جدید اور قابل تجدید توانائی کی وزارت

حکومت توانائی اور  سب کے لیے خوراک کی یقینی فراہم کے تئیں پرعزم ہے- مرکزی وزیر مملکت بھگونت کھوبا


بھارت  قابل تجدید توانائی کے میدان میں تیزی سے آگے بڑھ رہا ہے

Posted On: 30 JUL 2023 10:39AM by PIB Delhi

کیمیاوی مادوں اور  کیمیاوی کھادوں کے نیز نئی و قابل تجدید توانائی کے مرکزی وزیر مملکت جناب بھگونت کھوبا نے نیشنل پورٹل فار روف ٹاپ سولر انرجی کے ایک سال پورا ہونے کے موقعے اور قابل تجدید توانائی  کی کل ہند ایسوسی ایشن (اے ٓئی آر ای اے) کے یوم تاسیس کے موقع پر اجتماع سے خطاب کیا۔  یہ تقریب بھارت  کے قابل تجدید توانائی فیسٹیول کے طور پر منائی گئی ، جس میں توانائی کی حفاظت اور  مستحکم توانائی کے حصول کے تئیں ملک کے عزم کو اجاگر کیا گیا۔ اس موقع پر گوا کے وزیر اعلیٰ پرمود ساونت اور وزیر توانائی سُدین دھولیکر بھی موجود تھے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/IMG-20230730-WA0003FQWR.jpg

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جناب بھگونت کھوبا نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ حکومت تمام شہریوں کو توانائی اور خوراک کی یقینی فراہمی میں اپنا بھرپور تعاون دے رہی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ  کوپ 2015 کانفرنس میں اعلان کردہ 2022 تک  جی ڈبلیو 175 قابل تجدید توانائی (فوسیل فیول) بھارت  کا دور اندیشی پر مبنی مقصد مقررہ وقت سے پہلے ہی پورا ہو گیا ہے اور اس شاندار کامیابی کو عالمی برادری نے سراہا ہے ۔ اس کامیابی کے بعد، کوپ  26 کانفرنس میں، وزیر اعظم نے 2070 تک مضر صحت گیسوں کے اخراج کو مکمل طور پر خرچ کرنے کے حتمی  مقصد کے ساتھ 2030 تک قابل تجدید توانائی کے 500 گیگا واٹ تک پہنچنے کے بھارت  کے نئے نشانے کا ذکر کیا۔ انہوں نے یہ بھی  کہا کہ بھارت  کوپ - 15 میں طے شدہ مقاصد کو حاصل کرنے والے واحد ملک کے طور پر فخر کے ساتھ کھڑا ہے، لیکن مضر صحت گیسوں کے مکمل اخراج کے مقصد کو حاصل کرنے کے لیے اب بھی بہت کام باقی ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/IMG-20230730-WA00017MGR.jpg

وزیر اعظم نریندر مودی کے امریکہ اور فرانس کے حالیہ کامیاب دوروں پر روشنی ڈالتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ یہ دورے تمام شعبوں میں اپنے مقاصد اور خوابوں کو پورا کرنے کے لیے بھارت  کے مضبوط عزم کی عکاسی کرتے ہیں۔

حکومت ہند کی طرف سے اٹھائے گئے اہم اقدامات میں سے ایک قابل تجدید توانائی کے لیے پروڈکشن لنکڈ سبسڈی (پی ایل آئی) اسکیم کا آغاز ہے۔ اس اسکیم کا مقصد توانائی کے شعبے میں خود کفالت اور مقامی پیداوار کو فروغ دینا ہے۔ اس اسکیم کے تحت 1500 کروڑ روپے کی جنریشن سے منسلک سبسڈی کا اعلان کیا گیا ہے، جس میں سے 19500 کروڑ روپے کی لاگت سے 65 گیگاواٹ صلاحیت کے سیٹ شروع کیے گئے ہیں۔ سال 2030 تک بھارت  نے 500 گیگا واٹ کا کل نشانہ  مقرر کیا ہے جس میں سے 280 گیگا واٹ شمسی توانائی سے حاصل ہوگا۔

صاف توانائی کے ذرائع کو حاصل کرنے میں بھارت  کی شراکت کے ساتھ ہم آہنگ، حکومت نے نیشنل ہائیڈروجن مشن  کے مقصد کو حاصل کرنے کے لیے 17,500 کروڑ روپے کی پیداوار سے منسلک سبسڈی اسکیم کا اعلان کیا ہے۔ اس ہائیڈروجن اسکیم کو سپورٹ کرنے کے لیے ضابطے تیار کیے جا رہے ہیں۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/IMG-20230730-WA0002Z82E.jpg

گوا کے وزیر اعلیٰ پرمود ساونت نے ماحول کے لیے سازگار اور صاف  ستھری توانائی کے میدان میں ریاستی حکومت کی قیادت کو اجاگر کیا۔  وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مضر صحت گیسوں کے اخراج کو مکمل طور پر ختم کرنے کے گوا  کے مقصد کو حاصل کرنے میں مثبت کردار ادا کرے گا۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے 30 جولائی 2022  کو روف ٹاپ سولر پاور کے لیے قومی پورٹل کا آغاز کیا ۔

************

ش ح۔ا س ۔ ت ح

(U: 7735)



(Release ID: 1944142) Visitor Counter : 103