وزارتِ تعلیم

 مرکزی وزیر تعلیم نے متحدہ ضلع تعلیمی اطلاعاتی نظام  پلس (یو ڈی آئی ایس ای+) 20۔2019  سے متعلق رپورٹ جاری کی

رپورٹ سے  اسکولی تعلیم ، شاگرد استاد تناسب ، لڑکیوں کے داخلے  کی تمام سطحوں پر  جی ای آر میں بہتری ظاہر ہوتی ہے

Posted On: 01 JUL 2021 1:27PM by PIB Delhi

نئی دہلی،  یکم جولائی 2021،          مرکزی وزیر تعلیم  جناب رمیش پوکھریال نشنک نے آج  بھارت میں اسکولی تعلیم  کے لئے متحدہ ضلع تعلیمی اطلاعاتی نظام  پلس (یو ڈی آئی ایس ای+) 20۔2019  سے متعلق رپورٹ جاری کی۔

یو ڈی آئی ایس ای پلس رپورٹ 20۔2019 کے مطابق  اسکولی تعلیم  کی تمام سطحوں پر  مجموعی داخلے کے تناسب میں  19۔2018 کے مقابلے میں 20۔2019 میں بہتری آئی ہے۔ شاگرد  استاد تناسب (پی ٹی آر)  میں  اسکولی تعلیم کی تمام سطحوں پر بہتری آئی ہے۔

رپورٹ کے مطابق 20۔2019 میں  پرائمری سے ہائر سیکنڈری تک لڑکیوں کے داخلے   12.08 کروڑ سے زیادہ ہوئے 19۔2018 کے مقابلے میں  14.08 لاکھ کا  یہ ایک قابل قدر اضافہ ہے۔ 13۔2012 اور 20۔2019 کے دوران سیکنڈری اور ہائر سیکنڈری دونوں سطحو پر  صنفی  مساوات کے اشاریئے (جی پی آئی) میں بہتری آئی ہے۔

یو ڈی آئی ایس ای پلس  رپورٹ سے  گزشتہ سال کے مقابلے میں 20۔2019 میں  کام کرنے والی  بجلی کے کنکشن،  کام کرنے والے کمپیوٹروں، انٹرنیٹ سہولت والے  اسکولوں کی تعداد میں واضح اضافہ ظاہر ہوتا ہے۔

ہاتھ دھونے کی سہولت  والے اسکولوں کی تعداد میں بھی  کافی اضافہ ہوا ہے۔سال 20۔2019 میں بھارت میں 90 فیصد سے زیادہ اسکولوں میں ہاتھ دھونے کی سہولت تھی۔ جبکہ  13۔2012 میں  یہ تعداد محض 36.3 فیصد تھی۔

سال 19۔2018 میں اسکولوں سے آن لائن ڈاٹا  فراہم کرانے کا  یو ڈی آئی ایس ای پلس سسٹم تیار کیا گیا تھا جس کا مقصد  کاغذ پر  دستی طور پر  اعداد و شمار کے اندراج  اور  بعد میں بلاک یا ضلعی سطح پر اس کی فیڈنگ، جو کہ  13۔2012 سے یو ڈی آئی ایس ای  ڈاٹا کلیکشن سسٹم کا طریقہ تھا،   سے متعلق مسائل پر قابو پانا تھا۔ موجودہ پبلی کیشن سال 20۔2019 کے لئے  یو ڈی آئی ایس ای پلس ڈاٹا سےے متعلق ہے۔

متحدہ ضلع تعلیمی اطلاعاتی نظام  پلس (یو ڈی آئی ایس ای+) 20۔2019  سے متعلق رپورٹ کی جھلکیاں:

  • سال 20۔2019 میں پری پرائمری سے لیکر ہائر سیکنڈری تک   اسکولی تعلیم میں طلبا کی کل تعداد 26.45 کروڑ کو پار کرگئی۔ یہ تعداد 19۔2018 کے مقابلے میں  42.3 لاکھ زیادہ ہے۔
  • سال 20۔2019 میں مجموعی داخلے کے تناسب میں  اسکولی تعلیم کی ہر سطح پر   19۔2018 کے مقابلے میں بہتری آئی ہے۔
  • مجموعی داخلے کا تناسب   20۔2019 میں  سال 19۔2018 کے مقابلے میں  اپر پرائمری سطح پر بڑھ کر 89.7 فیصد  (87.7 فیصد سے) ، بنیادی سطح پر  97.8 فیصد (96.1 فیصد سے )، سیکنڈری سطح پر 77.9 فیصد (76.9 فیصد سے) اور ہائر سیکنڈری  سطح پر 51.4 فیصد (50.1 فیصد سے) ہوا ہے۔
  • مجموعی داخلے کا تناسب (جی ای آر)  میں 13۔2012 اور 20۔2019 کے درمیان سیکنڈری سطح پر تقریباً 10 فیصد  کی بہتری آئی ہے۔ سیکنڈری سطح پر جی ای آر 20۔2019 میں تقریباً 78 فیصد پر پہنچ گیا جبکہ 13۔2012 میں یہ 68.7 فیصد تھا۔
  • مجموعی داخلے کا تناسب (جی ای آر)  میں 13۔2012 اور 20۔2019 کے درمیان  ہائر سیکنڈری سطح پر  11 فیصد  سے زیادہ  کی بہتری آئی ہے۔  ہائر سیکنڈری سطح پر جی ای آر 20۔2019 میں 51.4 فیصد پر پہنچ گیا جبکہ 13۔2012 میں یہ 40.1 فیصد تھا۔
  • سال 20۔2019 میں اسکولی تعلیم  میں 96.87 لاکھ اساتذہ مقرر تھے۔ یہ تعداد   19۔2018 کے مقابلے میں تقریباً 2.57 لاکھ زیادہ ہے۔
  • شاگرد استاد تناسب (پی ٹی آر) میں  اسکولی تعلیم  کی تمام سطحوں پر بہتری آئی ہے۔
  • سال 20۔2019 میں  پرائمری  کے لئے پی ٹی آر  26.5 ہوا۔ اپر پرائمری اور سیکنڈری کے لئے پی ٹی آر 18.5 اور  ہائر سیکنڈری کے لئے پی ٹی آر 26.1 ہوا ہے۔
  • سال 20۔2019 میں  پرائمری  کے لئے پی ٹی آر  26.5 ہوا جبکہ 13۔2012 میں یہ 34.0 تھا۔ 20۔2019 میں  اپر پرائمری  کے لئے پی  ٹی آر 18.5 ہوا جبکہ  13۔2012 میں یہ 23.1 تھا۔
  • سال 20۔2019 میں سیکنڈری کے لئے پی ٹی آر  18.5 ہوا جبکہ سال  13۔2012 میں یہ 29.9 تھا۔
  • سال 20۔2019 میں  ہائر سیکنڈری کے لئے پی ٹی آر  26.1 ہوا جبکہ سال 13۔2012 میں یہ 39.2 تھا۔
  • معذور افراد کے لئے سبھی  کی تعلیم تک رسائی  کو یقینی بنانے کے لئے  پوری کوششیں کی گئی ہیں، جس سے  19۔2018 کے مقابلے میں دویانگ طلبا کے داخلے میں  6.52 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔
  • سال 20۔2019 میں پرائمری سے ہائر سکینڈری تک لڑکیوں  کے داخلے 12.08 کروڑ سے زیادہ ہیں جو کہ   سال 19۔2018 کے مقابلے میں 14.08 لاکھ زیادہ ہے۔
  • لڑکیوں کا مجموعی داخلے کا تناسب  20۔2019 میں  سال 19۔2018 کے مقابلے میں  اپر پرائمری سطح پر بڑھ کر 90.5 فیصد  (88.5 فیصد سے)،  بنیادی سطح پر  98.7 فیصد (96.7 فیصد سے )، سیکنڈری سطح پر 77.8 فیصد (76.9 فیصد سے) اور ہائر سیکنڈری  سطح پر  52.4 فیصد (50.8 فیصد سے) ہوا ہے۔
  • لڑکیوں کے داخلے کے تناسب   میں 13۔2012 اور 20۔2019 کے درمیان ہائر سیکنڈری سطح پر 13 فیصد  کا اضافہ ہوا ہے۔ سا؛ 13۔2012 میں یہ  39.4 فیصد تھا جو کہ 20۔2019 میں 52.4 ہوگیا ہے۔ یہ اضافہ لڑکوں کے مقابلے میں زیادہ ہے۔ ہائر سکینڈری سطح پر  لڑکوں کا جی ای آر  20۔2019 میں 50.5 فیصد ہے جو کہ 13۔2012 میں 40.8 فیصد تھا۔
  • سال 13۔2012 اور 20۔2019 کے درمیان سیکنڈری اور   ہائر سیکنڈری  دونوں سطحوں پر لڑکیوں کے جی ای آر  میں لڑکوں کے مقابلے زیادہ اضافہ ہوا ہے
  • سیکنڈری سطح پر  لڑکیوں خے جی ای آر میں  20۔2019 میں  9.6 فیصد  کا اضافہ ہوا جس سے یہ بڑھ کر 77.8 فیصد  ہوگیا جبکہ 13۔2012 میں یہ  68.2 فیصد تھا۔
  • بھارت میں 20۔2019 میں 80 فیصد  سے زیادہ اسکولوں میں کام کرنے والی بجلی  ہے جو کہ  گزشتہ سال 19۔2018 کے مقابلے میں 6 فیصد زیادہ ہے۔ کام کمپیوٹروں  والے اسکولوں کی تعداد  20۔2019 میں بڑھ کر 5.2 لاکھ ہوگئی جبکہ 19۔2018 میں یہ 4.7 لاکھ تھی۔
  • انٹرنیٹ سہولت والے اسکولوں کی تعداد  19۔2018 میں 2.9 لاکھ تھی جو کہ  20۔2019 میں بڑھ کر  3.36 لاکھ ہوگئی۔
  • سال 20۔2019 میں بھارت میں ہاتھ دھونے کی سہولت والے اسکول 90 فیصد سے زیادہ ہیں جبکہ سال 13۔2012 میں محض  36.3 فیصد تھے۔
  • سال 20۔2019 میں 82 فیصد سے زیادہ اسکولوں میں  طلبا کی طبی جانچ  کرائی گئی جو کہ  سال 19۔2018 کے مقابلے میں 4 فیصد زیادہ ہے۔ جبکہ سال 13۔2012 میں تقریباً 61.1 فیصد  اسکولوں میں ہی طبی جانچ کرائی گئی۔
  • بھارت میں 20۔2019 میں 84 فیصد سے زیادہ اسکولوں میں  لائبریری / ریڈنگ روم/ ریڈنگ کارنر  تھے جو کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں تقریباً 4 فیصد زیادہ ہیں جبکہ 13۔2012 میں تقریباً 69.2 فیصد اسکولوں میں لائبریری / ریڈنگ روم/ ریڈنگ کارنر  تھے۔

تفصیلات کے لئے دیکھیں لنک:

https://www.education.gov.in/hi/statistics-new?shs%20term%20node%20tid%20depth%20=394&Apply=Apply

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

ش ح۔ا گ۔ن ا۔

U-6097

                          



(Release ID: 1732092) Visitor Counter : 45