PIB Headquarters

کووڈ-19 پر پی آئی بی کا بلیٹن

Posted On: 27 MAY 2021 6:40PM by PIB Delhi

نئی دہلی:27مئی،2021۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002XWYZ.pnghttps://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001G5AG.jpg

  • مسلسل 14ویں دن صحت یاب ہونے والوں کی تعداد یومیہ نئے کیسز سے زیادہ رہی۔
  •  صحت یابی کی شرح بڑھ کر 90.01 فیصد ہوئی۔
  • یومیہ پوزیویٹی شرح مسلسل تیسرے دن 10 فیصد سے کم 9.79 فیصد رہی۔
  • ملک گیر سطح پر ٹیکہ کاری مہم کے تحت ابھی تک 20.27 کروڑ ویکسین ڈوزیز دی گئیں۔

سمندری طوفان یاس کے سبب آکسیجن کی سپلائی میں کوئی رکاوٹ نہیں ہوئی

آکسیجن ایکسپریس کے ذریعے ایک دن میں سب سے زیادہ 1195 میٹرک ٹن آکسیجن ریلیف ملک میں پہنچائی گئی۔

 

#Unite2FightCorona

#IndiaFightsCorona

پریس انفارمیشن بیورو

اطلاعات و نشریات کی وزارت

حکومت ہند

Image

لگاتار چودہویں دن صحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد نئے کسیز سے زیادہ

  • 2.11 لاکھ کیسز کے ساتھ نئے کیسز میں کمی کا رجحان برقرار۔
  • ابھی تک پورے ملک میں صحت یاب ہونے والے مجموعی مریضوں کی تعداد 24633951 ہے۔گزشتہ 24 گھنٹے کے دوران 283135 مریض صحت یاب ہوئے۔
  • صحت یابی کی شرح بڑھ کر 90.01 فیصد
  • ہفتہ وار پوزیویٹی شرح اس وقت 10.93 فیصد ہے۔
  • یومیہ پوزیویٹی شرح مسلسل تیسرے دن 10 فیصد سے کم 9.79 فیصد رہی۔
  • ملک گیر سطح پر ٹیکہ کاری مہم کے تحت ابھی تک 20.27 کروڑ ویکسین ڈوزیز دی گئیں۔
  • امریکہ کے بعد بھارت ایسا دوسرا ملک ہے، جس نے 20 کروڑ ویکسین ڈوزیز دینے کا نشانہ حاصل کیا ہے۔
  • جانچ کی صلاحیت میں خاطرخواہ اضافہ- پچھلے 24 گھنٹے میں 21.57 لاکھ ٹیسٹ کیے گئے۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722035

بھارت کے ٹیکہ کاری کے عمل سے متعلق افواہیں اور حقائق

بھارت کے کووڈ  - 19  ٹیکہ کاری پروگرام کے بارے میں بہت سی  افواہیں گردش کر رہی ہیں۔ یہ افواہیں  مسخ شدہ بیانات ، آدھے ادھورے حقائق  اور  کورے جھوٹ کی وجہ سے  پھیل رہی ہیں۔

 نیتی آیوگ نے  صحت سے متعلق  رکن  اور  کووڈ – 19  کے لئے  ٹیکہ کاری  سے متعلق  ماہرین کے قومی گروپ  کے  صدر نشیں  ڈاکٹر ونود پال  نے  ان افواہوں کو روکنے کے لئے  وضاحت کی۔ نیز انہوں نے ان سبھی معاملات پر حقائق  پیش کئے۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722078

ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو 22 کروڑ سے زیادہ ویکسین ڈوزیز فراہم کی گئی

بھارتی حکومت نے ابھی تک مفت کٹیگری اور  ریاستوں کے ذریعے براہ راست خرید کی کٹیگری دونوں کے تحت 22 کروڑ ویکسین ڈوزیز سے زیادہ  (221611940) ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں فراہم کیے ہیں۔اس میں سے مجموعی کھپت، جس میں  ضائع ہونے والے ڈوزیز بھی شامل ہیں،201759768 ڈوزیز ہے۔

1.84 کروڑ سے زیادہ کے کووڈ ویکسین ڈوزیز( 18490522) اب بھی ٹیکہ کاری کے لیے  ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے پاس موجود ہیں۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722053

کووڈ سے متعلق  راحتی امداد  کی تازہ جانکاری

 

