وزارت دفاع
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

مالی سال 2023-24 میں دفاعی سرمائے کی خریداری کے بجٹ کا ریکارڈ  75 فیصد گھریلو صنعت کے لیے مختص ،  14ویں ایرو انڈیا میں وزیر دفاع کا اعلان


بندھن تقریب میں تقریباً  80,000 کروڑ روپے کی 266 شراکت داریاں ہوئیں

ایرو انڈیا نے ’نیو انڈیا‘ کا ’نیو ڈیفنس سیکٹر‘ دنیا کو دکھایا: جناب راجناتھ سنگھ

Posted On: 15 FEB 2023 1:56PM by PIB Delhi

دفاعی سرمائے کی خریداری کے بجٹ کا ریکارڈ 75 فیصد (تقریباً ایک لاکھ کروڑ روپے) مالی سال (ایف وائی)  2023-24 میں گھریلو صنعت کے لیے مختص کیا گیا ہے، جو کہ 2022-23 میں 68 فیصد تھا۔ اس کا اعلان وزیر دفاع جناب راج ناتھ سنگھ نے 15 فروری 2023 کو بنگلورو میں 14ویں ایرو انڈیا کی بندھن تقریب کے دوران کیا تھا۔ مالی سال 2023-24 میں، وزارت دفاع (ایم او ڈی) کو کل 5.94 لاکھ کروڑ روپے کا بجٹ مختص کیا گیا ہے، جو کل بجٹ (45.03 لاکھ کروڑ روپے) کا 13.18 فیصد ہے۔ جدید کاری اور بنیادی ڈھانچے کی ترقی سے متعلق سرمایہ کاری کو بڑھا کر 1.63 لاکھ کروڑ روپے کر دیا گیا ہے۔

جناب راج ناتھ سنگھ نے اس فیصلے کو حکومت کی طرف سے ’’امرت کال‘‘ کے آغاز میں دفاعی شعبے کو مزید مضبوط بنانے اور درآمدات پر انحصار کو کم کرنے کے لیے اٹھایا گیا ایک بے مثال قدم قرار دیا۔ انھوں نے کہا کہ ’’اگر آپ ایک قدم بڑھائیں گے تو حکومت دس قدم آگے بڑھانے کا وعدہ کرتی ہے۔ آپ نے ترقی کی راہ پر چلنے کے لیے زمین کی بات کی۔ ہم آپ کو پورا آسمان فراہم کر رہے ہیں۔ مقامی صنعت کے لیے کیپٹل پروکیورمنٹ بجٹ کا تین چوتھائی حصہ مختص کرنا اس سمت میں ایک قدم ہے۔‘‘

وزیر دفاع نے اعتماد ظاہر کیا کہ اس قدم سے ہندوستانی صنعت زیادہ جوش و خروش کے ساتھ آگے آئے گی اور دفاعی شعبے کو مزید طاقتور اور خوشحال بنانے میں اپنا حصہ ڈالے گی۔ ان کا خیال تھا کہ ایک مضبوط اور خود انحصار دفاعی صنعت نہ صرف ملک کے سیکیورٹی نظام کو مضبوط کرتی ہے بلکہ معیشت کو بھی تقویت دیتی ہے۔ انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ گزشتہ چند سالوں میں، ملک میں گھریلو صنعت کے لیے سازگار ماحول پیدا کیا گیا ہے، جو مقامی کمپنیوں کو ترقی کرنے اور ملک کی مجموعی ترقی کو یقینی بنانے کے لیے وزیر اعظم جناب نریندر مودی کے ’میک ان انڈیا، میک فار دی ورلڈ‘ کے ویژن کے مطابق دوست ممالک کی سکیورٹی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ایک رن وے فراہم کرتا ہے۔ ۔

بندھن تقریب میں 201 ایم او یوز، 53 بڑے اعلانات، نو پروڈکٹ لانچ اور تین ٹیکنالوجی منتقلی سمیت  266 شراکت داریاں کی گئیں،  جن کی مالیت تقریباً 80,000 کروڑ روپے ہے۔

