PIB Headquarters

کووڈ-19 سے متعلق پی آئی بی کا یومیہ بلیٹن یا خبرنامہ

Posted On: 16 JUL 2020 6:21PM by PIB Delhi

Description: Coat of arms of India PNG images free downloadDescription: http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image001OZXY.jpg

کووڈ-19 پر مشتمل پریس ریلیز ، جو 24 گھنٹوں میں جاری کی گئی ہیں، فیلڈ افسران سے حاصل کردہ معلومات اور پی آئی بی کے ذریعہ کئے گئے صحیح تجزیات پر مشتمل ہیں

 

*612814 کووڈ 19 مریض اب تک صحت یاب ہوچکے ہیں ، جن کی بحالی کی شرح 63.25فیصد ہوگئی ہے۔
*گذشتہ 24 گھنٹوں میں 20783 افراد کووڈائڈ سے ٹھیک ہوئے۔
* ملک میں کووڈ 19 مریضوں کا اصل معاملہ صرف 331146 ہے۔
* مہاراشٹرا اور تمل ناڈو ملک کے کل فعال معاملہ بوجھ کا 48.15فیصد ہیں۔
* ڈاکٹر ہرش وردھن نے مزید کہا کہ آنے والے 12 ہفتوں میں جانچ کی گنجائش مزید 10 لاکھ کردی جائے گی۔
*34 1234 لیب کے ساتھ ساتھ ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹ کے استعمال سے فی ملین (TPM) ٹیسٹ 9231 سے زیادہ ہوچکا ہے۔
* مرکز اور ریاستیں مشترکہ طور پر رضاکاروں کو متحرک کرنے کے لئے 1 کروڑ تک کام کریں گی تاکہ کووڈ 19 کے خلاف ہندوستان کی لڑائی میں مدد ملے:کرن رججو۔



Description: http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image0059YYH.jpg

Description: http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image006APX6.jpg

وزارت صحت اور خاندانی بہبود سے کوڈ 19 پر تازہ ترین خبریں: ملک میں COVID19 مریضوں کا اصل معاملہ 331146 ہے۔ اصل کیس لوڈ کا معاملہ کل معاملات میں سے 1/3 ہے۔ 6.1 لاکھ سے زائد بازیافت کیسز۔
نئی دہلی 16جولائی 2020۔آج تک ملک میں کووڈ 19 مریضوں کا اصل معاملہ 331146 ہے۔ یہ اب تک پائے جانے والے کل معاملات میں سے ایک تہائی (34.18فیصد) سے تھوڑا زیادہ حصہ ڈالتے ہیں۔ بحالی کی شرح میں 50 کا ہندسہ عبور کرنے کے بعد جون 2020 کے وسط سے ، بازیاب مریضوں میں مستقل اضافہ اور فعال کیسوں کی تعداد میں کمی دیکھنے میں آرہی ہے۔ کووڈ 19 کے 63.25فیصد مریض اب تک صحت یاب ہوچکے ہیں۔ اسی کے ساتھ ، جون 2020 کے وسط میں تقریبا 45سے لے کر اب تک 34.18 فیصد کے قریب ، فعال معاملات میں مستحکم ڈپریشن دیکھنے میں آیا ہے۔ اب تک ، آخری 24 گھنٹوں میں کووڈ سے مکمل ہونے والے کل 20783 افراد کی مجموعی تعداد ہوگئی ہے کووڈ 19 کے مریضوں میں 612814 معاملات برآمد ہوئے۔ بازیاب مریضوں اور فعال کووڈ 19 معاملات کے مابین کا فرق مزید بڑھ کر 281668 ہو گیا ہے۔ صرف دو ریاستیں ، مہاراشٹرا اور تمل ناڈو ، ملک کے کل فعال معاملہ بوجھ کا 48.15فیصدہیں۔ کل 36 ریاستوں اورمرکز کے زیرانتظام علاقے میں سے ، صرف 10 ریاستیں ہی فعال فعال معاملے میں سے 84.62فیصد تشکیل پاتی ہیں۔



