زراعت اور کاشتکاروں کی فلاح و بہبود کی وزارت

مرکزی وزیر جناب نریندر سنگھ تومر نے فصل بیمہ ہفتہ کا افتتاح کیا

پردھان منتری فاصل بیمایوجنا نے کاشتکاروں کے دعوں کے لئے 95000 کروڑ روپے ادا کر کے ایک سنگ میل حاصل کیا

وزیر اعظم فصل بیمایوجنا کا مقصد ہر کسان کوسیکیورٹی کور فراہم کرنا ہے: جناب نریندرسنگھ تومر

وزیر زراعت کا کہنا ہے کہ ملک کو فصل بیمایوجنا میں توسیع کی ضرورت ہے

ریاستی حکومتیں اور بیمہ کمپنیاں، وزیر اعظم فصل بیمایوجنا کے نفاذ میں اہم کردار ادا کررہی ہیں

Posted On: 01 JUL 2021 3:56PM by PIB Delhi

زراعت اور کسانوں کی بہبود کے مرکزی وزیر جناب نریندر سنگھ تومر نے، ہندوستان کی 75 سالہ آزادی کییادگاری تقریبات کے موقع پر، سرکار کی ہندوستان @ 75 مہم ‘آزادی کا امرت مہوتسو’ کے ایک حصے کے طور پر ، فصل بیمہ ہفتہ کے دوران فصل بیمایوجنا کے لئے، آج فصل بیمہ آگہی کی مہم کا آغاز کیا۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001QY8D.jpg

ظہرانہ کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مرکزی وزیر جناب تومر نے کہا کہ فصل بیمایوجنا کا مقصد ہر کسان کو سیکیورٹی کور فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ اس اسکیم نے کسانوں کے دعوں کے لئے 95 ہزار کروڑ روپے کی ادائیگی کر کےایک سنگ میل حاصل کیا ہے۔

وزیر موصوف نے کہا کہ ریاستی حکومتوں اور انشورنس کمپنیوں کا پی ایم ایف بی وائی کے نفاذ میں اہم کردار ہے۔ ان کی محنت کا نتیجہیہ ہے کہ پچھلے 4 سالوں میں، کسانوں کے ذریعہ 17 ہزار کروڑ روپئے کی پریمیم جمع کی گئی تھی، جس کے مقابلہ میں انہیں دعوے کے طور پر 95 ہزار کروڑ روپے سے زیادہ کی رقم فراہم کی گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں اس اسکیم کو وسعت دینے کی ضرورت ہے، تاکہ اس کی کوریج میں اضافہ کیا جاسکے اور زیادہ کسانوں کو اسکےفوائد حاصل ہو سکیں۔

وزیر زراعت نے آئی ای سی گاڑیوں کو بھی پرچم دکھا کر روانہ کیا جو فصل بیمہ ہفتہ کے دوران پی ایم ایف بی وائی سے متعلق کاشتکاروں کو مصروف کرتی رہیں گی۔ انہوں نے کاشتکاروں اور زمینی رابطہ کاروں کو اسکیم، اس کے فوائد اور فصلوں کی بیمہ کے عمل کو سمجھنے میں مدد دینے کے لئے پی ایم بی ایف وائی ای - بروشر ، عمومی سوالنامہ کے کتابچہ اور ایک گائیڈ بک کا بھی اجراءکیا۔

اس مہم کے کے دوران، ہفتے بھر میں، 2021 سیزن کے تحت تمام مطلع شدہ علاقوں / اضلاع کا احاطہ کیا جائے گا، جس میں ذراعت اور کسانوں کی بہبود کی وزارت کے ذریعہ شناخت شدہ 75 خواہش مند / قبائلی اضلاع پر خصوصی توجہ دی جائے گی جہاں فصلوں کی بیمہ کی رسائی کم ہے۔ یکم جولائی تا 7 جولائی 2021 ء تک ان علاقوں / اضلاع کے کسانوں کے ساتھ پی ایم ایف بی وائی وین ، ریڈیو ، علاقائی اخبارات ، وال پینٹنگز، ڈیجیٹل میڈیا سمیت متعدد مشغولیت کی سرگرمیاں انجام دی جائیں گی۔