حکومتِ ہند کو 27 اپریل ، 2021 ء سے مختلف ملکوں / تنظیموں سے  کووڈ – 19 سے متعلق راحتی طبی سپلائی اور ساز و سامان کی صورت میں بین الاقوامی تعاون  حاصل ہو رہا ہے۔ اِن ساز و سامان کو فوری طور پر  ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو بھیج دیا جاتا ہے ۔

          27 اپریل، 2021ء سے 26 مئی، 2021 ء تک  مجموعی طور پر 18006  آکسیجن کنسنٹریٹرس، 19085 آکسیجن سلینڈرس، 19 آکسیجن بنانے والے پلانٹ، 14514  وینٹی لیٹرس / بی پیپ، 7  لاکھ ریمڈیسیور کی شیشیاں، 12 لاکھ فیوی پیراویر گولیاں سپلائی کی جا چکی ہیں۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722111

مرکزی وزارت صحت کے ذریعہ ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے ساتھ مشترک کئے گئے بزرگوں اور مختلف طور پر اہل شہریوں کے لئے نزدیکی کووڈ ٹیکہ کاری مراکز (این ایچ سی وی سی) کے لئے رہنما خطوط۔

کووڈ 19 کی ٹیکہ کاری بندوبست کے لئے قومی ماہرین گروپ (این ای جی وی اے سی) نے بزرگوں اور مختلف طور پر اہل شہریوں کے لئے نزدیکی کووڈ ٹیکہ کاری مراکز (این ایچ سی وی سی) کے رہنما اصولوں پر مرکزی وزارت کی تکنیکی ماہرین کمیٹی کی تجویز کی سفارش کی ہے۔ مرکزی وزارت صحت نے بھی ان سفارشات کو قبول کیا ہے۔ بزرگوں اور مختلف اہلیت کے حامل شہریوں کے لئےاین ایچ  سی وی سی   کمیونٹی پر مبنی، لچکدار اور لوگوں پر مبنی طرز عمل کی پیروی کرے گا، جس سے کووڈ ٹیکہ کاری مراکز قریب تر گھروں تک پہنچ جائیں گے۔

ٹیکنیکل ایکسپرٹ کمیٹی کی سفارشات کا مقصد بزرگ شہریوں اور مختلف عمر رسیدہ افراد کو جسمانی حالت کی وجہ سے محدود نقل و حرکت سے بچاؤ کے ٹیکےیقینی بنانا ہے۔ یہ سفارشات وقتا فوقتا جاری آپریشنل رہنما خطوط اور مشوروں کے مطابق، حفاظتی اقدامات کو حفاظتی اقدامات سے متعلق کمیونٹی کے قریب لاتے ہوئے رسائی کو بڑھانے کی ضرورت کے جواب میں ہیں۔

تفصیلات کے لئے:https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722164

سمندری طوفان یاس کی وجہ سےاسٹیل کی پیداوار اور آکسیجن کی سپلائی میں کوئی رکاوٹ نہیں آئی

اسٹیل کی وزارت نے انڈسٹری اور داخلی تجارت کے فروغ کے محکمے کے ساتھ مل کر 23  مئی کو تمام بڑی اسٹیل کی کمپنیوں کے ساتھ میٹنگ کی  تاکہ اسٹیل بنانے  اور آکسیجن کی پیداوار  میںیاس طوفان کے ممکنہ اثرات کا جائزہ لے سکیں۔ میٹنگ میں وزارت توانائی اور متعلقہ ریاستی حکومت کے نمائندگان بھی موجود تھے۔ میٹنگ میںیہ بات ابھر کر سامنے آئی کہ طوفان یاس سے صرف اڈیشہ اور مغربی بنگال میں واقع پلانٹس متاثر ہوں گے۔ لہذا اس بات کو یقینی بنانے کیلئے تمام کوششیں کی گئیں  کہ کسی طرح بجلی کی سپلائی ٹھپ  نہ ہو۔ اس بات کا بھی منصوبہ  بنایا گیا کہ ریاستیں جواڈیشہ کے کلنگ نگر اور انگول  پلانٹوں پرمنحصر تھے  وہ  دو سے چار دنوں کے لئے عارضی طور پر ٹاٹا جمشید پور پلانٹس سے  بجلی لیں گے۔ اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ اڈیشہ میں انگول، کلنگ نگر اور رورکیلا میں واقع اسٹیل  پلانٹوں کو کسی طرح سے  بجلی کی سپلائی میں رکاوٹ کا سامنا نہیں کرنا پڑا۔ ٹاٹا جن کے اڈیشہ میں پلانٹس ہیں ،ان کے نمائندگان نے تصدیق کی ہے کہ ٹاٹا اسٹیل پلانٹوں میں ایل ایم او کی پیداوار میںیاس طوفان کا کوئی اثر نہیں ہوا ہے۔ کلنگ نگر ، جمشید پور اور انگول میں تمام متعلقہ آکسیجنپلانٹوں سے ایل ایم او کی ترسیل بلاکسی رکاوٹ کے معمول کے مطابق جاری رہے۔ کلنگ پور جارہے ٹینکروں میں کمی آئی ہے کیونکہ انہیں جمشید پور کی طرف  بھیج دیا گیا۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722073

