وزارت ماہی پروری، مویشی پروری و ڈیری

مرکزی وزیر پرشوتم روپالا نے نندی (نئے منشیات اور ٹیکہ لگانے کے نظام کے لیے این او سی منظوری) پورٹل کا آغاز کیا


یہ پہل ڈیجیٹل انڈیا کو آگے بڑھانے اور مویشیوں نیز مویشیوں کی صنعت کو فروغ دینے کی سمت ایک اہم قدم ہے: جناب پرشوتم روپالا

Posted On: 26 JUN 2023 7:18PM by PIB Delhi

ماہی پروری، مویشی پالن اور ڈیری کے مرکزی وزیر جناب پرشوتم روپالا نے آج نئی دہلی کے کرشی بھون میں نندی - نئی دوا اور ٹیکہ لگانے کے نظام کے پورٹل کے لیے این او سی کی منظوری کا آغاز کیا۔ اس پورٹل کے ساتھ ڈی اے ایچ ڈی ریگولیٹری منظوری کے عمل کو شفافیت کے ساتھ جانچنے اور پرکھنے کے لیے ویٹرنری مصنوعات کی تجاویز کو دواؤں کے معیار کو کنٹرول کرنے سے متعلق مرکزی تنظیم کے سگم پورٹل کے ساتھ آسان انضمام کے ذریعے مزید ہموار کرے گا۔ جناب روپالا نے مویشی پروری اور ڈیری کے محکمہ (ڈی اے ایچ ڈی) کے شاندار کام کی ستائش کی اور اس پہل کو ڈیجیٹل انڈیا کو آگے بڑھانے اور مویشیوں نیز مویشیوں کی صنعت کو فروغ دینے کی سمت ایک اہم قدم کے طور پر اجاگر کیا۔ جانوروں کی ٹیکہ کاری کوریج پہل اور موبائل ویٹرنری یونٹس (ایم وی یوز) کے بعد نندی پورٹل کا آغاز ایک اور قابل ذکر اقدام ہے۔ یہ اقدام تجارتی نقطہ نظر سے محققین اور صنعتوں کو بھی قابل قدر مدد فراہم کرے گا۔ مویشی پالنے والوں میں بیداری پیدا کرنے اور رسد کی سہولیات کو بہتر بنانے سے منشیات کی کھپت میں اضافہ ہوگا۔ مرکزی وزیر نے ایک مضبوط نظام قائم کرنے کے لیے چند ماہ تک پورٹل کی سرگرمیوں کی قریب سے نگرانی کرنے کی اہمیت پر زور دیا۔ جناب روپالا نے نندی پورٹل کی ترقی میں سی ڈی اے سی سمیت تمام متعلقہ فریقوں کے تعاون کی تعریف کی۔

اس موقع پر بھارت کے مویشی پروری، ڈیری اور ماہی پروری کے وزیر مملکت ڈاکٹر سنجیو بالیان نے ڈیجیٹل انڈیا مشن کے ساتھ ہم آہنگی میں محکمے کی کوششوں کی ستائش کی۔

ویٹرنری ویکسین نے نہ صرف جانوروں کی صحت اور پیداوار پر بلکہ انسانی صحت پر بھی محفوظ خوراک کی فراہمی اور جانوروں سے انسانوں میں متعدی بیماریوں کی منتقلی کو روکنے کے ذریعے ایک بڑا اثر ڈالا ہے اور یہ کام ہنوز جاری ہے۔ یہ ہمارے پورے ماحولی نظام کا ایک حصہ ہے۔ ہمارے مویشیوں کو صحت مند رکھنا اور ویکسین اور ادویات کی باقاعدگی سے فراہمی کو برقرار رکھنا نہایت ضروری ہے۔

ڈی اے ایچ ڈی ریگولیٹری منظوری کے عمل کو بروقت آسان بنانے کے لیے مسلسل کوششیں کر رہا ہے، جو ملک میں ویٹرنری ادویات اور ویکسینز کی دستیابی کے لیے بہت اہم ہے۔

ڈی اے ایچ ڈی، حکومت ہند،(جی او آئی) کے زیر صدارت بااختیار کمیٹیوں جیسے بااختیار کمیٹی برائے جانوروں کی صحت (ای سی اے ایچ)  کے قیام کے ذریعے ریگولیٹری عمل کو بہتر بنانے کی سمت کام کر رہی ہے، جو ہندوستان میں لچکدار، کسانوں پر مرکوز جانوروں کی صحت کے نظام کو بنانے اور آگے لانے کی سمت کام کر رہی ہے۔ ہندوستان کے لائیوسٹاک سیکٹر کی طویل مدتی کامیابی کو یقینی بنانے کے لیے تبدیلیاں۔ ای سی اے ایچ کے تحت، ریگولیٹری ذیلی کمیٹی، جس میں صنعت اور اکیڈمی کے مختلف ویٹرنری ماہرین شامل ہیں، کا مقصد جامع طور پر جان بوجھ کر مؤثر طریقے سے کارروائی کرنا، اور محکمہ میں ویٹرنری ویکسین/بائیولوجیکلز/ڈرگس کی جمع آوری پر سفارش/پالیسی ان پٹ فراہم کرنا ہے۔ جانوروں کی دوائیوں اور ویکسینز کی منظوری کے لیے ریگولیٹری عمل کو تیز کرنے کے لیے نندی (نیو ڈرگ اینڈ انوکیشن سسٹم کے لیے این او سی منظوری) ہے۔ محکمہ نے ڈیجیٹل جذبے کے تحت سینٹرل ڈرگ اسٹینڈرڈ کنٹرول آرگنائزیشن (سی ڈی ایس سی او) کے ساتھ مل کر سی ڈی اے سی کے ذریعے نندی پورٹل تیار کیا ہے۔ وزیر اعظم کے ذریعہ شروع کردہ ہندوستانی ویژن اور آئی ٹی سسٹم کا فائدہ اٹھاتے ہوئے کم سے کم حکومت اور زیادہ سے زیادہ حکمرانی کے جوہر کو حاصل کرتا ہے۔ نندی ریگولیٹری عمل کو تیز کرنے اور مضبوط کرنے کے لیے بنائے گئے ایک ہموار اور باہم مربوط نظام کے ذریعے مختلف سرکاری محکموں، اداروں اور صنعتوں کے درمیان تیز اور آسان تال میل کو فعال کرکے ترقی اور اختراعات لائے گا۔ پورٹل میں محکموں، کمیٹیوں/ ذیلی کمیٹیوں اور درخواست دہندگان کے درمیان اختتام سے آخر تک کوآرڈینیشن کے لیے ان بلٹ خصوصیات ہیں۔

نندی کے آغاز کے ساتھ (نئے ڈرگ اینڈ انوکیشن سسٹم کے لیے این او سی کی منظوری)، مویشی پالن اور ڈیری کا محکمہ اپنے جانوروں کی وبائی تیاری کے اقدام (اے پی پی آئی) کے حصے کے طور پر پیش کردہ اقدامات کو حاصل کرنے کی طرف قدم بڑھا رہا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ش ح۔ م ع۔ع ن

 (U: 6517)



(Release ID: 1935530) Visitor Counter : 91