PIB Headquarters

کووڈ-19 سے متعلق پی آئی بی کا یومیہ بلیٹن یا خبرنامہ

Posted On: 10 AUG 2020 7:22PM by PIB Delhi


Coat of arms of India PNG images free downloadhttp://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image002PP7C.jpg

بھارت کی کوویڈ 19 بازیافت 15 لاکھ سے تجاوز کر گئی۔

آج کی سب سے زیادہ ایک دن میں 54.859 بازیافت شرح ، فعال مقدمات کی بازیافت 9 لاکھ سے زیادہ۔
کیس اموات کی شرح 2فیصد کی نئی سطح کو چھو رہی ہے۔

فعال معاملات میں کمی واقع ہوئی ہے اور اس وقت کل مثبت واقعات میں سے صرف 28.66 فیصد شامل ہیں۔

وزیر اعظم نے سیلاب سے متاثرہ ریاستوں کو بتایا کہ ہموار صورتحال کے پیش نظر ، بچاو ¿ کی کوششیں کرتے ہوئے ، ریاستوں کو یہ یقینی بنانا ہوگا تاکہ لوگ صحت کی تمام احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔

کووڈ-19 پر مشتمل پریس ریلیز ، جو 24 گھنٹوں میں جاری کی گئی ہیں، فیلڈ افسران سے حاصل کردہ معلومات اور پی آئی بی کے ذریعہ کئے گئے صحیح تجزیات پر مشتمل ہیں


http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image00504O0.jpg

Image

بھارت میں کووڈ۔19مریضوں کی صحتیابی تاریخی اونچائی 1.5 ملین پرپہنچی،شرح اموات کی تعداد میں ابھی تک کی سب سے کم شرح 2فیصد

ملک میں کووڈ۔19کے 15لاکھ سے بھی زیادہ مریض صحت یاب ہوچکے ہیں جو ایک ریکارڈ ہے۔ 15لاکھ 35ہزار743مریضوں کی صحتیابی زبردست ٹیسٹنگ ، جامع طریقوں سے مریضوں کی تلاش اور موثرطریقے سے ان کے علاج کی حکمت عملی سبب ممکن ہوئی ہے۔ایمبولینس کی بہترخدمات دیکھ بھال کے معیاری طریقوں پرتوجہ اور آکسیجن کے بندوبست کی بنیاد پریہ نتائج موصول ہوئے ہیں۔ایک ہی دن میں 24گھنٹے کے اندر54ہزار 859مریض صحت یاب ہوئے ہیں جو ابھی تک کی سب سے بڑی تعداد ہے۔ کووڈ19کے مریضوں کی صحتیابی کی شرح تقریبا70فیصد تک پہنچ گئی ہے۔صحتیاب ہونے والے مریضوں کی اس ریکارڈ تعداد سے یقین دہانی ہوئی ہےکہ جس قدربڑی تعداد میں ملک میں اس مرض سےمتاثرہوئے ہیں ، انھیں دیکھتے ہوئے کہاجاسکتاہے کہ ملک میں اس مرض کی وجہ ، عائد ہونے والاوزن یاکیس لوڈاوراس کے مقابلے میں موجود زیرعلاج معاملات دونوں میں تخفیف رونما ہوئی ہے اورفی الحال مجموعی متاثرہ مریضوں کے مقابلوں یہ محض 28.66فیصد کے بقدرہے۔ بھارت نے زیرعلاج مریضوں 634945کے مقابلے اپنے یہاں 9لاکھ افراد کو روبصحت کرپانے میں کامیابی حاصل کی ہے۔مرکز اورریاستی سرکاروں اورمرکز کے زیرانتظام علاقوں کی سرکاروں کی مربوط کوششوں کی وجہ سے جوانھوں نے مریضوں کی تلاش زبردست ٹیسٹنگ اور مستعدی کے ساتھ علاج کے ذریعہ کی ہیں ، شرح اموات میں لگاتارکمی آئی ہے۔ اب تک یہ شرح 2فیصد تک آگئی ہے اوراس میں لگاتارمزید کمی آتی جارہی ہے۔ مریضوں کی جلد تشخیص کی وجہ سے بھی زیرعلاج مریضوں کی شرح میں کمی آئی ہے۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644695

 

