PIB Headquarters

کووڈ 19پر پی آئی بی کی روزمرہ بلیٹن

Posted On: 09 MAY 2020 6:26PM by PIB Delhi

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image0015L3Z.png http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image002N97X.jpg

(کووڈ 19 پر مشتمل پریس ریلیزز، جو گذشتہ 24 گھنٹوں میں جاری کیا گیا ہے، فیلڈ افسران سے حاصل کردہ معلومات اور پی آئی بی کے ذریعہ کئے گئے صحیح تجزیات)

 

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image003H6JE.png

نئی دہلی ،09مئی2020:

  • اب تک، ملک میں کووڈ 19 کے تصدیق شدہ59,662 معاملات رپورٹ کئے گئے ہیں۔17,847 افراد صحت یاب ہوئے اور19,81اموات رپورٹ کی گئی ہے۔
  • گزشتہ 24گھنٹے میں کووڈ 19 معاملات میں33,20کا اضافہ نوٹ کیا گیا ہے۔
  • آسام اورتریپورہ کے علاوہ شمال مشرق کی زیادہ ترریاستیں گرین زون میں ہیں۔
  • اب تک 15.25لاکھ سے زیادہ ٹیسٹ کرنے کے ساتھ یومیہ 95,00ٹیسٹ کرتے ہوئے ملک میں ٹیسٹ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ ہواہے۔
  • مرکزی وزیرداخلہ نے سی اے پی ایف کے ذریعہ مشکل صورت حال میں کام کرنے پرکووڈ19انتظامیہ کاشکریہ اداکیاہے۔
  • وزارت مزدور کووڈ19معاملات پر سوشل شراکت داروں کے ساتھ تبادلہ خیال اورمعیشت ومزدوروں پراس کے اثرکو کم کرنے کیلئے منصوبوں پرکام کررہی ہے۔
  • جناب نقوی کے مطابق اقلیتی کمیونٹی کووڈوباکے خلاف لڑائی میں مکمل طورپرتعاون کررہی ہے۔

 

ڈاکٹر ہرش وردھن نے شمال مشرقی ریاستوں میں کووڈ 19 سے نمٹنے کےلئے تیاریوں اور اس پر قابو پانے کے اقدمات کا جائزہ لیا

صحت اور خاندانی بہبود کے مرکزی وزیر ڈاکٹر ہرش وردھن نے شمال مشرقی ریاستوں میں کووڈ 19 کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے آج اروناچل پردیش، آسام، منی پور، میگھالیہ، میزورم، ناگالینڈ، تریپورہ اور سکم کے ساتھ اعلیٰ سطحی ایک میٹنگ کی۔ ڈاکٹر ہرش وردھن نے ملک میں کووڈ 19 سے نمٹنے میں سبھی ریاستوں کے خود کو وقف کر دینے کو سراہا۔ انہوں نے کہاکہ یہ بڑی راحت اور حوصلہ افزاءبات ہے کہ زیادہ تر شمال مشرقی ریاستوں میں گرین زون ہیں۔ ابھی تک صرف آسام اور تریپورہ میں کووڈ 19 کے فعال معاملات پائے گئے ہیں۔

شمال مشرق میںکووڈ19 انتظامیہ کی مثبت صورت حال کو برقرار رکھنے کےلئے ڈاکٹر ہرش وردھن نے ریاستوں کو مشورہ دیا کہ وہ یہ یقینی بنائے کہ واپس آنے والے تارکین وطن مزدوروں، طلبہ اور بیرون ملک سے واپس آنے والے افراد کو ہدایت نامہ اور پروٹوکول کے مطابق اسکریننگ اور کورانٹین کیا جائے۔

