صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت

کووڈ-19 کے کلینک جاتی انتظامیہ کے بارے میں تازہ ترین جانکاری

ہسپتالوں میں کووڈ مریضوں کے داخلے کے لئے قومی پالیسی کومزید مریض پر مرکوز بنانے کے لئے نظرثانی کی  گئی

کووڈ-19 وائرس کا مثبت ٹیسٹ، اب کووڈ صحت سہولت میں داخلہ کے لئے لازمی نہیں ہے

کسی بھی مریض کو کسی بھی حالت میں خدمات سے انکار نہیں کیا جائے گا

Posted On: 08 MAY 2021 2:31PM by PIB Delhi

نئی دہلی 8 مئی 2021: ریاستوں کو ایک اہم ہدایت نامہ میں ، وزارت صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت نے کووڈ مریضوں کو کووڈ سہولیات کی مختلف زمروں میں داخلے کے لئے قومی پالیسی میں ترمیم کی ہے۔ اس مریض مرکوز اقدام کا مقصد کووڈ-19 سےمتاثرمریضوں کے فوری ، موثر اور جامع علاج کو یقینی بنانا ہے۔

مرکزی حکومت کی ہدایت کے مطابق ، تمام ریاستوں اورمرکزکے زیرانتظام علاقوں کو ، مرکزی حکومت، ریاستی حکومتیں اور مرکزکےزیرانتظام علاقوں کے تحت ہسپتال، بشمول نجی اسپتال (ریاستوں اور مرکزکےزیرانتظام علاقوں میں)، کووڈ مریضوں کا علاج و انتظام کرتے ہوئے درجہ ذیل امور کو یقینی بنائیں گے:

  • کووڈ صحت کی سہولت میں داخلہ کے لئے، کووڈ- 19وائرس کے پوزیٹیو  ٹسٹ کی ضرورت لازمی نہیں ہے۔ جیسا بھی کیس  ہوگا،  اسی کے مطابق اسے سی سی سی ، ڈی سی ایچ سی یا ڈی ایچ سی کے متعلقہ وارڈ میں مقدمہ داخل کیا جائے گا ۔
  • کسی بھی مریض کو کسی بھی حالت میں خدمات سے انکار نہیں کیا جائے گا۔ اس میں آکسیجن یا ضروری ادویات جیسی دوائیں بھی شامل ہیں یہاں تک کہ اگر مریض کا تعلق مختلف شہر سے بھی ہو۔
  • کسی بھی مریض کو اس بنیاد پر داخلے سے انکار نہیں کیا جائے گا کہ وہ ایک درست شناختی کارڈ فراہم کرنے کے قابل نہیں ہے جس کا تعلق اس شہر سے نہیں ہے جہاں اسپتال واقع ہے۔
  • ہسپتال میں داخلہ ضرورت پر مبنی ہونا چاہئے۔ اس بات کو یقینی بنانا چاہئے کہ بستروں پر ایسے افراد قابض نہیں ہیں جنہیں اسپتال میں داخل کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ مزید یہ کہ مریض کو  ڈسچارج  کرنے کی کاروائی پر دستیاب نظرثانی شدہ ڈسچارج پالیسی کے مطابق ہونی چاہیے جو https://www.mohfw.gov.in/pdf/ReviseddischargePolicyforCOVID19.pdf پر دستیاب ہے ۔

مرکزی وزارت صحت نے ریاستوں / مرکزکے زیرانتظام علاقوں کے چیف سکریٹریوں کو مشورہ دیا ہے کہ وہ تین دن کے اندراندر مذکورہ بالا ہدایات کو شامل کرتے ہوئے، ضروری احکامات اور سرکلر جاری کریں ، جو ایک متناسب یکساں پالیسی کے آنے تک نافذ العمل ہوں گے۔

اس سے قبل وزارت صحت نے مشتبہ / تصدیق شدہ کووڈ- 19 کے مناسب انتظام کے لئے تین درجہ جاتی صحت کے بنیادی ڈھانچے کے قیام کی پالیسی نافذ کی ہے۔ اس سلسلے میں 7 اپریل 2020 کو جاری کردہ رہنما دستاویز میں ، درج ذیل کے قیام کے بارے میں غور کیا گیا ہے:

  • کوویڈ کیئر سنٹر (سی سی سی) معمولی نوعیت کے معاملات کی دیکھ بھال کرے گا۔ یہ سرکاری اور نجی دونوں طرح کے ہاسٹلز ، ہوٹلوں ، اسکولوں ، اسٹیڈیموں ، لاجز وغیرہ میں قائم کیےجا رہے ہیں۔ فنکشنل اسپتال جیسے سی ایچ سی وغیرہ جو غیر کوویڈ کیسز کوباقاعدگی سے نپٹا رہے ہیں، ان کو بھی آخری سہولت کے طور پر، کوویڈ کیئر سنٹرس کےطور پر نامزد کیا جاسکتا ہے۔
  • مخصوص کوویڈ ہیلتھ سینٹر (ڈی سی ایچ سی)ان تمام معاملات کی دیکھ بھال کرے گا جو طبی لحاظ سے معتدل کے طور پر شناخت کیے گئے ہیں۔ یہ یا تو ایک مکمل اسپتال یا کسی اسپتال میں ایک علیحدہ بلاک کی شکل میں ہونا چاہئے جس میں ترجیحی طور سے علیحدہ داخلی / خارجی راستہ / زوننگ ہو۔ نجی اسپتالوں کو کوآئی وی ڈی مخصوص صحت مراکز کے نام سے بھی نامزد کیا جاسکتا ہے۔ ان اسپتالوں میں آکسیجن معاونت کے ساتھ بستر ہوں گے۔
  • مخصوص کوویڈ اسپتال (ڈی سی ایچ) بنیادی طور پر ان لوگوں کے لئے جامع نگہداشت  کرے گا جنہیں طبی لحاظ سے شدید معاملوں کے طور پر شناخت کیا گیا ہے۔ ان اسپتالوں میں یا تو ایک پورا اسپتال ہونا چاہئے یا کسی اسپتال میں علیحدہ بلاک ہونا چاہئے جس میں ترجیحا علیحدہ علیحدہ داخلی / خارجی راستہ ہو۔ نجی اسپتالوں کو بھی کووڈ مخصوص اسپتال نامزد کیا جاسکتا ہے۔ ان اسپتالوں میں آکسیجن معاونت کے ساتھ آئی سی یو ، وینٹیلیٹرز اور بیڈ پوری طرح سے لیس ہوں گے۔

مذکورہ بالا کووڈ صحت بنیادی ڈھانچےکوکلینک جاتی انتظامیہ پروٹوکول کے ساتھ منسلک کیا گیا ہے تاکہ ہلکے معاملات کو سی سی سی میں داخل کیا جاسکے ، اعتدال پسند معاملات کو ڈی سی ایچ سی اور سنگین معاملات والے مریضوں کو ڈی سی ایچ میں داخل کیا جائے۔

****

 

U.No. 4299

ش ح۔ ا ع ۔س ا

 



(Release ID: 1717158) Visitor Counter : 27