PIB Headquarters

کووڈ – 19 سے متعلق پی آئی بی کا یومیہ بلیٹن

Posted On: 22 APR 2020 6:45PM by PIB Delhi

نئی دہلی ، 22/ اپریل:

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image0025O2U.png http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image00195FU.jpg

 (کووڈ – 19 سے متعلق پریس ریلیز گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران فیلڈ آفیسرروں سے موصولہ معلومات اور پی آئی بی کے فیکٹ چیک پر مبنی ہے)

 

  • ہن Text Box: •	ہندوستان میں کووڈ – 19 کے اب تک  19984 پازیٹو معاملات کی تصدیق ہوئی ہے۔ کم وبیش  20 فیصد افراد روبہ صحت ہوئے۔•	آئی سی ایم آر  نے  ریپڈ اینٹی باڈی  ٹسٹ  کے لئے  ریاستوں کو  پروٹوکول بھیجا ہے۔•	حکومت کووڈ  -19 سے متعلق  معلومات کے حصول کے لئے  ٹیلی فون نمبر  1921 کے توسط سے  ٹیلی فونک  سروے  کرائے گی۔•	کابینہ نے  "ہندوستان کووڈ  - 19  ہنگامی  کارروائی اور صحت سے متعلق  تیاریوں کے پیکج " کے لئے  15000 کروڑ روپے  منظور کئے ہیں۔•	مزید زرعی  اور جنگلاتی اشیاء  ،  طلباء کے لئے نصابی کتابوں کی دکانیں  اور  بجلی کے پنکھوں کی دکانوں  کو  لاک  ڈائون کی پابندیوں سے باہر رکھا گیا  ہے۔•	شہری علاقوں میں  معمر شہریوں کی دیکھ بھال ،  پری پیڈ موبائل ریچارج کی  دکانیں اور  فوڈ پروسیسنگ کی اکائیوں کو بھی  لاک ڈائون کی پابندیوں سے باہر رکھا گیا ہے۔•	وزیر داخلہ  نے  کووڈ – 19  کے  خلاف جنگ  میں  ڈاکٹروں کو سکیورٹی  کی یقین دہانی کرائی ہے۔•	اطلاعات ونشریات  )آئی این بی (  کی  وزارت نے صحافیوں کو  کووڈ – 19  کی کووریج کرتے وقت معقول احتیاط برتنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

 

 

وزارت صحت اور کنبہ بہبود کی جانب سے کووڈ – 19 سے متعلق اپ ڈیٹ:

اب تک 19٫36 فیصد کی شرح سے 3870 افراد  رو بہ صحت ہوئے ہیں۔ کل سے لے کر  آج تک  1383  نئے معاملات کے اضافے کی رپورٹ ہے۔ ہندوستان میں اب تک کل 19984  افراد   میں    کووڈ – 19  کے پازیٹو ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔ گزشتہ 24  گھنٹے کے دوران  50 افراد  کی  کووڈ – 19 سے ہلاکت کی رپورٹ  ہے۔ مرکزی کابینہ نے  اپیڈمک ڈیزیز  ایکٹ  1897  کے تحت ڈاکٹروں کی  حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے ایک آرڈی نینس جاری کرنے کی سفارش کی ہے۔ آئی سی ایم آر  نے  ریپڈ اینٹی  باڈی ٹسٹ کے استعمال کے لئے تمام ریاستوں کو  پروٹوکول بھیجے ہیں۔ یہاں ایک بار پھر یہ دہرایا جاتا ہے کہ  اینٹی باڈی  ٹسٹ  کا  استعمال عام طور پر نگرانی کے لئے  کیا جاتا ہے۔ حکومت ہند  ٹیلی فونک سروے کا انعقاد کرے گی ، جس میں  این آئی سی کے توسط سے  شہریوں سے  ان کے موبائل فون پر ٹیلی فون نمبر  1921 پر رابطہ  قائم کیا جائے گا۔ یہ  ایک حقیقی  سروے ہے ، تمام شہریوں کو  کووڈ – 19  کی علامتوں کی موجودگی  اور مرض کے پھیلنے سے متعلق معلومات کے حصول میں  مدد کرنے کی درخواست کی جاتی ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617097

حکومت نے مزید زرعی اور جنگلاتی اشیاء ،طلباء کے لئے  نصابی کتابوں کی دکانوں  اور  بجلی کے پنکھوں کی دکانوں کو  کووڈ  - 19  کے خلاف جنگ میں لاک ڈائون کی پابندیوں سے باہر رکھا ہے:

وزارت امور داخلہ نے  مربوط نظر ثانی شدہ  رہنما خطوط کے تحت  بعض  سرگرمیوں کو  پابندی سے  مستثنی کرنے کے لئے حکم جاری کیا ہے۔ مذکورہ بالا  اشیاء کے تحت  نرمیاں  ، ہاٹ اسپاٹس /  کنٹینمنٹ زون یا پابندی والے علاقوں میں  نہیں ہوں گی۔ ان زون میں  ایسی سرگرمیوں کی اجازت نہیں ہوگی۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616915

 شہری علاقوں میں  گھر کے اندر معمر شہریوں کی دیکھ بھال کرنے والے، پری پیڈ موبائل ریچارج کرنے والے مراکز، فوڈ پروسیسنگ اکائیاں، کووڈ  - 19  کے خلاف جنگ کے لئے  عائد کی گئیں لاک ڈائون پابندیوں سے مستثنی رہیں گے:

وزارت امور داخلہ نے  کووڈ  -19 کے خلاف جنگ  کے لئے  ملک گیر لاک  ڈائون سے متعلق  مربوط نظر  ثانی شدہ رہنما خطوط کے تحت بعض سرگرمیوں کو چھوٹ دینے کے لئے آرڈر جاری کیا ہے۔ مذکورہ بالا  احکامات کے تحت جاری کئے  رہنما  خطوط میں  جن زمروں میں پہلے ہی مخصوص خدمات اور  سرگرمیوں  کی  چھوٹ دے  دی گئی تھی، ان سے متعلق  کوئیریز موصول ہوئی ہیں۔ وزارت امور داخلہ نے  وضاحت جاری کی ہے  اور استثنی کے  زمرے میں بعض خدمات کو شامل کیا ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616883

مرکزی وزیر داخلہ نے  ڈاکٹروں اور  آئی ایم اے کے سینئر نمائندوں کے ساتھ بات چیت کی : کووڈ- 19  کے خلاف جنگ میں  انہیں ان کی سلامتی کی یقین دہانی کرائی:

وزیر داخلہ نے  کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں  خصوصیت کے  ساتھ  ڈاکٹروں کے کردار کی تعریف کی اور  امید ظاہر کی کہ ڈاکٹر   اس جنگ میں   پوری لگن کے ساتھ کام کرتے رہیں گے،  جیسا کہ وہ اب تک کرتے رہے ہیں۔ انہوں نے  کووڈ -19 جیسے  مہلک امراض سے  عوام کو بچانے  کے دوران  ڈاکٹروں کے ذریعے  دی گئی قربانیوں کو سلام کیا۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616965

مرکزی وزیر داخلہ نے  حفظان صحت کے پیشہ وروں، طبی عملہ  اور  صف اول پر  جنگ لڑنے والے  کارکنوں کو  تشدد سے تحفظ فراہم کرانے کی غرض سے  معقول سکیورٹی کی یقین دہانی کرائی:

امور داخلہ کی وزارت نے  حفظان صحت کے پیشہ وروں ،  طبی عملہ اور  وبائی مرض کے خلاف  جنگ  لڑنے والے صف اول  کے  کارکنوں کے خلاف  تشدد کی روک تھام کے لئے معقول حفاظتی  انتظامات کو یقینی بنانے کے لئے  آج ایک پھر تمام ریاستوں  / مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو  ہدایت دی ہے۔ ان لوگوں کے خلاف  سخت کارروائی کی جائے گی ، جو  کووڈ  - 19  کے خلاف جنگ میں  اپنی  ذمہ داریاں نبھاتے ہوئے  رحلت کرجاتے ہیں، ان کی آخری رسومات  کی ادائیگی میں رکاوٹیں کھڑی کرتے ہیں۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617162

مرکزی کابینہ نے "انڈیا کووڈ – 19  ہنگامی کارروائی اور  نظام صحت کی تیاریاں پیکیج"  کے لئے  15000 کروڑ روپے  کی منظوری دی:

مرکزی کابینہ نے "انڈیا کووڈ  -19  ہنگامی کارروائی اور نظام صحت کی تیاریاں پیکج"  کے لئے  15000 کروڑ روپے تک کی  نمایاں سرمایہ کاری کو منظوری دی ہے۔ منظور شدہ فنڈ  کو  تین مرحلوں میں استعمال میں لایا جائے گا  اور  فوری  کووڈ  - 19  ہنگامی کارروائی  "7774 کروڑ روپے "  کی گنجائش  رکھی گئی ہے اور  وسط مدتی   سپورٹ)1 سے 4 سال ( کے لئے باقی ماندہ   رقم   میشن موڈ  طریقہ کار کے تحت مہیا کرائی جائے گی۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616886

وزیراعظم نے دنیا   کے تئیں  اظہار تشکر کیا:

وزیراعظم جناب نریندر مودی نے  عالمی یوم  ارض  کے موقع پر  اظہار تشکر کیا ہے۔ اس موقع پر  انہوں نے کہا کہ ہم سبھی  انسانوں کی  بے انتہا دیکھ بھال اور رحم دلی کے لئے  اپنے سیارے کے تئیں  اظہار تشکر کرتے ہیں۔ آیئے آج ہم  صاف ستھرے ، صحت اور زیادہ  خوشحال دنیا بنانے کے لئے  کام کرنے کا عہد   کریں۔ وزیراعظم نے کہا ان لوگوں کی حوصلہ افزائی کے لئے  آواز بلند کریں جو کووڈ -19 کو شکست دینے کے لئے صف اول میں کام کررہے ہیں۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616958

بھارتی ریلویز نے  کووڈ  - 19عالمی   وبائی   بیماری کے دوران  مال  بھاڑے  کے لئے دی جانے والی ترغیبات کو ختم کرنے کا اعلان کیا:

24 مارچ 2020  سے  30 اپریل 2020  کی مدت کے دوران  خالی کنٹینروں کی نقل وحمل  اور  خالی فلیٹ ویگنوں کے لئے  کوئی  اولج چارج وصول نہیں کیا جائے گا۔ زیادہ سے زیادہ  صارف  ذاتی طور پر  مال گودام  میں   آنے کی بجائے  اپنی ڈیمانڈ رجسٹر اور  الیکٹرانک  کے توسط سے  اپنی اشیاء کی ریلوے کی رسید حاصل کرسکتے ہیں۔ اگر  کسٹمر الیکٹرانک رسید حاصل نہیں کرسکتے ہیں تو وہ  بی سی این ایچ ایل  کے  الٹرنیٹ پروسیجر  مینیمم نمبر کا استعمال کرکے ، جو مال گاڑی میں  سامان کی لدائی کے لئے ضروری ہوتا ہے، اسے  سامان کی منزل پر  ریلوے انوائس جمع کرنے کے بغیر اپنے  مال کی ڈیلیوری  کراسکتے ہیں۔ ایسی حالت میں اب  ٹرین کی لدائی کی شرح 57 سے گھٹا کر  42 کردی گئی ہے۔ صنعتوں کی حوصلہ افزائی کے لئے  منی ریک کے لئے  فاصلے کی شرائط  میں  دو پوائنٹ  ریکیٹ کی  سہولت دی   گئی  ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617136

ریلویز نے  ملک کی تمام ریاستوں میں اپنے ریلوے کچن سے  روزانہ  2٫6  لاکھ کھانے کے ڈبے  فراہم کرنے کی  پیش کش کی ہے:

وزارت ریلویز نے  ، جہاں بھی  ضلعی انتظامیہ  چاہے گی اور  ضرورت مندوں کے درمیان  پکے  ہوئے  کھانے تقسیم کرنے کے لئے  تیار ہوگی تو  اپنے مختلف  کچنس میں  یومیہ 2٫6  لاکھ کھانے کے ڈبے   مہیا کرانے کی پیش کش کی ہے۔ 2٫6  لاکھ  یومیہ  کھانے کے ڈبوں کی پیش کش  ابتدائی مقامات  کے لئے  کچن کی صلاحتیوں کی بنیاد پر کی گئی ہے۔ اگر ضرورت  محسوس کی جائے گی تو پکے  ہوئے کھانے کے لئے  ایسے مزید مقامات پر کچن کو  اس قابل بنایا جائے گا۔ یہ کھانے  فی ڈبہ 15 روپے کی کل بنیاد پر دستیاب ہوگا۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616985

ہندوستان کی بندرگا ہوں  پر  ہندوستان کے ملاح  اور ان کی نقل حرکت  کے سائن آن اور آف کے لئے  ایس او پی کا اجراء:

جہاز رانی کے  وزیر مملکت آزادانہ چارج  جناب  منسکھ منڈاویا نے  ہندوستانی بندرگاہوں کے  ملاحوں کے سائن  آن  اور سائن آف کے لئے  ایس ا وپی  کے اجراء  کا خیر مقدم کیا ہے اور اپنے ایک ٹوئیٹ میں  اس حکم کے لئے وزیر داخلہ کا شکریہ ادا کیا ہے۔ کیونکہ اسے اب  بحری جہازوں کے عملے کے لئے سمندری بندرگاہ تبدیل کرنا ممکن ہوگا۔  انہوں نے کہا کہ  اس سے  ہزاروں کی تعداد میں  ملاحوں کو در پیش  مشکلات کا خاتمہ ہوگا۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616999

پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے لئے ایڈوائزری:

وزارت اطلاعات ونشریات نے  رپورٹروں ، کیمرا مین ،  فوٹو گرافروں  وغیرہ سمیت  میڈیا  افراد کو، جو  ملک کے مختلف حصوں میں  کووڈ  -19 سے متعلق  معاملات  کی کووریج کرتے ہیں،  اور دیگر مقامات کے لئے  سفر کرتے ہیں،  جن میں  پابندیوں والے  علاقے ، ہاٹ اسپاٹ  اور  کووڈ – 19 متاثر ہ دوسرے علاقےشامل ہیں ، وہ اپنے فرائض کی انجام دہی کے دوران  صحت اور  احتیاط  کا خاص  خیال رکھیں ، اس سے متعلق  مشورے دیئے  ہیں۔ وزارت نے  میڈیا ہاِئوسز کی  انتظامیہ  سے بھی اپنے فیلڈ  اسٹاف کے علاوہ  آفس  اسٹاف  کی ضروری  دیکھ بھال  کرنے کی درخواست کی ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617020

ای پی ایف او نے   پی ایم  جی کے وائی  کے تحت  کام کے 15 دنوں  کے اندر  کووڈ – 19  سے متعلق  6٫06 لاکھ  دعووں سمیت  10٫02 لاکھ  کا نمٹارہ کیا ہے:

اس عمل کے دوران  تقریبا  3600٫85 کروڑ روپے  کی کل رقم  کی ادائیگی کی ہے جس میں  لوک ڈائون کی وجہ سے  اپنے صرف ایک تہائی عملے کے ذریعے  1954 کروڑ روپے  کے  کووڈ -19 دعوے  شامل ہیں۔ کووڈ -19 سے متعلق 90 فیصد دعووں کو  کام کے تین دنوں کے اندر ہی نمٹایا گیا ہے۔ دعووں کے تیز  رفتار نمٹارے کے لئے تیار کئے  گئے  خصوصی  سافٹ ویئر کے توسط سے  سروس ڈیلیوری کا یہ  نیا معیار  طے کیا گیا ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617159