ڈاکٹر ہرش وردھن نے بتایا کہ 9 مئی 2020 تک، ملک سے مجموعی طور پر59,662 معاملات رپورٹ ہوئے ہیں جن میں 17847 افراد صحت یات اور 1981 اموات ہوچکی ہیں۔ پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران، 3320 نئے تصدیق شدہ معاملات شامل کئے گئے ہیں اور 1307 مریض ٹھیک پائے گئے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ اموات کی شرح 3.3فیصد اور بحالی کی شرح 29.9فیصد ہے۔ مزیدانہوں نے یہ بھی کہا کہ (کل تک) آئی سی یو میں موجود 2.41فعال کوووڈ 19 مریض، وینٹی لیٹروں پر 0.38 فیصد اور آکسیجن سپورٹ پر 1.88 فیصد مریض موجود ہیں۔ انہوں نے یہ بھی کہاکہ ملک میں جانچ کی صلاحیت میں اضافہ ہوا ہے اور یہ روزانہ 95000 ٹیسٹ ہورہے ہیں جن میں 332 سرکاری لیب ہیں اور 121 نجی لیباریٹری ہیں۔ مجموعی طور پرکووڈ19 کے لئے اب تک 1525631 ٹیسٹ ہوچکے ہیں۔

ڈاکٹر ہرش وردھن نے تمل ناڈو، تلنگانہ اور کرناٹک میں کووڈ19 انتظامیہ کیلئے لی گئی تیاری اور کنٹینمنٹ اقدامات کا جائزہ لیا

ڈاکٹر ہرش وردھن نے کہاکہ کووڈ19 کا مقابلہ کرنے کے لئے موزوں اقدامات اٹھائے جارہے ہیں اور مرکز اور ریاستوں دونوں کی متفقہ کاوشوں سے، کافی تعداد میں کووڈ اسپتالوں، تنہائی مرکز اور آئی سی یو بیڈز اور کورانٹین کی شناخت اور ترقی کی جا رہی ہے، ہم ابھی تک کووڈ19 کی وجہ سے کسی بھی قسم کے حالات کا مقابلہ کرنے کے لئے پوری طرح تیار ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مرکزی علاقوں ریاستی حکومتوں مرکزی اداروں کو کافی تعداد میں ماسک اور ذاتی حفاظتی سازوسامان، وینٹی لیٹرز وغیرہ فراہم کرکے بھی مدد فراہم کررہے ہیں۔

جناب امت شاہ نے سبھی مرکزی مسلح پولیس دستوں (سی اے پی ایف) کے ڈائریکٹر جنرل کے ساتھ جائزہ میٹنگ کی

مرکزی وزیر داخلہ نے کووڈ19 انتظامیہ کی اس مشکل صورتحال میں ہمارے سی اے پی ایف کے ذریعہ کئے جانے والے قابل تحسین کام کی تعریف کی۔ جناب شاہ نے کہا کہ مودی سرکار کوووڈ 19 کو نہ صرف پھیلانے پر ہی فکر مند ہے بلکہ تمام سی اے پی ایف کی حفاظت، دفاع اور فلاح و بہبود کو یقینی بنانے کے لئے پوری کوشش کر رہی ہے۔ میٹنگ کے دوران،سی اے پی ایف میں سے ہر ایک نے بیماری کو روکنے کے لئے اٹھائے گئے جدید اقدامات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ ان تجاویز میں احتیاطی تدابیر کے بارے میں آگاہی اور تربیت فراہم کرنا شامل ہے۔مطبخ میں انتظامات کو تبدیل کرنا اور بیرکوں میں قیام کی سہولیات۔ وزارت آیوش کے رہنما خطوط کے مطابق مدافعت کو بڑھانا اوردفاعی اہلکاروں کی عمر اور ان کی صحت کی تاریخ کو مدنظر رکھتے ہوئے اہلکاروں کے مناسب انتظام کو یقینی بناناہے۔

وزیر اعظم جناب نریندر مودی اور اٹلی کے وزیراعظم جیوسپے کونٹے کے درمیان فون پربات چیت

وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی اٹلی کے وزیراعظم جیوسیپے کونٹے کے ساتھ فون پربات ہوئی۔ وزیر اعظم نے کووڈ19 وبائی امراض کی وجہ سے اٹلی میں ہونے والے جانی نقصان پر اظہار تعزیت کیا۔ دونوں رہنماؤں نے اپنے ممالک کے ساتھ ساتھ عالمی سطح پر وبائی امراض کے صحت اور معاشی اثرات کو حل کرنے کے لئے درکار اقدامات پر تبادلہ خیال کیا۔ انہوں نے ایک دوسرے کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا اور ایک دوسرے کے پھنسے ہوئے شہریوں کے لئے بڑھائے جانے والے باہمی تعاون کو سراہا۔ وزیر اعظم نے جناب کونٹے کوہندوستان کی اٹلی کو ضروری ادویات اور دیگر اشیا کی فراہمی میں غیر منظم مدد کی یقین دہانی کرائی۔

