بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی راستوں کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

مرکزی وزیر جناب سربانند سونووال نے سبز بندرگاہ کے رہنما خطوط 2023 ’’ہرت ساگر‘‘ کا آغاز کیا


’ہرت ساگر گائیڈ لائنز 2023‘ بندرگاہ کی ترقی، آپریشن اور دیکھ بھال میں حیاتیاتی نظام کے طریقہ کار کا تصور کرتی ہے

بندرگاہیں، سبز اقدامات کر رہی ہیں اور ہمارے وزیر اعظم مودی جی کے اعلان کردہ ’پنچ امرت‘ وعدوں کی تکمیل میں فعال طور پر تعاون کر رہی ہیں: ایم او پی ایس کے مرکزی وزیرجناب سربانند سونووال

مختلف کارروائی جاتی طریقہ کار میں ان کی غیر معمولی کامیابیوں کے لیے بڑی بندرگاہوں کو ’ساگر شریشٹھ سمان‘ ایوارڈ سے بھی نوازا گیا

Posted On: 10 MAY 2023 4:18PM by PIB Delhi

صفر کاربن اخراج کےمقصد کو حاصل کرنے کے وسیع تر وژن کو پورا کرنے کے لیے، بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی شاہراہوں کی وزارت نے ’ہرت ساگر‘ گرین پورٹ گائیڈ لائنز کا آغاز کیا ہے۔ ان رہنما خطوط کا آغاز آج  نئی دہلی میں بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں اور آیوش کے مرکزی وزیر جناب سربانند سونووال؛ بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں اور سیاحت کے مرکزی وزیر مملکت جناب شریپد وائی نائک اور وزارت کے دیگر سینئر افسران کی موجودگی  میں کیا گیا۔

ہرت ساگر رہنما خطوط -2023، بندرگاہ کی ترقی، آپریشن اور دیکھ بھال میں ماحولیاتی نظام کی حرکیات کا تصور کرتا ہے جبکہ  اسے ’فطرت کے ساتھ کام کرنے‘ کے تصور سے ہم آہنگ کرتا ہے نیز بندرگاہ کے ماحولیاتی نظام کے حیاتیاتی اجزاء پر اثر کو کم کرتا ہے۔ یہ بندرگاہوں کی کارروائیوں میں صاف/سبز توانائی  کے استعمال پر زور دیتا ہے اور سبز ہائیڈروجن، سبز امونیا،سبز  میتھانول/ایتھانول وغیرہ  جیسے سبز ایندھنوں کو اسٹور کرنے کے لیے بندرگاہ کی صلاحیتوں کو تیار اور ان کی دیکھ بھال کرتا ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001YV0K.jpg

یہ رہنما خطوط بڑی بندرگاہوں کے لیے ایک لائحہ عمل فراہم کرتے ہیں تاکہ متعین ٹائم لائنز پر کاربن کے اخراج میں مقدار کے مطابق کمی کے ہدف کے نتائج کے حصول کے لیے، ایک جامع ایکشن پلان تیار کیا جا سکے، جس پر توجہ مرکوز عمل درآمد اور گرین اقدامات کی قریبی نگرانی اور پائیدار ترقیاتی اہداف (ایس ڈی جی) کو حاصل کیا جا سکے۔

تقریب کے دوران، مرکزی وزیر جناب سربانند سونووال نے کہا، ’بندرگاہیں سبز اقدامات کر رہی ہیں اور ہمارے وزیر اعظم جناب نریندر مودی کے اعلان کردہ ’’پنچ امرت‘‘ وعدوں کی تکمیل میں فعال طور پر تعاون کر رہی ہیں۔’’ہرت ساگر‘‘ کے رہنما خطوط -2023،ہماری بڑی بندرگاہوں کے لیے ایک جامع لائحہ عمل فراہم کرتے ہیں، جو انہیں ایک جامع ایکشن پلان بنانے کے لیے بااختیار بناتے ہیں جس کا مقصد کاربن کے اخراج میں متعین کردہ ٹائم لائنز پر قابل قدر کمی کو حاصل کرنا ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002G8ZX.jpg

