کامرس اور صنعت کی وزارتہ

اکتوبر  2023 میں ہندوستان کی مجموعی برآمدات کا تخمینہ62.26بلین ڈالر ہےجو کہ اکتوبر 2022 میں 56.90 بلین امریکی ڈالرکے مقابلے9.43 فیصد اضافہ ہے


اکتوبر 2023 میں تجارتی سامان کی برآمدات میں 6.21 فیصد کی شرح ترقی درج کی گئی ہے جس کی مالیت 33.57 امریکی ڈالر ہے جو کہ ا کتوبر 2022 میں  31.60بلین امریکی ڈالر  کی مالیت کی تھی

 اپریل تا ا کتوبر  2023 کے دوران خدمات کی برآمدات کاتخمینہ 192.65امریکی ڈالرہےجوکہ اپریل تا اکتوبر 2022 میں 181.37 بلین امریکی ڈالر تھا۔ اس طرح اس میں 6.22 فیصد کاا ضافہ درج کیا گیا ہے

اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران مجموعی  تجارتی خسارہ35.86 فیصد  کم ہوکر2022میں 89.86  بلین امریکی ڈالر سے کم ہوکر 2023 میں 57.64 بلین امریکی ڈالر ہوگیا ہے۔ سامان کی تجارت کا خسارہ بھی بہترہواہے۔ یہ خسارہ اپریل تا اکتوبر 2022 کے دوران 167.14 بلین امریکی ڈالر تھا جو بہترہوکر اپریل تا اکتوبر 2023 کےدوران 143.07  ہوگیا ہے

غیر پیٹرولیم  اورغیر جواہرات وزیورات  کی برآمدات اکتوبر  2022 میں21.99 بلین امریکی ڈالر سے اکتوبر 2023 میں21.99 فیصد     اضافے کے ساتھ 24.57 بلین امریکی ڈالر تک پہنچ گئی

اکتوبر 2023 کے دوران برآمدات کی ترقی میں اہم تعاون پیش کرنے والےشعبوں میں ادویات اور دوا سازی،انجینئرنگ، ا لیکٹرانک سامان،کپاس کے دھاگے،کپاس کے کپڑے اور کپاس سے تیار اشیاء،دستکاری مصنوعات،خام لوہا، سریمک  پروڈکٹ،گلاس ویئر،گوشت ، ڈیری اور پولٹری مصنوعات شامل ہیں

ادویات اور دوا سازی کی برآمدات میں اکتوبر 2023 کے دوران 29.31 فیصد کا اضافہ  ہوا ہےا ور یہ اکتوبر 2022 میں 1.87 بلین امریکی ڈالرکے مقابلے اکتوبر 2023 میں 2.42 بلین امریکی ڈالرہوگیاہے

انجینئرنگ سامان کی برآمدات اکتوبر 2022 میں1.85 بلین امریکی ڈالر سے ا کتوبر 2023 میں 2.38 بلین امریکی ڈالر تک7.2 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا

الیکٹرانک سامان کی برآمدات   اکتوبر 2022  میں 1.85 بلین امریکی ڈالر کے مقابلے اکتوبر 2023 کے دوران 28.23 فیصد بڑھ کر2.38 بلین امریکی ڈالر پر پہنچ گئیں

اکتوبر  2023 کے دوران زرعی برآمدات میں اضافہ جاری ہے: اناج کی تیاری اور  ڈبہ بند متفرق اشیاء (40.95فیصد )، تیل  کے بیج (29.7فیصد )،  پھل اور سبزیاں (24.48فیصد ) ،تلہن (17.32فیصد )، مصالحے (10.78فیصد )،   کافی (8.45فیصد )، چائے  (4.12فیصد )،  کاجو (3.29فیصد ) کا اضافہ درج کیا گیا

