محنت اور روزگار کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav

سا ل اختتام کا جائزہ:محنت اور روزگار کی وزارت

اس سال 30نومبر تک 39265 اداروں میں 88224 مستفیدین کو 2470.80 کروڑ روپے امپلائز ڈپازٹ سے جڑی انشورنس اسکیم کے تحت تقسیم کئے گئے

لیبر بیورو ،مایئگرنٹ ورکروں سے متعلق ماہر گروپ ، آل انڈیا کوارٹرلی اسٹبلشمنٹ سے متعلق روزگار سروے اور گھریلو ورکروں سے متعلق آل انڈیا سروے کی مجموعی نگرانی سے متعلق کل ہند سروے کی تعداد کا اہتمام کررہا ہے

28دسمبر 2021 تک ای شرم پورٹل پر 155334546 رجسٹریشن مکمل کئے گئے

بھارت سرکار نے تحفظ ، صحت اور بہبود پیشہ ورانہ تحفظ ، صحت اور کام کے حالات کے کوڈ سے متعلق شقوں کے بارے میں معیارات وضع کرنے کے مقصد سے چار ماہر کمیٹیاں تشکیل دی ہیں

Posted On: 31 DEC 2021 3:16PM by PIB Delhi

نئی دہلی،31 دسمبر 2021 / سال 2021 کے دوران  روزگار اور محنت کی وزارت کے ذریعہ  متعدد اہم اقدامات کئے گئے۔  ان میں  ای شرم پورٹل ، ای پی ایف او سے جڑے آتم نربھر یوجنا کا افتتاح  اور گرو گرام(مانیسر) شاہجہاں پور، ہری دوار، وشاکھاپٹنم، میرٹھ، اور تنسکیا آسام میں نئے   ای ایس آئی اسپتالوں کی توسیع کا قیام شامل ہے۔  تفصیلات حسب ذیل ہیں:

ای شرم پورٹل:

اس کا افتتاح 26 اگست 2021 کو مرکزی وزیر محنت اور روزگار جناب بھوپیندر یادو نے عزت مآب وزیر مملکت برائے محنت اور روزگار جناب رامیشور تیلی کی موجودگی میں کیا تھا۔ ای-شرم پورٹل کو غیر منظم کارکنوں کا ایک قومی ڈیٹا بیس بنانے کے لیے ڈیزائن کیا گیا ہے اور اسے آدھار سے منسلک کیا گیا ہے۔ اس میں نام ، پیشہ ، پتہ ، تعلیمی قابلیت ، ہنر کی قسم اور خاندان وغیرہ کی تفصیلات ہوں گی تاکہ وہ اپنی ملازمت کے مطابق زیادہ سے زیادہ حاصل کر سکیں اور سوشل سیکورٹی سکیموں کے فوائد ان تک پہنچائے جا سکیں۔ غیر منظم شعبے میں کام کرنے والا کوئی بھی کارکن اور 16-59 سال کی عمر کے درمیان کے مہاجر مزدور ، گگ ورکر ، پلیٹ فارم ورکرز ، زرعی مزدور ، منریگا ورکرز ، ماہی گیر ، دودھ والے ، آشا ورکرز ، آنگن واڑی ورکرز ، سڑک پر دکاندار ، گھریلو ملازم ، رکشہ چلانے والے اور غیر منظم شعبے میں اسی طرح کے پیشوں میں مصروف دیگر کارکن ای-شرم پورٹل پر رجسٹر کرنے کے اہل ہیں ۔ ای شرم پورٹل میں 28.12.2021 تک 155334546رجسٹریشن مکمل ہو چکے ہیں۔

آتم نربھربھارت  روزگار یوجنا(اے بی آر وائی)

