رام منوہر لوہیا انسٹی ٹیوٹ آف   میڈیکل سائنسیز   (آر  ایم ایل آئی ایم ایس) اور  ایراس لکھنو میڈیکل کالج  اینڈ ہاسپٹل لکھنؤ میں کیا جائے گا۔  ایک دوا کی ایک اچھی  اور محفوظ   پروفائل  اور یہ     انسانی    سیل میں    وائرس  کے داخلے کو  روکنے اور   اس کے خلاف   مدافعتی    نظام کو  سرگرم کرنے کے لئے  کام کرتی ہے۔ چین اور روس میں  اومیفینویر     کا استعمال    خاص طور پر    انفلیوئنزا کے  علاج کے لئے کیا جاتا ہے اور دیگر کسی ملک میں    یہ دستاب نہیں ہے۔ حال ہی میں    کووڈ-19 کے مریضوں کےلئے اس کےممکنہ استعمال کی  نشاندہی کی گئی ہے۔

مزید تفصیلات کےلئے پڑھیں۔ https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632190

ایسٹرن ریلوے کے  اسنسول ڈویژن نےبیگ کو سنیٹائز کرنے والی    خود کار مشین   بنائی

کووڈ-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے  ایسٹرن ریلوے (ای آر) کی کوششوں کے حصے کے طور پر ،  ای آر کے اسنسول ڈویژن نے  ایک خود کار بیگ سینیٹائز مشین  بنائی گئی ہے    ۔ اس خود کار بیگ  سینی ٹائز ر میشن نے  اسپرے کنٹرینر کے ساتھ  اور بلور پمپ  اور فوگ ٹائپ  سینی ٹائیزنگ کے لئے   نوزل  لگایا گیاہے ۔

مزید معلومات کے لئے پڑھیں ۔ https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632345

سڑک نقل و حمل کے مرکزی وزیر جناب نتن گڈکری نےکہا   کہ ہندستان پانچ برس میں   الیکٹرانک گاڑیو ں کی مینوفیکچرنگ  کا مرکز   (ہب) بن جائے گا۔

سڑک نقل و حمل اور شاہراہوں   نیز   ایم ایس ایم ایز    کےمرکزی وزیر    جناب نتن گڈکری نے اعتماد کا اظہار کیا ہے کہ آئندہ پانچ برسوں میں ہندستان الیکٹرک گاڑیوں  کا مینوفیکچرنگ  ہب بن جائے گا۔  انہوں نے کہاکہ  حکومت کے ذریعہ   اس میدان کو    ہر ممکن رعایتیں فراہم کرنے کی  کوشش کی جارہی ہے اور  بجلی  سےچلنے والی گاڑیوں پر جی ایس ٹی کو  کم کرکے  12 فی صد کردیا گیا ہے۔’ انڈیاز الیکٹریک وہیکل روڈ میپ   پوسٹ کووڈ-19‘ پر آج منعقد کئے گئے  ایک ویبنار سے خطاب کرتے ہوئے  وزیر موصوف نے کہاکہ   جن مسائل کا سامنا  الیکٹرک گاڑیوں  کا شعبہ کررہا ہے ، اس سے وہ   واقف ہیں، لیکن   انہیں اعتماد بھی ہے کہ   فروخت میں اضافہ ہونے کے ساتھ ہی  حالات میں تبدیلی ہوگی۔  انہوں نے کہاکہ  چین کے ساتھ کاروبار کرنے میں  دنیا زیادہ دلچسپی نہیں دکھا رہی ہے، جو کہ  ہندستانی صنعتی دنیا کے لئے کاروبار میں بدلاؤ  کے اصول  کا بہت  ہی سنہرا موقع ہے۔

این آر ڈی سی نے ہندوستانی بحریہ کے تیار کردہ نو پی پی ای سوٹ کی تیاری کے لئے تکنیکی جانکاری کے لئے لائسنس کو پانچ مائیکرو اور چھوٹے کاروباری اداروں میں منتقل کردیا

 

