وزیراعظم کا دفتر

وزیر اعظم نےمرکز کے ذریعہ مالی اعانت سے چلنے والےتکنیکی اداروں کے ڈائریکٹرز کے ساتھ بات چیت کی

وزیر اعظم نے جدید تکنیکی حل فراہم کرنے کے لئے نوجوان جدت کاروں کی کوششوں کو سراہا

تعلیم کے ان ماڈلز کو اختیار کرنے کی ضرورت ہے جو لچکدار ، ہموار اور سیکھنے والوں کی ضروریات کے عین مطابق ہوں: وزیر اعظم

ہمارےتکنیکی اور تحقیق و ترقی کے ادارے آنے والی دہائی میں 'بھارت کے ٹیک ایڈ' بننے میں اہم کردار ادا کریں گے: وزیر اعظم

وزیر اعظم نے تحقیق و ترقی کے اداروں میں جاری کام ،خاص کر کووڈ سے متعلق امورکے بارے میں بھی واقف کرایا

Posted On: 08 JUL 2021 2:07PM by PIB Delhi

 

نئی دہلی ، 08 جولائی: وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے 8 جولائی 2021 کو ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے مرکزی حکومت کے ذریعہ  مالی اعانت سے چلنے والے تکنیکی اداروں کے ڈائریکٹرز کے ساتھ بات چیت کی۔ 100 سے زائد اداروں کے سربراہان نے وزیر اعظم کے ساتھ اس اہم ترین  کانفرنس میں تبادلہ خیال کیا۔

وزیر اعظم نے کووڈ کے بعد درپیش چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لئے ان اداروں کے ذریعہ کی گئی تحقیق اور ترقیاتی (آر اینڈ ڈی) کاموں کی تعریف کی۔ انہوں نے فوری تکنیکی حل فراہم کرنے کے لئے نوجوان جدت کاروں کی کاوشوں کو بھی سراہا۔

Collage-3M0BE.jpg

وزیر اعظم نے کہا کہ بدلتے ہوئے ماحول اور ابھرتے ہوئے چیلنجوں سے  مقابلہ کرنے نیز ہر طرح کے حالات سے ہم آہنگ ہونے کے لئے اعلی تعلیم کے ساتھ ساتھ  تکنیکی تعلیم کوبھی اختیار کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس کے لئے اداروں کو ضرورت پڑتی ہے کہ وہ ملک اور معاشرے کی موجودہ اور مستقبل کی ضروریات کے مطابق متبادل اور جدید ماڈلز تیار کریں۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ ہمارے اعلی تعلیمی اور تکنیکی اداروں کو چوتھے صنعتی انقلاب کو مدنظر رکھتے ہوئے اپنے نوجوانوں کورکاوٹوں  کو دور کرنے کا اہل بنانےاور تبدیلیوں کے لئے تیار کرنے کی ضرورت ہے۔

وزیر اعظم نے ایسے تعلیمی ماڈل کو اختیار کرنے کی ضرورت پر زور دیا جو لچکدار ، ہموار ، اور سیکھنے والوں کی ضروریات کے عین مطابق مواقع فراہم کرنے کے اہل ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کے تعلیمی ماڈلز کی بنیادی اقدار رسائی ، کم لاگت ، مساوی اور معیاری ہونی چاہئے۔

Collage1L29D.jpg

وزیر اعظم نے پچھلے کچھ سالوں میں اعلی تعلیم میں اندراج کے مجموعی تناسب (جی ای آر) میں ہونے والی بہتری کی ستائش کی اور اس بات پر زور دیا کہ اعلی تعلیم کو ڈیجیٹلائزیشن اوراندراج کے مجموعی تناسب  ( جی ای آر)کو بہتر کرنے میں بڑا کردار ادا کرسکتاہے ، اور طلباء کو اچھے معیار اور سستی تعلیم تک آسان رسائی ہوگی۔ وزیر اعظم نے ڈیجیٹلائزیشن کو فروغ دینے کے لئے اداروں کی جانب سے اٹھائے گئے مختلف اقدامات جیسے آن لائن بیچلر اور ماسٹر ڈگری کے  پروگراموں کی بھی تعریف کی۔