آکسیجن ایکسپریس ٹرینوں کے ذریعہ ملک بھر میں ایک دن میں سب سے زیادہ  1195 ایم ٹی آکسیجن ریلیف پہنچائی گئی جو کہ گزشتہ سب سے زیادہ  ریلیف 1142 ایم ٹی سے زیادہ ہے

تمام مشکلات  پر قابو پاتے ہوئے اور نئے حل تلاش کرتے ہوئے  انڈین ریلوے  کا ملک بھر کی مختلف ریاستوں میں لکوڈ میڈیکل آکسیجن (ایل ایم او)  پہنچاتے ہوئے  راحت پہنچانے کا سفر جاری ہے۔ اب تک انڈین ریلوے  ملک  بھر  کی مختلف ریاستوں میں 1141 سے زیادہ ٹینکروں نے 18980 ایم ٹی سے زیادہ ایل ایم او پہنچا چکا ہے۔

قابل توجہ ہے کہ  اب تک  284 آکسیجن ایکسپریس گاڑیوں نے اپنا سفر مکمل کیا ہے اور مختلف ریاستوں کو راحت پہنچائی  ہے۔

آکسیجن ایکسپریس  گاڑیوں کے ذریعہ   ملک بھر میں ایک دن میں سب سے زیادہ  1195 ایم ٹی  آکسیجن ریلیف  پہنچائی گئی جو کہ گزشتہ  23 مئی  2021 کو  پہنچائی  سب سے زیادہ  ریلیف 1142 ایم ٹی سے زیادہ ہے۔

دہلی میں لکوڈ میڈیکل آکسیجن (ایل ایم او)  کی اترائی 5000 ایم ٹی  سے تجاوز کرگئی ہے۔جنوبی ریاستوں میں آندھرا پردیش، تمل ناڈو، کرناٹک اور تلنگانہ میں سے ہر ایک کو  1000 ایم ٹی سے  زیادہ ایل ایم او پہنچائی گئی۔قابل ذکر ہے کہ  آکسیجن ایکپسریس ٹرینوں نے  آکسیجن پہنچانے کا کام  33 دن قبل 24 اپریل کو  مہاراشٹر میں 126 ایم ٹی  کا لوڈ پہنچاکر کیا تھا۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722123

محکمہ برائے سائنس و ٹیکنالوجی (ڈی ایس ٹی) کے امداد یافتہ ڈس انفیکشن سسٹم نے N95 ماسک، پی پی ای، میڈیکل گیئر کو دوبارہ قابل استعمال بنا دیا ہے اور ضرورت سے زیادہ کووڈ 19 بایو میڈیکل کچرے کی پیداوار کو کم کر دیا ہے

ممبئی میں قائم اسٹارٹ اپ، اندرا واٹر کے ذریعہ تیار کردہ این 95 ماسک / پی پی ای ڈس انفیکشن سسٹم مہاراشٹر اور تلنگانہ کے متعدد سرکاری اسپتالوں میں نصب کیا گیا ہے۔

واجرا کاوچ نامی ڈس انفیکشن سسٹم پی پی ای، میڈیکل اور غیر میڈیکل گیئر کو دوبارہ قابل استعمال بناکر اور اس سے زیادہ ماحولیاتی کووڈ 19 سے متعلق بایو میڈیکل فضلہ کی پیداوار کو کم کرکے وبائی مرض سے مقابلہ کرنے کی لاگت کو نمایاں طور پر کم کررہا ہے، جس سے ماحولیات کے تحفظ میں مدد ملے گی۔ یہ ذاتی حفاظتی آلات کو مزید دستیاب، سستی اور قابل رسائی بنا رہا ہے۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722192

این ٹی پی سی نے عوام الناس کو کورونا وائرس سے تحفظ فراہم کرانے کے لئے اپنی جانب سے مدد کا ہاتھ بڑھایا