نیشنل ریسرچ ڈویلپمنٹ کارپوریشن (این آر ڈی سی) ، وزارت سائنس اور ٹکنالوجی ، محکمہ سائنسی اور صنعتی تحقیق (ڈی ایس آئی آر) کے ایک انٹرپرائز ، نیویارک نے پانچ ایم ایس ایم ایز کو تیار کردہ پی پی ای سوٹ تیار کرنے کے لئے تکنیکی معلومات کا لائسنس دیا ہے۔ یہ لائسنس ملک میں معیاری پی پی ای کٹس کی زیادہ مانگ کو پورا کرنے کے لئے دیا گیا ہے۔ یہ مینوفیکچر ہر سال 10 ملین پی پی ای سوٹ تیار کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔نوورکشک پی پی ای کی تکنیکی جانکاری انڈین انسٹی ٹیوٹ آف نیول میڈیسن کے انوویشن سیل میں تیار کی گئی تھی ، جو انڈین نیوی کے آئی این ایچ ایس اشونی ہسپتال ، ممبئی سے وابستہ ہے۔ اس پی پی ای کا تجربہ نیوکلئیر میڈیسن اینڈ الائیڈ سائنسز (آئی این ایم اے ایس)  ، دفاعی تحقیق اور ترقیاتی تنظیم (ڈی آر ڈی او) نے کیا ہے اور اس کی تصدیق کی گئی ہے ۔ لیبارٹری ان 9 این اے بی ایل مصدقہ لیبارٹریوں میں سے ایک ہے جو فی الحال ہندوستان میں وزارت ٹیکسٹائل کے ذریعہ آئی ایس او کے موجودہ معیارات اور وزارت صحت و خاندانی بہبود اور ٹیکسٹائل کی ہدایات کے مطابق پی پی ای پروٹو ٹائپ نمونے کی جانچ کے لئے اختیار کی گئی ہیں۔

مزید معلومات کے لئے پڑھیں https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632335

 

ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے بین الاقوامی انتظامی افسران کے لئے وبا میں بہتر  گورننس کے طریقہ کار سے متعلق ایک بین الاقوامی ورکشاپ کا انعقاد کیا

مرکزی وزیر ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے آج کہا کہ کوویڈ 19 عالمی وبا کا مقابلہ کرنے کا منتر ' فکر نہ کرو ، بیداری ' اور بین الاقوامی تعاون آج ایک اہم ضرورت ہے۔ وہ یہاں ہندوستانی ٹیکنیکل اینڈ اکنامک کوآپریشن (آئی ٹی ای سی) ، وزارت برائے امور خارجہ اور نیشنل گڈ گورننس سنٹر (این سی جی جی) ، محکمہ انتظامی اصلاحات اور عوامی شکایات کے مشترکہ طور پر منعقدہ ویبنار کے ذریعے بین الاقوامی ورکشاپ کے افتتاح کے بعد خطاب کررہے تھے۔ ڈاکٹر سنگھ نے اس بات کا اعادہ کیا کہ کوویڈ کے خلاف جنگ جیتنے کے لئے ممالک کا آگے کا روڈ میپ ۔19 کی وبا معیشت کو دوبارہ کھولنے اور تعاون پر مبنی وفاق کو مضبوط بنانے میں مضمر ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کا زور مضبوط اداروں ، مضبوط ای گورننس ماڈل ، ڈیجیٹل طور پر بااختیار شہریوں اور بہتر صحت کی دیکھ بھال پر ہے۔

مزید تفصیلات کے لئے پڑھیں۔ https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632335

ایس ای آر بی سے تعاون یافتہ مطالعات سے پتہ چلتا ہے کہ کوویڈ 19 کے مریضوں کے لئے دماغ میں تنفس مرکز کو مسمار کرنا مہلک ثابت ہوسکتا ہے۔

کیمیائی حیاتیات کے سی ایس آئی آر انڈین انسٹی ٹیوٹ (آئی آئی سی بی) کولکتہ، سے محققین کی ایک ٹیم سارس سی او  وی -2 کے نیورو انویسیو پوٹینشنل نے  سراغ لگایا اور وائرس کووڈ- دماغ کی اور وجہ سے سانس کی مرکز کو متاثر کر سکتا ہے کہ رپورٹ کیا گیا ہے مرکزی اعصابی نظام کے تنفس مرکز پر توجہ مرکوز کی جانی چاہئے جب 19 کی وجہ سے ہونے والی اموات کی تفتیش کی جارہی ہو۔

مزید معلومات کے لئے پڑھیں https://pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1632341

 