Description: http://pibcms.nic.in/WriteReadData/userfiles/image/image001GO3V.png
 

ریپڈ اینٹیجن ٹیسٹ کے استعمال کے ساتھ 1234 لیبس میں فی ملین افراد پر ٹیسٹ (ٹی پی ایم) کی شرح 9231 سے زیادہ ہوئی
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔’جانچ کرو، پتہ لگاؤ، علاج کرو‘ کی حکمت عملی کے مطابق مرکزی حکومت نے ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام خطوں میں ٹیسٹنگ کے اقدامات میں اضافہ کیا ہے، جس کے نتیجے میں ملک بھر میں ٹیسٹنگ لیبس کی تعداد میں زبردست اضافہ ہوا ہے۔ جانچ میں اضافہ آئی سی ایم آر کے رہنما خطوط کے مطابق کیا جارہا ہے اور اس سے معاملات کا جلد ہی پتہ لگانے میں مدد ملی ہے۔تمام رجسٹرڈ میڈیکل پریکٹیشنرز اب جانچ کی سفارش کرسکتے ہیں۔ اس کے ساتھ ساتھ آر ٹی پی سی آر ، ٹرو نٹ اور سی بی این اے ٹی لیب نیٹ ورک کے ذریعہ ریاستوں / مرکز کے زیرانتظام علاقے کے ذریعہ وسیع پیمانے پر جانچ کی سہولت کے ساتھ آزمائشی نمونوں کی تعداد میں اضافے میں مدد ملی ہے۔ گذشتہ 24 گھنٹوں میں 326826 نمونوں کا تجربہ کیا گیا ہے۔ 12739490 نمونوں کی مجموعی تعداد نے ہندوستان کے لئے فی ملین 9231.5 ٹیسٹنگ جانچ کی۔ ملک میں 1234 لیبز کے ساتھ ملک میں ٹیسٹنگ لیب نیٹ ورک کو مزید تقویت ملی ہے۔ سرکاری شعبے میں 874 لیب اور 360 نجی لیبز۔

ڈاکٹر ہرش وردھن نے دلے کے ایمس اسپتال کے راجکماری امرت کور او پی ڈی بلاک کا افتتاح کیا
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔ڈاکٹر ہرش وردھن نے خوشی کا اظہار کیا کہ نئی او پی ڈی کا نام محترمہ کے نام پر رکھا گیا ہے۔ راج کماری امریت کیور ، معروف آزادی پسند جنگجو اور ملک کے پہلے وزیر صحت۔ کووڈ 19 کے خلاف ملک کی اجتماعی کاوشوں کے بارے میں تفصیل دیتے ہوئے ۔انہوں نے کہا کہ "آہستہ آہستہ ہم وبائی امراض کے خلاف جنگ جیتنے کی سمت میں گامزن ہیں۔کووڈ سے متاثرہ مریضوں میں سے 2 فیصد سے کم آئی سی یو میں داخل ہیں۔ ہمارا لیب نیٹ ورک مضبوط ہوگیا ہے۔ ہمارے پاس لیبز کی تعداد میں غیر معمولی اضافہ ہوا ہے ،جو آج جنوری 2020 میں ایک سے بڑھ کر 1234 ہوچکا ہے۔ تاریخ کے مطابق ، ہم نے روزانہ 3.26 سے زیادہ نمونوں کی جانچ کی ہے۔ ڈاکٹر ہرش وردھن نے مزید کہا کہ آنے والے 12 ہفتوں میں اس صلاحیت کو مزید 10 لاکھ ٹیسٹ روزانہ بڑھایا جائے گا۔

وزیراعظم نریندر مودی 17 جولائی 2020 کوایکوسوک (ای سی او ایس او سی)، یعنی اقوام متحدہ اقتصادی اور سماجی کونسل کے اعلیٰ سطحی شعبے کے اجلاس سے خطاب کریں گے
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔وزیراعظم جناب نریندر مودی جمعہ، 17 جولائی 2020 کو نیویارک میں واقع اقوام متحدہ میں،اقوام متحدہ اقتصادی اور سماجی کونسل (ای سی او ایس او سی)، کے اجلاس کے اس سال کے اعلیٰ سطحی شعبے کے اجلاس سے ورچوولی خطاب کریں گے، جس کا وقت 0930-1130 بجے (مقامی وقت) ہوگا۔ ناروے کےوزیراعظم اور اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل اینٹونیو گٹیریس کے ہمراہ وزیراعظم جناب نریندر مودی اختتامی اجلاس سے خطاب کریں گے۔سالانہ اعلیٰ سطحی سیگمنٹ میں حکومت، نجی شعبے، سول سوسائٹی کے اعلیٰ نمائندوں اور ماہرین تعلیم کا ایک متنوع گروپ شامل ہے۔ اس سال کے اعلیٰ سطحی سیگمنٹ کا موضوع ہے “ کووڈ-19 کے بعد تکثیریت:75ویں سالگرہ پر ہمیں کس طرح کے اقوام متحدہ کی ضرورت ہے”۔بدلتے ہوئے بین الاقوامی ماحول اور کووڈ-19 وباکے موجودہ بحران کو ذہن میں رکھتے ہوئے یہ اجلاس تکثیریت کی سمت طے کرنے والی اہمیت پر توجہ مرکوز کر ےگا۔ اس کے ساتھ ہی اس اجلاس کے دوران مضبوط قیادت ، مو ثر بین الاقوامی اداروں، شراکت داری میں اضافہ اور عالمی عوامی چیزوں کی بڑھی ہوئی اہمیت کے توسط سے عالمی ایجنڈے کو آگے بڑھانے کے طریقوں کی شناخت کرے گا۔

