محنت اور روزگار کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

 ای پی ایف او نے جولائی 2023 کے مہینے کے دوران 18.75 لاکھ اراکین کے ساتھ باضابطہ تنخواہ پانے والے اپنے ملازمین کی فہرست  یعنی  پے رول میں سب سے زیادہ اضافہ درج کیا

Posted On: 20 SEP 2023 5:43PM by PIB Delhi

آج جاری کردہ ای پی ایف او  کے عارضی پے رول کے اعداد و شمارسے یہ بات اجاگر  ہوئی   ہے کہ ای پی ایف او  نے جولائی، 2023 کے مہینے میں 18.75 لاکھ نئے  اراکین کو شامل کیا ہے۔اس  ماہ کے دوران  یہ اضافہ ستمبر، 2017 کے بعد کے عرصے کا احاطہ کرتے ہوئے اپریل، 2018 سے ای پی ایف او  پے رول ڈیٹا کی پہلی اشاعت کے بعد سے سب سے زیادہ اضافہ درج کیا گیاہے۔ . گزشتہ تین مہینوں سے  یہ بڑھتا ہوا  رجحان  جاری  ہے، جس میں گزشتہ ماہ جون 2023 کے مقابلے میں تقریباً 85,932 نئے ارکان کا   اضافہ ہوا ہے۔

اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ جولائی، 2023 کے دوران تقریباً 10.27 لاکھ نئے اراکین نے اپنا  اندراج کرایا  ہے جو کہ جولائی، 2022 کے بعد سب سے زیادہ ہے۔ ای پی ایف او  میں شامل ہونے والے نئے اراکین کی اکثریت، 18سے 25 سال کی عمر کے گروپ  کی ہے جو کہ اس ماہ کے  دوران شامل ہونے والے کل نئے اراکین کا تقریباً 58.45 فیصد ہے۔  یہ نوجوانوں کےذریعہ  اندراج میں بڑھتے ہوئے رجحان کو ظاہر کرتا ہے، جو زیادہ تر ملک کے منظم شعبے کی افرادی قوت میں پہلی بار ملازمت کے متلاشی ہیں۔

پے رول کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ تقریباً 12.72 لاکھ ارکان اس فہرست سے باہر نکلے ہیں ، لیکن انہو ں نے ای پی ایف او  میں دوبارہ شمولیت اختیار کرلی ، جو پچھلے 12 مہینوں میں سب سے زیادہ ہے۔ ان اراکین نے اپنی ملازمتیں تبدیل کیں اور ای پی ایف او  کے تحت آنے والے  کاروباری اداروں میں دوبارہ شامل ہو گئے اور حتمی تصفیہ کے لیے درخواست دینے کے بجائے اپنی جمع شدہ رقم کو منتقل کرنے کا انتخاب کیا، اس طرح انہوں  نے اپنے سماجی سکیورٹی کے تحفظ میں مزید توسیع کی۔

پے رول کے اعداد و شمار کا صنفی لحاظ سے تجزیہ کئے جانے  سے پتہ چلتا ہے کہ جولائی، 2023 کے دوران پے رول میں تقریباً 3.86 لاکھ  نئی خاتون  اراکین کو شامل کیا گیا ہے۔ تقریباً 2.75 لاکھ خاتون  ارکان  پہلی بار سوشل سیکورٹی کوریج کے دائرے میں آئی ہیں۔

پے رول کے اعداد و شمار کے ریاستوں کے لحاظ سے  تجزیہ کئے جانے  سے پتہ چلتا ہے کہ 5 ریاستوں -مہاراشٹر، تمل ناڈو، کرناٹک، گجرات اور ہریانہ میں نئے ارکان کی تعداد میں   اضافہ سب سے زیادہ ہے۔ یہ ریاستیں تقریباً 58.78 فیصد ممبروں کی تعداد میں اضافہ کرتی ہیں، جس سے اس ماہ کے دوران کل 11.02 لاکھ ممبران کا اضافہ ہوا۔اس ماہ کے دوران  تمام ریاستوں میں، مہاراشٹر ریاست    20.45فیصد  نئے اراکین کے  اضافے کے ساتھ سب سے آگے ہے۔

صنعت کے لحاظ سے اعداد و شمار کا ماہ بہ ماہ موازنہ، ٹریڈنگ کمرشل اسٹیبلشمنٹس یعنی تجارتی و کاروباری اداروں ، بلڈنگ اینڈ کنسٹرکشن انڈسٹری، الیکٹریکل، مکینیکل اور جنرل انجینئرنگ سے متعلق مصنوعات  تیارکرنے والے اداروں میں کام کرنے والے ارکان میں نمایاں اضافے  کو ظاہر کرتا ہے۔ اس کے بعد ٹیکسٹائل، فنانسنگ اسٹیبلشمنٹ یعنی مالیاتی ادارے  اور  ہسپتال وغیرہ شامل ہیں۔ کل نئی  رکنیت میں سے تقریباً 38.40 فیصد اضافہ ماہر خدمات (افرادی قوت فراہم کرنے والے، نارمل ٹھیکیداروں، سیکیورٹی سروسز، اورمتفرق سرگرمیوں وغیرہ پر مشتمل ) کا ہے۔

مندرجہ بالا پے رول ڈیٹا یعنی  باضابطہ تنخواہ پانے والے اپنے ملازمین کی فہرست  عارضی ہے کیونکہ ڈیٹا تیار کرنے کا عمل  ایک مسلسل مشق ہے،  اور اس لئے  ملازمین کے ریکارڈ کو اپ ڈیٹ یعنی تازہ ترین  بنانا  ایک مسلسل عمل ہے۔ اس لیے پچھلا ڈیٹا ہر ماہ اپ ڈیٹ کیا جاتا ہے۔ اپریل-2018 کے مہینے سے، ای پی ایف او  ستمبر، 2017 کے بعد کی مدت کا احاطہ کرتے ہوئے پے رول ڈیٹا جاری کر رہا ہے۔ ماہانہ پے رول کے اعداد و شمار میں، آدھار کی توثیق شدہ یونیورسل اکاؤنٹ نمبر (یو اے این) کے ذریعے پہلی بار ای پی ایف او  میں شامل ہونے والے اراکین کی تعداد، ای پی ایف او  کی کوریج سے باہر نکلنے والے موجودہ اراکین اور جو لوگ باہر نکلے ہیں لیکن دوبارہ ممبر کے طور پر شامل ہو رہے ہیں، انہیں ماہانہ نئے پے رو ل  میں شامل کیا جاتا ہے ۔

*************

  ش ح۔ع م ۔رم

U-9746      



(Release ID: 1959125) Visitor Counter : 61


Read this release in: Tamil , English , Hindi , Telugu