 

وزارت بجلی کے تحت ملک میں توانائی فراہم کرنے والی سب سے بڑی این ٹی پی سی نے صرف یہ کہ کوود -19کی دوسری لہر کے دوران ملک کو لگاتار بجلی سپلائی فراہم کرنے کو یقینی بنانے میں نہ صرف  مصروف عمل ہے بلکہ اس کمپنی نے معاشرے تک رسائی بھی حاْصل کی ہے اور ملک کے مختلف حصوں میں طبی بنیادی ڈھانچے کو فروغ بہم پہنچا کر کووڈ -19 کے پھیلاؤ کو روکنے کی کوششوں میں خاطرخواہ تعاون دیا ہے۔

این ٹی پی سی آگے آئی اور اس نے اپنے مختلف پروجیکٹوں میں 600 سے زائد حاصل آکسیجن کے بستراور1200آئیسولیشن بستر فراہم کرائے۔ یہ تمام ترکام جنگی پیمانے پر ہوا اور محض ایک ہفتے کے اندرانجام پایا، جس کےذریعہ عوام الناس سمیت متعدد افراد کی قیمتی جانیں بچائی جاسکیں ۔ این ٹی پی سی ریاستی اورضلع انتظامیہ کے ساتھ قریبی تال میل بناکر کام کررہی ہے اوراس نے  دوردراز کے مقامات پرطبی بنیادی ڈھانچے کو منظم بنایاہے ۔

تفصیلات کیلئے: https://www.pib.gov.in/PressReleasePage.aspx?PRID=1722081

 

پی آئی بی کے فیلڈ دفاتر سے موصولہ جانکاریاں

کیرالہ: ریاست میں کووڈ لاک ڈاؤن کو بڑھانے سے متعلق فیصلہ آنے والے دنوں میں کووڈ ٹرانسمیشن ریٹ کی جانچ پڑتال کے بعد لیا جائے گا۔ فی الحال لاک ڈاؤن کا اعلان 30 مئی تک کیا گیا ہے۔ گذشتہ ایک ہفتہ میں اوسطا ٹیسٹ کی مثبت شرح 22.2 فیصد ہے۔ تاہم  کچھ اضلاع میں جہاں مریضوں کی تعداد زیادہ ہے، میں ٹیسٹ مثبت ہونے کی شرح 25 فیصد سے زیادہ ہے۔ دریں اثنا حکومت نے یکم جون سے اسکولوں میں ڈیجیٹل کلاسز شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت کے ویکٹرز چینل پر نشر ہونے والی کلاسوں کے علاوہ آن لائن کلاسز بھی منعقد کی جائیں گی۔ کووڈ کیصورتحال کو مدنظر رکھتے ہوئے اسکول میں داخلہ فیسٹیول نئے تعلیمی سال کے پہلے دن عملی طور پر منعقد کیا جائے گا۔ پلس ون امتحانات کے انعقاد کا فیصلہ جلد لیا جائے گا۔ کووڈ ٹریٹمنٹ پروڈکٹس کی غیر معمولی قیمتوں پر قابو پانے کی کوششوں کے ایک حصے کے طور پر حکومت ان مصنوعات کی فروخت میں ضروری اجناس کے ایکٹ سے رجوع کرنے کی منصوبہ بندی کر رہی ہے۔ ریاست میں گذشتہ روز کووڈ 19 کے 28,798 نئے کیسز کا پتہ چلا ہے۔ 151 اموات کی بھی اطلاع ہے۔ اس طرح ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 7882 ہو گئی ہے۔ ٹی پی آر جو زیادہ سے زیادہ 30 فیصد تک چلا گیا، 20 فیصد سے نیچے آ گیا ہے۔ ریاست میں اب تک کل 8,56,8978 افراد کو کووڈ سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔ اس میں سے 68,34,933 افراد کو پہلی خوراک اور 20,21,964 افراد کو دوسری خوراک دی گئی۔