اہم معاہدے

• ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ اور سفران ہیلی کاپٹر انجنز، فرانس کے درمیان کام میں حصہ داری کے لیے ایم او یو، جو کہ ہیلی کاپٹر انجنوں کے ڈیزائن، ڈیولپمنٹ، مینوفیکچرنگ اور لائف ٹائم سپورٹ کے لیے مشترکہ منصوبے کی تشکیل سے متعلق ہے۔

• بھارت الیکٹرانکس لمیٹڈ اور ایروناٹیکل ڈیولپمنٹ ایجنسی کے درمیان آئی ڈبلیو بی سی اور ایڈوانسڈ میڈیم کمبیٹ ایئر کرافٹ (اے ایم سی اے) کے لیے اَدر ایل آر یو کے درمیان ایم او یو۔

•  بی ایس ایس میٹریل لمیٹڈ اور پیگاسس انجینئرنگ، اے ڈی یو ایس ای اے انکارپوریٹڈ ڈویژن (یو ایس اے)  کے درمیان تعاون، لاجسٹک ڈرونز کے لیے ہندوستانی فوج کے لیے لاسٹ مائل ڈیلیوری کے مقصد سے سرحدی علاقوں کے ساتھ آگے کے فوجیوں کے لیے جو آندھی/جھونپڑی کی حالت، بارش / برف وغیرہ میں آپریشن کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

•   گوپالن ایرو اسپیس انڈیا پرائیویٹ لمیٹڈ اور چیک جمہوریہ  کے اومنیپول کے درمیان  مسافر بردار طیارے (ایل 410 یو وی پی- ای  ورژن) کی تیاری اور اسمبلنگ کے لیے ایم او یو۔

•  ساگر ڈیفنس انجینئرنگ پرائیویٹ لمیٹڈ (ایس ڈی ای پی ایل) اور اسرائیل ایرو اسپیس انڈسٹریز (آئی اے آئی) کے درمیان ہندوستانی بحریہ کے لیے آئیڈیکس چیلنج ’’خودکار ہتھیاروں سے چلنے والی کشتی سوارم‘‘ کے لیے ایم او یو۔

• بھارت ڈائنامکس لمیٹڈ اور بلٹیکسپرو لمیٹڈ، بلغاریہ کے درمیان بھارت میں 122 ایم ایم گریڈ بی ایم ای آر اور این او این ای آر راکٹوں کے لیے مینوفیکچرنگ سہولیات قائم کرنے اور ضروریات (بشمول ٹی او ٹی) کو پورا کرنے کے لیے ایم او یو۔

• جی آر ایس ای اور رولس- روئیس سالیوشنز جی ایم بی ایچ (ایم ٹی یو) کے درمیان ایم ٹی یو 16 وی 4000 ایم 73 ایل انجن کے لوکلائزیشن کے ساتھ لائسنس کی تیاری کے لیے ایم او یو، ہندوستانی بحریہ کے لیے نیکسٹ جنریشن فاسٹ اٹیک کرافٹ ویسل کے لیے مقامی مواد کو سپورٹ کرنے کی خاطر۔

•  بی ای ایم ایل نے، ٹی- 72 / ٹی-90 ٹینکوں کے لیے  ٹی آر اے، ڈبلیو ایل اسمبلی کی ترقی اور فراہمی کے لیے آر اینڈ ڈی ای ای، ڈی آر ڈی او کے ساتھ ٹیکنالوجی کی منتقلی (ٹی او ٹی) کے لیے لائسنس کا معاہدہ کیا۔

•  ڈی ایل آر ایل ڈی آر ڈی او سے بی ای ایل حیدرآباد یونٹ تک شکتی ای ڈبلیو سسٹم کا ٹی او ٹی آل سسٹم یونٹس، بل آف میٹریل، ٹیسٹ کے طریقہ کار، انضمام اور پیشکش کا طریقہ کار۔