Posted On: 15 NOV 2023 2:45PM by PIB Delhi
  • اکتوبر2023* میں ہندوستان کی مجموعی برآمدات (تجارتی سامان اور خدمات مشترکہ) 62.26 بلین امریکی ڈالر ہونے کا تخمینہ  لگایا گیا ہے، جو اکتوبر 2022 کے مقابلے میں9.43 فیصد کی مثبت نمو کو ظاہر کرتا ہے۔  اکتوبر 2023* میں مجموعی درآمدات کا تخمینہ 79.35 بلین ڈالر ہے، جو کہ اکتوبر 2022 کے مقابلے میں11.10 فیصد کی مثبت نمو کو ظاہر کرتا ہے۔

جدول 1: اکتوبر 2023 کے دوران تجارت*

 

 

اکتوبر 2023

(بلین امریکی ڈالر)

اکتوبر 2022

(بلین امریکی ڈالر)

تجارتی اشیا

برآمدات

33.57

31.60

درآمدات

65.03

57.91

*خدمات

برآمدات

28.70

25.30

درآمدات

14.32

13.51

مجموعی تجارت

(تجارتی سامان اور خدمات)

برآمدات

62.26

56.90

درآمدات

79.35

71.42

تجارتی میزان

-17.08

-14.52

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

* نوٹ: آر بی آئی  کی طرف سے جاری کردہ خدمات کے شعبے کے لیے تازہ ترین ڈیٹا ، ستمبر2023 کا ہے۔ اکتوبر  2023 کا ڈیٹا ایک تخمینہ ہے، جس میں آر بی آئی  کے بعد کے اجراء کی بنیاد پر نظر ثانی کی جائے گی۔ (ii) سہ ماہی بیلنس آف پیمنٹ ڈیٹا کا استعمال کرتے ہوئے اپریل-اکتوبر 2022 اور اپریل-جون 2023 کے ڈیٹا میں تناسب کی بنیاد پر نظر ثانی کی گئی ہے۔

تصویر 1: ا کتوبر 2023 کے دوران مجموعی تجارت*

  • اپریل-اکتوبر 2023 میں ہندوستان کی مجموعی برآمدات (تجارتی سامان اور خدمات مشترکہ)  کا تخمینہ 437.54 بلین امریکی ڈالر ہے جو کہ اپریل - اکتوبر 2022 کے مقابلے میں (-) 1.61 فیصد کی منفی نمو  کو ظاہر کرتا ہے۔ اپریل-  اکتوبر 2023 میں مجموعی درآمدات کا تخمینہ 495.17 بلین امریکی ڈالر ہے جو  اپریل تا اکتوبر  2022 کے مقابلے میں  ( -) 7.37 فیصد کی منفی نمو کو ظاہر کرتا ہے۔

جدول 2: اپریل- اکتوبر 2023 کے دوران تجارت*

 

 

اپریل۔ اکتوبر    2023

(بلین امریکی ڈالر)

اپریل۔اکتوبر   2022

 (بلین امریکی ڈالر)

تجارتی اشیا

برآمدات

244.89

263.33

درآمدات

391.96

430.47

*خدمات

برآمدات

192.65

181.37

درآمدات

103.22

104.09

مجموعی تجارت  (تجارتی اشیا + خدمات)*

برآمدات

437.54

444.70

درآمدات

495.17

534.56

تجارتی میزان

-57.64

-89.86

 

تصویر 2: اپریل-اکتوبر 2023 کے دوران مجموعی تجارت*

تجارتی سامان کی تجارت

  • اکتوبر  2023 میں تجارتی سامان کی برآمدات 33.37 بلین امریکی ڈالر تھیں، جبکہ اکتوبر 2022 میں  یہ 31.60 بلین امریکی ڈالر تھیں۔
  • اکتوبر 2023 میں تجارتی سامان کی درآمدات 65.03 بلین امریکی ڈالر تھیں، جبکہ اکتوبر 2022 میں یہ 57.91 بلین امریکی ڈالر تھی۔

