ہنر مندی کے فروغ اور صنعت کاری کی وزارت

دھرمیندر پردھان نے پردھان منتری قومی اپرنٹس شپ (کار آموزی) میلہ کا آغاز کیا جس کا انعقاد ایک دن میں 700 سے زیادہ مقامات پر کیا گیا؛ قومی مشنوں کو چلانے کے لئے اپرنٹس شپ کو ایک شراکتی تحریک بنانے پر زور دیا گیا


اگلے ایک سال کے دوران ایم ایس ڈی ای 10 لاکھ نوجوانوں کو شامل کرنے کی کوشش کرے گا

ہر ماہ اپرنٹس شپ میلہ منعقد کیا جائے گا: دھرمیندر پردھان

اپرنٹس کو وظیفہ کی ادائیگی آن لائن کی جائے گی

تعلیمی کریڈٹ اپرنٹس کو دیا جائے گا جو مستقبل کے راستے کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے

راجیو چندر شیکھر نے کہا کہ ایکو سسٹم کو زیادہ مانگ پر مبنی اور اثر انگیز بنانے کے لئے اپرنٹس شپ ماڈل کو صنعت سے ایک اہم فیڈ بیک میکانزم کے طور پر بھی لیا جانا چاہئے

Posted On: 21 APR 2022 3:04PM by PIB Delhi

 

وزیر اعظم کے اسکل انڈیا مشن کو فروغ دیتے ہوئے تعلیم، ہنرمندی کے فروغ اور صنعت کاری کے مرکزی وزیر جناب دھرمیندر پردھان نے آج ملک میں 700 سے زیادہ مقامات پر ڈیجیٹل طور پر قومی اپرنٹس شپ میلے کا افتتاح کیا۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001X813.jpg

بجلی، خردہ، ٹیلی مواصلات، آئی ٹی/آئی ٹی ای ایس ، الیکٹرانکس، آٹوموٹیو اور دیگر شعبوں سمیت 30 سے زائد صنعتوں کی 4000 سے زائد تنظیموں نے اس تقریب میں شرکت کی۔ پانچویں سے بارہویں جماعت کے پاس سرٹیفکیٹ طلباء، ہنر کی تربیت کا سرٹیفکیٹ رکھنے والے افراد، آئی ٹی آئی ڈپلومہ، یا گریجویٹ ڈگری رکھنے والے افراد پی ایم اپرنٹس شپ میلے میں حصہ لینے کے اہل تھے۔ اس پروگرام کا بنیادی مقصد تقریباً ایک لاکھ اپرنٹس کی خدمات حاصل کرنے کی حوصلہ افزائی کرنا اور تربیت اور عملی مہارتوں کے ذریعے ان کی صلاحیتوں کی شناخت اور ترقی میں آجروں کی مدد کرنا تھا۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002K57H.jpg

اس کے علاوہ نوجوان اور خواہش مند افرادی قوت کو 500 سے زیادہ تجارتوں بشمول ویلڈر، الیکٹریشین، ہاؤس کیپر، بیوٹیشین، مکینک اور دیگر پیشے کا انتخاب دیا گیا۔ انہیں موقع پر ہی سرکاری معیارات کے مطابق ماہانہ وظیفہ کے ساتھ اپرنٹس شپ کے لئے آفرز دی گئیں۔

اس کے بعد انہیں نئی ​​مہارتیں تیار کرنے کے لیے حکومتی معیارات کے مطابق ماہانہ وظیفہ ملے گا، سیکھنے کے دوران کمانے کا موقع بھی ملے گا۔ امیدواروں کو نیشنل کونسل فار ووکیشنل ایجوکیشن اینڈ ٹریننگ (این سی وی ای ٹی) کے ذریعہ تسلیم شدہ سرٹیفکیٹ ملے گا، جس سے تربیت کے بعد ان کی ملازمت کے امکانات بڑھ جائیں گے۔

قومی اپرنٹس شپ میلے کے آغاز کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے تعلیم، ہنرمندی کے فروغ اور صنعت کاری کے مرکزی وزیر جناب دھرمیندر پردھان نے کہا کہ ‘‘مجھے خوشی ہے کہ ملک کے 700 مقامات پر 4000 سے زیادہ ادارے اس میلے میں حصہ لے رہے ہیں تاکہ ہمارے نوجوانوں کے لئے فائدہ مند روزگار کے مواقع فراہم کئے جا سکیں۔  مینوفیکچرنگ، الیکٹرانکس، خدمات، بجلی،آئی ٹی/ آئی ٹی ای ایس، ریلوے، خردہ اور کئی دیگر ابھرتے ہوئے شعبوں سے ملازمت فراہم کرنے والے افراد کو اپرنٹس شپ میلے میں دیکھ کر بیحد خوشی ہورہی ہے اور یہ بیحد اطمینان کی بات ہے۔