پی آئی بی کے علاقائی دفاتر سے موصولہ اطلاع

•        چندی گڑھ : محکمہ سوشل ویلفیئر ، چندی گڑھ انتظامیہ نے تقریبا 22،586 مستحقین جن میں بچے ، حاملہ خواتین ، نرسنگ ماؤں (دودھ پلانے والی خواتین) ، 6 ماہ سے 6 سال کی عمر کی نوعمر لڑکیوں کو غذائیت بڑھانے والی کھانوں اور چنے کے آٹے کی فراہمی کی گئی ہیں۔ چونکہ ٹیک ہوم راشن تقسیم ہوا ہے۔ 53 آنگن واڑی مراکز میں مستحکم خشک راشن کے علاوہ مستحقین کو انڈے ، کیلے اور دودھ بھی تقسیم کیا گیا۔ شہر کے مختلف مقامات پر کچی آبادی کے علاقوں اور تعمیراتی مقامات پر لگ بھگ 350 فائدہ اٹھانے والوں کو گھر پر راشن بھی تقسیم کیا گیا۔

•        پنجاب : کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے حکومت پنجاب کے محکمہ ریونیو نے مختلف محکموں اور ڈپٹی کمشنرز کو 300 کروڑ روپئے مختص کیے ہیں۔ ڈپٹی کمشنرز کو مختص 100 کروڑ میں سے 98 کروڑ روپے تارکین وطن کارکنوں کو ان کی آبائی ریاست بھیجنے ، خشک سالی کے راشنوں اور قرانطین سہولیات کی تقسیم پر خرچ کیے گئے ہیں۔

•        ہماچل پردیش : وزیر اعلی نے کہا کہ ریاست کورونا کی وبا سے مؤثر طریقے سے لڑ رہی ہے اور یہاں کی صورتحال زیادہ تر پڑوسی ریاستوں سے کہیں بہتر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے مختلف حصوں میں پھنسے ہوئے تقریبا دو لاکھ افراد کی وطن واپسی کی وجہ سے ریاست میں کوویڈ 19 میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔ ان لوگوں کو قرنطین میں رکھا جارہا ہے اور لوگوں کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ پردھان منتری جان دھن یوجنا کے تحت ، رواں سال اپریل ، مئی اور جون کے مہینوں میں ریاست کی 5.90 لاکھ اہل خواتین کے اکاؤنٹس میں 500 روپے ماہانہ منتقل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ  ایک لاکھ 37 ہزار کارکنوں کو ہر ماہ دو ہزار روپے بطور امداد مہیا کیا گیا تھا اور اب حکومت نے ہماچل پردیش عمارت اور دیگر تعمیراتی ورکرز ویلفیئر بورڈ کے رجسٹرڈ کارکنوں کے اکاؤنٹس میں اضافی 2 ہزار روپے دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

•        مہاراشٹر : کوویڈ ۔19 کے 3307 نئے مثبت مریض بدھ کے روز سامنے آئے ، جس سے ریاست میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعدادایک لاکھ 16 ہزار 752  ہوگئی اور ان میں سے فعال مریضوں کی تعداد 51 ہزار 921 کی سطح پر ہے۔ اس کے علاوہ 114 افراد کی موت بھی ہوچکی ہے ، جس کی وجہ سے ریاست میں اب تک اس بیماری سے مرنے والوں کی کل تعداد 5 ہزار 651ہوگئی ہے۔ تازہ ترین رپورٹ کے مطابق ، ریاست میں اب تک59 ہزار 166 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔

•        گجرات : گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں کوویڈ 19 کے 520 نئے مثبت واقعات رپورٹ ہوئے اور 27 افراد کی موت ہوگئی۔ ریاست میں اس وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد بڑھ کر 25 ہزار 148 ہوگئی ، جن میں سے 17ہزار 438 افراد صحت مند اور فارغ ہوگئے ہیں اور 1ہزار 561 افراد بھی فوت ہوگئے ہیں۔

•        راجستھان: 84 مثبت مقدمات 13.626 کو ریاست میں کووڈ مریضوں کی تعداد میں اضافے، آج صبح اطلاع ملی. بدھ کی رات تک ، 326 نئے کیسز بھی رپورٹ ہوئے۔ تاہم ، ریاست میں اب تک 10ہزار 582 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں جو کہ بہتری کی شرح ہے۔ آج رپورٹ ہونے والے نئے معاملات میں سے زیادہ تر کا تعلق بھرت پور سے ہے ، اس کے بعد ضلع جے پور سے متعلق معاملات ہیں۔

