وزارت آیوش

آیوش کی وزارت کی کوششوں نے روایتی ادویات کو بھارت کی جی 20  صدارتی خطاب میں سب سے آگے لادیا ہے - امیتابھ کانت، شیرپا جی 20


صحت اور انگیجمنٹ ورکنگ گروپس کی تمام میٹنگوں میں روایتی ادویات کو مؤثر طریقے سے اجاگر کیا گیا اور آیوش کی وزارت نے ان کوششوں کو تسلیم کیا: سیکرٹری آیوشحتحح

Posted On: 23 JUL 2023 5:38PM by PIB Delhi

نئی دہلی میں منعقدہ جی 20  کے انگیجمنٹ گروپوں کے ساتھ ایک اہم بات چیت میں، شراکت داروں کا واضح اور مضبوط نقطہ نظر تھا کہ بھارتی  حکومت کی کوششوں نے صحت پر جی 20  کے مباحثے میں روایتی ادویات کو سب سے آگے لادیا ہے اور یہ کہ جی 20  صحت کے چیلنجوں سے نمٹنے میں روایتی ادویات کے ممکنہ کردار کو تسلیم کرے گا۔

اس بات چیت میں جی 20 کے شیرپا  امیتابھ کانت، کے ساتھ ساتھ آیوش کی وزارت کے سکریٹری ویدیا راجیش کوٹیچا، صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کے ایڈیشنل سکریٹری جناب لو اگروال، امور خارجہ کی وزارت کے ایڈیشنل سکریٹری جناب ابھے ٹھاکر، مختلف اسٹیک ہولڈر انگیجمنٹ گروپس کے چیئرمینوں اور دیگر معززین نے شرکت کی۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001MQ0U.jpg

اپنے خطاب میں، جناب  امیتابھ کانت نے کہا، "میں تمام کاموں اور ورکنگ گروپس کے ساتھ فعال طور پر تعاون کرنے میں سب سے آگے رہنے کے لیے آیوش کی وزارت کی بہت تعریف کرتا ہوں۔ ہمیں مجموعی صحت اور تندرستی کے حصول میں آیوش کے طریقوں کی اہمیت کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔"

انہوں نے کہا کہ "روایتی ادویات" انتہائی اہم ہیں کیونکہ وہ صدیوں سے ہندوستان میں صحت کا ایک لازمی وسیلہ رہی ہیں، اور مجموعی صحت اور تندرستی حاصل کرنے کے لیے آیوش کی روایات کو بڑھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ عالمی ادارہ صحت نے ہندوستان میں روایتی ادویات کے لئے ایک وقف ڈبلیو ایچ او  گلوبل سنٹر فار ٹریڈیشنل میڈیسن (ڈبلیو ایچ او جی سی ٹی ایم ) کے ساتھ آیا ہے اور یہ مرکز روایتی ادویات کی طاقت کو بروئے کار لائے گا۔

اپنے خطاب میں، مسٹر لو اگروال نے کہا، "دنیا صحت کے تمام چیلنجوں سے نمٹنے کے تناظر میں مربوط صحت یا مجموعی صحت  کے تصور کے بارے میں بات کر رہی ہے۔ ہم شراکت داری میں کام کر رہے ہیں، جی 20  ممالک کے درمیان ہم آہنگی ہے اور صحت کے شعبے میں روایتی ادویات کے کردار کو قبول کرنے کے لیے سب کے لیے ایک واضح وژن ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ بات چیت میں حصہ لینے والے مختلف ماہرین اور سینئر عہدیداروں کے تجربات کو شیئر کرتے ہوئے اس بات کا قوی امکان ہے کہ صحت کے اعلامیے میں روایتی ادویات کے ممکنہ کردار کو تسلیم کرتے ہوئے ایک سرشار ذکر کیا جائے گا۔

اس موقع پر ویدیا راجیش کوٹیچا نے اپنی سفارشات اور بصیرت انگیز بات چیت کے ذریعے روایتی ادویات کے شعبے میں ان کے تعاون کے لیے کاموں اور ورکنگ گروپس کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ بنیادی مقصد ہندوستان کی جی 20 صدارت کے دوران وزارت آیوش کے تعاون کو مشترک کرنا تھا اور اسے کامیابی کے ساتھ حاصل کیا گیا۔ ہیلتھ ورکنگ گروپ کے تمام اجلاسوں میں روایتی ادویات کو مؤثر طریقے سے اجاگر کیا گیا اور وزارت ان کوششوں کو سراہتی ہے۔

 اجتماع کا خیرمقدم کرتے ہوئے، آیوش کی وزارت کے جوائنٹ سکریٹری جناب راہول شرما نے مختلف جی 20  پروگراموں اور ورکنگ گروپس کے ساتھ روایتی ادویات کے ارد گرد فعال طور پر مکالمے کی تشکیل میں آیوش کی وزارت کے کردار پر روشنی ڈالی۔ انہوں نے مزید کہا کہ جیسا کہ دنیا کی بڑی معیشتوں کے رہنما جی 20 سربراہی اجلاس کے لیے اکٹھے ہو رہے ہیں، اس لیے ضروری ہے کہ روایتی ادویات عالمی سماجی بہبود میں جو اہم کردار ادا کر سکتی ہیں اس پر غور کریں اور طبی علم کو آگے بڑھانے اور نئے علاج تیار کرنے میں اپنا تعاون دیں ۔

سی ایس آئی آر-آئی جی آئی بی میں سینئر پرنسپل سائنسدان ڈاکٹر بھاونا پراشر  نے جی 20  سے متعلقہ گروپوں جیسے تھنک 20 ، سائنس 20 ، اسٹارٹ اپ 20 ، سیول 20 ، ویمن 20 ، یوتھ 20  اور زراعت 20  کے ساتھ آیوش کی مصروفیت کو اجاگر کیا۔ ہندوستان کی جی 20  کی سربراہی میں کام کرنے والے متعلقہ گروپوں کے چیئرمینوں نے جی 20  پلیٹ فارم کو استعمال کرنے کے لئے مربوط کوششوں پر تبادلہ خیال کیا تاکہ ہندوستان کو ایک عالمی روایتی ادویات کے ڈرائیور کے طور پر پیش کیا جا سکے تاکہ اس وژن کو پورا کیا جا سکے۔

آر آئی ایس  کے ڈائریکٹر جنرل   اور ٹی 20 کے صدر پروفیسر سچن چترویدی  اور بھارت کے صدر جناب چنتن ویشنو، آیوروید اسپتال  کے ایم ڈی اور سی ای او جناب  راجیو واسودیون ، آئی این ایس اے کے سابق نائب صدر اور ایمس کی  پروفیسر ڈاکٹر سبراتا سنہا ، امریتا اسپتال کی  ورکنگ گروپ کوآرڈینیٹر ڈاکٹر پریا نائر، اے آئی آئی اے کی ڈائریکٹر ڈاکٹر تنوجا نیساری  اور آیوش کی وزارت میں جوائنٹ سکریٹری ڈاکٹر کویتا گرگ  بھی اس موقع پر موجود تھیں۔

*****

ش ح ۔ا م۔

U:7379



(Release ID: 1941961) Visitor Counter : 81