تمل ناڈو: وزیر اعلیٰ ایم کے اسٹالن نے بدھ کو کووڈ 19 کے علاج کے لئے 184 اضلاع میں درآمد شدہ آکسیجن سلینڈر اور آکسیجن ریگولیٹرز کو بدھ کے روز روانہ کیا۔ وزیر صحت ایم سبرامنیم نے کہا ہے کہ 286 افراد تامل ناڈو میں بلیک فنگس سے متاثر ہیں۔ پی ایم کے رہنما ایس رامڈوس نے تمل ناڈو حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ ریاست کی فلاحی منصوبوں سے استفادہ کرنے کے لئے ویکسینیشن کو لازمی بنائے۔ بدھ کے روز مرکز کے زیر انتظام علاقے پڈوچیری نےکووڈ 19 سے 27 اموات ریکارڈ کیں۔ اس طرح اموات کی کل تعداد 1,435 ہوگئی، جبکہ بدھ کے روز 1,321 نئے کیسز اور 1,927 افراد کے صحتیاب ہونے کی اطلاع ملی۔ ٹمل ناڈو میں کووڈ کے نئے کیسز کا گرتا ہوا گراف بدھ کے روز بھیجاری رہا، ریاست میں تازہ ترین انفیکشن سے 33,764 افراد  کے متاثر ہونے کی اطلاع ملی۔ 475 افراد کی ہلاکت کے ساتھ اموات کی کل تعداد 21,815 ہوگئی اور ریاست کے بلیٹن کے مطابق آئسولیشن معاملات سمیت کل معاملات کی تعداد 3,10,224 ہے۔ اب تک 79,14,277 افراد کو پورے تمل ناڈو میں کووڈ کے ٹیکے لگائے جاچکے ہیں، جن میں سے 59,40,657 افراد کو پہلی خوراک اور 19,73,620 افراد کو دوسری خوراک دی گئی ہے۔

کرناٹک: ریاستی حکومت کے ذریعے 26 مئی 2021 کو جاری کردہ بلیٹن کے مطابق، نئے معاملات کی تعداد: 26,811 ؛ کل فعال معاملات کی تعداد: 4,09,924 ؛ کووڈ سے نئی اموات: 530؛ کووڈ سے کل اموات: 26,929 ۔ ریاست میں کل 1,27,317 افراد کو کووڈ سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے گئے تھے اور ریاست میں اب تک کل 1,25,41,765 افراد کو ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔ کرناٹک کے دیہی علاقوں سے کووڈ 19 کے تازہ ترین معاملات کی بڑھتی ہوئی تعداد کے بعد، وزیر اعلی بی ایسیدیورپا نے بدھ کی صبح ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعہ منتخب شدہ گرام پنچایتوں سے اعلی معاملات کی بوجھ کی اطلاع دہندگان سے بات چیت کی۔ بنگلورو کے شہری بلدیاتی ادارے بروہت بنگلورو مہانگرا پالیکے (بی بی ایم پی) نے کووڈ 19 کے پروٹوکول کو نافذ کرنے اور نگہداشت کے مراکز میں مدد کرنے کے لئے تجرباتی بنیاد پر 11 خواتین مارشلز کو تربیت دیکر تعینات کیا ہے۔

آندھرا پردیش: ریاست میں 99 اموات کے ساتھ، نیز91,120 نمونوں کی جانچ کے بعد 18,285 نئے کووڈ 19 معاملات کی اطلاع ملی ہے، جبکہ 4,105 افراد کو گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اسپتال سے چھٹی دی گئی۔ ریاست میں کل تک کووڈ ویکسین کی کل 84,59,763 خوراکیں دی گئیں، جس میں60,76,647 پہلی خوراکیں اور 23,83,116 دوسری خوراکیں شامل ہیں۔ کووڈ 19 کے جائزہ کے دوران وزیر اعلی نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ نجی اسپتالوں میں 50 فیصد بستروں کے الاٹمنٹ کو اروگیاسری اسکیم کے تحت زیر علاج مریضوں کے لئے یقینی بنائیں۔ انہوں نے ریاست میں آکسیجن کی سپلائی بڑھانے پر عہدیداروں کی تعریف کی، جو 330 ایم ٹن سے بڑھ کر 600 میگاین ٹن ہوچکا ہے اور عہدیداروں کو مشورہ دیا کہ وہ اس کی فراہمی کو مزید عام کرنے کے لئے آکسیجن اسٹاک کے آڈٹ کرنے پر توجہ دیں۔ دریں اثنا ریاستی حکومت نے کووڈ صورتحال کے پیش نظر، دسویں جماعت کے امتحانات سات جون سے ملتوی کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس نے ہائی کورٹ کو آگاہ کیا ہے کہ وہ جولائی میں دسویں جماعت کے امتحانات کے انعقاد پر نظرثانی کرے گی۔