• ہندوستان ایروناٹکس لمیٹڈ اور ایلٹا سسٹمز لمیٹڈ، اسرائیل کے درمیان ہندوستانی پلیٹ فارمز کے لیے میری ٹائم پیٹرول راڈار (ایم پی آر) میں مستقبل کے کاروبار پر تعاون کے لیے ایم او یو۔

مصنوعات

عمودی طور پر شارٹ رینج کی سطح سے فضا میں مار کرنے والا میزائل (بھارت ڈائنامکس لمیٹڈ): وی ایل ایس آر ایس اے ایم اگلی نسل کا، جہاز پر مبنی، ہر موسم میں کام آنے والا، فضائی دفاعی ہتھیار ہے، جسے بحریہ سپرسونک سی اسکیمنگ کے نقطہ دفاع کے طور پر استعمال کر سکتی ہے۔ ہوائی جہاز اور یو اے وی جیسے اہداف کو اسکیم کرنا۔ میزائل دھوئیں سے پاک پروپلشن سسٹم سے لیس ہے، جو ہر موسم میں کام کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس میں جدید ترین الیکٹرانک کاؤنٹر - کاؤنٹر میژرس کی خصوصیات کے ساتھ انتہائی چست کنفیگریشن ہے۔

•  بی ایم پی II کے لیے ایس اے ایل سیکر اے ٹی جی ایم (بھارت ڈائنامکس لمیٹڈ): بی ایم پی-  II کے لیے سیمی ایکٹیو لیزر سیکر پر مبنی اینٹی ٹینک گائیڈڈ میزائل ایک سبسونک میزائل ہے جس کی رینج 4,000 میٹر اور پرواز کا وقت 25 سیکنڈ ہے۔ لانچ ٹیوب کے ساتھ میزائل کا وزن 23 کلوگرام ہے اور اسے ٹینکوں اور پیادہ جنگی گاڑیوں جیسے متحرک اور غیر متحرک اہداف کو نشانہ بنانے کے لیے مختلف قسم کے علاقوں میں استعمال کیا جا سکتا ہے۔

جشنو (بھارت ڈائنامکس لمیٹڈ): جشنو، ایک ڈرون ڈیلیورڈ میزائل، ہلکے وزن والا چھوٹا میزائل ہے، جو نرم جلد والے اہداف کو نشانہ بناتا ہے۔ اس کی رینج 1.5 کلومیٹر ہے اور پرواز کا وقت 9 سیکنڈ ہے۔ سسٹم کی ترتیب کی بنیاد پر میزائل نیم خودکار یا مکمل طور پر خودکار ہو سکتا ہے۔

سافٹ ویئر ڈیفائنڈ این اے وی آئی سی / جی پی ایس ریسیور ماڈیول کی بنیاد پر مقامی طور پر تیار کردہ پروسیسرز (اَستر مائیکروویو پروڈکٹس لمیٹڈ) ۔

•  ڈی آر ڈی او (استر مائیکروویو پروڈکٹس لمیٹڈ) کی ٹیکنالوجی پر مبنی مقامی طور پر بنایا گیا ’کاؤنٹر ڈرون راڈار‘۔

•  9 ملی میٹر سب سونک ایمیونیشن (میونیشنز انڈیا لمیٹڈ)۔

 آئی او ایس پر بی ایف ٹی (آئیڈا فورگ ٹیکنالوجی لمیٹڈ): بلیو فائر ٹچ بلیو فائر ٹچ، ہمارا گراؤنڈ کنٹرول اسٹیشن (جی سی ایس) سافٹ ویئر، آپریشنل ایریا اور ٹارگٹ لوکیشنز کی بنیاد پر مشنوں کی پہلے سے منصوبہ بندی کرنے کی صلاحیت کے ساتھ نقشہ سازی اور نگرانی دونوں مشنوں کی منصوبہ بندی اور کمانڈ کرنے کے لیے وے پوائنٹ پر مبنی نیویگیشن کے ذریعے بنایا گیا ہے۔