ریلوے کو اجتماعی طور پر محصول بڑھانے ، اخراجات کو کم کرنے ، آپریشنوں کی حفاظت کو بڑھانے اور موجودہ ملازمین کی فلاح و بہبود پر توجہ دینے کی ضرورت ہے: پیوش گوئل
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔وزارت ریلوے نے پہلی بار آن لائن ورک مین سنگھوستی کا انعقاد کیا ،جس میں ملک بھر سے ریلوے ورکرز یونینوں کے نمائندوں نے شرکت کی۔ سنگوشی سے خطاب کرتے ہوئے ، سری پیوش گوئل نے لاک ڈاو ¿ن کے دورانیے میں نہایت مستعدی فرائض کی انجام دہی پر ریلوے کے کارکنوں کا شکریہ ادا کیا۔ وزیر موصوف نے کہا کہ  لاک ڈاؤن کے دوران تمام افسران اور عملے نے خلوص نیت سے اپنے فرائض سرانجام دیئے ہیں۔ اس وقت وبائی امراض کی وجہ سے ہندوستانی ریلوے خطرناک وقت سے گزر رہا ہے۔ وزیر موصوف نے فیڈریشنوں کے رہنماؤں پر زور دیا کہ وہ اس بات پر غور کریں کہ ریلوے اس وبائی حالت کی وجہ سے دنیا بھر میں پائے جانے والے اس بحران پر قابو پا سکتا ہے۔ انہوں نے ریلوے فیڈریشنوں سے بھی انوکھے خیالات پیش کرنے کو کہا کہ کیسے ریلوے کی آمدنی میں اضافہ کیا جاسکتا ہے ، اخراجات کم سے کم ہوسکتے ہیں ، مال برداری میں بہتری لائی جاسکتی ہے اور کیسے ریلوے مزید تیزی سے آگے بڑھ سکتا ہے۔

زی ڈَس کی تیار کردہ کووڈ -19 ویکسین زی کوو-ڈی کی بایو ٹکنالوجی محکمہ نے حمایت کی ، اختیار کرنے کا مرحلہ 1/11 طبی ٹرائل شروع
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔بائیوٹیکنالوجی انڈسٹری ریسرچ اسسٹنس کونسل (بی آئی آر اے سی) نے اعلان کیا ہے کہ زائڈوس نے ڈیزائن کیا اور تیار کیا گیا ہے اور جزوی طور پر محکمہ بایوٹکنالوجی کے ذریعہ تیار کیا گیا ، حکومت ہند نے صحت مند مضامین میں فیز 1 / II کے کلینیکل ٹرائلز کا آغاز کیا ہے۔ ہندوستان میں انسانوں میں COVID19 کے لئے دیسی ساختہ پہلی ویکسین تیار کی جائے گی۔ انکولی مرحلہ I / II کی خوراک میں اضافہ ، کثیر مرکزیت کا مطالعہ اس ویکسین کی حفاظت ، رواداری اور امیونوجنکیت کا اندازہ کرے گا۔ ڈاکٹر رینوسوارپ ، سکریٹری ، ڈی بی ٹی اور چیئرپرسن ، بی آئی آر اے سی نے کہا کہ نیشنل بائیوفرما مشن کے تحت COVID19 کے لئے دیسی ویکسین کی تیز رفتار نشوونما کے لئے محکمہ بائیوٹیکنالوجی نے زائڈس کے ساتھ شراکت کی ہے۔

دھرمیندر پردھان نے بھارت کی ترقی کی کہانی میں بہت بڑےموقع سے فائدہ اٹھانے کے لئے امریکی سرمایہ کارو ں کو دعوت دی
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔وزیر پٹرولیم و قدرتی گیس اور اسٹیل ، شری دھرمیندر پردھان ، امریکی سکریٹری برائے توانائی ، ایچ ای ڈین بروولیٹ ، کے ساتھ مشترکہ سربراہی میں صنعت کی سطح پر بات چیت ، جس کا انعقاد کل یو ایس انڈیا بزنس کونسل (یو ایس آئی بی سی) نے کیا تھا۔ وزیر موصوف نے منگل کے روز یو ایس انڈیا اسٹریٹجک انرجی پارٹنرشپ (یو ایس آئی ایس پی ایف) کے زیر اہتمام ایک انڈسٹری سطح کی بات چیت کی الگ الگ صدارت بھی کی تھی۔ ان بات چیت کے دوران ، وزیر پردھان نے امریکی کمپنیوں اور سرمایہ کاروں کو دعوت دی کہ وہ نئے مواقع میں ہندوستان میں مشغول اور سرمایہ لگائیں۔ مسٹر پردھان نے کہا کہ ان مشکل وقتوں کے دوران بھی ، ہندوستان اور امریکہ گہری باہمی تعاون سے کام کر رہے ہیں ، وہ عالمی توانائی کی منڈیوں کو مستحکم کرنے میں ہو یا کووڈ 19 کو حل کرنے کے لئے باہمی تعاون سے کی جانے والی کوششوں میں۔ انہوں نے کہا کہ "آج کی ہنگامہ خیز دنیا میں ، ایک مستقل مزاج ہے - اور ہمیشہ ہماری باہمی شراکت داری کی طاقت ہوگی۔"