تصویر 3: اکتوبر 2023 کے دوران تجارتی سامان کی تجارت

  • اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران تجارتی سامان کی برآمدات 244.89 بلین امریکی ڈالر تھیں جبکہ اپریل تا اکتوبر 2022 کے دوران  تجارتی اشیا کی برآمدات 263.33 بلین امریکی ڈالر تھیں۔
  • اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران تجارتی سامان کی درآمدات 391.96 بلین امریکی ڈالر تھیں جبکہ اپریل تا اکتوبر 2022 کے دوران  تجارتی اشیا کی درآمدت 430.47 بلین امریکی ڈالر تھیں۔
  • اپریل تا  اکتوبر 2023 کے لیے تجارتی خسارے کا تخمینہ 147.07بلین ڈالر  لگایا گیا ہے جبکہ  یہ اپریل تااکتوبر 2022 کے دوران 167.14 بلین  امریکی ڈالر تھا۔

تصویر 4: اپریل- اکتوبر 2023 کے دوران تجارتی سامان کی تجارت

  • اکتوبر2023 میں غیر پیٹرولیم اور غیر زیورات وجواہرات  کی برآمدات 24.57 بلین امریکی ڈالر تھیں، جبکہ اکتوبر 2022 میں یہ برآمدات 21.99 بلین امریکی ڈالر تھیں۔
  • اکتوبر 2023 میں غیر پیٹرولیم، غیر جواہرات اور زیورات (سونا، چاندی اور قیمتی دھاتیں) کی درآمدات 36.87 بلین امریکی ڈالر تھیں، جبکہ اکتوبر 2022 میں یہ درآمدات  35.12 بلین امریکی ڈالر تھیں۔

جدول 3: اکتوبر 2023 کے دوران پیٹرولیم اور جواہرات اور زیورات کے علاوہ تجارت

 

اکتوبر   2023

(بلین امریکی ڈالر)

اکتوبر   2022

(بلین امریکی ڈالر)

غیر پیٹرولیم برآمدات

27.56

25.30

غیر پیٹرولیم درآمدات

47.36

41.57

غیر پیٹرولیم اورغیر جواہرات  اور زیورات کی برآمدات

24.57

21.99

غیر پیٹرولیم اورغیر جواہرات  اور زیورات کی درآمدات

36.87

35.12

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

نوٹ: جواہرات اور زیورات کی درآمدات میں سونا، چاندی اور موتی، قیمتی اور نیم قیمتی پتھر شامل ہیں۔

تصویر 5: اکتوبر 2023 کے دوران پیٹرولیم اور جواہرات اور زیورات کے علاوہ تجارت

  • اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران غیر پیٹرولیم اور غیر جواہرات اور زیورات کی برآمدات 178.42 بلین امریکی ڈالر تھیں جبکہ اپریل تا اکتوبر 2022 میں یہ برآمدات 182.24بلین امریکی ڈالر تھیں۔
  • اپریل- اکتوبر 2023 میں غیر پیٹرولیم، غیر جواہرات اور زیورات (سونا، چاندی اور قیمتی دھاتیں) کی درآمدات 246.50بلین امریکی ڈالر   تھی جبکہ اپریل- اکتوبر 2023 میں یہ درآمدات 260.01 بلین امریکی ڈالر تھیں۔

جدول 4: اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران پیٹرولیم اور جواہرات اور زیورات کے علاوہ تجارت

 

اپریل۔ اکتوبر    2023

(بلین امریکی ڈالر)

اپریل۔ اکتوبر    2022

(بلین امریکی ڈالر)

غیر پیٹرولیم برآمدات

197.02

206.19

غیر پیٹرولیم درآمدات

292.01

307.50

غیر پیٹرولیم اورغیر جواہرات  اور زیورات کی برآمدات

178.42

182.24

غیر پیٹرولیم اورغیر جواہرات  اور زیورات کی درآمدات

246.50

260.01

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

نوٹ: جواہرات اور زیورات کی درآمدات میں سونا، چاندی اور موتی، قیمتی اور نیم قیمتی پتھر شامل ہیں۔

تصویر 6: اپریل- اکتوبر 2023 کے دوران پیٹرولیم اور جواہرات اور زیورات کے علاوہ تجارت

