وزارتِ تعلیم

مرکزی وزیر تعلیم نے آئی آئی ٹی بمبئی کے زیر اہتمام منعقدہ قومی یوم تعلیم کے پروگرام کا مجازی طور پر افتتاح کیا

این ای پی۔ 2020 کے نفاذ سے ملک کے نظام تعلیم میں تبدیلی آئے گی: رمیش پوکھریال 'نشنک'

Posted On: 10 NOV 2020 4:35PM by PIB Delhi

مرکزی وزیر تعلیم جناب رمیش پوکھریال 'نشنک' نے آج بطور مہمان خصوصی قومی یوم تعلیم (راشٹریہ شکشا دیوس) پروگرام کا مجازی طور پر افتتاح کیا۔ یہ پروگرام انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی بمبئی نے ہندوستان کے پہلے وزیرتعلیم مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر منقعد کیا تھا۔ 11 نومبر کو مولانا ابوالکلام آزاد کا یوم پیدائش قومی یوم تعلیم کے طور پر منایا جاتا ہے۔ اس موقع پر ڈاکٹر کے کستوری رنگن، سابق چئیرمین، اسرو اور نئی تعلیمی پالیسی کا مسودہ تیار کرنے والی کمیٹی کے چیئرمین مہمان خصوصی تھے۔

Capture.JPG

قومی یوم تعلیم کے پروگرام کا افتتاح کرتے ہوئے جناب پوکھریال نے اپنے خطاب میں کہا کہ "اسٹڈی ان انڈیا ، اسٹے ان انڈیا اور انٹرنیشنلائزیشن آف ایجوکیشن" کے ذریعہ ہم ہندوستان کو تعلیم کے عالمی مرکز کے طور پر قائم کرنے کے تئیں پرعزم ہیں۔ اعلی تعلیم کو یقینی بنانے کے لئے یہ بھی ضروری ہے کہ ہم دنیا کی سرکردہ یونیورسٹیوں کے ساتھ تعاون ، تال میل اور معاہدے کے ساتھ آگے بڑھیں۔ ہندستان میں کیمپس قائم کرنے کے لئے دنیا کی 100 ٹاپ یونیورسٹیوں کو مدعو کر کے اس کو این ای پی 2020 میں شامل کیا گیا ہے۔

 

جناب پوکھریال نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ آئی آئی ٹی بمبئی ایک سرکردہ عالمی ٹیکنولوجیکل انسٹی ٹیوشن ہے جو رہنماؤں اور اختراع کاروں کو پیدا کرنے کے لئے تغیراتی تعلیم مہیا کرتی ہے اور معاشرے اور صنعت کے لئے ایک نیا علم پیدا کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ این ای پی 2020 کے نفاذ سے ملک کے نظام تعلیم میں تبدیلی آئے گی۔ وزیر موصوف نے ہندوستان میں تحقیق اور ترقی کو اونچائی پر لے جانے کے لئے تمام ایوارڈ یافتگان کو ان کے کام اور لگن کے لئے مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے طلباء سے اپیل کی کہ وہ ہندوستانی عوام کے مفاد کے لئے سائنس اور ٹکنالوجی کا استعمال کریں۔ انہوں نے ان سے قومی تعمیر کے اقدامات میں حصہ لینے کو کہا کیوں کہ انسانی سرمائے کے لحاظ سے ہم دنیا کی سب سے بڑی قوم ہیں۔

ڈائریکٹر پروفیسر سبھاسیس چودھری نے آئی آئی ٹی بمبئی ریسرچ ایکسیلنس ایوارڈ 2019 دیا۔ آئی آئی ٹی بمبئی ریسرچ ایکسیلنس ایوارڈ آئی آئی ٹی بمبئی فیکلٹی کی تحقیق وترقی کی کوششوں کے اعتراف میں پچھلے کئی سالوں سے شروع کیا گیا ہے۔ ایوارڈ میں شامل ہیں۔

