وزارت اطلاعات ونشریات
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

نیشنل کنکلیو میں اس بات پر تبادلہ خیال کیا گیا کہ کس طرح گزشتہ نو سالوں کی حکومتی پالیسیوں نے یووا شکتی کو بااختیار بنا کر بھارت کو تقویت  پہنچائی ہے

Posted On: 27 MAY 2023 5:46PM by PIB Delhi

نئی دہلی کے وگیان بھون میں 'یووا شکتی: گیلونائزنگ انڈیا' کے عنوان سے منعقدہ ایک سیشن میں سماج کے مختلف طبقوں کے شہری جمع ہوئے اور اس بات پرتبادلہ خیال  کیا کہ گزشتہ نو برسوں کے دوران حکومت کی پالیسیوں اور پروگراموں نے نوجوانوں کو بااختیار بنانے میں کس طرح کردار ادا کیا ہے۔ یہ سیشن پرسار بھارتی کے زیر اہتمام "نیشنل کنکلیو: 9 سال سیوا، سشاسن، غریب کلیان" نامی کانفرنس میں منعقد ہوا۔ پینل لسٹ میں ایسپریسو ٹیکنالوجیز کی ڈائریکٹر یشودھرا باجوریا بھی شامل تھیں۔ اویو رومز کے سی ای او رتیش اگروال۔ ویرین رسکوئنہا، سابق بھارتی ہاکی کپتان۔ باکسر اکھل کمار۔ موسیقار امان علی بنگش۔ اور اداکار رشاب شیٹی۔ اس سیشن کی نظامت رونک، ریڈیو جوکی، ریڈ ایف ایم نے کی۔

 

"کاروباری افراد کے لیے ادارہ جاتی مدد کے لیے حکومت ستائش  کی مستحق ہے"

 

ایسپریسو ٹیکنالوجیز کی ڈائریکٹر یشودھرا باجوریا نے کہا کہ اسٹینڈ اپ انڈیا اور اسٹارٹ اپ انڈیا جیسی اسکیموں نے کاروباری افراد کو بااختیار بنانے میں بڑا کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے ایک خاتون کسان کی مثال دی جو اب حکومت کے اوپن نیٹ ورک فار ڈیجیٹل کامرس کی بدولت اپنی پیداوار کی مارکیٹنگ کرنے کے قابل ہے۔ کسان پروڈیوسر آرگنائزیشن اور سیلف ہیلپ گروپس نے دور دراز علاقوں میں بھی کسانوں اور لوگوں کو زمینی سطح پر مدد فراہم کی ہے۔ حکومت عوام کو اس طرح کی مدد کو ادارہ جاتی بنانے اور چھوٹے کاروباریوں کو بھی یکساں مواقع فراہم کرنے کے لیے ستائش  کی مستحق ہے۔

 

"حکومتی پالیسیوں نے مختلف اختراعات کو جنم دیا ہے جو ہماری زندگی کا حصہ بن گئے ہیں"

 

اویو رومز کے سی ای او رتیش اگروال نے کہا کہ مختلف خدمات جو آج ہماری روزمرہ زندگی کا حصہ بن چکی ہیں وہ نو سال پہلے بھی موجود نہیں تھیں۔ انہوں نے کہا، 'بھارت بہت اچھا کام کر رہا ہے، جو نوجوانوں کی طرف سے چلایا جا رہا ہے جو اسٹارٹ اپ کی ترقی کو طاقت دے رہے ہیں۔ ہم نے دنیا میں ایکاعلی  مقام حاصل کیا ہے۔

 

"حکومت نے نچلی سطح پر کھیلوں کے بنیادی ڈھانچے میں سرمایہ کاری میں بہت اچھا کام کیا ہے"

 

