وزارت خزانہ

پبلک فائننشل  منجمنٹ سسٹم  (پی ایف ایم ایس)  کے ذریعہ  ڈائریکٹ بنیفٹ  ٹرانسفر  (ڈی بی ٹی)  کاا ستعمال کرتے ہوئے   36659 کروڑ روپے سے زیادہ  کووڈ-19 کے   لاک ڈاؤن کے دوران  16.01 کروڑ  فیض یافتگان کے بینک کھاتوں میں   منتقل کئے گئے

وزیراعظم غریب کلیان پیکج   کے تحت   جن  نقد  فائدوں کا اعلان کیا گیا تھا، وہ بھی  ڈی بی  ٹی ڈیجیٹل ادائیگی   نظام استعمال کے ذریعہ منتقل کئے جارہے ہیں

ڈی بی ٹی ادائیگوں کے لئے  پی ایف ایم ایس  کا استعمال   میں پچھلے تین مالی برسوں کے دوران اضافہ ہوا ہے ۔ کل رقمیں    جو مالی سال 19-2018میں  جاری کی گئی تھیں   وہ 22 فی صد سے  بڑھ کر   مالی 20-2019 میں  45 فی صد  ہوگئیں

ڈی بی ٹی کے ذریعہ   یہ یقینی بنایا جاتا ہے  کہ  نقد فائدے  فیض یافتہ کے کھاتے  میں  براہ راست پہنچ جائیں، اس سے   خرد برد  ختم ہوجاتی ہے  اور استعداد میں بہتری آتی ہے

Posted On: 19 APR 2020 3:06PM by PIB Delhi

نئی دہلی،19,- اپریل 2020/ کووڈ-19 کے لاک ڈاؤن کے دوران وزارت خزانہ کے   محکمہ اخراجات کے    کنٹرولر جنرل آف اکاؤنٹس (سی جی اے) کے دفتر  کی  طرف سے پبلک فائننشل منجمنٹ سسٹم   (پی ایف ایم ایس)  کے ذریعہ  ڈائریکٹر بینیفٹ ٹرانسفر   (ڈی بی ٹی)    کا استعمال کرتے ہوئے     36659 کروڑ روپے سے زیادہ    16.01 کروڑ  فیض یافتگان کے   بینک کھاتوں   میں منتقل کئے گئے ہیں۔

فائدوں کی براہ راست  منتقلی کے ذریعہ  اس بات کو یقین بنایا جاتا ہے   کہ  نقد فائدے   فیض یافتہ شخص کے کھاتے میں  براہ  راست پہنچ جائیں   اس سے خرد برد  کا مسئلہ  ختم ہوجاتا ہے   اور استعداد میں بہتری آتی ہے۔

مرکزی اسکیموں (سی ایس)  / مرکزی  نگرانی والے اسکیموں ( سی ایس ایس )   / سی اے ایس ای   اسکیموں کے تحت    ڈی بی ٹی ادائیگی کرنے کے لئے   مذکورہ بالا   نقد  رقمیں    زبردست ڈیجیٹل  ادائیگی  ٹکنالوجی پی ایف ایم ایس ( پبلک  فائننشل  منجمنٹ سسٹم)   کا استعمال کرتے ہوئے منتقل کی گئی ہے۔

چیدہ خصوصیات

  1. کووڈ -19 لاک ڈواؤن کے  دوران ( 24 مارچ 2020 سے  17 اپریل 2020 تک ) 36659 کروڑ روپے سے زیادہ  (27442 کروڑ روپے  (مرکزی نگرانی والی اسکیم (سی ایس ایس) + مرکزی سیکٹر کی اسکیمیں (سی ایس)  ))+9717 روپے   ((ریاستی حکومت (پبلک فائنشنل  منجمنٹ سسٹم(پی ایف ایم ایس) کے  زریعہ ڈائریکٹ بنیفٹ ٹرانسفر (ڈی بی ٹی) کا استعمال کرتے ہوئے  16.01 کروڑ  فیض یافتگان کے بینک کھاتوں میں منتقل کئے گئے ( 11.42 کروڑ (سی ایس ایس /سی ایس )  + 4.59 کروڑ   (اسٹیٹ )
  2. پردھان منتری  غریب کلیان یوجنا  پیکج کے تحت جن نقد فائدوں کا اعلان کیا گیا تھا  انہیں بھی ڈی بی ڈی  ڈیجیٹل ادائیگی نظام کا استعمال کرتے ہوئے منتقل کیا جارہا ہے۔  جن دھن کھاتے رکھنے والی ہر ایک خاتون کے کھاتے میں 500 روپے پہنچائے گئے ہیں  ۔ 13 اپریل 2020 تک کل ملاکر     فیض اٹھانے والی خواتین کی تعداد  19.86 کروڑ تھی۔ جس کے نتیجے میں  (مالی خدمات کے محکمے کے اعدادوشمار کے مطابق )  9930 کروڑ روپے   جاری کئے گئے۔
  3. ڈی بی ٹی ادائیگیوں کے لئے  پی ایف ایم ایس   کے استعمال میں   پچھلے  مالی برسوں میں اضافہ ہوا ہے۔ ڈی بی ٹی کے ذریعہ ادائیگی  جو مالی سال 19-2018 میں   22 فی صد تھی،   مالی سال 20-2019 میں   45 فی صد ہوگئی ۔