روزگار پیدا کرنے  کوتقویت دینے اور  کووڈ - 19 عالی وبا کے سماجی و اقتصادی اثرات کو کم کرنے کے لیے ، 30.12.2020 کو روزگار اور محنت کی وزارت نے  ا ی پی ایف او سے منسلک روزگار کی گارنٹی اسکیم (اے بی آروائی) کو مطلع کیا ہے ۔ اے بی آر وائی غیر رسمی روزگار کو باضابطہ بنانے اور کووڈ-19عالمی  وبا کے دوران اور اس کے بعد روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے میں مدد کرے گا ۔ 18 دسمبر 2021 کو اے بی  آروائی کے تحت 120,697 اداروں کے ذریعے 4,282,688 مستفید ہونے والوں کو 2966.28 کروڑ روپے کے کل فائدے  پہنچائے گئے۔

 ای ڈی ایل  آئی  اسکیم پر پیش رفت

روزگار کی  ڈپازٹ سے جڑی انشورنس اسکیم (ای  ڈی ایل آئی)  کے تحت اہل خاندان کے افراد کو فوائد کی یقین دہانی فراہم کی جاتی ہے تاکہ ملازمت کے دوران کسی بھی ملازم کی بدقسمتی سے موت کی صورت میں مالی امداد فراہم کی جا سکے۔ انشورنس فائدے  28.04.2021 سے 6 لاکھ روپے سے بڑھا کر 7 لاکھ روپے کر دیئے گئے ہیں ۔ 15.02.2020 سے 30.11.2021 تک39265 اداروں میں ، 88224استفادہ کنندگان کو 2470.80 کروڑ روپے  یقین دہانی کے فوائد کے طور پر تقسیم کیے گئے ہیں۔

 

پیشہ ورانہ تحفظ ، صحت اور کام کا اسٹیٹس کوڈ ، 2020 ( او ایس ایچ اور ڈبلیو سی کوڈ 2020)

ماہرین کی کمیٹیاں: حکومت ہند نے کارخانوں سے متعلق پیشہ ورانہ تحفظ ، صحت اور کام کی شرائط کوڈ ، 2020 کی دفعہ  18، 23 اور 24 کے تحت تحفاظ ، صحت اور بہبود سے متعلق دفعات پر معیارات مرتب کرنے کے مقصد سے چار ماہر کمیٹیاں تشکیل دی ہیں۔  یہ کمیٹیاں فیکٹریوں ،  گودی کے کام ، عمارت  سازی اور دیگر تعمیراتی کام  کے علاوہ آگ سے تحفظ سے متعلق ہیں۔

اس کے علاوہ ، مندرجہ ذیل دو ماہر کمیٹیوں کی سربراہی ڈائریکٹر جنرل ، ڈی جی ایف اے ایس ایل آئی کر رہے ہیں: ماہرین کی کمیٹی جس کا مقصد کارخانوں سے تعلق رکھنے والے کام کی جگہوں پر تحفظ، صحت اور فلاح و بہبود اور پیشہ ورانہ تحفظ کے معیارات مرتب کرنا ہے اور گودی کے کام سے متعلق کام کی جگہوں کے لئے پیش ورانہ تحفظ اور صحت سے متلعق معیارات وضع کرنے  کے مقصد کے لئے یہ ماہر کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔ معیارات کا مسودہ تیار ہو رہا ہے ، جو تکمیل کے قریب ہے۔

کل ہند سروے کا اہتمام:

لیبر بیورو ، ایک ماہر گروپ کی مجموعی رہنمائی میں، درج ذیل آل انڈیا سروے کا اہتمام کیا جارہا ہے:

مہاجر کارکنوں سے متعلق کل ہند سروے (یکم اپریل 2021 کو آغاز کیا گیا)

 آل انڈیا سہ ماہی اسٹیبلشمنٹ پر مبنی روزگار  سروے  (اے کیو ای ای ایس)  (یکم اپریل 2021 سے  شروع کیا گیا تھا۔

گھریلو ملازمین سے متعلق  آل انڈیا سروے (سروے کا 22 نومبر 2021 کو آغاز کیا گیا تھا)

پروفیسر ایس پی  مکھرجی کی صدارت اور ڈاکٹر امیتابھ کنڈو،  کی جانب سے  مشترکہ  صدارت کے ذریعہ ماہرین کا گروپ ،ممتاز اعدادوشمار کے  ماہرین  ، مارہین اقتصادیات   کے ساتھ ساتھ محنت اور روزگار کی وزارت کے  سینئر افسران اور اعدادوشمار اور پروگرام کے نفاذ  کے علاوہ نیتی آیوگ   کے  سینئر افسروں پر مشتمل ہے۔