مرکز اور ریاستیں مل کر کام کریں تاکہ کووڈ-19 کے خلاف ہندوستان کی جنگ میں مدد کے لئے ایک کروڑ رضاکاروں کو تیار کیا جاسکے: جناب کرن رجیجیو
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔نوجوانوں کے امور اور کھیل کے وزیر شری کیرن رجیجو نے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقے کے نوجوانوں کے امور اور کھیلوں کے محکموں کے انچارج وزرائ اور سینئر افسران سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ نوجوانوں کی وزارت کی پرچم بردار اسکیموں کے ایک حصے کے طور پر رضاکاروں کی ایک بڑی تعداد کو متحرک کریں ، قومی خدمت اسکیم اور بھارت سکاو ¿ٹس اور رہنما۔ انہوں نے مزید کہا کہ کووڈ 19 کے خلاف ہندوستان کی لڑائی کو تیز کرنے کے ساتھ ساتھ معاشرے کے نچلے طبقے کے درمیان اتمانیربھارت کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کے لئے بھی کہا گیا۔ وزیر کھیلوں اور نوجوانوں سے متعلق امور سے متعلق امور کے لئے باہمی تعاون کے ساتھ مل کر ایک روڈ میپ بنانے کے لئے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیرانتظام علاقے کے ساتھ دو روزہ ویڈیو کانفرنس کر رہے تھے۔ انہوں نے تمام ریاستوں پر زور دیا کہ وہ کوڈ کے دوران فٹ انڈیا کی سرگرمیاں آن لائن جاری رکھیں اور عام لوگوں کو فٹنس سے متعلق سرگرمیوں میں شامل کریں۔

رکشا راجیہ منتری شری شری پدنائک نے ایرواسپیس ا ور ڈیفنس ٹیکنالوجی مینوفیکچرنگ پر کانفرنس کا افتتاح کیا
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔رکشا راجیہ منتری شری پد نائک نے کہا ہے کہ ہندوستانی دفاع اور ایرو اسپیس انڈسٹری آج ’میک ان انڈیا‘ اور ’اتمانیربھارت’ ابیان کی تشہیر کے لئے حکومت ہند کے متعدد اقدامات کے تحت تبدیلی کی دہلیز پر ہے۔ ایرو اسپیس اینڈ ڈیفنس مینوفیکچرنگ ٹیکنالوجیز کے بارے میں گذشتہ روز کانفرنس کے 5 ویں ایڈیشن میں افتتاحی خطبہ دیتے ہوئے شری نائک نے تاکید کی کہ ہندوستان کو اے ڈی ڈی کی صنعت کو دفاعی پیداوار میں خود انحصار کرنے میں زیادہ سے زیادہ ذمہ داری نبھانا ہے اور 26 حصولیت حاصل کرنا ہوگی۔ 2025 تک ارب امریکی ڈالر کی گھریلو پیداوار ، جو دفاعی پیداوار پالیسی کا واضح مقصد ہے۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ نے پوری دنیا میں ، شدید معاشی اور معاشرتی چیلنجوں کا باعث بنا ہے۔ پچھلے چار مہینوں سے ہماری قومی کوششوں میں ، ہم سب سے پہلے اپنی بڑی آبادی میں اعلی بیداری پیدا کرنے ، صحت کی دیکھ بھال کرنے اور جانچنے کے لئے مناسب صلاحیت پیدا کرنے اور وائرس کے پھیلاؤ کی شرح کو منظم کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔

ٹی آئی ایف اے سی نے فعال ادویاتی اجزائ-تازہ ترین صورتحال، مسائل ٹیکنالوجی کی تیاری اور چیلنجوں سے متعلق رپورٹ جاری کی
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔ایکٹو فارماسیوٹیکل اجزاء(APIs) کی دیسی پیداوار کو اس سطح تک بڑھانے کی ضرورت ہے جہاں پیداوار معاشی طور پر قابل عمل ہے ، ایک ایسی رپورٹ میں کہا گیا ہے جس میں اے پی آئی ایس کی ایک فہرست کی نشاندہی کی گئی ہے جس کو ترجیحی مینوفیکچرنگ اور اس سے وابستہ فوائد کی ضرورت ہے۔ سائنس انفارمیشن ڈیپارٹمنٹ کے تحت ایک خودمختار تنظیم ، ٹیکنالوجی انفارمیشن پیشن گوئی اور تشخیص کونسل (ٹی آئی ایف اے سی) کے ذریعہ حال ہی میں ، معاملات ، ٹکنالوجی کی تیاری اور چیلنجوں کو منظرعام پر لایا گیا ہے۔ رپورٹ میں دی گئی اہم سفارشات میں انجینئرنگ اور پیمانے کے پہلو پر فوکس شامل ہے۔ ٹکنالوجی کی ترقی کے ، انووں کی بلاتعطل ترکیب کے لئے اور ہندوستان میں مشترکہ انفراسٹرکچر کے ساتھ میگا ڈرگ مینوفیکچرنگ کلسٹر بنانے کے لئے متعین اہداف کے ساتھ مشن موڈ کیمیکل انجینئرنگ کی ضرورت ہے۔ کووڈ 19 وبائی مرض نے ہمارے قوم کی توجہ آتم نربھر ہونے پر پوری مضبوطی سے مرکوز کردی ہے۔

ماہی پروری، مویشی پروری اور ڈیری کے مرکزی وزیر جناب گری راج سنگھ نے مویشی پروری بنیادی ڈھانچہ ترقیاتی فنڈ کے نفاذ سے متعلق رہنما ہدایات جاری کیں
نئی دہلی،16 جولائی 2020۔مرکزی وزیر فشریز ، جانوروں کی کھیتی باڑی اور ڈیرینگ شری گریراج سنگھ نے آج جانوروں کی کھیتی کے انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ فنڈ (اے ایچ آئی ڈی ایف) کے لئے نفاذ کے رہنما خطوط کا افتتاح کیا جس میں 40 لاکھ روپے لاگت آئے گی۔ 15000 کروڑ ، جس کو مرکزی سکریٹری نے 24.06.2020 کو اتاتما نیربھارت بھارت ابھیان کے محرک پیکج کے تحت متعدد شعبوں میں ترقی کو یقینی بنانے کے لئے منظور کیا تھا۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ڈیری پروسیسنگ انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ فنڈ (ڈی آئی ڈی ایف) کوآپریٹو سیکٹر میں انفراسٹرکچر ڈیولپمنٹ کے لئے نافذ کیا جارہا ہے۔ اور اے ڈی آئی ڈی ایف نجی شعبے کے لئے پہلی قسم کی اسکیم ہے۔ انفراسٹرکچر بننے کے بعد لاکھوں کسانوں کو فائدہ پہنچے گا اور مزید دودھ پر کارروائی ہوگی۔ اس سے ڈیری مصنوعات کی برآمد میں بھی اضافہ ہوگا جو اس وقت نہ ہونے کے برابر ہے۔ بھارت کو ڈیری کے شعبے میں نیوزی لینڈ جیسے ممالک کے معیارات پر جانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اطمینان کا اظہار کیا کہ کوویڈ۔19 لاک ڈاؤن کے دوران ڈیری فارمرز ملک میں صارفین کو دودھ کی مستقل فراہمی برقرار رکھ سکتے ہیں۔


پی آئی بی فیلڈ دفاتر سے ماخوذ

*چندی گڑھ: منتظم ، یو ٹی چنڈی گڑھ ، نے جسمانی پریس کانفرنسوں پر مکمل پابندی عائد کرنے کا حکم دیا ، جہاں بڑے اجتماعات کی وجہ سے انفیکشن کا خطرہ ہے۔ انہوں نے تمام سیاسی جماعتوں سے بھی اپیل کی کہ وہ کسی بھی اجتماع یا تقریب کا انعقاد نہ کریں ، جس میں وزارت داخلہ کے ان رہنما اصولوں کی خلاف ورزی ہو جو صرف شادی اور جنازے جیسے واقعات کو ہی غیر معمولی معاملات کی اجازت دیتے ہیں۔ سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ شہر میں کسی بھی طرح سے غیر قانونی طور پر اکٹھا ہونے کی صورت میں ایف آئی آر درج کروائے۔

