وزارتِ تعلیم

تعلیم تک مساویانہ رسائی کے لئے حکومت کے اقدامات

Posted On: 22 JUL 2021 2:47PM by PIB Delhi

 

نئی دہلی 22 جولائی 2021:مفت اور لازمی تعلیم کے بچوں کے حق(RTE) ایکٹ 2009 میں چھ سے چودہ برس کی عمر والے تمام بچوں کو ان کے قریبی علاقے میں مفت اور لازمی ابتدائی تعلیم مہیا کرانے کے لئے متعلقہ سرکار کو ذمہ دار بنایا گیا ہے۔ عالمی وباء کے دوران تعلیم کی وزارت نے بچوں کو دور سے تعلیم کی سہولت مہیا کرانے کے لئے بہت سے اقدامات کئے ہیں جو ایس سی / ایس ٹی سمیت تمام طبقوں کے طلباء کے لئے دستیاب ہیں۔

پی ایم ای ودیا کے نام سے ایک جامع پہل کا آغاز کیا گیا جس کا مقصد تعلیم تک رسائی کے لئے ڈیجیٹل/ آن لائن / آن ائر تمام کوششوں کو یکجا کرنا ہے۔ اس پہل میں تعلیم کے تمام طریقوں کا احاطہ کیا گیا ہے۔ DIKSHA(آن لائن) SWAYAM(آن لائن) SWAYAM پربھا(ٹی وی)، دوردرشن اور اے آئی آر سمیت دیگر ٹی وی چینل کا استعمال۔ اس کے علاوہ ریاستوں/ یوٹیز کو PRAGYATA گائڈ لائن جاری کی گئیں تاکہ مختلف طریقوں سے تعلیم جاری رہنے کو یقینی بنایا جاسکے۔ اس گائڈ لائن میں دیگر باتوں کے علاوہ ان تمام حالات کا دھیان رکھا گیا ہے کہ کہاں انٹر نیٹ کنکٹوٹی دستیاب نہیں ہے یا اس کی مناسب دستیابی نہیں ہے۔ ان وسائل کو دیگر پلیٹ فارم مثلاً ٹی وی ، ریڈیو وغیرہ کے ذریعہ دسیتاب کرایا جائے جو انٹرنیٹ پر منحصر نہیں ہیں۔ پہلے درجے سے بارہویں درجے تک کے بچوں کو تعلیم فراہم کرنے کے لئے متبادل تعلیمی کلنڈر تیار کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ کمیونٹی ریڈیو، ورک شیٹ اور نصابی کتابیں ٹیچروں کے ذریعہ گھروں پر فراہم کی گئیں اور کمیونٹی کلاس کرائے گئے۔ تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں ان اقدامات کی تفصیل۔ انڈیا رپورٹ۔ ڈیجیٹل ایجوکیشن جون 2020 میں موجود ہے  جو درج ذیل لنک پر دستیاب ہے۔

https://www.education.gov.in/sites/upload_files/mhrd/files/India_Report_Digital_Education_0.pdf.

مرکزی وزیر تعلیم جناب دھرمیندر پردھان نے یہ اطلاعاات آج راجیہ سبھا میں ایک تحریری جواب میں دی۔

****

ش ح-رف-س ا

U.No. 6844



(Release ID: 1737817) Visitor Counter : 74