زمینی اور ڈیجیٹل اقدامات سے کسان کو اس اسکیم کی بنیادی باتوں کے بارے میں وضاحت ملے گی جیسے این سی آئی پی پورٹل ، سی ایس سی سنٹرز ، انشورنس کمپنیوں ، بینکوں کے ساتھ اسکیم میں کسطرح اندراج کروایا جئے، مختلف حالتوں میں انشورنس کا دعوی کیسے کیا جائے ، شکایات کا ازالہ اور فصل کے نقصان کی اطلاع کس طرح دی جائے۔ اس مہم کے ذریعہ قبائلی علاقوں اور پرجوش اضلاع کے کسانوں کے ساتھ ، خواتین کاشتکاروں کو بھی شامل کیا جائے گا۔

اس مہم کا مقصد، ویڈیو اور فوٹو کہانیوں کے ذریعے سوشل میڈیا پر، فائدہ حاصل کرنے والے کسانوں کی کہانیاں کوبھی منظرعام پر لانا ہے جنہوں نے نہ صرف اس سکیم سے فائدہ اٹھایا بلکہ پورے کاشتکار طبقے کی اپنی سوچ کی قیادت کے ذریعے مدد کی۔

اس بات کا خاص خیال رکھا گیا ہے کہ جہاں بھی نچلی سطح پر مہم چلائی جارہی ہے  وہاں اورخاص طور پر متعدد ریاستوں کی افتتاحی تقریبات کے دوران، کووڈ-19 پروٹوکول پر عمل کیا جائے۔

وزیر موصوف نے تمام ریاستی حکومتوں اور دیگر اسٹیک ہولڈرز جیسے بینک ، سی ایس سی ، انشورنس کمپنیوں پر زور دیا کہ وہ مل کر کام کریں اور ان شناخت شدہ 75 بلاکس / حلقوں / تحصیلوں میں کسانوں تک پہنچیں۔ انہوں نے تمام کسانوں پر بھی زور دیا کہ وہ آگے آئیں اور فصلوں کے بیمہ کے ثمرات سے لطف اندوز ہوں، بحران کے وقت خود کفیل ہوجائیں اور آتم نربھر کسان کی تشکیل کی حمایت کریں۔

پی ایم ایف بی وائی کا آغاز 2016 میں وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی سربراہی میں ان کے اس ویژن کے تحت کیا گیا تھا کہ ہندوستان کے کسانوں کو فطرت کی تلون مزاجی سے مالی تحفظ فراہم کیا جائے اور ان کی محنت کو محفوظ بنایا جائے۔ اب تک، اس اسکیم نے 29.16 کروڑ کسانوں کی درخواستوں (5۔5 کروڑکسان درخواستیں سالانہ بنیاد پر) کا بیمہ کیا ہے۔ 5 سال کے عرصہ میں، 8.3 کروڑ سے زیادہ کسان درخواستوں نے اس اسکیم سے فائدہ اٹھایا ہے۔ مزیدیہ کہ 95000 کروڑ روپئے کے دعوے ادا کیے جاچکے ہیں جبکہ اس  میںRs.  کسانوں کا حصہ 20000 کروڑروبے کا ہے۔

اس ورچوئل تقریب میں وزیر مملکت جناب پرشوتھم روپالا، جناب کیلاش چودھری اور   زراعت، تعاون اور کسان بہبود کے محکمہ کےسکریٹری، جناب سنجے اگروال سمیت وزارت زراعت کے دیگر اعلی افسران ، شریک ریاستوں کے وزراء زراعت کے علاوہ دیگرسینئر افسران ، انشورنس کمپنی کے عہدیدار اور دیگر اسٹیک ہولڈرزنے بھی شرکت کی۔

ای بروشر کے لئے یہاں کلک کریں

*****

U.No.6102

(ش ح - اع - ر ا)                                      



(Release ID: 1732144) Visitor Counter : 98