کووڈ19 پر قابو پانے کےلئے نافذ کیے گئے لاک ڈا ؤن کے سبب صنعت کاروں کو درپیش ملازمین کی کمی کے مسئلے کے حل کے لیے وزارت محنت وملازمت ہر ممکن اقدام کرے گی

وزارت محنت و روزگار سماجی شراکت داروں کے ساتھ بات چیت کر رہی ہے جس میں کووڈ-19 وبائی امراض سے پیدا ہونے والی ہنگامی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا ہے اور کارکنان اور معیشت پر اس کے اثرات کو کم سے کم کرنے کے لئے حکمت عملی اور پالیسی ساز اقدامات پر عمل پیرا ہے۔ جناب سنتوش کمار گنگوار، وزیر مملکت برائے محنت ور روزگار نے آجروں کی تنظیموں کے ساتھ ایک ویب کانفرنس منعقد کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ان کی وزارت صنعت کے تقاضوں پر ہمدردی رکھتی ہے اور صنعت کی بحالی اور معیشت کو دوبارہ کھولنے کے لئے ہر ممکن مدد فراہم کرنے کی کوشش کرے گی۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ محنت اور روزگار وزارت دیگر متعلقہ وزارتوں سے مشاورت کررہی ہے کہ وہ صنعت، خصوصاایم ایس ایم ای سیکٹر کو درپیش مسائل کو حل کرے۔

نئے اداروں کے اندراج اور منظوری کا دستورالعمل یکم اکتوبر2020 تک مؤخر

سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکسز نے ملک میں موجودہ غیرمعمولی انسانی اور مالی بحران کے پیش نظر نئے اداروں کے اندراج اور منظوری کے دستورالعمل پر عمل آوری کو یکم اکتوبر2020 تک موخر کردیا ہے۔ اس دستورالعمل میں نئے اداروں کے اعلان کا عمل بھی شامل ہے۔اس کے مطابق انکم ٹیکس کی 10 (23سی)، 12اے اے، 35 اور 80 جی ایکٹ 1961 کی دفعات کے تحت نئے اداروں کی منظوریرجسٹریشن نوٹیفکیشن (ناموں کا اعلان) کےلئے یکم اکتوبر 2020 سے 31 اکتوبر2020 تک درخواستیں بھیجنا لازمی ہوگا۔ مزید برآں نئے اداروں کے رجسٹریشن اور منظوری کےلئے بھی یکم اکتوبر 2020 سے درخواست بھیجنی لازمی ہوگی۔

انکم ٹیکس ایکٹ 1961 کی دفعہ6 کے تحت قیام گاہوں کی تصدیق

انکم ٹیکس ایکٹ 1961 کی دفعہ 6 میں ایک شخص کی رہائش گاہ سے متعلق دفعات موجود ہیں۔ کسی فرد کی حیثیت یہ ہے کہ آیا وہ ہندوستان میں رہائش پذیر ہے یا غیر رہائشی ہے یا عام طور پر رہائشی نہیں ہے۔ ایک سال کے دوران وہ شخص کتنی مدت کے لئے ہندوستان میں رہتا ہے،یہ اس پر انحصار کرتا ہے۔ متعدد نمائندگی موصول ہوئی ہے جس میں یہ بتایا گیا ہے کہ ان افراد کی تعداد بہت ہے جو گذشتہ سال 2019-20 کے دوران کسی خاص عرصے کے لئے ہندوستان کے دورے پر آئے تھے اور اپنی حیثیت برقرار رکھنے کے لئے گذشتہ سال کے اختتام سے قبل ہندوستان چھوڑنے کا ارادہ کیا تھا۔ ہندوستان میں رہائشی یا عام شہری نہیں۔ تاہم کووڈ19 کے پھیلنے کی وجہ سے لاک ڈاون کے اعلان اور بین الاقوامی پروازوں کی معطلی کی وجہ سے، انہیں ہندوستان میں اپنے قیام کو طول دینے کی ضرورت ہے۔ خدشات کا اظہار کیا گیا ہے کہ وہ بغیر کسی ارادے کے غیر ارادی طور پر ہندوستانی شہری بننا ختم کرسکتے ہیں۔ ایسے معاملات میں حقیقی مشکلات سے بچنے کے لئے، سی بی ڈی ٹی نے اب اس سلسلے میں وضاحت جاری کردی ہے۔