وزارتوں ،  فرضی خبروں  کو باہر لانے  والے  پی آئی فیکٹ چیک  کو  بند کرنے کا  کوئی  سرکاری حکم نہیں ہے:حکومت کے ذریعے  "سے نمستے"  نام سے  کوئی بھی  ویڈیو کانفرنسنگ ایپ  کی شروعات نہیں کی گئی  ہے اور نہ اسے منظوری دی گئی ہے:

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616896

جناب دھرمیندر پردھان نے  ویڈیو کانفرنسنگ کے توسط سے  ایل پی جی  ڈسٹری بیوٹروں کے ساتھ بات چیت کی: غریبوں کے فائدے کے لئے  زیادہ سے زیادہ  اجوولا ریفل کو مفت کرنے کے لئے کہا:

 پیٹرولیم  اور قدرتی گیس نیز فولاد کے مرکزی وزیر جناب  دھرمیندر پردھان نے   لاک ڈائون کے دوران  ایل پی جی سیلنڈروں کی  صارفین کے گھر پر  فراہمی کو یقینی بنانے  کے کام  کی تعریف کرتے ہوئے  ویڈیو کانفرنسنگ کے توسط سے  پورے ملک سے  1000 سے زائد  ایل  پی جی  ڈسٹری بیوٹروں کے ساتھ بات چیت کی۔ انہوں نے  غریبوں کے لئے  پردھان منتری  غریب کلیان یوجنا کے تحت  پی اے ایم یو وائی  استفادہ کنندگان کو  زیادہ سے زیادہ  تین  مفت  ایل پی جی سلینڈر مہیا کرانے  کے لئے مثبت  طریقہ کار  اپنانے کی اپیل کی۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616614

پریسیڈنٹ  اسٹیٹ میں  کووڈ – 19  کے پازیٹو معاملے  کا پتہ لگنے سے متعلق معلومات:

پریسڈنٹ اسٹیٹ میں کووڈ – 19  کے پازیٹو معاملے کا پتہ لگنے  کے تعلق سے  میڈیا رپورٹوں اور  قیاس آرائیوں کے پیش نظر  صورت حال کے تعلق سے  حقائق جاری کئے گئے ہیں۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616940

وزارت فروغ انسانی نے  ای- لرننگ کے مواد  میں تعاون  کے لئے  ایک قومی پروگرام ودیا دھن 2٫0 شروع کیا ہے:

جناب رمیش پوکھریال نشنک نے  ای – لرننگ  کے مواد میں تعاون کے لئے  ودیا دھن 2٫0 پروگرام  شروع کیا ہے۔ یہ پروگرام  طلباء " اسکول اور اعلی تعلیم  دونوں کے لئے" خصوصا  کووڈ – 19  کے وبائی مرض کے پھیلنے  کے پس منظر میں  ای – لرننگ  کے مواد کے بڑھتے مطالبات کی وجہ سے  شروع کیا گیا ہے۔ علم میں اضافے کے لئے  اسکولنگ کے ساتھ  ڈیجیٹل  ایجوکیشن کو  مربوط کرنے کی فوری ضرورت  کے پیش نظر بھی  یہ  پروگرام  شروع کیا گیا ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617143

سبز  وشاداب ، صاف ستھری دنیا  کی تعمیر کی  نائب صدر جمہوریہ کی اپیل:

نائب صدر جمہوریہ ہند جناب ایم وینکیا نائیڈو  نے  عالمی یوم ارض کے  موقع پر  سبز و شاداب اور  صاف ستھری دنیا کی تعمیر کے لئے  مشترکہ  کوششیں کرنے کی عوام سے  اپیل کی کیونکہ  خدمت خلق ایک مبارک کام ہے۔ اس موقع پر اپنے  پیغام میں انہوں نے کہا کہ  "آئیے ہم  ترقیاتی ماڈل اور  صارف پر  مبنی  طرز زندگی  نیز  اپنے کرہ ارض کے تحفظ کواہمیت دینے کا عزم کریں"۔ انہوں نے کہا کہ  کووڈ – 19 وبائی مرض کے تناظر میں  ہمیں  اپنی ترقیاتی  اور  معاشی حکمت عملیوں پر از سر غور کرنا  اور انہیں  دوبارہ وضع کرنا ہوگا۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616763

جناب نریندر سنگھ تومر نے  فوڈ سکیورٹی ، سلامتی  اور تغذیہ پر  کووڈ -19 پر اثرات  کے موضوع پر منعقدہ  جی -20  غیر معمولی وزرائے زراعت کی میٹنگ میں شرکت کی:

وزیر  زراعت جناب نریندر سنگھ تومر  نے  فوڈ سکیورٹی، سیفٹی اور تغذیہ پر کووڈ  -19 کے اثرات سے متعلق مسئلے کے حل کے لئے  جی -20 وزراء  کی  غیر  معمولی حقیقی میٹنگ میں  شرکت کی۔ انہوں نے  لاک ڈائون کی مدت کے دوران   سماجی ڈیسٹنسنگ ، صحت اور صفاءی ستھرائی کے ضابطوں پر عمل کرتے ہوئے  زرعی سرگرمیوں کو  پابندیوں سے  باہر رکھنے اور  لازمی زرعی پیداوار  کی دستیابی  اور فراہمی  کو جاری رکھنے  سے متعلق  حکومت کے فیصلے کے بارے میں بتایا۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616889