•        مدھیہ پردیش : بدھ کی شام تک ریاست میں 161 نئے مقدمات درج کیے گئے ، جن سے کیسوں کی کل تعداد 11ہزار244 ہوگئی۔ زیادہ تر نئے کیس بھوپال (49) میں رپورٹ ہوئے ، اس کے بعد کوویڈ 19 کا ہاٹ سپاٹ اندور (44) رہا۔

•        چھتیس گڑھ : بدھ کے روز ریاست میں کورونا وائرس کے 71 نئے کیسوں کی نشاندہی ہوئی ہے ، جس سے ریاست میں کوویڈ 19 کے مریضوں کی تعداد 1ہزار 864 ہوگئی ہے اور ان 756 میں سے فعال واقعات ہیں۔

•        گوا : بدھ کے روز ریاست میں 27 نئے معاملات کی نشاندہی ہوئی اور 11 افراد صحتیاب ہوئے۔ کوویڈ 19 کے کیسوں کی اب کل تعداد 656 ہے ، جن میں سے 560 سرگرم مقدمات ہیں۔ وزیراعلیٰ پرمود ساونت نے کہا کہ سرحدی علاقوں اور انفیکشن سے متاثرہ تمام علاقوں میں بڑی تعداد میں ٹرائلز چل رہے ہیں۔ لیکن صرف 8-10 مریض اسیمپوٹومیٹک ہیں۔ گوا نے مریضوں کی درجہ بندی کی ہے کہ وہ کوویڈ اسپتالوں یا کوویڈ کیئر سنٹرز میں بھیجے جائیں۔

•        کیرالہ : ریاست میں آج ایک اور شخص کوویڈ کی وجہ سے فوت ہوگیا ، جس کی ہلاکت کی تعداد 21 ہوگئی۔ متوفی ، 28 ، محکمہ ایکسائز میں ڈرائیور تھا ، جو گورنمنٹ میڈیکل کالج کنور میں زیر علاج تھا۔ اس کے انفیکشن کے ذرائع کا سراغ لگانے کی کوششیں جاری ہیں۔ کوچی کے ایک سول پولیس افسر کو تفتیش کے دوران کوویڈ کو مثبت پایا ہے۔ اس افسر کو یہ کام سونپا گیا تھا کہ وہ گھر کے قرنطین میں چلنے والے لوگوں کے گھروں کا جائزہ لے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ وہ سنگروانی پروٹوکول پر عمل پیرا ہیں۔ حزب اختلاف رمیش شینیتھالا نے کہا کہ وندے بھارت مشن کے لئے کوویڈ منفی سند کے بارے میں ریاستی حکومت کا اصرار آنے والے تارکین وطن کے لئے بحران میں مزید اضافہ کرے گا۔ اسی وقت ، کیرالہ سے دو دیگر افراد ریاست سے باہر کوویڈ 19 کے باعث چل بسے۔ کل 90 افراد صحتمند ہوگئے اور 75 نئے کیس رپورٹ ہوئے۔ ریاست بھر میں اب بھی لگ بھگ 1،351 مریض مختلف اسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔

•        تمل ناڈو : مرکز کے علاقے پڈوچیری میں  کوویڈ ۔19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے تامل ناڈو سے آنے والوں کی نگرانی میں توسیع کردی گئی ہے۔ ریاستی حکومت نے 25 مارچ سے 7 مئی تک موجود تامل ناڈو کے سرکاری ملازمین پر عدم حاضری پر غور کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ چنئی اور پڑوسی اضلاع میں 12 دن کا سخت لاک ڈاؤن نافذ کیا گیا ہے ، جو کل سے نافذ ہوگا۔ گذشتہ روز ریاست میں 2،174 نئے کیس رپورٹ ہوئے ، 842 افراد بازیاب ہوئے اور 48 کی موت ہوگئی۔ کل معاملات : 50ہزار 193 ، فعال مقدمات : 21ہزار990 ، اموات : 576 ، خارج ہونے والے مادہ : 27ہزار 624 ، چنئی میں سرگرم مقدمات : 16ہزار67۔