وزیر اعظم نے انڈمان اورنیکوبار جزیروں سے آبدوز کیبل رابطے کا آغاز کیا

وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے آج ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ انڈمن نیکوبر جزیروں کو سرزمین سے جوڑنے والی سب میرین آپٹیکل فائبر کیبل (او ایف سی) کا آغاز اور قوم کے لئے وقف کیا۔ مسٹر نریندر مودی نے کہا کہ اب رابطوں سے جزیروں میں لامتناہی مواقع میسر آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 2300 کلومیٹر طویل آبدوز کیبل بچھانا اور اسے طے شدہ ہدف سے پہلے مکمل کرنا قابل تعریف ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ آج چنائی سے پورٹ بلیئر ، پورٹ بلیئر سے لٹل انڈمان تک جزیروں کے ایک بہت بڑے حصے پر یہ سروس شروع ہوگئی ہے۔ اور پورٹ بلیئر سے سوراج جزیرہ۔ وزیر اعظم نے سمندر کے نیچے تقریبا 23 2300 کلومیٹر طویل کیبل بچھانے کی تعریف کی کیونکہ گہرے سمندر میں سروے کرنا ، کیبل کا معیار برقرار رکھنا اور خصوصی جہازوں سے کیبل بچھانا آسان کام نہیں ہے۔ وزیر اعظم نے کہا کہ سب میرین کیبل سستی اور بہتر رابطے اور ڈیجیٹل انڈیا کے تمام فوائد خصوصا آن لائن تعلیم ، ٹیلی میڈیسن ، بینکاری نظام ، آن لائن تجارت اور سیاحت کو فروغ دینے میں بہتری لانے میں اے اینڈ این کی مدد کرے گی۔

https/pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644702



انڈمان اور نکوبار جزیروں کو سب میرین کیبل رابطے کے افتتاح کے موقع پر وزیر اعظم کے خطاب کا متن

https//pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644697


وزیراعظم نے سیلاب کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے 6 ریاستوں کے وزرائے اعلیٰ کے ساتھ میٹنگ کی

وزیر اعظم شری نریندر نے آج چھ ریاستوں یعنی آسام ، بہار ، اترپردیش ، مہاراشٹرا ، کرناٹک اور کیرالہ کے وزرائے اعلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنس کے ذریعے ایک میٹنگ کی تاکہ ملک میں جنوب مغربی مانسون اور موجودہ سیلاب کی صورتحال سے نمٹنے کے لئے ان کی تیاری کا جائزہ لیا جاسکے۔ . وزیر اعظم نے تمام وسطی اور ریاستی ایجنسیوں کے مابین بہتر رابطہ کاری پر زور دیا کہ وہ سیلاب کی پیش گوئی کا مستقل نظام اور پیش گوئی اور انتباہی نظام کو بہتر بنانے کے لئے جدید ٹیکنالوجی کا وسیع استعمال کرسکیں۔ وزیر اعظم نے کہا کہ مصنوعی ذہانت جیسی جدید ٹیکنالوجیز کے استعمال کے لئے پائلٹ کی کوششیں جاری ہیں۔ مقامات کی پیش گوئی بہتر بنانے کےلئے ، جس کے لئے ریاستوں کو ان ایجنسیوں کو ضروری معلومات فراہم کرنا چاہئے اور مقامی کمیونٹیز کو بروقت انتباہ دینا چاہئے۔ وزیر اعظم نے اس بات پر بھی زور دیا کہ کووڈ صورتحال کے پیش نظر ، بچاو ¿ کی کوششیں کرتے ہوئے ، ریاستوں کو یہ یقینی بنانا ہوگا کہ لوگ صحت کی تمام احتیاطی تدابیر پر عمل کریں۔ جیسے چہرے کا ماسک پہننا ، ہاتھوں کی صفائی کرنا اور مناسب جسمانی فاصلہ برقرار رکھنا اور امدادی سامان میں متاثرہ لوگوں کے لئے ہاتھ دھونے / صاف کرنے اور چہرے کے ماسک کی فراہمی شامل ہونی چاہئے۔ اس سلسلے میں ، بزرگ افراد ، حاملہ خواتین اور باہم مرض کے لوگوں کے لئے خصوصی دفعات کی جائیں۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644757


ای پی ایف او نے کووڈ۔ انیس وبا کے دوران امنگ کے ذریعہ بغیر کسی رکاوٹ کے خدمات کی فراہمی کو یقینی بنایا