کووڈ -19 وبائی مرض  کی وجہ سے  عائد لوک ڈائون کی مدت کے دوران پورے ملک میں  لازمی اشیاء کی  بلا رکاوٹ فراہمی  کے لئے  حکومت کی  بروقت مداخلت:

 وزارت زراعت نے  وبائی مرض کووڈ  -19 کی وجہ سے  پیدا ہوئی صورت حال میں  عائد لاک ڈائون کے دوران  تھوک بازاروں  میں بھیڑ بھاڑ کو کم کرنے اور سپلائی چین کو فروغ دینے کی غرض سے متعدد اقدامات کئے ہیں۔ دو نئے  ماڈیول یعنی  گوداموں پر مبنی کاروباری کا ماڈل  اور  کاشت کار پیداوار  آرگنائزیشن )ایف پی او( کو  شامل کرکے نیشنل ایگریکلچر مارکیٹ  "ای – نام"  پورٹل  کو   بہتر بنایا گیا ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616771

وبائی مرض  کووڈ  -  19  کے مقابلے کے لئے پورے ملک میں   کیمیائی اشیاء ،  کیمیائی  کھاد  اور  ادویہ کی دستیابی  کی حالت کو بہتر بنانے کے لئے  تمام  کوششیں کی جارہی ہیں: گوڑا

کیمیکل  اور فرٹیلائزر کے مرکزی  وزیر جناب  ڈی وی  سدانند گوڑا نے کہا ہے کہ  عالمی وبائی مرض کووڈ -19  کی وجہ سے درپیش   چیلنجوں پر قابو پانے کے لئے ان کی وزارت ادویہ ، فرٹیلائزر  اور جراثیم کش  کیمیائی مادوں کی  معقول فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے  ضروری اقدامات کررہی ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616771

وبائی مرض کے دوران  رہنما خطوط پر عمل در آمد کرتے ہوئے  لازمی خدمات کے تحت ضروریات کی تکمیل کے لئے  اسکل  انڈیا نے  900 سرٹیفائد پلمبروں کی فہرست  مہیا کرائی ہے:

جاری کووڈ  -19 بحران کے دوران  پیلمبنگ جیسی لازمی خدمات  کی ضرورت کی اہمیت کو تسلیم کرتے ہوئے  انڈین پیلمبنگ اسکل کونسل)آئی پی ایس سی(، جو کہ  ہنر مندی کے فروغ اور  صنعت کاری کی وزارت کے تحت کام کرتی ہے، 900 سے زائد  ان پلمبروں کا ڈاٹا بیس  تیار کیا ہے جو  لاک ڈائون کی مدت کے دوران  پورے ملک میں اپنی خدمات فراہم کرنے کے لئے تیار ہیں۔ آئی پی ایس سی نے  اپنے تسلیم شدہ  تربیتی  شراکت داروں سے  ضرورت مندوں  کے درمیان خوراک کی تقسیم اور لازمی  اشیاء کی فراہمی  کی درخواست کی ہے اور  ان کی تیاری اور تقسیم کاری کی سرگرمیوں کے لئے  ضروری  امداد  کی پیش کش کی ہے۔

برائے تفصیل: http://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1616886

وزارت سیاحت نے  وبائی مرض  کورونا وائرس کی وجہ سے  15 اکتوبر 2020 تک  ہوٹلوں /  ریستورانوں کو بند کرنے سے متعلق  کوئی مراسلہ جاری نہیں کیا ہے:

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617014

کووڈ -19  کی وجہ سے  ٹرائیفڈ )ٹی آر  آئی ایف ای ڈی(  کی مثبت پہل:

کووڈ -19  لاک ڈائون )اور اس کے بعد کی مدت (کے دوران  قبائلیوں کے مفادات کے تحفظ سے متعلق  کارروائیوں   کو  تین مدوں – تشہیر ،   بیداری پیدا کرنے، حفظان صحت کے لئے ذاتی  تحفظ ،  این ٹی ایف پی  خریداری  میں درجہ بند کیا جاسکتا ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617038

محکمہ سائنس  اینڈ ٹیکنالوجی ، سائنس وٹیکنالوجی کے توسط سے  سماجی سطح پر  کووڈ  -19  سے نمٹنے والے  این جی اوز نیٹ ورک کی مدد کررہا ہے:

سائنس اور ٹیکنالوجی  کے نیٹ ورک سے  ہندوستان کی  22 ریاستوں میں  پھیلے این جی اوز  کی  محکمہ سائنس  اینڈ ٹیکنالوجی )ڈی ایس ٹی (  کا  سائنس  فار اکیوٹی  امپارومنٹ اینڈ ڈیولپمنٹ )ایس  ای ای ڈی(ڈویزن   کے  ذریعے مدد کی جارہی ہے۔ اس نے  مختلف  ایس این ٹی  مداخلتوں کے توسط سے کووڈ -19  کو پھیلنے سے روکنے میں  اپنی صلاحتیوں کا مظاہرہ کیا ہے۔ مختلف  ریاستوں میں  حکومت کی کوششوں کی تعریف کی گئی ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617176