*پنجاب: کووڈ بحران سے نمٹنے کے لئے سوشل میڈیا کی بڑھتی ہوئی عالمی اہمیت کے درمیان ، حکومت پنجاب نے آؤٹ سورس ماڈل پر 15 ماہر سوشل میڈیا ٹیمیں تشکیل دے کر اپنے سوشل میڈیا رسائی کو بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیر اعلی نے اس اقدام کو ریاست کی پہنچ کو بڑھانے اور ناول کورونا وائرس وبائی امراض سے متعلق مختلف پہلووؤں سے متعلق معلومات کو پھیلانے میں کوششوں کو تقویت دینے کے لئے موثر اور نتیجہ خیز انداز میں اہم قرار دیا۔ لوگوں میں وبائی امراض سے متعلق احتیاطی تدابیر ، اصولوں وغیرہ کے بارے میں لوگوں میں آگاہی پیدا کرنے کے علاوہ ، ٹیمیں مستقل اور تازہ ترین معلومات انہیں مستقل بنیاد پر فراہم کرکے غلط معلومات کے پھیلاؤ کے مقابلہ میں بھی مدد کریں گی۔

*ہریانہ: لوگوں کو COVID19 وبائی امراض کے بارے میں اٹھائے جانے والے حفاظتی اقدامات کے بارے میں آگاہ کرنے کے لئے ، ہریانہ کے وزیر اعلی نے ہریانہ ساہتیہ اکیڈمی کے ذریعہ شائع ہونے والے ماہانہ رسالہ ہریگندھا کا خصوصی مشترکہ شمارہ جاری کیا۔ وزیر اعلی نے ہریگندھا کے اس خصوصی شمارے کی افادیت اور اہمیت کا خاکہ پیش کیا ،جس میں عالمی وبائی امراض سے متعلق جامع معلومات پر بھی روشنی ڈالی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اس خصوصی مسئلے کے ذریعے لوگ کورونا اور دیگر ضروری معلومات کی روک تھام کے لئے کیے جانے والے اقدامات کے بارے میں جان سکیں گے۔

*ہماچل پردیش: وزیر اعلی نے ریاست کے امید کاروں کو ان کے موثر اور ہموار کام کرنے اور اپنے فرائض کو موثر طریقے سے ادا کرنے کے لئے مفت اسمارٹ فون تقسیم کیے۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وبائی بیماری نے پوری دنیا کو حیرت میں مبتلا کردیا ہے اور طبی برادری کو بلا تیاری کر لیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماچل پردیش اس وائرس سے مو ثر طریقے سے لڑ رہی ہے اور ریاست کے ایشا کارکنوں نے اس وائرس پر قابو پانے میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آشا کارکنوں نے نہ صرف لوگوں کو آئی ایل آئی کی علامات کا پتہ لگانے میں مدد فراہم کی ، بلکہ انہوں نے قرنطین اصولوں پر سختی سے عمل کرنے میں لوگوں کو تحریک دینے میں بھی مدد کی ہے۔

*مہاراشٹر: پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران ریاست میں اس کی تعداد 275640 ہوگئی ، 7975 نئے انفیکشن کی اطلاع ملی ہے۔ تاہم ، اس وقت مہاراشٹر میں سرگرم معاملات 111801 ہےں۔ ممبئی کا فعال کیس 22959 ہے۔ مہاراشٹر میں بازیافت کی شرح 55.37فیصد ہے ، جبکہ اموات کی شرح 3.96فیصد ہے۔ ناسک ضلع میں COVID19 کے بڑھتے ہوئے معاملات کے تناظر میں ، ریاستی حکومت اور ضلعی انتظامیہ نے آپ کے دہلیز پر ایک پیمانہ ہیلتھ کیئر سروس شروع کی ہے۔ 556 اسکواڈ تشکیل دیئے گئے ہیں اور انہیں کویوڈ مثبت مریض کا سراغ لگانے کی ذمہ داری سونپی گئی ہے۔

*گجرات: گجرات میں بدھ کے روز 925 کووڈ 19 واقعات اور 10 اموات کی اطلاع ملی۔ اس کے ساتھ ، ریاست کی تعداد بڑھ کر 44648 ہوگئی ہے،جس میں 31346 خارج ہونے والے مادہ اور 2081 اموات شامل ہیں۔ ریاستی حکومت نے کووڈ۔19 کے لئے بدھ کے روز جانچ کی پالیسی میں ترمیم کی ہے۔ نئی پالیسی کے مطابق ، کووڈ ٹیسٹ کسی بھی ایم بی بی ایس ڈاکٹر کے نسخے پر کیا جاسکتا ہے۔
*راجستھان: راجستھان میں آج صبح 143 نئے مثبت کیس اور 4 اموات کی اطلاع ملی ہے۔ بدھ کے روز ، ریاست میں ریکارڈ 866 افراد نے مثبت تجربہ کیا۔ جبکہ ریاست COVID19 کی تعداد 26580 ہوچکی ہے ، اس صورت میں فعال کیس 6459 ہے۔