اقلیتی سماج معاشرے کے تمام لوگوں کے ساتھ مل کر کووڈ 19 کے خلاف جنگ میں برابر کے شریک ہیں: مختارعباس نقوی

وزیر برائے اقلیتی امور جناب مختار عباس نقوی نے آج یہاں بتایا کہ اقلیتی امور کی وزارت کے ’اسکل ڈیولپمنٹ‘ پروگرام کے تحت تربیت حاصل کرنے والے 1500 سے زیادہ ہیلتھ کیئر اسسٹنٹ، کورونا مریضوں کے علاج اور فلاح و بہبود میں معاونت کر رہے ہیں۔ جناب نقوی نے یہاں بتایا کہ ان ہیلتھ کیئر اسسٹنٹ میں 50 فیصد لڑکیاں شامل ہیں جو ملک بھر کے مختلف اسپتالوں اور صحت کی دیکھ بھال کے مراکز میں کورونا مریضوں کے علاج میں مدد فراہم کررہی ہیں۔جناب نقوی نے کہا کہ ملک بھر کے مختلف وقف بورڈ نے مختلف مذہبی، سماجی اور تعلیمی تنظیموں کے تعاون سے کرونا وبائی مرض کے لئے وزیر اعظم اور وزیر اعلی امدادی فنڈز میں 51 کروڑ روپے کی امداد کی ہے۔

ملک بھر میں طبی سپلائز اور ضروری اشیا کی مسلسل سپلائی کو یقینی بنانے کےلئے اب تک 490 لائف لائن اڑان پروازیں چلائی گئی ہیں

لائف لائن اڑان کے تحت ایئر انڈیا، الائنس ایئر، آئی اے ایف اور پرائیوکٹ کیریئرس کے ذریعہ 490 پروزیں چلائی گئی ہیں۔ ان میں سے 289 پروازیں ایئر انڈیا اور الائنس ایئر کے ذریعہ چلائی گئی ہیں۔ 8 مئی 2020 کو 6.32 ٹن کارگو لے جایا گیا، جس سے اب تک لے جائے جانے والے کارگو کا وزن تقریبا 848.42 ٹن ہوگیا ہے۔ الائنس ایئر نے 8 مئی 2020 کو دو پروازیں چلائیں جبکہ آئی اے ایف نے 8 پروازیں چلائیں۔ اب تک لائف لائن اڑان پروازوں کے ذریعہ 47609 کلومیٹر کی فضائی دوری طے کی گئی۔ لائف لائن اڑان پروازیں کووڈ 19 کے خلاف ہندوستان کی جنگ میں مدد کرنے کے لئے ملک کے دور دراز علاقوں میں ضروری اشیااور طبی کارگو پہنچانے کے لئے ایم او سی اے کے ذریعہ چلائی جارہی ہیں۔

پون ہنس لمٹیڈ سمیت ہیلی کاپٹر خدمات جموں و کشمیر، لداخ، جزائر اور شمال مشرقی خطے میں چلائی جارہی ہیں، جن کے ذریعہ اہم میڈیکل کارگو اور مریضوں کو لایااور لے جایا جارہا ہے۔ پون ہنس نے 8 مئی 2020 تک 2.32 ٹن کارگو کی ڈھلائی کی ہے اور 8001 کلومیٹر کی دوری طے کی ہے۔