•  ایچ ایف، ایس ڈی آر ریڈیو  (بھارت الیکٹرانکس لمیٹڈ): یہ ایک جدید سافٹ ویئر ڈیفائنڈ ریڈیو ہے۔ ریڈیو ہلکا پھلکا 20 ڈبلیو ٹرانسمٹ کرنے کے قابل ریڈیو ہے۔ یہ پرہجوم ایچ ایف بینڈ اور نظروں سے باہر لمبی رینج کی مواصلات میں مختصر فاصلے کی کمیونیکیشن کی ضروریات کا مکمل حل فراہم کرتا ہے۔

•  جونیومیٹر (بھارت الیکٹرانکس لمیٹڈ): یہ آرٹلری کے ذریعے دن کے وقت یا رات کے وقت استعمال کے لیے کسی بھی مربوط مشاہدے اور فائر کنٹرول مانیٹرنگ سسٹم کا حصہ ہے۔

 

جناب راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ بندھن کے دوران مکمل ہونے والے مفاہمت نامے اور ٹی او ٹی، دفاع میں ایف ڈی آئی کو بڑھانے کی راہ ہموار کریں گے اور اس شعبے میں مینوفیکچرنگ کو مزید بلندیوں پر لے جائیں گے۔ انہوں نے بندھن کی تعریف صرف اقتصادی فائدے تک محدود دونوں فریقوں کے درمیان ایک معاہدے کے طور پر نہیں کی بلکہ دفاعی میدان میں قوم کو تقویت دینے کے لیے ایک نئی قرارداد کے طور پر بیان کی۔ انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ دوست ممالک کے ساتھ جو شراکت داری قائم کی گئی ہے وہ ہندوستان کے ساتھ دوطرفہ تعاون کو اگلی سطح تک لے جائے گی۔

وزیر دفاع نے کہا کہ ایرو انڈیا نے دنیا کو ’نیو انڈیا‘ کا ’نیو ڈیفنس سیکٹر‘ دکھایا، جس نے نہ صرف پچھلے کچھ سالوں میں ترقی کی ہے، بلکہ اب سرکردہ ممالک کے دفاعی شعبوں کے ساتھ ساتھ چلنے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔ انہوں نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ اس تقریب نے ہندوستانی دفاعی صنعت کو مضبوط کرنے کی نئی راہ ہموار کی اور اسے ’’آتم نربھر بھارت‘‘ کے نئے دور کا آغاز قرار دیا۔ انہوں نے اس یقین کا اظہار کیا کہ یہ شعبہ نئی توانائی اور عزم کے ساتھ ترقی کی راہ پر مضبوطی سے آگے بڑھے گا۔

جناب راج ناتھ سنگھ نے کرناٹک کو ان تاریخی ریاستوں میں سے ایک قرار دیا جو ملک کی اقتصادی ترقی میں مسلسل تعاون کر رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایرو انڈیا کو منظم کرنے کے لیے کرناٹک سے بہتر کوئی جگہ نہیں ہو سکتی ہے، کیونکہ ریاست نے اپنے مضبوط آر اینڈ ڈی مینوفیکچرنگ ماحولیاتی نظام کے ساتھ مقامی اور بین الاقوامی صنعتوں کو راغب کیا ہے۔

کرناٹک کے وزیر اعلی جناب بسوراج بومائی، چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل انل چوہان، چیف آف دی ایئر اسٹاف ایئر چیف مارشل وی آر چودھری، چیف آف دی نیول اسٹاف ایڈمیرل آر ہری کمار، چیف آف آرمی اسٹاف جنرل منوج پانڈے، دفاعی سکریٹری جناب گریدھر ارامانے ، سکریٹری، محکمہ دفاع آر اینڈ ڈی اور چیرمین ڈی آر ڈی او جناب سمیر وی کامت، چیف سکریٹری، حکومت کرناٹک محترمہ وندیتا شرما اور وزارت دفاع اور ریاستی حکومت کے دیگر سینئر افسران تقریب کے دوران موجود تھے۔

 

******

ش ح۔ م م۔ م ر

U-NO. 1697

15.02.2023



(Release ID: 1899580) Visitor Counter : 127