تلنگانہ: ریاستی حکومت نے رواں ماہ کی 28 سے 30 تاریخ تک کووڈ سے بچاؤ کے لئے خصوصی مہم چلانے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ صحافیوں، ڈلیوری وائز، آٹو اور ٹیکسی ڈرائیوروں، مناسب قیمت والے شاپ ڈیلرز جیسے لوگوں سے زیادہ رابطے رکھنے والے سوپر اسپریڈرس / ہائی رسک گروپس کو ٹیکہ لگایا جائے۔ اپنے فرائض کے حصے کے طور پر محکمہ صحت کے ڈائریکٹر پبلک ہیلتھ ڈاکٹر سرینواسا راؤ نے گھر گھر بخار سروے کے دو مراحل میں کہا کہ یہ پتہ چلا ہے کہ ریاست میں تقریبا چار لاکھ افراد کووڈ جیسے علامات کا شکار ہیں اور اب تک 3.16 لاکھ افراد کو ہوم آئسولیشن کٹس فراہم کی گئی ہیں۔ دریں اثنا کل کووڈ کے 3,762 نئے معاملات اور 20 اموات کی اطلاع ملی ہے جس سے ہلاکتوں کی مجموعی تعداد 3,189 ہوگئی اور مثبت معاملات کی مجموعی تعداد 5,63,903 ہوگئی۔ ریاست میں ایکٹو کیسز کی تعداد اب 38,632 ہے۔

مہاراشٹر: کووڈ 19 کی تیسری لہر کے دوران بچوں پر پڑنے والے اثرات کے پیش نظر مہاراشٹر حکومت نے روک تھام اور علاج کے طریقوں کو تیار کرنے کے لئے ایک خصوصی ٹاسک فورس تشکیل دی ہے۔ یہ خصوصی ٹاسک فورس بچوں کو کووڈ 19 کے انفیکشن سے بچانے کے لئے کام کرے گی۔ اس کے علاوہیہ علاج، سہولیات اور ادویات کے بارے میں رہنمائی فراہم کرے گا۔ ہندوجا اسپتال کے سینئر بچوں کے امراض کے ماہر  ڈاکٹر سوہاس پربھو اس ٹاسک فورس کے سربراہ ہوں گے۔ مہاراشٹر نہ صرف کووڈ-19 کے معاملات میں بلکہ اموات میں بھی کمی کا سامنا کررہا ہے، جو گذشتہ کئی دنوں سے اونچائی طرف تھا۔ بدھ کے روز ریاست میں24,752 نئے کیسز اور 453 اموات ریکارڈ کی گئیں۔

گجرات: گجرات کی حکومت نے بدھ کے روز 36 شہروں میں ایک گھنٹہ کے لئے رات کے کرفیو میں نرمی کی لیکن اس پابندیوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی جس پر دن کے وقت یہ پابندی عائد کی گئی ہے کیونکہ مغربی ریاست نے کورونا وائرس کے نئے معاملات میں نمایاں کمی ریکارڈ کی ہے۔ وزیر اعلی وجے روپانی نے گاندھی نگر میں کابینہ کے اجلاس کے بعد نظرثانی شدہ کرفیو کے اوقات کے بارے میںیہ اعلان کیا۔ وزیر اعلیٰ نے یہ بھی کہا کہ ریاستی حکومت کورونا وائرس وبائی امراض کی تیسری لہر کے امکان کے بارے میں چوکس ہے اور اس سے نمٹنے کے لئے ایک مفصل ایکشن پلان کا اعلان جلد کیا جائے گا۔

راجستھان: ریاست میں گذشتہ ماہ ہونے والی کورونا سے ہونے والی اموات کی جانچ کے لئے ریاستی حکومت نے 3 ٹیمیں تشکیل دیں۔ ان سے 15 دن میں رپورٹ پیش کرنے کو کہا گیا ہے۔ ٹیموں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ کووڈ کی وجہ سے ہونے والی اموات کے ساتھ ساتھ کل اموات کا بھی جائزہ لیں۔

راجستھان میں کووڈ معاملات کی تعداد بدھ کے روز 9,27,746 ہوگئی، تازہ ترین کیسز3,886 ، جبکہ 107 مزید اموات سے ہلاکتوں کی تعداد 8,018 ہوگئی۔ تازہ مثبت معاملات میں سب سے زیادہ 779 معاملات جے پور سے، 340 جودھ پور سے اور 284 الور سے رپورٹ ہوئے۔