کووڈ-19 کی  مدت کے دوران  (24 مارچ 2020 سے 17 اپریل 2020 تک)  ڈی بی  ٹی ادائیگیوں کے لئے پی ایف ایم ایس   کا استعمال  کرتے ہوئے  جو نقد    فائدے  منتقل کئے گئے ہیں ان کی تفصیل مندرجہ ذیل ہے۔

  1. کووڈ-19 کے لاک ڈاؤن کے دوران  یعنی 24 مارچ 2020 سے  17 اپریل 2020 تک  پی ایف ایم ایس   کے ذریعہ   تمام   مرکزی  سیکٹر /مرکزی نگرانی والی اسکیموں   کے تحت  ڈی بی ٹی کے ذریعہ ادائیگی 114202592 فیض یافتگان کے کھاتوں میں   27442.08 کروڑ روپے   منتقل کئے گئے۔  یہ اسکییمں ہیں  پی ایم کسان ، مہاتما گاندھی   نیشنل  ایمپلائمنٹ  گارنٹی اسکیم  (ایم این  آر ای جی ایس)  نیشنل  سوشل اسسٹنٹ  پروگرام ( این ایس  اے پی)  پرائمنٹر  ماترو ونندنا یوجنا (پی ایم  ایم وی وائی)  نیشنل رولر  لیولی ہڈ مشن  (ایم آر ایم ایل) نیشنل ہیلتھ مشن (این ایچ ایم)  نیشنل اسکالر شپ پورٹل (این ایس پی)  این ایچ پی کے ذریعہ مختلف وزارتوں کی  اسکالر شپ اسکیمیں ۔
  2. متذکرہ بالا اسکیموں کے علاوہ   پی ایم  غریب کلیان یوجنا کے تحت بھی ادائیگیاں کی گئی ہیں۔ جن دھن کھاتےرکھنے والی  خواتین میں سے  ہر ایک کے کھاتے میں 500  روپے ڈالے گئے ہیں۔ 13 اپریل 2020 تک فیض اٹھانے والی خواتین کی کل تعداد 19.86 کروڑ تھی جس کے تحت  (مالی خدمات کے محکمے کے   اعدادوشمار کے مطابق)9930 کروڑ روپے  تقسیم کئے گئے۔
  3. کووڈ 19 کے دوران  بہت سی ریاستوں   مثلاً یوپی  ، بہار، مدھیہ پردیش  ، تری پورہ   ، مہاراشٹر، جموں کشمیر، آندھراپردیش   اور دیگر ریاستوں نے    بینک کھاتوں میں نقد رقمیں منتقل کرنے کے لئے   ڈی بی ٹی کا استعمال کیا ہے۔ 180   فلاحی اسکیموں کے ذریعہ 24 مارچ 2020 سے  17 اپریل 2020 تک   ریاستی حکومتوں نے   پی ایف ایم ایس  کا استعمال کرتے ہوئے  45903908 فیض یافتگان کو  9217.22 کروڑ  روپے کی رقمیں  تقسیم کی ہیں۔

مرکزی  نگرانی  دس اہم  اسکیموں  /مرکزی سیکٹر کی اسکیموں کے لئے   بی بی ٹی  ادائیگوں کی تقسیم

اسکیم

24 مارچ 2020 سے 17 پریل 2020 تک

فیض یافتگان کو کی گئی ادائیگی

رقمیں کروڑ میں

پردھان منتری کسان سمان ندھی  (پی ایم کسان) –(3624)