وزیر اعظم نے مزید کہا کہ ہمیں ہندوستانی زبانوں میں تکنیکی تعلیم کا ایک ماحولیاتی نظام تیار کرنے اور عالمی معیار کے رسائل و جرائد کو علاقائی زبانوں میں ترجمہ کرنے کی ضرورت ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ 'آتم نربھر بھارت' (خود کفیل ہندوستان) کی مہم آئندہ 25 برسوں میں ہندوستان کے خوابوں اور آرزوؤں کی اساس بنے گی جب ہم آزادی کا صد سالہ جشن منائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تکنیکی ، آر اینڈ ڈی ادارے آئندہ دہائی میں ایک اہم کردار ادا کریں گے ، جسے "انڈیا کا ٹیک ایڈ" بھی کہا جاتا ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ ہمیں تعلیم ، حفظان صحت ، زراعت ، دفاع ، اور سائبر ٹکنالوجی کے شعبوں میں مستقبل کے حل کی تیاری پر توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

وزیر اعظم نے زور ڈالتے ہوئے کہا  کہ یہ ضروری ہے کہ اعلی تعلیمی اداروں میں اچھے معیار کے انفراسٹرکچر موجود ہوں تاکہ یہ یقینی بنایا جا سکے کہ مصنوعی ذہانت، اسمارٹ ویری ایبل، ریالٹی سسٹم کے فروغ ، اور ڈیجیٹل اسسٹنٹس سے وابستہ مصنوعات عام آدمی تک پہنچ سکیں۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ہمیں سستی ، ذاتی نوعیت ، اور مصنوعی ذہانت سے چلنے والی تعلیم پر بھی بہت زیادہ توجہ دینی چاہئے۔

بات چیت کے دوران ، آئی آئی ایس سی بنگلور کے پروفیسر گووندن رنگاراجن ، آئی آئی ٹی بمبئی کے پروفیسر سبھاسیس چودھری ، آئی آئی ٹی مدراس کے پروفیسر بھاسکر رامامورتی ، اور آئی آئی ٹی کانپور کے پروفیسر ابھے کراندیکر نے وزیر اعظم کو پریزنٹیشن پیش کیا اور مختلف  طرح کے جاری منصوبوں ، ادارہ جاتی  کاموں نیزملک میں کئے جانے والے نئے نئے  تحقیقی کاموں  پر بھی روشنی ڈالی۔  وزیر اعظم کو کووڈ سے متعلق تحقیق کے بارے میں بھی بتایا گیا جس میں جانچ کے لئے نئی تکنیک تیار کرنے ، کووڈ ویکسین تیار کرنے کی کوششوں ، دیسی آکسیجن کنسنٹریٹرس ، آکسیجن جنریٹرز ، کینسر سیل تھیراپی ، ماڈیولر ہسپتالوں ، ہاٹ سپاٹ کی پیشن گوئی  کرنے کے طریقہ کار، وینٹیلیٹروں کی تیاری کے بارے میں بھی باخبر کیا گیا ۔ روبوٹکس ، ڈرونز ، آن لائن تعلیم ، بیٹری ٹکنالوجی کے شعبوں میں کی جانے والی کوششیں سے بھی وزیراعظم کو مطلع کیا گیا۔ وزیر اعظم کو معیشت اور ٹکنالوجی کی بدلتی نوعیت کے مطابق نئے تعلیمی نصاب ، خاص طور پر آن لائن کورسز کے بارے میں بھی بتایاگیا۔

اس بات چیت کے دوران مرکزی وزیر تعلیم اور وزیر مملکت برائے تعلیم بھی موجود تھے۔

*****************

 

ش ح - س  ک

U.No. : 6325



(Release ID: 1733692) Visitor Counter : 75