محنت اور روزگار کے وزیر جناب بھوپیندر یادو نے 27.09.2021 کو لیبر بیورو کے ذریعہ تیار کردہ آل انڈیا سہ ماہی اسٹیبلشمنٹ پر مبنی  ایمپلائمنٹ سروے (اے کیو ای ای ایس) کے سہ ماہی ایمپلائمنٹ سروے (کیو ای ایس) کی رپورٹ ( اپریل تا جون2021   ) کی پہلی  سہ ماہی رپورٹ جاری کی۔

 

اے کیو ای ای ایس  کو لیبر بیورو کے ذریعہ نو منتخب شعبوں کے منظم اور غیر منظم دونوں شعبوں میں روزگار اور اداروں سے متعلق عوامل پر مسلسل (سہ ماہی) اپ ڈیٹ فراہم کرنے کے لیے اپنایا گیاہے۔

کووڈ19 سے  بحالی کے لئے  کارروائی کرنے کی غرض سے  عالمی اپیل پر سہ فریقی مذاکرات 

آئی ایل اونے اس وزارت کے اشتراک سے   نئی دہلی میں 10 دسمبر 2021 کو  ہندوستان کے تناظر میں کووڈ 19  سے  عام آدمی  کی شفایابی کے لئے کارروائی کرنے کی خاطر عالمی اپیل پر ایک سہ فریقی بات چیت کا اہتمام کیا ہے۔ محنت اور روزگار کے وزیر جناب بھوپیندر یادو نے کانفرنس سے کلیدی خطاب کیا۔ کانفرنس میں دو اعلیٰ سطحی پینل مباحثے بھی ہوئے۔ جناب سنیل برتھوال ، سکریٹری (مزدور اور روزگار) نے "ہندوستان میں کام کی دنیا میں کووڈ-19 سے انسان پر مرکو لچک اور پائیداری کے لئے تمام کارکنوں کے عالمی سماجی تحفظ اور تحفظ" پر ایک پینل بحث کی صدارت کی۔

ای ایس آئی سی اسپتال یا ڈسپنسری کی عدم دستیابی کی صورت میں ای ایس آئی سی کی فہرست میں شامل اسپتالوں سے ای ایس آئی سی فائدہ اٹھانے والوں کو طبی دیکھ بھال کی سہولیات فراہم کرنا

نئے جغرافیائی علاقوں میں ای ایس آئی  اسکیم کی توسیع کے بعد، فائدہ اٹھانے والوں کی تعداد میں نمایاں اضافے کے مدنظر ای ایس آئی، طبی نگہداشت والے بنیادی ڈھانچ کو مستحکم کرنے کی کوششیں کی گئی ہیں تاکہ فائدہ اٹھانے والے کی رہائش گاہ کے ارد گرد بہتر طبی خدمات فراہم کی جاسکیں۔ ای ایس آئی مستفیدین کی مشکلات کو کم کرنےکے لئے یہ ایک اہم قدم اٹھایا ہے ، جو اب ای ایس آئی سے مستفید ہونے والے افراد جن کے پاس اپنی رہائش گاہ کے 10 کلومیٹر کے اندر طبی دیکھ بھال کی سہولت نہیں تھی، وہ اب ای ایس آئی کے بغیر شناختی کارڈ/آدھار کارڈ کے ساتھ ای ایس آئی نامی ہسپتال اور ہیلتھ پاس بک کے حوالہ جات، حکومت کا جاری کردہ شناختی کارڈ طبی سہولیات حاصل کر سکتا ہے اور ایسے ہسپتال سے براہ راست او پی ڈی  خدمات کے لیے کیش لیس طبی مشاورت حاصل کر سکتا ہے۔ او پی ڈی  مشاورت کے دوران موصول ہونے والی طبی خدمات اور تجویز کردہ ادویات کی ادائیگی ان کے قریبی ڈسپنسری کم برانچ آفس  (ڈی سی بی او )یا علاقائی دفتر کے ذریعے کی جائے گی جہاں ڈی سی بی او  دستیاب نہیں ہے۔