سابق بھارتی ہاکی کپتان ویرین رسکوئنہا نے کہا کہ ٹوکیو اولمپکس میں بھارتی مردوں کی ہاکی ٹیم کے لیے یہ ایک عظیم لمحہ تھا۔ ٹوکیو اولمپکس میں کھیلوں میں میرے لیے سب سے بڑی کہانی بھارتی خواتین ہاکی ٹیم کی کارکردگی تھی ، جو چوتھے نمبر پر رہی اور تمغے سے پیچھے رہ گئی۔ 2016 اور 2021 کے درمیان جو ہوا وہ یہ ہے کہ نچلی سطح پر بہت زیادہ سرمایہ کاری ہوئی۔ ایسٹرو ٹرف پچوں کی تعداد میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔ کھیلوں کے بنیادی ڈھانچے میں بہت بہتری آئی ہے ، حالانکہ ہمیں ابھی بہت کچھ کرنا ہے۔ ہاکی فزیکل پاور کا کھیل بن چکا ہے، ہم ہمیشہ مہارت میں دنیا کی بہترین قوموں کا مقابلہ کر سکتے ہیں، ہم نے فٹنس اور طاقت کے شعبے میں جدوجہد کی ہے۔ یہ ایک ایسا شعبہ ہے جہاں ہم نے نمایاں پیش رفت کی ہے۔ سابق کپتان نے کہا کہ چھوٹے گاؤوں کی لڑکیوں کا اولمپکس میں پرفارم کرنا لاکھوں نوجوان لڑکیوں کو فخر اور امید دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے نچلی سطح پر سرمایہ کاری میں بہت اچھا کام کیا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ فٹ انڈیا اور کھیلو انڈیا کے تصورات دو تبدیلی لانے والے اقدامات ہیں، جو کھیلوں کی ثقافت اور کھیلوں کے کوچوں کے دو سی ز کو حل کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کھیل نے مجھے زندگی میں بہت کچھ سکھایا ہے، سب سے بڑی چیز جو کھیل ہمیں سکھاتا ہے وہ شکست کو قبول کرنا اور سیکھتے رہنا اور بہتری لانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر ہم فزیکل ایجوکیشن ٹیچر کی حیثیت کو سائنس کے استاد کے برابر بلند کر سکیں تو ہم واقعی کھیل وں کو تبدیل اور تبدیل کرسکتے ہیں۔

 

کھیلو انڈیا اور فٹ انڈیا جیسی اسکیموں سے بھارتی کھلاڑیوں کا مستقبل روشن ہے۔

 

باکسر اکھل کمار نے کہا کہ جب وزیر اعظم بڑے ٹورنامنٹس سے پہلے کھلاڑیوں سے ملتے ہیں اور ان سے بات چیت کرتے ہیں تو اس سے کھلاڑیوں کو بہت زیادہ اندرونی ترغیب ملتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کھیلوں کو فروغ دینے کے لیے کھیلوں کے کلچر کی تعمیر ضروری ہے۔ انہوں نے فٹنس اور صحت کو فروغ دینے میں فٹ انڈیا موومنٹ کے کردار کی تعریف کی۔ انہوں نے کھلاڑیوں کو مالی امداد کی اہمیت پر بھی زور دیا جس سے وہ اپنی مالی حیثیت کے بارے میں فکر مند ہوکر کھیلوں کو آگے بڑھا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کھیلو انڈیا جیسی بااختیار اسکیموں سے بھارتی کھلاڑیوں کا مستقبل روشن ہے۔

 

"حکومت نے چھوٹے گاؤوں اور قصبوں سے ٹیلنٹ کو فروغ دینے میں بہت اچھا کام کیا ہے"

 

موسیقار امان علی بنگش نے کہا کہ حکومت نوجوان نسل کے لیے بہت کچھ کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حیرت انگیز امر ہے کہ حکومت نے چھوٹے دیہاتوں اور قصبوں کے باصلاحیت نوجوانوں کی حوصلہ افزائی اور ترقی کی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ بھارت کے لیے ایک عروج کا وقت ہے اور آرٹ اور ثقافت کی تمام شکلوں کے بارے میں بیداری میں نمایاں اضافہ ہوا ہے۔

 

وزیر اعظم نے فلم سازوں سے کہا ہے کہ وہ بھارت کی انوکھی کہانیوں کو دنیا کے سامنے پیش کریں۔

 

اداکار رشب شیٹی نے کہا کہ فلم عوام تک رسائی کے لیے ایک بہت مضبوط ذریعہ بن گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس سے پہلے بہت سی فلمیں ہمارے ملک کو منفی انداز میں پیش کرتی تھیں، میرے خیال میں ہمارے ملک کو مثبت انداز میں اجاگر کرنا ضروری ہے۔ یہ میرا خیال رہا ہے، ہمارے گاؤوں کی انوکھی کہانیوں کو سامنے لانا، جیسا کہ انوکھے عقائد، طرز زندگی، رسومات اور کھانے سے ظاہر ہوتا ہے۔ فلم انڈسٹری کے لیے وزیر اعظم کا یہ پیغام رہا ہے کہ ہماری بھارتی ثقافت اور کہانیوں کو دنیا تک لے جانے کی ضرورت ہے۔

•••

(ش ح – ع ا – ع )

U. No. 5539



(Release ID: 1927740) Visitor Counter : 100