مدھیہ پردیش: مدھیہ پردیش میں اب تک ایک کروڑ سے زیادہ کورونا ویکسین کی خوراکیں 45 سال سے زائد عمر کے لوگوں کے ساتھ ساتھ 18 سے 45 سال کی عمر کے لوگوں کو بھی دی گئیں۔ وزیر اعلی نے ہدایت کی کہ 18 ٹیکوں میں بھی ہینڈ کارٹ مالکان، ہاکروں میں ترجیحی گروپ تشکیل دیئے جائیں۔ چھوٹے بچوں کے والدین کو بھی ترجیحی گروپ میں رکھا جاسکتا ہے۔

ریاستی محکمہ صحت کے مطابق مدھیہ پردیش میں بدھ کے روز 2,182 تازہ کورونا وائرس کے نئے معاملات رپورٹ ہوئے، جبکہ 7,479 مریضوں کو چھٹی دی گئی اور 72 افراد اس بیماری سے دم توڑ گئے۔ مدھیہ پردیش میں اب 43,265 فعال معاملات باقی ہیں۔

 

 

چھتیس گڑھ: چھتیس گڑھ میں کورونا وائرس میں انفیکشن کی تعداد بدھ کے روز بڑھ کر 9,59,544 ہوگئی جبکہ اس میں2,829 نئے معاملات شامل ہیں جبکہ ہلاکتوں کی تعداد 56 سے بڑھ کر 12,779 ہوگئی ہے۔ مختلف اسپتالوں سے کل 997 افراد کی چھٹی ہونے کے بعد صحتیاب ہونے والے مریضوں کی تعداد 8,93,258 ہوگئی، جبکہ اس دوران 4,100 دوسروں نے اپنے ہوم آئسولیشن مکمل کیا۔ ریاست میں فعال معاملات کی تعداد 53,480 ہے۔ ریاست میں کووڈ 19 کی مثبت شرح 4۔7 فیصد رہ گئی ہے جو یکم مئی کو 26.1 فیصد تھی۔

گوا: ریاستی وبا کے ماہرین نے کہا ہے کہ گوا کووڈ۔19 کی دوسری لہر کے عروج کو عبور کرچکا ہے۔ وبائی امراض کے ماہر نے مزید کہا کہ اس وقت تک خود پرستی کی کوئی جگہ نہیں ہے جب کہ معاملات ایک دن میں 200 سے کم ہوجاتے ہیں۔ گذشتہ ستمبر میں پہلے عروج کے دوران ریاست نے ایک دن میں 740 معاملات کو چھو لیا تھا، لیکن اس نقطہ نظر سے گراف میں کافی نیچے آنے اور روزانہ اوسطا نئے انفیکشن کی شرح 200 سے نیچے آنے کے لئے ایک ماہ سے زیادہ کا وقت لگا تھا۔

پنجاب: مریضوٹیسٹ کے بعد پازیٹو مریضوں کی مجموعی تعداد 548231 ہے۔ فعال معاملات کی تعداد 53127 ہے۔ اموات کی تعداد 13642 ہے۔ 870938 صحت کارکنوں اور صف اول کے کارکنوں کو ویکسین کی پہلی خوراک دی گئی ہے، جبکہ 247533 صحت کارکنوں اور صف اول کے کارکنوں کو ویکسین کی دوسری خوراک دی گئی ہے۔ 45 سے زیادہ کے 2736806 افراد کو ویکسین کی پہلی ڈوز دی گئی ہے، جبکہ 45 سے زیادہ کے 459657 افراد کو ویکسین کی دوسری ڈوز دی گئی ہے۔

چندی گڑھ: کل لیب نے تصدیق کی کہ کووڈ 19 کے معاملے 58992 ہیں۔ فعال معاملات کی کل تعداد 4063 ہے۔ آج تک کووڈ سے ہونے والی ہلاکتوں کی کل تعداد 714 ہے۔

ہریانہ: آج تک مثبت پائے جانے والے نمونوں کی تعداد 744602 ہے۔ مجموعی طور پر کووڈ 19 کے 34088 مریض ہیں۔ اموات کی تعداد 7735 ہے۔ آج تک ٹیکے لگائے گئے لوگوں کی مجموعی تعداد 5439215 ہے۔

آسام: ریاست کی پازیٹویٹی ریٹ 5 فیصد سے نیچے گر گئی، لیکن روزانہ 90 سے زیادہ ہلاکتیں محکمہ صحت کے لئے تشویش کا باعث بنی ہیں۔ ریاست بھر میں کئے گئے 1,16,119 ٹیسٹوں میں مجموعی طور پر 5,699 نئے معاملات کا پتہ چلا جن کی مثبت شرح 4.91 فیصد ہے۔

