اقلیتی امور کی وزارتت

عازمین حج کے لیے صحت سے متعلق جامع انتظامات


ہوائی اڈوں پر ہیلتھ ڈیسک

سرکاری ڈاکٹروں کے ذریعہ میڈیکل اسکریننگ

مکہ، مدینہ اور جدہ میں وسیع پیمانے پر صحت کے بنیادی ڈھانچے کی تعمیر

Posted On: 29 MAR 2023 5:34PM by PIB Delhi

اقلیتی امور کی وزارت عازمین حج کے لیے معیاری صحت  سے متعلق مدد کو یقینی بنانے کے مقصد سے، صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت کے ساتھ مل کر مکہ مکرمہ جانے کا ارادہ رکھنے والے عازمین کے لیے صحت کے جامع انتظامات کی خاطر تعاون کر رہی ہے۔ سعودی عرب ہر سال دنیا بھر سے مکہ پہنچنے والے تقریباً 25 سے 30 لاکھ عازمین حج کی میزبانی کرتا ہے۔ ہندوستان سے مکہ جانے والے عازمین حج کی تعداد دنیا میں تیسری سب سے بڑی تعداد ہے۔ عازمین حج  کی اتنی بڑی تعداد صحت عامہ کے لیے بھی منفرد چیلنجز پیش کرتی ہے، اس لیے مکہ، مدینہ اور جدہ میں عازمین حج کی طبی ضروریات کا اچھی طرح خیال رکھا جانا چاہیے۔

گزشتہ 3 برسوں میں کووڈ-19 وبائی امراض کی وجہ سے عازمین حج کی تعداد میں کمی کا رجحان دیکھا گیا تھا، لیکن اس سال ہندوستانی عازمین کی ایک بڑی تعداد کے مکہ مکرمہ آنے کی امید ہے۔ موجودہ سال کے لیے ہندوستان کو 175025 عازمین کا کوٹہ مختص کیا گیا ہے۔

عازمین حج کے لیے جامع اور معیاری خدمات کو یقینی بنانے کے مقصد سے، اقلیتی امور کے وزیر اور صحت کے وزیر نے دونوں وزارتوں کے عہدیداروں کے ساتھ میٹنگوں کا ایک سلسلہ شروع کیا ہے۔ گزشتہ 3 مہینوں میں دونوں وزارتوں کے درمیان اس موضوع پر 10 سے زائد میٹنگیں منعقد کی گئی ہیں اور ایک تفصیلی لائحہ عمل کو حتمی شکل دی گئی ہے۔

میڈیکل اسکریننگ اور فٹنس سرٹیفکیٹ

وزارت صحت نے 21 مارچ کو تمام ریاستوں کو ہدایات جاری کی ہیں، جس میں ریاستوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ درخواست گزار عازمین حج کے لیے میڈیکل اسکریننگ اور فٹنس سرٹیفکیٹ فراہم کریں اور اس طرح کی اسکریننگ کے لیے ایک تفصیلی فارمیٹ ریاستوں کو بھیجا گیا ہے۔ درخواست دہندگان کی مدد کرنے کے لیے، اس سال درخواست دہندگان کے ذریعہ میڈیکل اسکریننگ اور فٹنس سرٹیفکیٹ ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں کسی بھی سرکاری ایلوپیتھک طبی ڈاکٹر کے ذریعہ جاری کیا جاسکتا ہے۔ اس سے ملک بھر میں میڈیکل اسکریننگ سرٹیفکیٹ حاصل کرنے کے عمل میں آسانی ہوگی۔

صحت اور ٹیکہ کاری کیمپ

اس کے علاوہ، یہ بھی ہدایت دی گئی ہے کہ ریاستیں اور ضلعی صحت کے حکام منتخب عازمین حج کے لیے کیمپ بھی لگائیں  گے جہاں روانگی سے قبل تفصیلی طبی معائنہ اور ٹیکہ کاری بھی فراہم کی جائے گی۔ ان کیمپوں میں تمام عازمین کے لیے ایک ہیلتھ کارڈ بھی جاری کیا جائے گا جس کے تحت منتخب عازمین حج کا ان کی موجودہ صحت کی حالت، موجودہ بیماریوں/خطرناک امراض، اگر کوئی ہے، تو اس کی جانچ کی جائے گی۔ منصوبہ بنایا گیا ہے کہ سعودی عرب میں میڈیکل ٹیموں کو کسی بھی ایمرجنسی کی صورت میں طبی نگہداشت کی بروقت فراہمی کے لیے ڈیجیٹل ذرائع سے صحت کی صورتحال فراہم کی جائے گی۔ اس کے مطابق ہر ریاست کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ ریاستی اقلیتی بہبود کے محکمے کے ساتھ مل کر سرگرمیوں کو مربوط کرنے کے لیے ایک نوڈل افسر کو نامزد کرے۔