وبائی مرض  کووڈ -19  کے دوران  سیف گارڈ عملے کے لئے  نارتھ  ڈی ایم سی کے ذریعے کئے گئے جامع اقدامات:

 وبائی مرض  کووڈ -19  کی اس مشکل گھڑی میں  نارتھ دہلی  میونسپل کارپوریشن نے اپنے عملے کی  پوری  حفاظت اور ممکنہ  تحفظ کو یقینی بنانے کی غرض سے متعدد جامع اقدامات کئے ہیں۔ نارتھ ڈی ایم سی نے  ہر ایک  کنٹنمنٹ زون کے باہر  ہر ایک عملے کے لئے خواہ اس کا تعلق  صفائی ستھرائی ، انجینئرنگ، عوامی صحت  یا کسی بھی محکمے سے ہو، اس کے لئے  ڈاکنگ  اسٹیشن قائم کیا ہے۔ یہ عملہ  ڈاکنگ اسٹیشنوں کی  اپنی  ڈیوٹی شروع کرتا ہے۔ یہ لوگ  یہاں رپورٹ کرتے ہیں اور انہیں معقول پی پی  ای  کٹ مہیا کرائی جاتی ہے۔

برائے تفصیل: https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1617007

 

پی آئی بی فیلڈ آفیسروں سے ان پٹ:

*        مہاراشٹر: مہاراشٹر میں منگل کے دن  سامنے آئے  552 نِئے مریضوں کے ساتھ کووڈ  -19  کے مریضوں کی تعداد   5218 تک پہنچ گئی ہے۔ ممبئی میں  355  نئے  معاملات کی رپورٹ کے ساتھ یہاں تعداد  بڑھ  کر  3445 تک پہنچ گئی ہے جو ہندوستان کے کسی  شہر میں ایک دن میں  سب سے بڑی تعداد ہے۔ اب تک  779 افراد  روبہ صحت ہوئے ہیں۔ ممبئی میں  53  صحافیوں میں  کووڈ -19 کا پازیٹو  آنے کی روشنی میں  وزارت  اطلاعات ونشریات نے  پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کے لئے  ایک ایڈوائزر ی جاری کی ہے جس میں  ان کی انتظامیہ سے  فیلڈ کے علاوہ  آفس اسٹاف  کا خیال رکھنے   کے لئے کیا گہا ہے  نیز صحافیوں سے  احتیاط برتنے کے لِئے  بھی کہا گیا ہے۔ ایڈیشنل سکریٹری  جناب منوج جوشی  کی قیادت میں  بین  وزارتی  مرکزی ٹیم  " آئی ایم سی ٹی"  نے آج  دھراوی  علاقے کا دورہ کیا اور  ٹرانزٹ کیمپوں  نیز کرنطینہ کے مراکز وغیرہ کا معائنہ کیا۔ ان کے ہمراہ ریاست کے وزیر صحت جناب راجیش توپے بھی تھے۔ آئی  ایم سی ٹی  ٹیم نے  وزیراعلی،  میونسپل کمشنر ، کمشنر  آف پولیس  اور  حکومت  مہاراشٹر کے اعلی افسران کے ساتھ  تبادلہ خیال کیا۔

*        گجرات:  گجرات سے  کورونا وائرس  کے 112  نئے معاملات  کی خبر ہے، جس کے ساتھ ریاست میں  کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد  2178 ہوگئی ہے۔ متاثرہ افراد میں سے اب تک  139 افراد  روبہ صحت  ہوگئے ہیں جبکہ  90  افراد کا انتقال ہوگیا ہے۔ متاثرہ افراد کی تعداد کے اعتبار سے  ہندوستان کی تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں  مہاراشٹر کے بعد دوسرے نمبر پر گجرات ہے۔

*        راجستھان:  بدھ کے دن  ریاست میں  کورونا وائرس کے 64 نئے معاملے  درج کئے گئے ہیں اور اس طرح متاثرین کی کل تعداد  1799 تک پہنچ گئی ہے۔ ایڈیشنل چیف  سکریٹری "صحت"  جناب  روہت کمار سنگھ کے مطابق  بیک لاگ کی وجہ سے  4000 نمونوں کے  نتیجے نہیں ملے ہیں اور انہیں دہلی کی پرائیویٹ لیب میں بھیجا گیا ہے اور ان کے نتائج آنے شروع ہوگئے ہیں۔

*        چنڈی گڑھ:  چنڈی گڑھ انتظامیہ نے ان علاقوں پر خصوصی توجہ دی ہے ، جنہیں  کورونا وبائی مرض کی وجہ سے سیل کردیا گیا ہے۔ وہاں  لوگوں کو ان کے گھر کے قریب ہی  سبزیاں اور راشن مہیا کرایا جانا چاہئے تاکہ لوگ اپنے رہائشی علاقے سے باہر نہ آئیں۔ علاقے میں رہنے والوں کی سہولت کے لئے  پلمبروں ، الیکٹریشینز اور  اے سی میکینک کی فہرست تیار کرکے  انہیں شائع کردیا گیا ہے، جو  ادائیگی پر ان کی خدمات سے استفادہ حاصل کرسکتے ہیں۔

