صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت

مرکز نے کووڈ-19 معاملوں میں حالیہ اضافے اور ہندوستان میں جے این وَن کی قسم کا پہلا معاملہ سامنے آنے کے بعد ریاستوں کو ایڈوائزری جاری کی ہے


ریاستوں سے کہا گیا ہے کہ  وہ کووڈ کی صورتحال پر لگاتار نظر رکھیں گے

ریاستی ایس اے آر آئی اور آئی ایل آئی کے معاملوں کی ضلع وار نگرانی اور رپورٹنگ کا کام باقاعدگی سے کریں

ریاستوں کو ہدایت دی گی ہے کہ آرٹی-پی سی آرجانچ بڑھانے سمیت جانچ کے مناسب انتظامات کریں اور پوزیٹیو نمونوں کو آئی این ایس اے سی او جی لیباریٹریوں کو بھیجیں

Posted On: 18 DEC 2023 6:09PM by PIB Delhi

ہندوستان میں چند ر یاستوں اور یوٹی میں کووڈ اُنیس معاملوں میں حالیہ اضافے اور ملک میں کووڈ اُنیس کی نئی قسم جے این وَن کا پہلا معاملہ سامنے آنے کے بعد مرکزی ہیلتھ سکریٹری جناب سدھانش پنت نے ریاستوں اور  یوٹی کو ایک مکتوب    بھیج کر ملک میں کووڈ اُنیس    کی صورتحال پر لگاتار نظر رکھنے کو کہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مرکز اور ریاستی سرکاروں کے مابین لگاتار تال میل  کے ذریعے ہم کووڈ معاملوں کو کم رکھنے میں کامیاب   رہے ہیں، لیکن کووڈ اُنیس    وائرس موجود ہے اور ہندوستان کی موسمیاتی خصوصیات کے ساتھ اس کا رجحان طے ہو گیا ہے۔ لہذا صحت عامہ کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے اس طرح کی کوششیں جاری رکھنا اہم ہے۔

مرکزی ہیلتھ سکریٹری نے کووڈ اُنیس پر قابو پانے اور اس کے بندوبست کے لئے در ج ذیل      حکمت عملی کو اجاگر کیا۔

1.آنے  والے تہواروں  کو دیکھتے ہوئے ریاستوں کو ہدایت دی  گئی ہے کہ بیماری  پھیلنے کی روک تھام کے اقدامات کریں۔

2. ریاستوں سے کہا گیا ہے کہ صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت کی جانب سے کووڈ اُنیس کی روک تھام کے نظرثانی شدہ رہنما خطوط پر سختی سے عمل کریں۔

3.ریاستوں سے کہا گیا ہے  کہ انفلوئنزا جیسی بیماری  آئی ایل آئی اور شدید سانس کی تکلیف (ایس اے آر آئی)  کے ضلع وار معاملوں پر نظر رکھیں اور ان کی رپورٹ کریں۔

4.ریاستوں کو صلاح دی گئی ہے کہ کووڈ اُنیس کی جانچ کے رہنما خطوط کے مطابق تمام اضلاع میں مناسب   تعدا د میں جانچ  کرائی جائے۔

5.ریاستیں آر ٹی -پی سی آر ٹیسٹ کی تعدا د بڑھائیں اور پوزیٹیو نمونوں کو این ایس اے سی او جی لیباریٹریوں کو بھیجیں۔

6.ریاستیں اس بات کو یقینی بنائیں کہ مرکزی وزارت صحت کی جانب سے ہونے والی مشق میں تمام سرکاری اور پرائیویٹ اسپتال وغیرہ حصہ لیں۔

7.ریاستوں سے یہ بھی کہا گیا ہے کہ کووڈ اُنیس کے بندوبست کے لئے کمیونٹی کی مدد بھی لی جائے اور لوگوں کو سانس سے متعلق حفظان صحت کے بارے میں  آگاہ کرایا جائے۔

***

ش ح۔ ع س۔ ک ا

U NO 2609

 



(Release ID: 1987937) Visitor Counter : 86