کووڈ 19 عالمی وبا کی وجہ سے درپیش زبردست چیلنج کے باوجود آر سی ایف نے این پی کے فرٹیلائزر سپھلا کی فروخت میں 35 فیصد سے زیادہ اضافہ درج کیا

کووڈ 19 لاک ڈا ؤن کی وجہ سے درپیش سامان لانے لے جانے سے متعلق اور دیگر زبردست چیلنجوں کے باوجود راشٹریہ کیمیکل فرٹیلائزرز لمٹیڈ(آر سی ایف) جو کہ حکومت ہند کی کیمیکل اور فرٹیلائزر کی وزارت کے تحت کام کرنے والی ایک پی ایس یو ہے، اپریل 2019 کے مقابلے میں اپریل 2020 ماہ میں اپنے این پی کے فرٹیلائزر سپھلا کی فروخت میں 35.47 فیصد کا اضافہ درج کرایا ہے۔

کیمیکلز اور فرٹیلائزرز کے وزیر جناب ڈ ی وی سدانند گوڑا نے آئی سی ایف کو مبارکباد دی ہے کہ اس نے زرعی ضرورتوں کو پورا کرنے میںجوش و خروش کا مظاہرہ کیا جس سے کہ کسان زیادہ سے زیادہ فصل کا فائدہ حاصل کرسکیں گے۔ انہوں نے اس بات پر بھی اطمینان کا اظہار کیا کہ ان کی وزارت کے تحت کام کرنے والے مختلف فرٹیلائزرز پی ایس یو کووڈ 19 عالمی وبا کا سامنا کرنے کے لئے کئے گئے لاک ڈا ؤن کی مشکلات کا سامنا کرنے میں ہندوستانی کسانوں کی مدد کے لئے سخت محنت کررہے ہیں۔ جناب سدانند گوڑا نے کہا کے ان کے ڈیپارٹمنٹ آف فرٹیلائزرز کے علاوہ وہ خود بھی بوائی کے موسم کے دوران فرٹیلائزرز کی ضرورت کو پورا کرنے کے لئے پروڈکشن منتقلی اور تقسیم کو آسان بنانے کے لئے مرکز اور ریاستوں مرکز کے زیر انتظام خطوں میں وزارت زراعت دیگر متعلقہ محکموں میں اپنے ہم منصوبوں کے رابطے میں ہیں۔

آر سی ایف ک ے ای ایم ڈی، ایس سی مڈگیریکر نے ایک ٹوئٹ میں کہا کہ کووڈ 19 عالمی وبا کے مشکل دور میں آر سی ایف مہاراشٹر کے زراعت محکمے کی مدد سے کسانوں کو فرٹیلائزرز کی سپلائی کو مسلسل یقینی بنارہی ہے۔کسانوں کی حفاظت کے لئے فرٹیلائزرز کھیت کی حد کے اندر پہنچائے جارہے ہیں۔ اس آر ایس کے علاوہ ٹرامبے یونٹ نے 6.178ایم کے کیل ایم ٹی کی توانائی صلاحیت حاصل کرنے میں ایک نیا سنگ میل قائم کیا ہے۔

کارپوریٹ سماجی ذمہ داری نے اپنے مستحکم یقین کی وجہ سے آر سی ایف نے ضرورت مندوں کو فائدہ پہنچانے اور معاشرے کی عام فلاح و بہبود کے لئے پی ایم کیئرس فنڈ میں 83.56 لاکھ روپے اور مہاراشٹر سی ایم آر ایف میں83.50 لاکھ روپے دیئے ہیں۔ اس سلسلے میں اس کے ملازمین بھی آگے آئے ہیں اور انہوں نے اس مقصد کے لئے اپنی ایک دن کی تنخواہ کا تعاون دیا۔ یہ رقم ایف سی ایف کے ذریعہ پہلے ہی سی ایس آر کے ذڑیعہ فراہم کرائی گئی 50 لاکھ روپے کے علاوہ ہے۔