8,43,79,326

17,733.53

مہاتما گاندھی نیشنل   رولر گرانٹی پروگرام –(9219)

1,55,68,886

5,406.09

 انداگاندھی نیشنل   اولڈ ایج پنشن اسکیم (آئی جی  این او اے پی ایس )-(3163)

93,16,712

999.49

 اندراگاندھی نیشنل وڈو پنشن اسکیم  (آئی جی این  ڈبلیو پی ایس)-(3167)

12,37,925

158.59

نیشنل رولر ہیلتھ مشن  -(9156)

10,98,128

280.80

پردھان منتری ماترو وندنا  یوجنا  (3534)

7,58,153

209.47

اقلیتوں کے لئے  میٹرک سے پہلے   اسکالر شپ اسکیم  (9253)

5,72,902

159.86

ایم ایف ایس اے  کے تحت   اناج کی  غیر مرکوز  خرید کے لئے    خوراک کی سبسڈی   9533

2,91,250

19.18

اندرا گاندھی  نیشنل  ڈس ایبلٹی  پنشن اسکیم  (آئی جی   این ڈی  پی ایس)-(3169)

2,39,707

26.95

 نیشنل سوشل  اسسٹنٹ پروگرام  (این ایس اے پی)-(9182)

2,23,987

 

30.55

ریاست

اسکیم 24 مارچ 2020 سے 17 اپریل 2020 تک کی مدت

جن فیض یافتگان کو ادائیگی کی گئی 

 

رقم

کروڑ  میں

بہار

ڈی بی ٹی  -محکمہ تعلیم

1,52,70,541

1,884.66

 

بہار

کورونا ساہیتا  (بی آر) 142

86,95,974

869.60

 

یوپی

وردوستھا  دویا  وستھیا  / کسان پیشن یوجنا -[9529]

53,24,855

707.91

 

یوپی

یوپی- نیشنل ووڈ پنشن اسکیم 3167  (یو پی  10)

26,76,212

272.14

 

بہار

مکھیہ منتری   وردھ جن  پنشن یوجنا  (بی آر 34)

18,17,100

199.73

 

یوپی

کشٹھ وکلانگ  بھرن پوشنن انودان (9763)

10,78,514

112.14

 

بہار

بہار  کی  معذوری اسکیم  (بی آر 99)

10,37,577

98.39

 

آسام

اے ایس  ریاستی   مدد  بزرگوںکے لئے پنشن (او اے سی ایف ایس سی) –(اے ایس 103)

9,86,491

28.88

 

بہار

مکھیہ منتری   وشیش ساہاہتا   (ڈی آر  166)

9,81,879

98.19

 

دہلی

سینئر  شہریوںکے لئے  دہلی کی مالی امداد  (2239 )

9,27,101

433.61

 

*کل  فیض یافتگان  (45903908 کو 9217.22 کروڑ  روپے  ادا کئے گئے۔  (جیسا کہ مندرجہ  بالا  کی پیرا 3 میں بتایا گیا ہے)

***کل فیض یافتگان  کی تعدادجن کو ادائیگی کی گئی  

114202592/رقم :27442.08 کروڑ (مندرجہ بالا کہ پیرا   1 میں )

ریاستی حکومتوں کی  دس اعلی اسکیموں کے لئے ڈی بی  ٹی کے ذریعہ ادائیگیوں کی تقسیم ۔

 

 پچھلے تین برسوں کے دوران  پی ایف ایم ایس  کے استعمال کے ذریعہ   ڈی بی ٹی کی ادائیگی میں اضافہ :

پچھلے تین برسوں میں جی  ڈی بی  ا دائیگوں کے لئے    پی ایف ایم ایس  کے استعمال میں   اضافہ ہوا ہے۔ مالی سال 19-2018 کے دوران لین دین میں 11 فی صدا ضافہ ہوا،( مالی  18-2017 کے مقابلے میں ) اور مالی سال  20-2019 میں  48 فی صد اضافہ ہوا۔   کل ملاکر ادا کی گئی ڈی بی ٹی رقمیں   مالی سال 19-2018 میں  12 فی صد سے بڑھ کر  مالی سال  20-2019 میں  45 فی صد ہوگئیں۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001JPVB.png

 

 

م ن۔ ج۔ ج

Uno-1868



(Release ID: 1616385) Visitor Counter : 47