ایمپلائز پروویڈنٹ فنڈ آرگنائزیشن (ای پی ایف او) کے صارفین کے لئے، نیو ایج گورننس (یو ایم اے این جی ) کے لئے یونیفائیڈ موبائل ایپلی کیشن بہت متاثر ہوا ہے ، جس سے وہ کووڈ وبائی امراض کے دوران خدمات کو اپنے پریشانیوں سے آزادانہ طور پر اپنے گھروں کے آرام سے استعمال کرسکتے ہیں۔ فی الحال ایک پی ایف ممبر اپنے موبائل فون پرای ایم ایف ایپ کی مدد سے ای پی ایف او کی 16 مختلف خدمات تک رسائی حاصل کرسکتا ہے۔ عمانگ ایپ پر ، ایک ممبر دعویٰ ، دعوی کو ٹریک کرسکتا ہے اور اٹھائے گئے دعوے کی صورتحال جان سکتا ہے۔ اپریل سے جولائی 2020 ءمیں کوویڈ 19 کے وبائی امراض کے دوران ، عمانگ ایپ کے ذریعے کل 11.27 لاکھ دعوے آن لائن دائر کیے گئے تھے۔ امنگ نے اراکین کوای پی ایف او کی خدمات تک رسائی میں کووڈ19 وبائی بیماری کے ذریعے نقل و حرکت کی پابندی پر قابو پایا ہے اور اس طرح ای پی ایف او کے دفاتر کا جسمانی طور پر دورہ کرنے کی ضرورت کو کم کردیا ہے۔ کوویڈ۔19 وبائی بیماری کے دوران اپریل سے جولائی 2020 تک ، ویو پنشنر پاس بک سروس پر 18.52 لاکھ اے پی آئی ہٹ موصول ہوئی تھیں جبکہ جیون پرامان پتر خدمات کو اپ ڈیٹ کرنے پر 29773 اے پی آئی ہٹ ریکارڈ کی گئیں۔
https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644807


اسٹریٹیجک اہمیت کے حامل اور سرحدی علاقوں میں واقع 354 گاؤں میں حکومت موبائل کنیکٹیویٹی فراہم کریگی: روی شنکر پرساد

الیکٹرانکس اینڈ آئی ٹی ، مواصلات اور قانون و انصاف کے وزیر شری روی شنکر پرساد نے کہا کہ حکومت ہند اسٹریٹجک اہمیت کے حامل دور دراز ، مشکل ، سرحدی علاقوں میں رابطے کی فراہمی کے لئے ترجیحی اقدامات اٹھا رہی ہے تاکہ بہتر معیار کو یقینی بنایا جاسکے۔ لوگوں کے ساتھ ساتھ ان شعبوں میں کام کرنے والے افراد کی زندگی کی۔ وزیر موصوف نے بتایا کہ ملک کے اسٹریٹجک ، دور دراز اور سرحدی علاقوں میں ڈھیر سارے 354 دیہاتوں کے لئے ٹینڈر کو حتمی شکل دے دی گئی ہے اور ریاست بہار ، راجستھان ، کے ریاستوں کے 144 دیہاتوں ، جموں و کشمیر اور لداخ کے مرکزی خطوں میں اس پر عمل درآمد جاری ہے۔ اترا کھنڈ ، ہماچل پردیش اور گجرات کے دوسرے ترجیحی علاقے۔ انہوں نے بتایا کہ ان دیہاتوں کو موبائل پر سرحدی علاقے کے رابطے کے لئے حکمت عملی کے ساتھ منتخب کیا گیا ہے۔ شری پرساد نے بتایا کہ ان دیہاتوں کے کام شروع ہونے کے بعد ، موبائل رابطے کے لئے جموں و کشمیر ، لداخ کے مرکزکے زیرانتظام علاقے میں کوئی پردہ نہیں کیا جائے گا۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644795


بہت چھوٹے ،چھوٹے اوردرمیانی صنعت کاروں کو دئے گئے سرکار کے حالیہ راحتی اقدامات سے معیشت کی رفتار میں تیزی آئے گی: جناب نتن گڈکری