*مدھیہ پردیش: ریاست میں 638 نئے مثبت مریضوں کا پتہ چلا ہے، جن کی تعداد 19643 ہے۔ فعال کیس 5053 ہے ، جبکہ 13908 مریض صحت یاب ہوچکے ہیں۔ اب تک 682 افراد اس بیماری کا شکار ہوچکے ہیں۔

*چھتیس گڑھ: چھتیس گڑھ میں 154 نئے مثبت واقعات رپورٹ ہوئے ہیں۔ اس سے ریاست COVID19 کی تعداد 4556 ہوجاتی ہے۔ ریاست میں فعال معاملات 1212 ہےں۔

*گوا: گوا میں بدھ کے روز 198 مثبت واقعات رپورٹ ہوئے ، جو ریاست میں اب تک کووڈ 19 میں سب سے زیادہ بڑھ جانے والا ایک دن ہے۔ ریاست کی کوروناویرس کی تعداد 2951 ہوچکی ہے ، جبکہ اس وقت فعال کیس 1259 ہے۔

*کیرالہ: ریاست میں آج ایک اور کووڈ کی ہلاکت کی اطلاع ہے، جن کی تعداد 36 ہوگئی۔ جاں بحق نوجوان کی شناخت کنور کا رہنے والا ہے۔ ادوکی میں کووڈ 19 کے زیر مشاہدہ ایک اور شخص آج مردہ پایا گیا تھا۔ کووڈ اموات کے طور پر ابھی تک تصدیق نہیں ہوسکی۔ ترواننت پورم میڈیکل کالج کے چار ڈاکٹروں نے کووڈ۔19 میں مثبت جانچ کی ہے۔ چونکہ احتیاطی طور پر سرجری یونٹ کے تقریبا تیس ڈاکٹروں کو الگ کردیا گیا ہے اور سرجری وارڈ کو بند کردیا گیا ہے۔ کووڈ کیسوں میں اضافے سے نمٹنے کے لئے جو اگلے مہینے تک ہونے کا امکان ہے ، ہر ضلع میں اس مرض کے لئے پہلے لائن ٹریٹمنٹ مراکز میں 5000 5000 ہزار بستروں کی گنجائش کو یقینی بنانے کے لیس کیا جائے گا۔ کووڈ 19 کے 623 نئے مقدمات کی تصدیق کل ان میں سے 450 مقامی ٹرانسمیشن کی وجہ سے ہوئی ہے اور 37 کا کوئی وبائی اموات کے ساتھ نہیں ہے۔ مختلف اضلاع میں اب بھی 4880 مریض زیر علاج ہیں اور 184601 افراد نگرانی میں ہیں۔

*تمل ناڈو: پڈوچیری میں نو ماہ کا بچہ کویوڈ۔19 میں دم توڑ گیا جب ہلاکتوں کی تعداد 22 ہوگئی۔ یونین ٹیریٹریٹری نے آج تک اس سب سے بڑی تعداد میں 147 واقعات رپورٹ کیے ہیں جن میں کووڈ کی تعداد 1743 ہوگئی ہے۔ ایران سے 40 ٹی این ماہی گیر چنئی میں آئے۔ کوئمبٹور کلکٹر کووڈ۔19 کے لئے مثبت ٹیسٹ کر رہے ہیں۔ کل 4496 نئے کیسز اور 68 اموات کی اطلاع ہے۔ چنئی سے 1291 مقدمات۔ کل معاملات: 151820؛ فعال مقدمات: 47340؛ اموات: 2167؛ چنئی میں سرگرم مقدمات: 15606۔

*کرناٹک: سات دن لاک ڈاؤن دوسرے دن میں داخل ہوگیا۔ پولیس کے ذریعہ لاک ڈاؤن کو سختی سے نافذ کیا جارہا ہے۔ وزیر تعلیم کے وزیر ڈاکٹر کے سدھاکر نے کوڈ سے بازیاب شہریوں پر زور دیا کہ وہ دوسروں کی زندگیوں کو بچانے کے لئے اپنا پلازما عطیہ کریں۔ ڈاکٹر کے سدھاکر نے کہا کہ خون کے عطیہ دہندگان کو داد دینے کے لئے 5000 روپے کا انعام دیا جائے گا۔ ہائی کورٹ نے شہر میں کوویڈ آگاہی ہورڈنگز اور بینرز آویزاں کرنے کے لئے اسٹیٹ اور بی بی ایم پی کو اجازت دی ہے۔ ادھر پرائیویٹ ہاسپٹل اینڈ نرسنگ ہومز ایسوسی ایشن (پی ایچ اے این اے) نے کہا کہ وہ 30 فیصد ڈاکٹروں اور 50 فیصد نرسوں اور وارڈ لڑکوں کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔ کل بنگلور شہر میں 1975 کیسوں کے ساتھ کل 3176 نئے کیسز اور 87 اموات کی اطلاع ملی۔ مثبت مثبت معاملات: 47253؛ فعال مقدمات: 27853؛ اموات: 928۔