وزارت صحت مطلوبہ تعداد میں کواڈری ویلنٹ میننگوکوکل میننگ جائٹس ویکسین (کیو ایم ایم وی) اور سیزنل انفلوئنزا ویکسین (ایس آئی وی) خریدے گی اور عازمین حج کو فراہم کرے گی۔

تمام ہوائی اڈوں پر ہیلتھ ڈیسک

مزید برآں، روانگی کے دوران عازمین حج کی صحت کی ضروریات کو مربوط کرنے کے لیے روانگی کے تمام ہوائی اڈوں پر ہیلتھ ڈیسک بھی قائم کیے جائیں گے۔

سعودی عرب میں صحت کا بنیادی ڈھانچہ (صحت کے پیشہ ور افراد، آلات اور ادویات)

سعودی عرب میں صحت کے بنیادی ڈھانچے کی ضرورت کو پورا کرنے کے لیے وزارت صحت اور خاندانی بہبود اپریل 2023 کے پہلے ہفتے کے دوران سینئر طبی ماہرین کی ایک ٹیم بھی بھیج رہی ہے، تاکہ ضرورت کے مطابق مکہ، مدینہ، جدہ، عرفات اور منیٰ کے بنیادی رسمی مقامات پر عارضی ہسپتالوں، ڈسپنسریوں، دواخانوں اور کیمپوں کا منصوبہ بنایا جا سکے۔ یہ ٹیم ماہرین، ڈاکٹروں اور پیرا میڈیکل اسٹاف کی ضرورت کا ان کے فیلڈ اسیسمنٹ کی بنیاد پر جائزہ لے گی۔ یہ ٹیم صحت کی ان سہولیات کے لیے طبی آلات اور ادویات کی ضرورت کا جائزہ لے گی اور وزارت صحت کی طرف سے ان کی خریداری اور فراہمی کی جائے گی۔ معیار کو یقینی بنانے کے لیے، جن اوشدھی اسٹورز میں دستیاب دوائیں خریدی جائیں گی اور ان مقامات پر فراہم کی جائیں گی۔

وزارت صحت نے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں سے خواہشمند سرکاری طبی اور پیرامیڈیکل پیشہ ور افراد کی فہرست حاصل کرنے کے لیے بھی کہا ہے جن کا انتخاب ان کے تجربے، مہارت اور صحت کی ان سہولیات کے انتظام کے لیے مطلوبہ قابلیت کے معیار کی بنیاد پر کیا جائے گا۔ صحت کی معیاری خدمات کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے منتخب کیے گئے صحت کے پیشہ ور افراد کو عازمین حج کی متوقع صحت کی ضروریات پر بھی وسیع پیمانے پر توجہ دی جائے گی۔

بڑے پیمانے پر طبی مسائل کا پتہ لگانے کے لیے حجاج کرام کی اسکریننگ کی جائے گی تاکہ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے مؤثر طریقے سے اور تیزی سے نمٹا جا سکے، جو سفر حج کے دوران پیدا ہو سکتی ہے۔ اقلیتی امور کی وزارت اور صحت کی وزارت کی مشترکہ کوششوں سے امید کی جاتی ہے کہ سفر کے مقام سے ہندوستان واپسی تک طبی اسکریننگ اور فٹنس سرٹیفکیٹ اور ٹیکہ کاری کے ساتھ ساتھ بروقت اور معیاری صحت کی دیکھ بھال کی خدمات حاصل کرنے کے عمل کو آسان بنانے میں مدد ملے گی۔

*****

ش ح – ق ت – ت ع

U: 3491



(Release ID: 1911941) Visitor Counter : 1981


Read this release in: English , Punjabi , Tamil , Telugu