شری نتن گڈکری وزیر مائیکرو ، چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں نے کہا کہ ایم ایس ایم ایز کی اسکیم ، فنڈ آف فنڈز ، چیمپئنز پورٹل کی ایم ایس ایم ای کو توسیع شدہ کریڈٹ ، یقینی طور پر معیشت کے پہیے کو تیز کرے گی جو مقابل میں لاک ڈاو ¿ن کی وجہ سے سست ہوگئی تھی۔ وبائی یہ بات انہوں نے آج منعقدہ ورچوئل ایم ایس ایم ای کانفرنسک سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے تمام اسٹیک ہولڈرز سے اپیل کی کہ وہ ہر طرح کے خوف اور نفی سے دور رہیں اور یقین دہانی کرائی کہ حکومت ملک کو ایک اعلی معاشی طاقت بنانے کے لئے ہر ممکن کوشش کر رہی ہے۔ شری گڈکری نے مزید بتایا کہ لگ بھگ 50 لاکھ روپے کے قرض ایم ایس ایم ایز کو 120000 کروڑ روپئے تقسیم کیے گئے ہیں۔ امدادی پیکیج میں 3 لاکھ کروڑ کا اعلان۔ تاخیر سے ادائیگیوں کے مسئلے کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تمام وزارتوں ، محکموں اور پی ایس یو کو 45 دن کے اندر ایم ایس ایم ایز کے زیر التواءبلوں کو ختم کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644760

مرکزی وزیر دفاع ، نائب صدر جمہوریہ کے عہدے کے تین سال کے واقعات پر مشتمل ایک کتاب کا اجرا کریں گے،مرکزی وزیر جناب پرکاش جاوڈیکر اس کتاب کا ای-شکل میں اجرا کریں گے

نائب صدر ، شری ایم وینکیا نائیڈو کے دفتر میں تیسرے سال پرانی کتاب ، جس کا عنوان ہے ’رابطہ قائم کرنا ، بات چیت کرنا ، بدلنا‘ کل مرکزی دہلی کے وزیر دفاع شری راج ناتھ سنگھ کے ذریعہ دہلی میں اپا-راشٹرپتی نیواس میں جاری کیا جائے گا۔ شری نائیڈو نے 11 اگست کو اپنے عہدے میں تین سال پورے کرلئے ہیں۔ کتاب کا الیکٹرانک ورڑن (ای بک) مرکزی وزیر اطلاعات و نشریات ، مسٹر پرکاش جاوڈیکر کے ذریعہ شروع کیا جائے گا۔ 250 سے زائد صفحات پر مشتمل کتاب کو وزارت اطلاعات و نشریات کی اشاعت ڈویڑن نے منظرعام پر لایا ہے۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644742


وزیرخزانہ نے قومی بنیادی ڈھانچہ پائپ لائن کے لئے آن لائن ڈیش بورڈ کا آغازکیا

خزانے اورکارپوریٹ امورکی وزیرمملکت محترمہ نرملاسیتارمن نے آج ویڈیوکانفرنسنگ کے ذریعہ بنیادی ڈھانچے کی قومی پائپ لائن کے ڈیش بورڈ کا افتتاح کیا۔آن لائن ڈیش بورڈ میں ان سبھی متعلقہ فریقوں کے لئے ان اسٹاپ حل فراہم کیاگیاہے جو نئے بھارت میں بنیادی ڈھانچے کے پروجیکٹوں کے بارے میں معلومات حاصل کرناچاہتے ہیں۔ اس ڈیش بورڈ کی میزبانی انڈیا انویسٹ منٹ گرڈ (آئی آئی جی ) (www.indiainvestmentgrid.gov.in) کررہاہے۔آئی آئی جی ایک آن لائن فعال پلیٹ فارم ہے جس پر ملک میں سرمایہ کاری کے موقعوں کی تازہ ترین اور بروقت جانکاری دی جاتی ہے۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644812