•        کرناٹک : ریاست میں کوویڈ ۔19 کے بارے میں آگاہی پھیلانے کے لئے آج ' ماسک ڈے ' منایا گیا ۔ ریاستی حکومت نے ہائی کورٹ کو آگاہ کیا کہ اب تک 3لاکھ 79ہزار195 تارکین وطن مزدوروں کو 267 لیبر ٹرینوں کے ذریعہ اپنے آبائی مقام پر روانہ کیا گیا ہے۔ گذشتہ روز ریاست میں 204 نئے واقعات رپورٹ ہوئے ، 348 افراد کو چھٹی دی گئی اور آٹھ افراد کی موت ہوگئی۔ کل مثبت معاملات : 7ہزار 734 ، فعال مقدمات : 2ہزار824 ، موت : 102 ، رخصت  ہونے والے: 4ہزار 804۔

•        آندھرا پردیش : پچھلے 24 گھنٹوں میں ، 13ہزار923 نمونوں کی جانچ کے بعد ، 299 نئے مقدمات درج ہوئے اور دو افراد کی موت ہوگئی ، جبکہ 77 افراد کو فارغ کردیا گیا۔ کل کیسز: 5.854، فعال مقدمات: 2ہزار 779، برآمد: 2 ہزار 983، ہلاکتیں 92. بین ریاستی معاملات کی تعداد 1ہزار 353 کی سطح پر ہے ، جن میں سے 611 سرگرم مقدمات ہیں اور گذشتہ 24 گھنٹوں میں 51 افراد کو فارغ کیا گیا ہے۔ بیرون ملک سے آنے والے لوگوں سے متعلق 289 معاملات میں سے 242 ابھی بھی سرگرم عمل ہیں۔

•        تلنگانہ : تلنگانہ کے نجی اسپتالوں نے کہا کہ وہ اپنے اسپتالوں میں کوویڈ 19 کے مریض کے علاج معالجے کے لئے ریاستی حکومت کی طرف سے طے شدہ اعلی سطحی  درخواست کریں گے ۔ اسپتال انتظامیہ اس صورتحال کو ٹھیک کرنے کے لئے جدوجہد کر رہی ہے کیونکہ گاندھی اسپتال کے مردہ خانے کے باہر افراتفری عروج پر پہنچی۔ جمعرات کو ، مورگیو ملازم نے ایک متوفی کوویڈ 19 کی لاش دوسرے کنبے کے حوالے کردی ، حال ہی میں اس طرح کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ اب تک کل معاملات 5ہزار 675 کی سطح پر ہیں ۔ فعال مقدمات کی تعداد 2ہزار 412 کی سطح پر ہے ۔ 3ہزار 71 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔

•        آسام : آسام میں کوویڈ 19 کے 82 نئے مثبت واقعات رپورٹ ہوئے۔ انفیکشن کی کل تعداد 4ہزار777 کی سطح پر ہے ، جن میں سے فعال واقعات 2ہزار 111 ہیں ، 2ہزار 658 افراد بازیاب ہوئے ہیں اور 9 کی موت ہوگئی ہے۔

•        منی پور : ریاست منی پور میں 5 آر ٹی پی سی آر مشینوں اور 3 سچ این اے ٹی مشینوں کے ذریعہ کوویڈ ۔19 نمونوں کی جانچ کی صلاحیت کو بہتر بنایا گیا ہے۔ ریاست میں اب تک مجموعی طور پر 29ہزار 865 مقدمے چلائے جا چکے ہیں۔

•        میزورم : میزورم ضلع کولاسب میں کوویڈ 19 کے 9 مریضوں کو تفتیش کے دوران دو بار منفی پایا گیا ہے۔ ریاستی وزیر صحت نے کہا کہ توقع ہے کہ انہیں کل سے جورم میڈیکل کالج سے فارغ کردیا جائے گا۔

•        ناگالینڈ : ناگالینڈ میں دیما پور کوہیما ٹیکسی سروس اووڈ -ایون  کے تحت شروع کردی گئی ہے۔ چھوٹی کاروں میں 3 تک مسافر اور بڑی گاڑیوں میں 5 افراد سفر کرسکتے ہیں۔ دیما پور میں بی ایس ایل -2 لیب کی تکنیکی ٹیم کو تربیت دینے آسام کے ضلع جوراہٹ کے سائنس دان پہنچے ہیں۔ لانگلیگ اور ٹوئنسنگ میں حقیقی این اے ٹی مشینیں لگائی گئیں ہیں۔

م ن۔   ش ت  ۔ ج

Uno-3365

)



(Release ID: 1632719) Visitor Counter : 11