خدمات کی تجارت

  • اکتوبر 2023* کے لیے خدمات کی برآمد کی تخمینی قدر  28.70 بلین امریکی ڈالر ہے، جو کہ  اکتوبر 2022 میں25.30 بلین امریکی ڈالر تھی۔
  • اکتوبر 2023* کے لیے خدمات کی درآمد کی تخمینی قدر 14.32 بلین امریکی ڈالر ہے جبکہ اکتوبر 2022 میں13.51 بلین امریکی ڈالر تھی۔

تصویر 7: اکتوبر 2023 کے دوران خدمات کی تجارت*

  • اپریل تا اکتوبر 2023* کے لیے خدمات کی برآمد کی تخمینی قدر192.65 بلین امریکی ڈالر ہے جب کہ اپریل تا اکتوبر 2022 میں  یہ قدر 181.37 بلین  امریکی ڈالر تھی۔
  • اپریل تا اکتوبر2023* کے لیے خدمات کی درآمدات کی تخمینی قدر 103.22 بلین  امریکی ڈالر ہے جو کہ اپریل تا اکتوبر 2022 میں 104.09 بلین امریکی ڈالر تھی۔
  • اپریل- اکتوبر 2023* کے لیے سروسز ٹریڈ سرپلس کا تخمینہ89.43 بلین امریکی ڈالر ہے جبکہ اپریل-اکتوبر 2022 میں یہ تخمینہ 77.28 بلین امریکی ڈالر تھا۔