رہنما خطوط کا مقصد، ماحولیاتی کارکردگی کے اشاریوں کی بنیاد پر، بندرگاہوں کی کارروائیوں سے  صفر فضلہ خارج کرنے اور نگرانی کو فروغ دینے کے لیے، ریڈوس،دوبارہ استعمال اور ری سائیکل کے ذریعے کچرے کو کم سے کم کرنا ہے۔ اس میں بندرگاہوں سے متعلق قومی سبز ہائیڈروجن مشن کے پہلوؤں، سبز  ہائیڈروجن سہولت کی ترقی، ایل این جی بنکرنگ، آف شور ونڈ توانائی وغیرہ کا بھی احاطہ کیا گیا ہے اور عالمی سبز  رپورٹنگ اقدامات (جی آر آئی) معیار کو اپنانے کا بندوبست بھی کیا گیا ہے۔

ایم او پی ایس ڈبلیو کے وزیر مملکت جناب شری پد نائک، نے تقریب کے دوران کہا کہ’ہرت ساگر گرین پورٹ گائیڈ لائنز ‘کا اجراء ،ہمارے پائیداری کے اہداف کو حاصل کرنے کی جانب ایک اہم قدم ہے۔ یہ رہنما خطوط ہمارے تمام بندرگاہوں پر ماحول دوست طرز عمل کو فروغ دینے کے مقصد سے وضع کیے گئے ہیں۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image003YAYM.jpg

ایم او پی ایس ڈبلیو  کے سکریٹری جناب سدھانش پنت نے کہا، ’ہماری چار بڑی بندرگاہیں۔ دین دیال پورٹ، وشاکھاپٹنم پورٹ، نیو منگلور پورٹ اور وی او سی پورٹ پہلے ہی اپنی طلب سے زیادہ قابل تجدید توانائی پیدا کر رہی ہیں۔ اب سے ہماری بندرگاہیں، ماحولیاتی پہلوؤں میں اپنی صلاحیت کو جاننے کے لیے ماحولیاتی اشارے پر خود اپنی پرکھ کر سکیں گی‘‘۔

بڑی بندرگاہوں کو مالی سال 23-2022 کے دوران، منتخب آپریشنل اور مالیاتی پیرامیٹرز پر ان کی ہمہ وقتی بہترین کارکردگی پر ایوارڈز سے نوازا گیا۔ ان بندرگاہوں کو بھی اعزاز دیا گیا جنہوں نے سب سے زیادہ اضافہ درج کیا اور 23-2022 کے دوران ان کی مجموعی کارکردگی کی بنیاد پر درجہ بندی کی گئی ہے۔ اس کا مقصد بڑی بندرگاہوں کے درمیان منصفانہ اور صحت مند مقابلہ پیدا کرنا اور انہیں آنے والے سال میں اچھی اور بہتر کارکردگی دکھانے کی ترغیب دینا ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image0042OON.jpg

سال 23-2022 کے لیے بہترین مطلق کارکردگی کا ایوارڈ ،دین دیال پورٹ، کانڈلا کو 137.56 ایم ایم ٹی کے سب سے زیادہ سامان کو ہینڈل کرنے کے لیے دیا گیا۔ جواہر لعل نہرو پورٹ کو ٹرن اراؤنڈ ٹائم میں اہم سنگ میل حاصل کرنے پر ایوارڈ ملا جبکہ پارا دیپ پورٹ کو شپ برتھ ڈے ماحصل پر کارکردگی کی شیلڈ ملی۔ کامراجار بندرگاہ کو برتھنگ سے پہلے کے حراستی وقت میں پہچانا گیا جبکہ کوچین پورٹ کو باری باری (غیر کنٹینر بندرگاہ) میں کارکردگی کی شیلڈ دی گئی۔

گزشتہ سال 16.56 فیصد کی سب سے زیادہ کارگو گروتھ ریٹ حاصل کرنے پر، پارا دیپ پورٹ نے بہترین اضافہ کارکردگی کا ایوارڈ حاصل کیا۔ انکریمنٹل زمرہ میں ایک اور ایوارڈ مورموگاو پورٹ کو بہترین شپ برتھ ڈے ماحصل  کے لیے دیا گیا جبکہ بہترین پری برتھنگ ڈیٹینشن ٹائم کے لیے، کامراجار پورٹ کو ایوارڈ دیا گیا۔

بہترین بندرگاہ کا ایوارڈ، پارا دیپ پورٹ کو کارگو ہینڈلنگ، اوسط ٹرناراؤنڈ ٹائم، جہاز کی سالگرہ وار  پیداوار، اور برتھ پر موقوف دورانیہ، آپریٹنگ تناسب، برتھنگ سے قبل قیام کی بنیاد پر مجموعی سالانہ کارکردگی پر دیا گیا۔

*****

(ش ح - اع - ر ا)   

U.No.4990



(Release ID: 1923227) Visitor Counter : 86