ریسرچ پبلیکیشن ایوارڈ (5 ایوارڈز) جائزہ اشاعتوں اور / یا دیگر شکلوں جیسے نمائشوں (جیسے ، ڈیزائن ، فلم) میں اصل تحقیقی نتائج کا اعتراف کرنے کے لئے دیا گیا ہے۔

مونوگراف / کتابوں / جائزہ ابواب / جائزہ کے پیپرز کے ذریعہ تحقیق کی ترسیل کی نمایاں کوششوں کے اعتراف میں ریسرچ ڈسیمنیشن ایوارڈ (3 ایوارڈز) دیا گیا۔

ابتدائی ریسرچ حاصل کرنے والا ایوارڈ (3 ایوارڈز) - نوجوان محققین کو دیا گیا جو پہلے ہی نمایاں اصل کام تیار کرنے کی اپنی صلاحیت دکھا چکے ہیں۔

آئی آئی ٹی بمبئی کے ڈائریکٹر پروفیسرسبھاسیس چودھری نے کہا ، "وزارت تعلیم کی مرتب کردہ قومی تعلیمی پالیسی 2020 اپنے دائرہ کار میں بہت جامع ہے اور ایک مناسب امتزاج کے ذریعہ ہم ہندوستان میں تمام طلبا کے لئے تعلیم کے معیار میں ایک بہت بڑے فروغ کی توقع کرتے ہیں۔ آئی آئی ٹی بمبئی میں ہم اپنی پیش کش کو مزید وسعت بخش ، بنیادی اور معاشرتی طور پر موزوں بنانے کے لئے اس پالیسی دستاویز میں شامل کلیدی جذبوں سے فائدہ اٹھانے کے منتظر ہیں۔ اب جبکہ ہم قومی یوم تعلیم منا رہے ہیں تو ہم معیاری تعلیم اور تحقیق میں امتیاز فراہم کرنے کے اپنے وعدوں کے تئیں پرعزم ہیں۔

مہمان خصوصی نے پروفیسر کرتھی رممرتھم ایوارڈ برائے تخلیقی تحقیق برائے 2019- آئی آئی ٹی بمبئی کے الیکٹریکل انجینئرنگ محکمہ کے پروفیسر جئے کرشنن نیر کو ان کے "اسمارٹ، قابل تجدید-پاور گرڈ میں غیر یقینی صورتحال کے بندوبست"میں ان کی اہم تحقیقی خدمات کے لئے اور آئی آئی ٹی بمبئی کے محکمہ فزکس کے پروفیسر ورون بھلیراؤ کو کشش ثقل کی لہر کے ذرائع سے برقی مقناطیس میں ان کے تحقیقی کاموں کے لئے دیا۔ یہ ایوارڈ ایک توصیف نامہ اور ایک لاکھ روپے نقد پر مشتمل ہے۔

مہمان اعزاز ڈاکٹر کے کستوری رنگن نے اپنے خطاب میں کہا ، "قومی تعلیمی پالیسی تعلیم کے تئیں ایک مربوط تاہم لچکدار اپروچ کی نمائندگی کرتی ہے۔ قومی تعلیمی پالیسی 2020 کے افتتاح کے بعد اس پر ایک ورکشاپ منعقد کیا گیا۔ ورکشاپ میں پروفیسر بی این جگتاپ ، آئی آئی ٹی بمبئی ، ڈاکٹر جےترتھ 'جیری' راؤ ، کاروباری شخصیت ، وی بی ایچ سی اور ایچ ایف ایف سی کے بانی اور پروفیسر دھروبا جے ساکیا ، ٹی آئی ایف آر، سابق وائس چانسلر ، کاٹن کالج اسٹیٹ یونیورسٹی شامل تھے۔

 

                                          **************

 

 

م ن۔ ن ا۔ م ف

U:7130



(Release ID: 1671850) Visitor Counter : 106