کووڈ سے متاثرہ آئی پی ایس کی مد کے لئے ای ایس آئی سی   کووڈ-19 راحتی اسکیم کا آغاز

بیمہ شدہ افراد(آئی پی ایس) کے خاندانوں کو امداد اور راحت فراہم کرنے کے لیے جو کووڈ-19  کی وجہ سے مرجاتے ہیں ، ایمپلائز اسٹیٹ انشورنس کارپوریشن (ای ایس آئی سی)  نے 03.06.2021 کو ای ایس آئی سی کووڈ-19 راحتی اسکیم شروع کی  ہے۔ اس اسکیم کے تحت مرنے والے بیمہ شدہ شخص کی اوسط تنخواہ کا 90فی صد  بیمہ شدہ کے اہل انحصار کو دیا جائے گا جوکووڈ-19 کی وجہ سے فوت ہوا    ہے۔ یہ اسکیم دو سال کی مدت کے لیے 24.03.2020 سے نافذ العمل ہے۔

ای ایس آئی کارپوریشن نے 04.12.2021 کو منعقدہ اپنی میٹنگ میں کووڈ -19 بیماری کی تشخیص سے پہلے ایک سال میں تعاون کی کم سے کم مدت کو 70 دن سے گھٹا کر 35 دن کر دیا ہے۔

متوفی آئی پی کی شریک حیات بھی 120/- روپے ہر سال جمع کرانے پر طبی امداد کی اہل ہو گی

ای ایس آئی سی    اتراکھنڈ ، ہری دوار میں 50 سپر اسپیشلٹی بستروں کے ساتھ 300 بستروں کا اسپتال تعمیر کرے گا

ہری دوار اور ملحقہ اضلاع میں آئی پیز کی طبی خدمات کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے ، ای ایس آئی کارپوریشن نے ہری دوار ، اتراکھنڈ میں 5 ایکڑ اراضی میں 50 بستروں والے سپر اسپیشلٹی بیڈز اور اسٹاف کوارٹرز کےساتھ  ساتھ 300 بستروں کا ای ایس آئی سی اسپتال بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔ تعمیر کے بعد ، ہسپتال تقریباً 2.55 لاکھ بیمہ شدہ کارکنوں اور ان کے خاندان کے افراد کو طبی دیکھ بھال کی خدمات فراہم کرے گا۔

ای ایس آئی سی آندھراپردیش کے وشاکھاپٹنم میں اضافی 50 بستروں والے ایس ایس ٹی ونگ کے ساتھ 350 بستروں کا اسپتال تعمیر کرے گا

وشاکھاپٹنم کے شیلا نگر میں تقریباً 8.72 ایکڑکے ایک پلاٹ ایریا میں بیمہ شدہ کارکنوں کو اچھے طبی صحت کے فوائد فراہم کرنے اور طبی دیکھ بھال کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط کرنے کے لیے اضافی 50 بستروں والے ایس ایس ٹی  ونگ اور 128 اسٹاف کوارٹرز کے ساتھ 350 بستروں والے اسپتال کی تعمیر۔ . مجوزہ اسپتال کی تعمیرات، وشاکھاپٹنم اور آس پاس کے علاقوں کو ای ایس آئی اسکیم کے تحت آنے والے تقریباً 14 ملین مستفیدین کو طبی خدمات فراہم کرے گا ۔

40 سال یا اس سے زیادہ عمر کے ای ایس آئی بیمہ شدہ افراد/ بیمہ شدہ خواتین(آئی پی ایس /آئی ڈبلیو) کے لیے سالانہ صحت کے احتیاطی  چیک پروگرام  سے متعلق  پائلٹ پروجیکٹ کا آغاز

محنت اور روزگار ،ماحولیات جنگلات اور آب و ہوا کی تبدیلی کے مرکزی وزیر اور ای ایس آئی سی  کے چیئرمین جناب بھوپیندر یادو  نے

