وزارت خزانہ

حکومت ہند نے سولہواں  فنانس کمیشن تشکیل دیا  ہے جس کے چیئرمین ڈاکٹر اروند پناگریا ہوں گے

Posted On: 31 DEC 2023 3:03PM by PIB Delhi

 حکومت ہند نے صدر جمہوریہ کی منظوری سے آئین کی دفعہ 280 (1) کی تعمیل میں سولہویں فنانس کمیشن کی تشکیل کی ہے۔ نیتی آیوگ کے سابق وائس چیئرمین اور کولمبیا یونیورسٹی کے پروفیسر ڈاکٹر اروند پناگریا اس کے چیئرمین ہوں گے۔ سولہویں فنانس کمیشن کے ممبران کو الگ سے مطلع کیا جائے گا۔ جناب رتوک رنجنم پانڈے کو کمیشن کا سکریٹری مقرر کیا گیا ہے۔ آج جاری ہونے والے نوٹیفکیشن میں سولہویں فنانس کمیشن کے لیے تفصیلی ٹرمز آف ریفرنس بھی بیان کیے گئے ہیں۔

سولہویں فنانس کمیشن مندرجہ ذیل امور کے بارے میں سفارشات پیش کرے گا، یعنی:

  1. آئین کے باب اول، جز بارہ کے تحت یونین اور ریاستوں کے درمیان ٹیکسوں کی خالص آمدنی کی تقسیم اور اس طرح کی آمدنی کے متعلقہ حصوں کی ریاستوں کے درمیان تقسیم؛

  2. وہ اصول جو بھارت کے کنسولیڈیٹڈ فنڈ سے ریاستوں کی آمدنی کی گرانٹ ان ایڈ اور آئین کے آرٹیکل 275 کے تحت ریاستوں کو ان کی آمدنی کی گرانٹ ان ایڈ کے ذریعہ ادا کی جانے والی رقوم کو اس آرٹیکل کی شق (1) کی شق (1) میں بیان کردہ مقاصد کے علاوہ دیگر مقاصد کے لیے کنٹرول کرتے ہوں؛ اور

  3. ریاست کے مالیاتی کمیشن کی سفارشات کی بنیاد پر ریاست میں پنچایتوں اور میونسپلٹیوں کے وسائل کو پورا کرنے کے لیے ریاست کے کنسولیڈیٹڈ فنڈ کو بڑھانے کے لیے ضروری اقدامات۔

سولہویں مالیاتی کمیشن ڈیزاسٹر مینجمنٹ ایکٹ، 2005 (2005 کا 53) کے تحت تشکیل دیئے گئے فنڈز کے حوالے سے ڈیزاسٹر مینجمنٹ اقدامات کی مالی اعانت سے متعلق موجودہ انتظامات کا جائزہ لے سکتا ہے اور اس پر مناسب سفارشات دے سکتا ہے۔

سولہویں فنانس کمیشن سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ 31 بجے تک اپنی رپورٹ پیش کرے۔سینٹ اکتوبر، 2025 کا دن 1 سے شروع ہونے والے پانچ سال کی مدت کا احاطہ کرتا ہےسینٹ اپریل 2026 کا دن

گزٹ نوٹیفکیشن کے لیے یہاں کلک کریں

***

(ش ح – ع ا – ع ر)

U. No. 3129



(Release ID: 1991975) Visitor Counter : 115