ریاستی حکومت نے ایک نیا ایس او پی جاری کیا ہے جس میںیہ لازمی قرار دیا گیا ہے کہ کسی بھی شخص کو ٹیکے لگائے جانے سے پہلے کووڈ ٹیسٹ کروانا لازمی ہے۔ کووڈ 19 سے متاثرہ افراد کو ویکسین نہیں لگائی جائے گی۔

منی پور: ریاست میں 847 نئے کیسز ریکارڈ ہوئے، 24 گھنٹوں میں 10 اموات ہوئیں۔ ریاستی حکومت نے نجی اسپتالوں میں کووڈ مریضوں کے علاج کے لئے بالائی حد کا اعلان کردیا ہے۔ ریاستی محکمہ صحت کے ذریعہ بدھ کے روز جاری کردہ ایک آرڈر کے مطابق، آکسیجن سپورٹ کے بغیر عام / آئسولیشن بیڈ کے لئے بالائی حد کی شرح 3000 روپے یومیہ، آکسیجن سپورٹ کے ساتھ عام / آئسولیشن بیڈ کے لئے 5000 روپے یومیہ، ایچ ڈییو کے لئے 7000 روپے فی دن ہے، وینٹی لیٹر کے بغیر آئی سییو کے لئے 8000 روپے اور وینٹی لیٹر کے ساتھ آئی سییو بیڈ کے لئے 0,000 رروپےیومیہ ہے۔  اب تک کووڈ 19 کے خلاف 3,55,793 افراد کو ٹیکے لگائے گئے ہیں، جبکہ 79,897 افراد کو ٹیکے کی دوسری خوراک بھی دی جا چکی ہے۔

 

میگھالیہ: میگھالیہ میں کووڈ 19 کی مجموعی تعداد 8,000 سے زیادہ ہوگئی ہے، جس میں بدھ کے روز 846 تازہ معاملات رپورٹ ہوئے۔ دوسرے دن مسلسل ریاست میں 700 سے زیادہ افراد صحتیاب ہوئے۔ پچھلے 24 گھنٹوں میں 10 اموات ریکارڈ کی گئیں۔ اس طرح اموات کی کل تعداد اب 512 ہوگئی ہے۔ ریاستی حکومت نے کووڈ 19 پر غلط معلومات شیئر کرنے / پھیلانے کے خلاف لوگوں کو متنبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ خلاف ورزی کرنے والے کسی بھی شخص کے خلاف وبائی امراض ایکٹ کے تحت سخت کارروائی کی جائے۔

سکم: سکم کی تعداد، 295 نئے کیسز، 241 مریض صحتیاب اور 2 اموات:

کوویڈ 19 کے تصدیق شدہ کیسز اب 13,806 پر پہنچ چکے ہیں۔ دوسری طرف

سکم میں کووڈ 19 کے صحتیاب ہونے والے مریضوں کی کل تعداد 9,933 ہے۔ ریاست میں اس وقت کورونا وائرس کے 3,422 فعال کیسز ہیں۔

تریپورہ: گذشتہ 24 گھنٹے میں مغربی ضلعے میں 330 نئے پازیٹو معاملات کی اطلاع  ملی ہے، جبکہ کل 667 افراد ٹیسٹ کیے گئے تھے۔ 6 اموات ریکارڈ کی گئیں، جبکہ 1066 افراد صحتیاب ہوئے۔ لیکن مغربی ضلع حکومت کے لئے پازیٹو معاملات کی شرح کے ساتھ تشویش کا باعث بن گیا ہے۔

ناگالینڈ: ناگالینڈ میں بدھ کے روز کووڈ کے 260 نئے معاملات اور 12 اموات ریکارڈ کی گئیں۔کل ایکٹو کیسز 4923 ہیں جبکہ ان کی تعداد 20,795ہوگئی ہے۔ دائم پور آکسیجن پلانٹ نے سرٹیفیکیشن حاصل کیا اور کام کرنا شروع کردیاہے۔ پی ایم کیئرس فنڈ کے تحت نصب پلانٹ میں 200 لیٹر آکسیجن فی منٹ پیدا ہوگی۔

اہم ٹوئٹس

 

-----------------------

ش ح۔م ع۔ ع ن

U NO:4932



(Release ID: 1722650) Visitor Counter : 37