ہندوستانی مصنوعات دیگر ملکوں میں باہمی بنیاد پر مناسب رسائی کے قابل ہیں

شری پیوش گوئیل ، وزارت تجارت و صنعت نے آج پانچ روزہ طویل ورچوئل ایف ایم سی جی سپلائی چین ایکسپو ، 2020 کے پہلے ایڈیشن کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر بات کرتے ہوئے ، مسٹر گوئل نے کہا کہ ہمیں پوسٹ کوویڈ 19 کی وبائی حقیقت کو قبول کرنا ہے۔ دنیا بدل چکی ہے۔ دنیا کوویڈ کے اس تجربے سے سبق سیکھے گی۔ مسٹر گوئل نے کہا کہ ہم اپنی صنعتوں کی حفاظت کرنا چاہتے ہیں تاکہ انہیں منصفانہ کھیل اور رسائی حاصل ہوسکے۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستان دنیا کے ساتھ مساوی ، منصفانہ اور باہمی تجارت کا خواہاں ہے۔ ہم بہت سارے ممالک اور خطوں کے ساتھ متوازن تجارت کی طرف گامزن ہیں۔ یہی ایک وجوہ ہے جس کی وجہ سے ہندوستان نے آر سی ای پی میں شامل نہ ہونے کا انتخاب کیا کیونکہ یہ مکمل طور پر ناہموار انتظام تھا۔ ممالک کو مرحلہ وار انداز میں ہندوستان سے سورسنگ پر غور کرنا چاہئے ، ان کی مصنوعات کو ہندوستان میں تیار کرنا چاہئے اور پھر اس بڑے تجارتی مواقع کو گھیرنا چاہئے جس میں 1.3 بلین ہندوستانی پیش کرتے ہیں۔ . شری گوئل نے ہندوستانی صنعت کو ایک ساتھ چلنے ، ایک دوسرے کا ساتھ دینے اور آنے والے نسلوں کے بہتر مستقبل کے لئے ایک خوشحال ہندوستان کی طرف کام کرنے کی دعوت دی۔

https://pib.gov.in/PressReleseDetail.aspx?PRID=1644817


پی آئی بی فیلڈ دفاتر سے ماخوذ


پنجاب: وزیراعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ کی ہدایت پر ، میڈیکل ایجوکیشن اینڈ ریسرچ ڈیپارٹمنٹ نے ستمبر 2020 کے دوران ریاست میں ہر لیب میں روزانہ 1000 ٹیسٹ کے ساتھ روزانہ کی جانچ کی صلاحیت 4000 ٹیسٹ کرنے کی غرض سے چار کوویڈ وائرل ٹیسٹنگ لیبز قائم کی ہیں۔ . اس کے علاوہ ، پٹیالہ ، امرتسر اور فرید کوٹ کے تین میڈیکل کالجوں میں کل وائرل ٹیسٹنگ کی صلاحیت بھی 31 اگست تک ہر کالج میں ہر روز 5000 ٹیسٹ تک بڑھا دی جائے گی۔

مہاراشٹر: اتوار کے روز بدترین متاثرہ مہاراشٹر میں 390 اموات کی اطلاع ملی ، جو اس وبائی امراض کے پانچ مہینوں میں اب تک کی سب سے زیادہ ہے ، جبکہ دوسرے دن بھی ریاست میں 12000 سے زیادہ کوویڈ 19 واقعات کا اضافہ ہوا ہے۔ ریاست میں مجموعی طور پر ہلاکتوں کی تعداد 17757 تھی۔ 12،248 مقدمات کے اضافے کے ساتھ ، مجموعی طور پر کوویڈ 19 کی تعداد 5.15 لاکھ کیسز تک پہنچ گئی ہے۔ اگرچہ چاندی کے استر میں ، ریاست میں روزانہ اضافے کے مقابلے میں زیادہ خارج ہونے والے اخراجات کی اطلاع ملی - اتوار کے روز 13348 افراد کو چھٹی دی گئی ، جس کی وجہ سے وہ 551710 کو خارج ہوئے۔

گجرات: یہاں تک کہ جب احمد آباد میں کوویڈ کے 19 کیس مستحکم ہورہے ہیں ، ایسے مریضوں کی تعداد میں اضافہ ہورہا ہے جو آئی سی یو کی دیکھ بھال اور وینٹیلیٹر کی مدد کرتے ہیں۔ شہر میں آئی سی یو بیڈز کے 60فیصد اور وینٹی لیٹر والے 70.6فیصد آئی سی یو بیڈ پر قبضہ کیا گیا ہے۔ دریں اثنا ، گجرات حکومت نے ریاست میں عوامی مقامات پر چہرہ ماسک نہ پہننے کے جرمانے میں پہلے اعلان کردہ 500 روپے سے بڑھاکر 1000 روپے کردی ہے۔

راجستھان: ریاست میں پیر کی صبح ساڑھے دس بجے تک 8 59 نئے واقعات رپورٹ ہوئے ، جس سے ریاست کی کووڈ19 کی تعداد 53095 ہوگئی۔ راجستھان محکمہ صحت کے بلیٹن کے مطابق ، پیر کو چھ اموات کی اطلاع ملی ، جس میں ہلاکتوں کی تعداد 795 ہوگئی۔