پی آبی فیلڈ دفاتر سے ماخوذ

  • اروناچل پردیش: وزیراعلیٰ نے ،جن میں علامات ظاہرنہیں ہیں، ان کے ساتھ ہی ریاست میں داخل ہونے والے ہر فرد کے لئے کووڈ19کے پھیلاؤ کوروکنے کیلئے لازمی ٹیسٹ کا اعلان کیا۔
  • منی پور: منی پور سے تعلق رکھنے والی کولکاتہ کے پانچ نجی اسپتالوں میں کام کر رہیں 22 نرسیں ریاست پہنچ گئیں اور انھیں کورنٹین مرکز میں رکھا گیا ہے۔
  • میگھالیہ: میگھالیہ کے وزیر اعلی نے ٹوئٹ کیاکہ میگھالیہ کے شہر شلانگ میں احتیاطا ٹیسٹ میں ایک اور شخص میں کووڈ19 مثبت پایاگیا جو پہلے مریض کی طرح ایک ہی گھر میں کام کرتا ہے۔ وہ شخص صحت مند ہے اور کوئی علامت نہیں دکھ رہی ہے۔
  • میزورم: مرکزی وزیر صحت ڈاکٹر ہرش وردھن نے میزورم کے وزیر صحت کو ریاست کی کووڈ19سے پاک ہونے اور نئے اموات کی شرح (آئی ایم آر) میں 10 پوائنٹس کی کمی کے لئے مبارکباد پیش کی۔
  • ناگالینڈ: حکومت کا کہنا ہے کہ مریض کے نفاذ میں بیرونی اسپتال سے قبولیت سرٹیفکیٹ لگنے کے بعد ہی ریاست سے باہر سنگین غیرکووڈ مریضوں کے حوالے کی اجازت دی جاسکتی ہے۔ ناگالینڈ کے وزیر منصوبہ بندی کا کہنا ہے کہ ریاست کے باہر پھنسے ہوئے 33 افراد نے ای۔ پاس کے لئے درخواست دی ہے جبکہ 7015 نے حکومت سے ان کی واپسی کا انتظام کرنے کی درخواست کی ہے۔
  • سکم: وزیر اعلی نے گورنر شری گنگا پرساد سے ملاقات کی جس میں کورونا وائرس پھیلنے کی وجہ سے ریاست کی معیشت کی بحالی کے بارے میں تبادلہ خیال کیا گیا۔ کفایت شعاری کے اقدامات سے آگاہ کیا۔
  • تریپورہ: 11 دیگر ریاستوں میں پھنسے تریپورہ کے 17000 افراد نے ریاست میں واپسی کے لئے آن لائن پورٹل کے ذریعے رجسٹریشن کرایا ہے۔ نیز تریپورہ سے 33000 تارکین وطن کارکنان کو ان کی اپنی ریاستوں میں واپس بھیجا جائے گا۔
  • مہاراشٹر: ریاست میں کوووڈ 19 کے 19063 معاملات ہیں جن میں 1089 مزید افراد مثبت پائے گئے ہیں۔ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں وائرس کی وجہ سے 37 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں جس سے ریاست میں مرنے والوں کی مجموعی تعداد 731 ہوچکے ہیں۔ ممبئی میں گذشتہ 24 گھنٹوں میں شہر میں کورونا وائرس کے 748 نئے واقعات رپورٹ ہوئے جن کی تعداد 11967 ہے۔ مہاراشٹر بھر میں 714 پولیس اہلکار بھی مثبت پائے گئے ہیں۔
  • گجرات: آل انڈیا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کے ڈائریکٹر ڈاکٹر رندیپ گلیریا نے آج احمد آباد سول اسپتال میں ڈاکٹروں سے ملاقات کی تاکہ انہیں کوووڈ19 علاج و معالجے کے بارے میں مشورہ دیں۔ دریں اثنا، گجرات میں مجموعی طور پر ہلاکتوں کی تعداد 249 ہوگئی جبکہ مجموعی طور پر کوووڈ کے 19 مثبت معاملات رہے جو مہاراشٹر کے بعد ملک میں دوسرے نمبر پر ہیں۔