*        پنجاب: کووڈ – 19  کی پابندیوں کے درمیان بلا کسی رکاوٹ کے گندم کی خریداری کو یقینی بنانے کی غرض سے  پنجاب منڈی بورڈ نے  409 اضافی رائس شیلر کو  ربیع  مارکیٹنگ  سیزن 21-2020 کے دوران  ذیلی منڈی یارڈ میں تبدیل کردیا ہے۔ کووڈ -19 کے دوران  خریداری کے بہتر نظم کے نتیجے میں  آج  کی تاریخ تک  گندم کی خریداری  1٫95 لاکھ میٹرک ٹن  کی سطح تک پہنچ گئی ہے۔ اس میں   7٫54 لاکھ میٹرک ٹن کی خریداری مختلف سرکاری ایجنسیوں کے ذریعے کی گئی ہے۔ صنعتی اکائیاں جو  وزارت امور  داخلہ  اور حکومت پنجاب کے ذریعے گزشتہ ہفتے جاری کئے گِئے رہنما  خطوط کے تحت  معیاری عملی طریقہ کار  پر عمل در آمد کی شرط پر  کارروائی شروع کرنے کے خواہاں ہیں، تو  انڈسٹریز اینڈ کامرس ڈپارمنٹ کی سائٹ پر آن لائن درخواست جمع کراکر  سرگرمی شروع کرسکتے ہیں۔

*        ہریانہ: صنعت اور دوسرے ادارے  پورٹل  -  "سرل ہریانہ – جی او  وی – ان" پر  ریاست میں  لاک ڈائون کے تحت  کی گئی  نرمی کے پیش نظر  اپنی کارروائیاں شروع کرنے کے لئے پاس کے لئے  درخواست کرسکتے ہیں۔ موٹر  گاڑیوں کی  بین ریاست  نقل وحمل کے ای- پاس  کے لئے  " کووڈ  پاس ۰ ای گورنمنٹ۰ او   آر جی/ ریکویسٹر  - ڈیش بورڈ "  پر  اپلائی کرسکتے ہیں۔

*        ہماچل پردیش:  وزیراعلی نے کہا ہے کہ  ریاست میں کرفیو  3  مئی  2020 تک جاری رہے گا۔ ایسا اس بات کو یقینی بنانے کے لئے کیا جارہا ہے کہ کورونا وائرس  ریاست کے ان علاقوں تک نہ پہنچے ، جو  سر دست  اس سے  پاک ہیں۔ وزیراعلی نے  ریاست کو  این -95  سرجیکل مارکس دینے کے لئے  صدر جمہوریہ ہند کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ  اس خیر سگالی سے ریاست میں کورونا  کے خلاف جنگ کرنے والے میں اعتماد میں اضافہ ہوگا۔

*        جموں وکشمیر:  آج  27 نئے  معاملے کی رپورٹ ہے۔ ان تمام معاملات کا تعلق کشمیر ڈویژن سے ہے۔ اس  طرح کل تعداد  اب  407 تک پہنچ گئی ہے۔ اس میں  جموں سے  56  اور کشمیر  کے متاثرین کی تعداد 351 ہے۔ فوج نے   دو کووڈ -19 اسپتال قائم کئے ہیں ان میں ایک اسپتال سری نگر میں اور ایک جموں میں ہے۔ فوج نے  وبا ئی مرض سے  مقابلے میں  سول انتظامیہ کے  ساتھ مکمل تعاون کی یقین دہانی کرائی ہے۔

*        ارونا چل پردیش:  اروناچل پردیش میں اب تک 12366  صارفین نے  مفت ایل پی جی سلینڈر حاصل کئے ہیں۔ ہندوستانی فضائیہ کے ہیلی کاپٹروں سے ارونا چل پردیش کے  چانگ لانگ ضلع کے دور دراز کے علاقوں میں  لازمی اشیاء اور طبی  آلات کی فراہمی کے لئے  اب تک  چار دستے یہاں اتارے ہیں۔

*        آسام:  وزیر صحت جناب  ہیمنت وسواس سرما  نے  ٹوئیٹ کرکے کہا ہے کہ  لاک ڈائون کی مدت کے دوران  والدین کو  راحت پہنچانے کی غرض سے  آسام کے پرائیویٹ اسکولوں میں  اسکول  کی 50 فیصد  فیس کو معاف کردیا ہے۔ آسام کے محکمہ پنچایت اور دیہی ترقی  نے  پی ایم جی وائی کے تحت  ڈی بی ٹی  کے توسط سے  851642 ستفادہ کنندگان   کے لئے  فی کس 500  روپے کی مالی امداد  جاری کردی ہے۔

*        میزورم:  پولیس کے ڈائریکٹر جنرل  {ڈی جی پی}  نے  مامت ضلع میں  سرحد کی سیلنگ کی  ڈیوٹی پر تعینات دو پولیس والوں  کے ساتھ میزورم  - تری پورہ سرحد پر رہنے والے افراد کے گروپ کے ذریعے مار پیٹ کے معاملے کی  جانچ کا حکم دے دیا ہے۔

*        ناگالینڈ:  ریاست کے وزیر صحت نے کہا ہے کہ  ریاست میں  پی پی ای  کی خریداری  اور کوائلٹی کنٹرول کی دیکھ بھال کرنے کے لئے  دو کمیٹیاں تشکیل دی گئی ہیں۔