مدھیہ پردیش: ریاست کو زیادہ ہائی انحصار یونٹ (ایچ ڈی یو) اور انتہائی نگہداشت یونٹ (آئی سی یو) کے بستروں اور آکسیجن والے بیڈوں کی ضرورت ہے کیونکہ گذشتہ سات ہفتوں میں غیر مقفل مدت کے دوران ریاست میں کوویڈ 19 کے معاملات خطرناک حد تک بڑھ چکے ہیں۔ ایم پی کے پاس آج تک 9009 فعال مقدمات ہیں۔ کرونا کی وبائی بیماری کے پیش نظر ، ریاست میں گنیش اتسو ، موہررم اور جنم بھسمی جیسے آنے والے تہوار عوامی طور پر نہیں منائے جائیں گے۔ یوم آزادی بھی محدود پیمانے پر منایا جائے گا۔

گوا: ریاست میں اتوار کو ایک دن میں سب سے زیادہ 506 واقعات ریکارڈ کیے گئے۔ چونکہ گوا کا واحد تنہا کوویڈ 19 اسپتال ان اہلیت کے پیچھے ہے جس کی وجہ یہ ہے کہ حکومت نے پنڈا میں سب ڈسٹرکٹ ہسپتال کو ریاست کا دوسرا مکمل کوڈ ہسپتال نامزد کیا ہے۔

اروناچل پردیش: اروناچل پردیش میں ، کوویڈ 19 سے گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 52 افراد بازیاب ہوئے جبکہ اتوار کو 38 نئے معاملات کا پتہ چلا۔ ریاست میں فی الحال 670 فعال مقدمات ہیں۔ مشرقی کامنگ ضلع سے 38 نئے کیسوں میں سے 11 معاملات کا پتہ چلا۔

منی پور: منی پور میں ، اس وقت 996 افراد سرکاری سنگرودھ میں ہیں ، 1580 کمیونٹی سنگرودھ میں اور 419 ادائیگی شدہ قرنطین سہولیات لے رہے ہیں۔

ناگالینڈ: ناگالینڈ میں ، مجموعی طور پر 2781 مثبت واقعات میں سے 1226 معاملات مسلح افواج کے ہیں ، 1072 مقدمات واپس آنے والوں سے ہیں ، 196 مقدمات فرنٹ لائن ورکرز سے ہیں ، 233 معاملات ٹریس رابطوں کے ہیں اور 54 دیگر معاملات ہیں۔

میزورم: گزشتہ روز میزورم میں 12 کوویڈ 19 تازہ کیسز کا پتہ چلا۔ ریاست میں کوویڈ 19 کے مجموعی طور پر 620 واقع ہوئے جن میں سے 322 فعال کیس ہیں۔

سکیم: سکیم میں ، آج کوویڈ 19 کے 44 نئے کیسز کا پتہ چلا۔ آج تک مجموعی طور پر 510 کوویڈ 19 مریض ٹھیک اور چھٹ گئے تھے۔ اور ریاست میں سرگرم مقدمات کی تعداد 399 ہے۔

کیرالہ: ریاستی حکومت نے بارشوں میں ہونے والے نقصانات پر قابو پانے کے لئے مرکز سے ریاست کو خصوصی معاشی پیکیج فراہم کرنے کی درخواست کی ہے۔ وزیراعلیٰ پنارائے وجیان نے یہ درخواست وزیر اعظم کی طرف سے سیلاب سے متاثرہ ریاستوں کے وزیراعلیٰ کے ساتھ ملاقات کی صورتحال کے جائزہ لینے کے لئے کی۔ ملبے کے تودے گرنے سے ہلاکتوں کی تعداد 49 ہوگئی ہے اور ملبے سے مزید لاشوں کی بازیافت ہوئی ہے۔ وایاناد میں ، آج کویوڈ۔19 کے لئے مزید 25 ٹیسٹ کیے گئے ہیں۔ آج کویوڈ کی دو اموات ہوئیں۔ کل کیرالہ میں کل 1211 کیس رپورٹ ہوئے۔ ریاست بھر میں ابھی تک 12347 مریض زیر علاج ہیں اور 149357 افراد مشاہدے کے تحت ہیں۔