  • راجستھان: راجستھان میں کورونا وائرس کے 57 نئے معاملات رپورٹ ہوئے، جس سے رپورٹ ہونے والے کل معاملات 3636 ہو گئے ہیں۔ آج تک متاثرہ افراد میں سے 1916 صحت یاب ہوچکے ہیں اور 101 فوت ہوگئے ہیں۔
  • مدھیہ پردیش: ایم پی میں آج صبح 8 بجے تک 89 نئے معاملات رپورٹ ہوئے، جن میں کل رپورٹ ہونے والے معاملات 3341 ہو گئے۔ آج تک متاثرہ افراد میں سے 1349 صحت یاب ہوچکے ہیں اور 200 افراد انتقال کرگئے ہیں۔ تین دن تک ایم پی نے نئے مثبت کیسوں سے زیادہ بحالی رپورٹ کی ہے۔
  • چھتیس گڑھ: وزیر اعلی جناب بھوپش بھوگل نے وزیر اعظم شری نریندر مودی کو خط لکھا ہے اور کووڈ 19 وبائی امراض کے بعد معاشی بحران سے نمٹنے کے لئے 30000 کروڑ روپے کے پیکیج کا مطالبہ کیا ہے۔ 60 رپورٹ شدہ معاملات اور کوئی جانی نقصان نہ ہونے کے ساتھ، چھتیس گڑھ ہندوستان کی سب سے کم متاثرہ بڑی ریاستوں میں سے ایک ہے۔
  • کیرالہ: کیرالہ حکومت نے ریڈ زون علاقوں کے علاوہ دیگر ریاستوں سے واپس آنے والے لوگوں کو پاس جاری کرنا دوبارہ شروع کردیا ہے۔ ریاست کے سرحدی اضلاع کی چیک پوسٹوں پر بغیر پاس کے بہت سے کیرلاکے باشندے پھنس گئے ہیں۔ کوئٹم ضلع انتظامیہ نے ان 34 طلبہ کی شناخت کے لئے اقدامات شروع کردئے ہیں جو تامل ناڈو کے ریڈ زون ضلع تریوولور سے واپس آئے ہیں اور کورانٹین سے بچ رہے ہیں۔ مسقط، کویت اور دوحہ سے مزید تین پروازیں وندے بھارت مشن کے ذریعے آج رات کوچی پہنچیں گی۔ کل کووڈ 19 کا صرف ایک کیس 10بحالی کے ساتھ رپورٹ ہوا۔ ابھی بھی صرف 16 مریض زیر علاج ہیں۔
  • تمل ناڈو: ریاست نے شراب کی انسداد فروخت پر پابندی عائد کرنے کے ہائی کورٹ کے حکم کے خلاف سپریم کورٹ سے کارروائی کی۔ وزیراعلیٰ نے وزیر اعظم مودی پر زور دیا کہ وہ بجلی کے ایکٹ میں ترامیم کو عدم استحکام میں رکھیں۔ دبئی سے وندے بھارت مشن کے تحت ایئر انڈیا کی دو پروازیں 359 مسافروں کو لے کر آج صبح چنئی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اتری۔ ملائشیا سے ایک اور اڑان 168 مسافروں کے ساتھ آج تروچی انٹرنیشنل ایئرپورٹ پہنچے گی۔ کل تک کووڈ کے کل معاملات 9 600 9میںفعال 61 436161، اموات 40، صحت یات 5 1605 15ہوئے ہیں۔ اب تک 89 1589 معاملات کویم بڈو مارکیٹ سے منسلک ہیں۔
  • کرناٹک: ریاست میں آج تک 36 نئے کووڈ کیس رپورٹ ہوئے۔ بنگلور 12، شمال کرناٹک 7، دامن گیری 6، چترڈورگا، بیدر اور کنڑ میں تین اور تمکور اور وجئے پورہ میں ایک ایک معاملہ درج ہے۔ اب تک مجموعی طور پر مثبت معاملات 789 ہیں۔ اب تک 30 افراد ہلاک اور 379 افرادصحت یاب ہوئے ہیں۔