تصویر 8: اپریل-اکتوبر 2023 کے دوران خدمات کی تجارت*

  • اکتوبر2023 کے مہینے کے لیے، زیر تجارت برآمدات کے ، 30 کلیدی شعبوں میں سے 22 شعبوں نے اکتوبر 2023 میں گزشتہ سال (اکتوبر2022) کی اسی مدت کے مقابلے میں مثبت نمو کا مظاہرہ کیا۔ ان میں خام لوہا (2595.91فیصد )، سرامک مصنوعات اور شیشے کے سامان (48.16فیصد )، تمباکو (47.6فیصد )، اناج کی تیاری اور متفرق پراسیس شدہ اشیاء (40.95فیصد )، گوشت، ڈیری اور پولٹری مصنوعات (38.57فیصد )، سوتی دھاگے/ فیبرکس / تیار شدہ اشیا، ہینڈ لوم پروڈکٹس وغیرہ (36.49فیصد)، تیل کا بیج (29.7فیصد )، ادویات اور دواسازی (29.31فیصد )، الیکٹرانک سامان (28.23فیصد )، پھل اور سبزیاں (24.48فیصد )،   تیل کا کھانا (17.32فیصد )، قالین (16.63فیصد )، پلاسٹک اور لینولیم (12.83فیصد )، مصالحے(10.78فیصد )، انسانی تیار کردہ دھاگے / فیبرک/ مصنوعات وغیرہ (10.23فیصد )،کافی (8.45فیصد ) سمندری مصنوعات  (8.16فیصد )، انجینئرنگ سامان (7.2فیصد ) دستکاری مصنوعات بالخصوص ہاتھ سے بنائی گئی قالین  (4.72فیصد )، چائے  (4.12فیصد )، کاجو  (3.29فیصد )، اور جوٹ کا سامان بشمول فرش بچھانے والے (0.42فیصد ) شامل ہیں۔
  • تجارتی سامان کی درآمدات کے تحت، اکتوبر 2023 میں 30 کلیدی شعبوں میں سے 10 نے منفی نمو کا مظاہرہ کیا۔ ان میں خام کپاس اور کچرا  (منفی78.69فیصد)، سبزیوں کا تیل (منفی35.7فیصد)، کھاد، خام اور تیار شدہ (منفی34.58فیصد)، ٹرانسپورٹ کا سامان شامل ہیں۔ (منفی33.99 فیصد)، گودا اور ویسٹ پیپر (منفی33.38 فیصد)، نیوز پرنٹ (منفی33.08 فیصد)، پروجیکٹ گڈز (منفی23.73 فیصد)، موتی، قیمتی اور نیم قیمتی پتھر (منفی9.76 فیصد)، لکڑی اور لکڑی کی مصنوعات ( منفی7.82 فیصد) اور چمڑے اور چمڑے کی مصنوعات (منفی5.38 فیصد)۔
  • اپریل-اکتوبر 2023 کے لیے، تجارتی سامان کی برآمدات کے تحت، 30 کلیدی شعبوں میں سے 14 نے اپریل-اکتوبر 2022 کے مقابلے میں اپریل-اکتوبر 2023 کے دوران مثبت نمو کا مظاہرہ کیا۔ (27.7فیصد)، تیل کے بیج (24.39فیصد)، سیرامک مصنوعات اور شیشے کے برتن (23.65فیصد)، تمباکو (12.99فیصد)، پھل اور سبزیاں (12.82فیصد)، ادویات اور دواسازی (8.14فیصد)، اناج کی تیاری اور متفرق پراسیس شدہ اشیاء 6.32فیصد، کاٹن یارن/کپاس سے تیار کردہ دھاگے/ فیبرکس/اشیا، ہینڈ لوم مصنوعات وغیرہ (5.65فیصد)، گوشت، دودھ اور پولٹری مصنوعات (4.54فیصد)، کافی (4.02فیصد)، مصالحے (2.35فیصد) اور کاجو (0.72فیصد) )۔ اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران الیکٹرانک سامان کی برآمدات 15.48 بلین امریکی ڈالر ریکارڈ کی گئیں جبکہ اپریل تا اکتوبر 2022 کے دوران 12.13 بلین امریکی ڈالر کی برآمدات میں 27.70 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔
  • تجارتی سامان کی درآمدات کے تحت، 30 کلیدی شعبوں میں سے 17 نے اپریل-اکتوبر 2022 کے مقابلے میں اپریل-اکتوبر 2023 میں منفی نمو ظاہر کی ہے۔ (منفی40.4فیصد)، کھاد، خام اور تیار شدہ (منفی35.92فیصد)، کوئلہ، کوک اور بریکیٹس، وغیرہ (منفی32.83فیصد)، سبزیوں کا تیل (منفی24.87فیصد)، موتی، قیمتی اور نیم قیمتی پتھر (منفی24.02فیصد) فیصد)، نامیاتی اور غیر نامیاتی کیمیکلز (منفی22.08فیصد)، پیٹرولیم، خام اور مصنوعات (منفی18.72فیصد)، ٹیکسٹائل یارن فیبرک، تیار کردہ آرٹیکلز (منفی16.61فیصد)، چمڑے اور چمڑے کی مصنوعات (منفی13.95فیصد)، ٹرانسپورٹ کا سامان (منفی13.06فیصد)، لکڑی اور لکڑی کی مصنوعات (منفی12.3فیصد)، نیوز پرنٹ (منفی8.31فیصد)، گودا اور ویسٹ پیپر (منفی5.81فیصد)، دھاتی دھاتیں اور دیگر معدنیات (منفی4.49فیصد) اور مصنوعی رال، پلاسٹک کے مواد، وغیرہ (منفی4.4فیصد)۔
  • اپریل تا اکتوبر 2022 کے مقابلے میں اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران خدمات کی برآمدات میں 6.22 فیصد مثبت اضافہ متوقع ہے۔
  • اپریل-اکتوبر 2023 میں ہندوستان کے تجارتی خسارے میں کافی کمی ہوئی ہے۔ اپریل-اکتوبر 2022 کے دوران 89.86 بلین امریکی ڈالر کے خسارے کے مقابلے میں اپریل-اکتوبر 2023 کے لیے مجموعی تجارتی خسارے کا تخمینہ 57.64 بلین امریکی ڈالر لگایا گیا ہے۔ 35.86 فیصد اپریل تا اکتوبر 2023 کے دوران تجارتی تجارتی خسارہ 147.07 بلین امریکی ڈالر ہے جو کہ اپریل تا اکتوبر 2022 کے دوران 167.14 بلین امریکی ڈالر کے مقابلے میں (منفی) 12.01 فیصد کی کمی درج کرتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ش ح۔ م ع   ۔ر ا

 (U.No. 1059)



(Release ID: 1977328) Visitor Counter : 99


Read this release in: Bengali , English , Marathi , Hindi