تمل ناڈو: پڈوچیری یوٹی میں 245 تازہ ترین کیس اور دو اموات کی اطلاع ملی ہے ، جس کے کل معاملات 5624 ، فعال کیس 2180 ، اور پڈوچری یوٹی میں پیر کو اموات 89 ہوگئیں۔ 10 سے زیادہ تمل ناڈو کے ایم ایل اے نے کوویڈ 19 پر معاہدہ کیا ہے۔ تقریبا آٹھ مہینوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے ساتھ ہی ، ممبران اسمبلی حلقہ کے کام سے احتیاطی تدابیر متوازن رکھتے ہیں۔ تمل ناڈو میں کلاس 10 کے نتائج کا اعلان ، تمام طلباءپاس ہوچکے ہیں۔ اسکولوں کے داخلی تشخیص کے ساتھ ساتھ حاضری کی بنیاد پر نتائج تیار کیے گئے تھے۔ اتوار کے روز 5994 نئے کیسز ، 6020 بازیافت اور 119 اموات کی اطلاع ملی۔ کل معاملات: 296901؛ فعال مقدمات: 53336؛ اموات: 4927۔

کرناٹک: وزیر اعلی اور دوسرے سینئر وزرا نے سیلاب کی صورتحال پر وزیر اعظم نریندر مودی کے ساتھ گفتگو میں حصہ لیا۔ ریاستی حکومت نے مرکزی حکومت سے 4000 کروڑ روپئے کی مالی مدد کی درخواست کی۔ پرائمری وزیر تعلیم نے آج ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیا ہے اور کوڈ بحران کے درمیان حال ہی میں 71.80فیصد طلباءامتحانات میں کامیاب ہوئے ہیں۔ کرناٹک روڈ سیفٹی اتھارٹی کے مطابق کوڈ لاک ڈاو ¿ن کے دوران سڑک حادثات اور اموات میں 48 فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ اتوار کے روز بنگلورو شہر میں کوڈ مثبت معاملات میں 2000 نمبر کم ہوئے۔ ریاست میں کل 85 5985؛ نئے کیسز ، 4670 ڈسچارج اور 107 اموات کی اطلاع ملی۔ کل معاملات: 178087؛ فعال مقدمات: 80973؛ کل اموات: 3198۔

آندھرا پردیش: وجیا واڑہ کے ایک کوویڈ کیئر سنٹر میں آگ لگنے والے حادثے کے بعد ریاست بھر کے ضلعی کلکٹر حادثات سے بچنے کے لئے کوویڈ 19 کے نگہداشت مراکز میں آگ سے حفاظت کے بارے میں اطلاعات مانگ رہے ہیں جس میں 10 افراد ہلاک ہوگئے۔ ریاست نے کوویڈ 19 کیئر ہسپتالوں میں طبی خدمات کی فراہمی کے لئے 30887 آسامیوں پر عملے کی بھرتی کی منظوری دے دی ہے۔ کورونا وائرس کے پھیلاو ¿ کو روکنے کے اقدام کے طور پر ، گنٹور ضلعی حکام نے آج سے شروع ہونے والے تین دن کے لئے مچیرلا شہر میں مکمل لاک ڈاو ¿ن نافذ کردیا ہے۔ اتوار کے روز گنٹور ضلع میں کوویڈ میں مزید 881 واقعات ریکارڈ ہوئے جن کی تعداد 21718 ہے۔ کل اے پی میں 10820 نئے کیسز ، 9097 ڈسچارج اور 97 اموات کی اطلاع ملی۔ کل معاملات: 227860؛ فعال معاملات: 87112؛ اموات: 2036۔

تلنگانہ: تلنگانہ کیپیٹل ریجن میں کوویڈ۔19 کی تعداد کم ہے ، لیکن اضلاع میں اس کی تیزی ہے۔ ریاست میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 1256 نئے معاملات ، 1587 کی بازیابی اور 10 اموات کی اطلاع؛ 1256 مقدمات میں سے 389 مقدمات جی ایچ ایم سی سے رپورٹ ہوئے۔ کل معاملات: 80751؛ فعال مقدمات: 22528؛ اموات: 637؛ ڈسچارجز: 57586۔

 

FACT CHECK

http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image007UEW0.jpg

 

    • ImageImage

*****

(م ن ۔ ک ا)

U-4490

 



(Release ID: 1645467) Visitor Counter : 5