  • آندھرا پردیش: غیر قانونی شراب اور ریت کی نقل و حمل کو روکنے کے لئے ریاست خصوصی انفورسمنٹ بیورو قائم کرے گی۔ نمونے جانچنے کے بعد گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران، کووڈ کے45 نئے کیس رپورٹ ہوئے، 45 ڈسچارج ہوئے اور تین اموات کی اطلاع ملی۔ کل معاملات 1930 تک بڑھے ہیں۔ فعال معاملات 999، بحالی 887، اموات 44ہوئی ہیں۔وہ اضلاع جن میں سب سے زیادہ واقعات ہیں ان میں کرنول (553)، گنٹور (376)، کرشنا (338)، اننت پور (102) ہیں۔
  • تلنگانہ: آئی سی ایم آر نے کووڈ 19 کے مریضوں پر پلازما تھراپی ٹرائل کرنے کے لئے ای ایس آئی اسپتال اور گاندھی سے چھ ماہ کے لئے اجازت کا معاہدہ کیا۔ ریاست نے بغیر کسی ماسک پہنے عوامی مقامات پر گھومنے والے لوگوں پر ایک ہزار روپے جرمانہ عائد کرنا شروع کردیا۔ گاچی بوولی میں ایک تعمیراتی مقام پر تارکین وطن کارکنوں کے ایک گروپ نے یہ مطالبہ کیا کہ انہیں واپس آبائی مقام بھیج دیا جائے۔ اب تک کل مثبت معاملات 1132، فعال معامات 376، اموات 29،صحت یاب 727 ہوئے ہیں۔
  • چنڈی گڑھ:مرکزی علاقہ چنڈی گڑھ انتظامیہ نے ڈپٹی کمشنر، مرکزی علاقہ کو ہدایت دی ہے کہ وہ وصول کنندگان کے ساتھ ہم آہنگی پیدا کریں، تاکہ پھنسے ہوئے مزدور اور دیگر افراد جو اپنی ریاستوں میں جانے کے خواہشمند ہیں ،ضروری طبی جانچ پڑتال کے بعد ایسا کرسکیں۔ توقع کی جارہی ہے کہ قریب 5000 افراد، جن میں زیادہ تر این آر آئی اور چنڈی گڑھ کے رہائشی ہیں، ہوائی اڈے کے ذریعہ بیرون ملک سے لوٹ آئیں گے۔
  • پنجاب: حکومت پنجاب نے کووڈ19 وبائی امراض کے دوران کھانے پینے کی اشیاءاور دیگر ضروری گھریلو اشیاءکی حفاظت اور اس کو یقینی بنانے کے بارے میں ایڈوائزری جاری کی ہے۔ جنرل ایڈوائزری میں، حکومت پنجاب نے ہدایت دی ہے کہ دکان مالکان، ڈلیوری عملہ اور صارفین کو ہر وقت کپڑے کا ماسک پہننا چاہئے۔ اگرچہ گروسری کی خریداری یا آرڈر جمع کرنے میں تھوڑا سا وقت لگتا ہے تو بھی ماسک پہننا چاہئے۔ صارفین کے لئے مخصوص مشورے میں حکومت پنجاب نے مشورہ دیا ہے کہ وہ ضروری سامان خریدنے نکلتے وقت کپڑے کے تھیلے لے کر جائیں۔ استعمال کے فورابعد کپڑے کے تھیلے کو صابن اور پانی سے اچھی طرح دھونا چاہئے۔
  • ہریانہ: ہریانہ حکومت کے وعدے کے مطابق، وطن واپسی کے خواہشمند تارکین وطن مزدوروں کو اگلے 7 دن کے اندر 5000 بسوں اور 100 ٹرینوں کے ذریعے ریاستی حکومت اپنے گھروں میں مفت بھیجے گی۔ ان کی آمدورفت کا سارا خرچ ریاستی حکومت برداشت کرے گی۔ موجودہ منظرنامے میں، وزیر اعلی نے ضلعی انتظامیہ سمیت پوری سرکاری مشینری کو ہدایت دی ہے کہ لاک ڈا ؤن کے دوران ہر مہاجر مزدور کےلئے کھانے اور رہائش کے مناسب انتظامات ہونے چاہئیں اور کوئی بھی تارکین وطن مزدور یہ محسوس نہ کرے کہ وہ گھر سے میلوں دور ہے۔

م ن۔ ن ع

(U: 2437)



(Release ID: 1623206) Visitor Counter : 10