ریلوے کی وزارت

یکم جون 2020سے شروع ہونے والی  ریل گاڑی خدمات کیلئے رہنما خطوط

ریل گاڑی خدمات کی بتدریج بحالی

مہاجر مزدوروں اور شرمک ریل گاڑیوں کے علاوہ دیگر ریل گاڑیوں سے سفر کرنے کے خواہشمند افراد کی مدد کیلئے  انتظام

یہ قواعدوضوابط شرمک ریل گاڑیوں کے علاوہ دیگر ریل گاڑیوں کے لئے ہیں، جو بڑی تعداد میں چلتی رہیں گی

ریل گاڑیوں کی 100جوڑیوں کی فہرست تیار کی گئ

ٹکٹوں کی بکنگ، کوٹہ چارٹ تیار کرنے، رعایات، منسوخی اور ریفنڈ، صحت کی اسکریننگ، کھان پان اور بستر وغیرہ کی فراہمی

ان تمام ریل گاڑیوں کےلئے بکنگ21 مئی 2020 کو صبح 10بجے سے شروع ہوگی

دیگر ریگولر مسافر خدمات، جن میں تما م تر میل ؍ ایکسپریس، مسافر اور ذیلی مضافاتی خدمات شامل ہیں، تا حکم ثانی منسوخ رہیں گی

ریل گاڑی میں کوئی اضافی کوچ نہیں لگے گا

جنرل (جی ایس)، سواری ڈبوں کے لئے کرایہ نارمل ہوگا، ریزرو کرانے کے لئے سکنڈ سیٹنگ (2ایس)، کے لئے کرایہ وصول کیا جائے گا اور تمام مسافروں کو نشست فراہم کرائی جائے گی

آئی آر سی ٹی سی ویب سائٹ کے ذریعے یا موبائل کے توسط سے صرف آن لائن ای-ٹکٹنگ کی جائے گی

اے آر پی (پیشگی ریزرویشن مدت) زیادہ سے زیادہ 30دنوں کی ہوگی

صرف کنفرم ٹکٹ کے حامل مس

Posted On: 20 MAY 2020 10:25PM by PIB Delhi

نئی دہلی، 20 ؍مئی، 2020،وزارت ریلوے نے صحت و کنبہ بہبود کی وزارت اور وزارت داخلہ کی صلاح و مشورے سے فیصلہ کیا ہے کہ بھارتی ریلوے کے تحت ریل گاڑی خدمات کو یکم جون 2020 سے مزید جزوی طور پر بحال کیا جائے گا۔

 

بھارتی ریلوے منسلکہ ضمیمہ کے  مطابق فہرست بند 200 مسافر خدمات کا آپریشن بھی شروع کرے گی۔ یعنی 200ریل گاڑیاں چلائے گی۔ یہ ریل گاڑیاں یکم جون 2020 سے چلیں گی اور ان تمام ریل گاڑیوں کے لئے ٹکٹ کی بکنگ 21؍مئی 2020 کو صبح 10بجے سے شروع ہو جائے گی۔

 

یہ خصوصی خدمات ان شرمک ریل گاڑیوں کے علاوہ فراہم کرائی جائیں گی، جو یکم مئی  سے چلائی جا رہی ہیں اور ساتھ ہی ساتھ 12مئی 2020 سے چلائی جانے والی خصوصی اے سی ریل  گاڑیاں (30ریل گاڑیاں)، علیحدہ سے چلتی رہیں گی۔

 

دیگر ریگولر مسافر خدمات، جن میں تمام تر میل ؍ ایکسپریس، مسافر اور مضافاتی خدمات شامل ہیں، تا حکم ثانی منسوخ رہیں گی۔

 

ٹرین کا ٹائپ: ریگولر ریل گاڑیوں کے طرز پر خصوصی ریل گاڑیاں۔

 

یہ ریل گاڑیاں اے سی اور غیر اے سی درجات سمیت کلی طور پر ریزرو ہوں گی۔ جنرل (جی ایس)، سواری ڈبے ایسے ہوں گے، جن کے اندر بیٹھنے کے لئے بھی ریزرو سیٹ ہوگی۔ اس ریل گاڑی میں کوئی غیر ریزرو کوچ نہیں ہوگا۔

 

ان گاڑیوں کا کرایہ نارمل ہوگا اور جنرل سواری ڈبوں کے لئے یہی نارمل کرایہ لگے گا۔ چونکہ یہ گاڑی ریزرو ہوگی، لہذا سکنڈ سیٹنگ کرایہ وصول کیا جائے گا اور ہر مسافر کو سیٹ فراہم کی جائے گی۔

 

وزارت داخلہ کے رہنما خطوط کے مطابق مسافروں کی نقل و حمل اور مسافروں کو لے جانے والی موٹرگاڑی کا ڈرائیور جو مسافروں کو ریلوے اسٹیشنوں تک لانے اور لے جانے کا فریضہ انجام دے گا، اُسے کنفرم ای-ٹکٹ کی  بنیاد پر داخلہ دیا جائے گا۔

Link of Annexure

ضمیمے کا لنک

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

م ن۔ک ا۔

U- 2694



(Release ID: 1625717) Visitor Counter : 17