   احمد آباد، فرید آباد اور کوکلکتہ میں واقع چار  ای ایس آئی سی  میڈیکل کالجوں اور اسپتالوں میں  نئی دہلی کے وگیان بھون سے  چارلیس سال  اور اس سے زیادہ کی عمر  کے  بیمہ شدہ افراد کے لئے سالانہ احتیاطی صحت چیک اپ کے واسطے ایک  ڈیڈیکیٹٹ پائلٹ پروگرام شروع کیا ہے اس سے   بیماری کا جلد پتہ لگانے میں بیمہ شدہ افراد کی  مدد کرے گا۔

موجودہ   100 بستروں والے اسپتال  کی خدمات  کی توسیع کے لئے گروگرام (مانیسر) میں 500 بستروں والے ای ایس آئی سی اسپتال کی تعمیر

ای اسی آئی سی نے ایچ ایس آئی آئی ڈی سی ، مانیسر میں 500 بستروں والے ای ایس آئی سی  ہسپتال کے قیام کے لیے 8.7 ایکڑ کے پلاٹ کے حصول کو منظوری دی۔

میرٹھ میں 100 بستروں والے ا ی ایس آئی سی  ہسپتال کا قیام

 

کارپوریشن نے میرٹھ میں 100 بستروں والے ا ی ایس آئی سی ہسپتال کی تعمیر کے لیے 2.024 ہیکٹر اراضی کے حصول کو منظوری دی ہے ، جسے حکومت اتر پردیش نے مفت فراہم کیا ہے۔

سرکاری  ا ی ایس آئی سی ہسپتال ، تنسکیا ، آسام  کا لیا جانا

ای ایس آئی سی کارپوریشن نے تنسکیا میں سرکاری ہسپتال کے حصول کو منظوری دے دی ہے تاکہ اسے 100 بستروں والے ای ایس آئی سی ہسپتال کو اپ گریڈ کیا جا سکے۔

اتر پردیش میں رائے بریلی اور پنکی میں ڈسپنسری اور برانچ آفس کا افتتاح

ای ایس آئی کارپوریشن نے بالترتیب 27.11.2021 اور 24.12.2021 کو رائے بریلی اور پنکی میں نئی ​​ڈسپنسریوں اور برانچ آفس کا افتتاح کیا۔

اتر پردیش  کے شاہجہاں پور میں 30 بستروں والے ای ایس آئی  سی ہسپتال کا بھومی پوجن

 

30 بستروں والے ای ایس آئی سی ہسپتال کی تعمیر شروع کرنے کے لیے 24.12.2021 کو اتر پردیش کی ریاستی حکومت کے ذریعے حاصل کی گئی زمین کا بھومی پوجن کیا گیا۔

ای ایس آئی اسکیم کی توسیع

کیلنڈر سال 2021 کے دوران ای ایس آئی اسکیم کو 52 اضلاع تک بڑھا دیا گیا ہے ، جس سے 231495 ملازمین کو ان کے اہل خانہ کے ساتھ ای ایس آئی اسکیم کے سماجی تحفظ کے تحت لایا گیا ہے۔ ای ایس آئی اسکیم کا فائدہ اب 592 اضلاع میں دستیاب ہے۔ سال 2022 تک ملک کے  تما م اضلاع کے لئے   ای ایس آئی اسکیم کا دائرہ  بڑھانے کی تجویز ہے۔

نیشنل کیریئر سروس (این سی ایس)

این سی ایس پورٹل ملازمت کے متلاشیوں اور آجروں کو ایک پلیٹ فارم پر لانے کے لیے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے فوائد فراہم کرتا ہے۔ 2828 دسمبر 2021تک ، این سی ایس  پلیٹ فارم میں تقریباً 1.34 کروڑ فعال ملازمت کے متلاشی ہیں ، جن میں تقریباً 1.7 لاکھ فعال آجر اور تقریباً 2.21 لاکھ فعال آسامیاں ہیں۔ 2015 میں اس کے آغاز کے بعد سے پورٹل پر اسامیوں کی کل تعداد 90 لاکھ سے زیادہ ہے۔

***

ش ح۔ ح ا ۔ ج

UNO-52



(Release ID: 1787103) Visitor Counter : 84