*آندھرا پردیش: مغربی گوداوری ضلع میں پائلٹ پروجیکٹ کی حیثیت سے 3 جنوری ، 2020 کو نافذ ، وزیر اعلی نے مزید 6 اضلاع میں وائی ایس آر آروگیاسری اسکیم کی توسیع کی خدمات کا آغاز کیا۔ اسکیم کو اب ویزیانگرم ، وشاکھاپٹنم ، گنٹور ، پراکسم ، کڑپہ اور کرنول اضلاع میں نافذ کیا جائے گا۔ ریاست نے آئندہ اپریل تک تمام پنچایتوں میں گاو ¿ں کے کلینک قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ریاست کرشنا ڈسٹرکٹ کے شہری علاقوں میں بھکاریوں کو کووڈ - 19 کٹس تقسیم کرتی ہے جس میں چھ ماسک اور دو صابن شامل ہیں۔ ضلع چٹور میں پیلیرو سب جیل کویوڈ۔19 جیل میں تبدیل ہوگئی، جس سے ضلع بھر کی مختلف جیلوں میں 138 قیدی رہائش پزیر ہیں، جن کا وائرس کے لئے مثبت ٹیسٹ کیا گیا ہے۔ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 2593 نئے کیسز، 943 خارج ہوئے اور 40 اموات کی اطلاع ملی۔ کل مقدمات: 38044؛ فعال مقدمات: 18159؛ اموات: 492۔

*تلنگانہ: تلنگانہ کے ضلع سیدپیٹ میں آئی سی یو میں 20 سمیت 100 بستروں پر مشتمل کووڈ تنہائی بلاک کھول دیا گیا۔ کل 1597 نئے کیسز اور 11 اموات کی اطلاع کل؛ جی ایچ ایم سی سے 796 کیس رپورٹ ہوئے۔ کل تک کل مقدمات رپورٹ ہوئے: 39342 ، فعال مقدمات: 12958 ، اموات 386۔

*اروناچل پردیش: اروناچل پردیش حکومت نے چمپن ، اٹانگر میں نئے تعمیر شدہ ایم ایل اے اپارٹمنٹس میں ایک سرشار کووڈ اسپتال کے قیام کی منظوری دے دی ہے۔

*آسام: آذارا میں گریجیانند چودھری انسٹی ٹیوٹ آف فارماسیوٹیکل سائنس جلد ہی آس پاس کے کم سے کم 1000 بستروں کی گنجائش والے COVID19 کیئر سنٹر کے طور پر کام کرے گا ، اسام کے وزیر صحت ہمنٹا بیسسورما نے ٹویٹ کیا۔

*منی پور: تومبل ڈسٹرکٹ ویمن ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (تیوبل آئیما) ، لیرونگتیل ویمن ڈیولپمنٹ ایسوسی ایشن اور منشیات اور الکحل کے خلاف اتحاد (سی اے ڈی اے) تیوبل کے لیروونگتیل میں لیکیکئی میں کوویڈ 19 پر ایک بیداری پروگرام کا انعقادکیاہے۔ منی پور بپٹسٹ کنونشن ایم بی سی سنٹر چرچ، امفال میں COVID19 میں بیداری کے بارے میں ایک روزہ آگاہی پروگرام کا انعقاد کیا۔

*میزورم: میزورم میں آج ایک COVID19 مریض بازیاب ہوا۔ ریاست میں اب کل کیسز 167 ہیں۔

*ناگالینڈ: احتیاطی تدابیر کے طور پر دہلی سے واپسی کے بعد ناگالینڈ کے وزیر اعلی سلف کوارنٹائن پر ہیں۔ وہ اپنے فرائض سرانجام دیتے رہےںگے۔

*سکم: سکم کے وزیر اعلی شری پریم سنگھ تمانگ کے ساتھ ان کی اہلیہ محترمہ کے نمونے۔ سردا تامنگ اور بیٹے ایم ایل اے شری آدتیہ تمنگ کو COVID19 ٹیسٹنگ کے لئے اکٹھا کیا گیا تھا ، اس کے بعد سیکورٹی اہلکار اور رہائشی عملہ شامل تھا۔ کل 95 نمونے اکٹھے کیے گئے ہیں۔

 

Description: http://164.100.117.97/WriteReadData/userfiles/image/image008HOT4.jpg

 

Description: https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image0072MTI.jpg

******

 

U-4019

 



(Release ID: 1639877) Visitor Counter : 8