*        سکم:  سکم میں نارتھ ڈسٹرک انتظامیہ نے  اطلاع دی ہے کہ  پی ایم جی کے وائی کے تحت  ضابطے کے مطابق  راشن کی دکانوں سے  23 اپریل 2020 سے  چاول اور دال  تقسیم کئے جائیں گے ۔

*        تری پورہ: تری پورہ میں  ضلع انتظامیہ نے کل   557 مائیگرینٹ مزدوروں  کے لئے  ریاستی حکومت کے ذریعے  کووڈ  -19  کے پیکج کے حصے کے طور پر اعلان کردہ  پالیسی کے مطابق  اپنے کنبے کی دیکھ بھال کے لئے  ہر ایک مزدور کو  ہزار روپے دیئے ہیں۔ اس سے  157 مزدوروں کو فائدہ حاصل ہوا ہے۔

*        کیرالہ:  کووڈ -19 کے  لئے  پتھانم  تھٹا جانچ میں نگیٹو آنے کے  45 دنوں کے بعد کوزی کوڈ  میڈیکل کالج کے  دو  ہائوس سرجن میں  پازیٹو کی تصدیق ہوئی ہے۔ وہ  ٹرین میں  دہلی میں  تبلیغی جماعت میں شرکت کرنے والے جماعتیوں کے رابطے میں آئے تھے۔پازیٹو  مریض کے مزید رابطوں  کا پتہ لگنے کے بعد کولم کے سرحدی گائوں  میں نگرانی بڑھادی گئی ہے اور  تمل ناڈو کے ساتھ ملنے والی سرحد پر سرحدی چیک پوسٹ کو  مستحکم کیا گیا ہے۔ ریاست میں  سی ایم  ڈی آر ایف  میں  سرکاری ملازمین کی  پانچ  مارچ تک  6 دن کی تنخواہ میں تخفیف کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ کل تصدیق شدہ  معاملات کی تعداد  426  ہے  جبکہ ایکٹو معاملات کی تعداد 117 ہے۔

*        تمل ناڈو: ریاست کے وزیراعلی نے  صحت کارکنان ، جن  کی  کووڈ -19  کی  وجہ سے موت ہوجاتی ہے  ان کے پسماندگان کو  50 لاکھ روپے  اور روزگار دینے کا اعلان کیا ہے۔ ڈاکٹر  کی  آخری رسومات کی آدائیگی کے موقع پر  حملہ کے لئے  69 سے زائد افراد  کو گرفتار کیا گیا ہے۔ مذکورہ  ڈاکٹر کی کووڈ کی وجہ سے موت ہوگئی تھی۔ تمل ناڈو میں  کووڈ -19 کے کل معاملات کی تعداد  1596 ہوگئی ہے، ان میں  فعال معاملات  940 ہیں، 18  کی موت  ہوئی  635 ڈسچارج کردئے گئے۔ چنئی میں کل  تعداد  358 اور کوئمبٹو ر میں 134 ہے۔

*        پڈوچیری:  پڈوچیری کے وزیراعلی، وزراء  اور ممبران اسمبلی  کے  حفاظتی قدم کے طور پر  کووڈ  جانچ کی جائے گی۔

*        کرناٹک: کل معاملات  425 ہیں  اور آج  7 نئے معاملوں کی تصدیق ہوئی ، جن میں 5 کا تعلق  کلبرگی  سے  اور   دو  کا تعلق بینگلور سے ہے۔ اب تک  129 افراد کو  ڈسچارج کیا گیا ہے۔

*        آندھرا پردیش:  گزشتہ 24 گھنٹے میں  26 نئے معاملے سامنے آئے ہیں۔ اس طرح  پازیٹو معاملات کی کل تعداد  813 تک پہنچ گئی ہے۔ ان میں  24  کی موت ہوئی  ، 120 ڈسچارج کئے گئے۔ اکٹیو معاملات  669 ہیں ۔ ریاست میں ہر ایک  ریڈ زون میں  اسپیشل آفیسر کی تقرری  کی ہے۔ ریاستی حکومت نے  پریشان حال خواتین  کی شکایات  کو دیکھنے کے لِئے  تمام اضلاع میں  گھریلو تشدد ہیلپ لائن نمبر شروع کیا ہے۔ پازیٹو معاملات والے  اضلاع میں سب سے اوپر کرنول  {203} ،  گنٹو ر  177 ،  کرشنا 86 ، نیلور 67 ، چتوڑ 59  اور   کڈپا -51۔

*        تلنگانہ:  ریاست میں  صحت انتظامیہ  سوریہ پٹ میں  کووڈ -19  کے تیزی سے پھیلائو پر تشویش  ظاہر کی گئی ہے۔ یہ علاقہ  حیدرآباد سے 135 کلو میٹر کے فاصلے پر واقع ہے۔ منگل کے دن  26 نئے معاملات  کی رپورٹ ہوئی تھی۔ اس طرح سوموار کے  روز  یہ تعداد  56 تھی۔ ریاست میں اب تک  کل پازیٹو معاملات کی 928  ہے۔

ہیش ٹیگ کووڈ- 19 سے متعلق فیکٹ چیک

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image005R4NW.png

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image006WDLC.jpg

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image007K1UX.jpg

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image0080A6S.png

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image009EYJY.png

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image010N0HO.png


http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image0118I0T.jpg

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

م ن- س ش- ق ر

U: 1975



(Release ID: 1617659) Visitor Counter : 39