نیتی آیوگ

اٹل اختراعی مشن اور ڈیل ٹکنالوجیزنے طلبا کا چھوٹی صنعتوں سے متعلق پروگرام دوئم شروع کیا

Posted On: 11 AUG 2020 6:16PM by PIB Delhi

 

نئی دہلی،  11/اگست 2020، نیتی آیوگ کے اٹل اختراعی مشن  نے  آج ڈیل ٹکنالوجیز  کے اشتراک سے طلبا کا چھوٹی صنعت سے متعلق پروگرام دوئم شروع کیا۔ یہ پروگرام اٹل ٹنکرنگ لیب کے نوجوان اختراع  کاروں کے لئے شروع کیا گیا ہے۔

          ستمبر کے پہلے مرحلے کی غیر معمولی کامیابی کے بعدیہ دوسرے مرحلے کا پروگرام نیتی آیوگ کے نائب چیئرمین ڈاکٹر راجیو کمار ، ڈیل ٹکنالوجیز کےصدر اور ایم ڈی آلوک اوہری  ، کے آئی ایم کے مشن ڈائریکٹر آر رمنن  او رلرننگ لنکس  فاؤنڈیشن کی چیئر پرسن ڈاکٹر انجلی پرکاش کی موجودگی میں  شروع کیا گیا۔

          نیتی آیوگ کے نائب چیئر مین ڈاکٹر راجیو کمار نے کہا :’’ آج میں بے حد خوش ہوں چونکہ میں نے اے ٹی ایل کے نوجوان پہل کاروں  کی طرف سے کی گئی اختراعات کو دیکھا ہے ۔ یہ اختراع کار مجھے سوچنے پر مجبور کرتے ہیں  کہ  ملک کے یہ نوجوان کیا کچھ حاصل کرسکتے ہیں ، اگر ان کو ان کے ساتھی شہریوں کو درپیش چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے غیر روایتی طور پر سوچنے کا موقع دیا جائے۔جب ستمبر کا پہلے مرحلے کا پروگرام ختم ہوا اور ستمبر میں دوسرے مرحلے کا پروگرام شروع ہوا تو مجھے اس کے اثرات دیکھ کر بہت خوشی ہوئی کہ یہ اختراعات  ملک میں  ترقی کا سبب بنیں گی۔

          ستمبر کے دوسرے مرحلے کے پروگرام میں نوجوان اختراع کاروںکو ڈیل رضا کاروں کے ساتھ قریب رہتے ہوئے کام کرنے کا موقع ملے گا۔انہیں  ایک گرو کی مدد ،نمونے تیارکرنے اور جانچ کرنے میں مدد ملے گی۔صارفین کی طرف سے موصولہ رائے ،دانشورانہ املاک کے رجسٹریشن  ، نت نئے نظریات کی پیٹنٹنگ  ، ان نظریات کو آگے بڑھانے اور مصنوعات ، مصنوعات سازی میں مدد نیز مارکیٹ میں  مصنوعات کے آغازمیں  مدد مل سکے گی۔

          اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے اے آئی ایم مشن کے ڈائریکٹر آر رمنن نے کہا :’’ اٹل اختراعی مشن کا مقصد ملک میں  دس لاکھ سے زیادہ اختراع کار  اور روزگار کے موقعے پیداکرنا ہے۔ ڈیل ٹکنالوجی کے ساتھ اٹل ٹنکرنگ لیب  کی ابھرتی ہوئی صنعتی صلاحیتوں  کو بڑھاوادینے میں  طلبا کے چھوٹی صنعتو ں کے پروگرام سے حوصلہ ملتا ہے۔

          ستمبر کے پہلے مرحلے کا پروگرام جنوری 2019  میں  شروع ہوا تھا ۔اس  دس مہینہ طویل محنت کے ایک پروگرام کے ذریعہ   اے ٹی ایل مراٹھوں کی چھ سرکردہ ٹیموں کو اپنی اختراعات کو ، پوری طرح کارکردگی انجام دینے والی مصنوعات میں بدلنے کا موقع  دیا گیا ہے ۔ یہ مصنوعات   مارکیٹ میں دستیاب ہیں۔

          اے ٹی ایل مراٹھوں کے  آخری اجلاس میں   1500 اختراعات داخل کی گئیں۔دومرحلوں کے بعد طلباکے اختراعی پروگرام کے لئے 50 ٹیموں کا انتخاب کیا گیا ۔جیتنے والی ٹیموں میں سے 75 فیصد سے زیادہ کا تعلق دوسرے نمبر کے شہروں اور / یا دیہی علاقوں سے تھا اور 60 فیصد سے زیادہ کا تعلق سرکاری اسکولوں سے تھا۔جیتنے والی طلبا ٹیموں  میں تقریباََ 46 فیصد لڑکیاں تھیں اس کے بعد ان ٹیموں کو کئی مہینے تک اٹل انکیوبیشن  مراکز میں تربیت دی گئی ۔ اب 8 سرکردہ ٹیموںکو  اپنے نمونے ستمبر کے دوسرے مرحلے میں  مصنوعات کے طور پر پیش کرنے کا موقع ملے گا۔

 

 

 

 

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

U-4766

م ن۔ ا س۔  ر م۔

 



(Release ID: 1648158) Visitor Counter : 10