جناب پردھان نے کہا کہ 34 سال کے بعد ہمارے پاس ایک نئی تعلیمی پالیسی ہے جو اس امرت کال میں ہندوستان کی تبدیلی کا روڈ میپ ہے۔ تعلیمی کریڈٹ اپرنٹس کو دیا جائے گا جو ان کے مستقبل کے راستے کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے. ہمیں اپرنٹس شپ کو ہنر مندی، دوبارہ ہنر مندی اور اعلیٰ ہنرمند نوجوان بھارت، فی کس اقتصادی پیداواری صلاحیت کو بڑھانے اور قومی مشنوں کو آگے بڑھانے کے لیے ایک شراکتی تحریک بنانا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ‘‘آگے بڑھتے ہوئے پردھان منتری قومی اپرنٹس شپ میلہ ایک ماہانہ معاملہ ہوگا۔ اپرنٹس شپ کے عمل کو مزید ہموار کرنے اور ہمارے نوجوانوں کو 21ویں صدی میں متعلقہ مواقع سے مربوط کرنے کے لیے ایک ڈیجیٹل ڈیش بورڈ ترتیب دیا جائے گا۔ ہماری کوشش یہ ہوگی کہ 10 لاکھ سے زائد ٹرینی کارپوریٹس کے ساتھ اپرنٹس کے طور پر مشغول ہوں اور کمانے کے اس موقع سے فائدہ اٹھائیں جب وہ سیکھیں اور صنعت میں اپنا گیٹ وے تلاش کریں۔’’

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image003IU67.jpg

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ہنرمندی کے فروغ اور صنعت کاری کے وزیر مملکت نیز الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹکنالوجی کے وزیر مملکت جناب راجیو چندر شیکھر نے کہا کہ ‘‘کووڈ کے بعد ہماری توجہ اپنی قابل روزگار مہارتوں اور اس طرح روزگار کی اہلیت کو بڑھانا ہے، جیسا کہ ہمارے وزیر اعظم نے کہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہنر مندی، دوبارہ ہنر مندی اور اپ اسکلنگ کو مواقع کی ایک مسلسل سیڑھی کے طور پر لیا جانا چاہیے۔ اپرنٹس شپ سب سے زیادہ پائیدار ماڈلز میں سے ایک ہے اور یہ تصور حکومت، ہنر کی فراہمی کے ماحولی نظام اور روزگار کے ماحولی نظام کے درمیان ایک قابل شراکت داری پیدا کرنے کے لیے مرکزی حیثیت رکھتا ہے۔ ہنر مندی کے فروغ اور  صنعت کاری نے 2014 اور 2015 میں اپرنٹس شپ ایکٹ اور اپرنٹس رولز میں جامع اصلاحات کی ہیں اور اب اسے ہنر مندی کے ماحولی نظام کو ہنر مند اور ہنر مند ہنر کی تلاش کرنے والوں دونوں سے مربوط کرنے کے لیے ایک متحرک ارتقا پذیر پلیٹ فارم کے طور پر لیا جانا چاہیے۔ ٹی بنانے کے لیے اپرنٹس شپ ماڈل کو انڈسٹری کی جانب سے ایک اہم فیڈ بیک میکانزم کے طور پر بھی لیا جانا چاہیےچاہیے تاکہ ماحولی نظام زیادہ مانگ پر مبنی اور اثر انگیز بنایا جاسکے۔ پردھان منتری قومی اپرنٹس شپ میلہ صنعت کو نوجوانوں سے جوڑنے کے لیے ایک مضبوط پلیٹ فارم کے طور پر کام کرے گا۔

پردھان منتری قومی اپرنٹس شپ میلے میں شرکت کرنے والے اداروں کو ایک مشترکہ پلیٹ فارم پر ممکنہ اپرنٹس سے ملنے اور موقع پر ہی امیدواروں کا انتخاب کرنے کا موقع ملتا ہے۔ اس کے علاوہ چھوٹے پیمانے کی صنعتیں بھی جن میں کم از کم چار ورکنگ ممبرز ہوں وہ بھی ایونٹ میں اپرنٹس کی خدمات حاصل کر سکتے ہیں۔ ایک کریڈٹ بینک کا تصور بھی جلد ہی متعارف کرایا جائے گا جس میں سیکھنے والوں کے جمع کردہ مختلف کریڈٹس کی ڈیپازٹری ہوگی جسے وہ مستقبل کے تعلیمی راستوں کے لیے استعمال کر سکتے ہیں۔

بات چیت کے دوران جناب دھرمیندر پردھان بھونیشور سے تعلق رکھنے والے ایک نوجوان ٹرینی کے کاروباری جذبے سے خاص طور پر متاثر ہوئے۔سرکاری آئی ٹی آئی بھونیشور میں بیکر اور کنفیکشنر کی تجارت میں اپرنٹس شپ کرنے والی وہ لڑکی اپنی بیکری شروع کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ انہوں نے تمام اسٹیک ہولڈرز کی حوصلہ افزائی کی کہ وہ اپرنٹس شپ کے دائرہ کار اور پیمانے کو مزید وسعت دینے کے لیے اپنے تخیل کو وسیع کریں۔ مقامی معیشتوں میں موجود مواقع پر مبنی صنعتی روابط نوجوانوں کے لیے بڑے پیمانے پر اپرنٹس شپ کے مواقع بڑھانے میں ایک طویل سفر طے کریں گے۔

پردھان منتری قومی اپرنٹس شپ میلہ حصہ لینے والے اداروں کے لیے ایک بہترین موقع رہا ہے، کیونکہ وہ ایک پلیٹ فارم پر ممکنہ اپرنٹس سے ملنے اور ان کی ضروریات کی بنیاد پر درخواست دہندگان کا انتخاب کرنے کے قابل تھے۔ اس کے علاوہ کم از کم چار ملازمین والی چھوٹی صنعتیں بھی میلے میں اپرنٹس کی خدمات حاصل کرنے کے قابل تھیں۔

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

 

ش ح۔م ع۔ع ن

                                                                                                                                      (U: 4516)



(Release ID: 1818776) Visitor Counter : 91