کامرس اور صنعت کی وزارتہ
azadi ka amrit mahotsav

بھارت عمان کے ساتھ ترجیحی تجارتی معاہدے (پی ٹی اے) پر غور کر رہا ہے: جناب پیوش گوئل

جناب پیوش گوئل نے حکومت عمان کو ہندوستان کے ساتھ دواؤں کی تجارت بڑھانے کے لئے مدعو کیا

جناب پیوش گوئل نے بھارت-عمان مشترکہ تجارتی کونسل (جے بی سی) پر زور دیا کہ وہ دو طرفہ تعلقات کو مزید گہرا کرنے کے لیے دونوں ممالک کی حکومتوں کی کوششوں کو آگے بڑھائے

Posted On: 12 MAY 2022 5:02PM by PIB Delhi

تجارت اور صنعت، امور صارفین، خوراک اور سرکاری نظام تقسیم اور ٹیکسٹائل کے مرکزی وزیر جناب پیوش گوئل نے آج کہا کہ بھارت عمان کے ساتھ ترجیحی تجارتی معاہدہ (پی ٹی اے) کرنے پر غور کر رہا ہے۔

وہ آج نئی دہلی میں بھارت-عمان مشترکہ تجارتی کونسل (جے بی سی) کی 10ویں میٹنگ میں کلیدی خطبہ دے رہے تھے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہندوستان پہلے سے ہی خلیجی تعاون کونسل (جی سی سی) ممالک کے ساتھ ایک جامع تجارتی معاہدے پر غور کر رہا ہے، جس میں عمان ایک اہم رکن ہے۔

وزیر موصوف نے کہا کہ جوائنٹ کمیشن میٹنگ (جے سی ایم) جو کل ہندوستان اور عمان کے درمیان ہوئی تھی، جو کافی عرصے سے التوا میں تھی، بہت نتیجہ خیز تھی۔ انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ دونوں طرف کے کاروباری رہنماؤں کے ساتھ بات چیت جے سی ایم کے تحت ہونے والی بات چیت کی تکمیل کرے گی، ہمارے پہلے سے گہرے دوستی کے بندھنوں کو فروغ دینے کے لیے نئے تصورات سامنے لائیں گے اور ہمارے وژن کو حقیقت میں بدلیں گے۔

اس بات کا مشاہدہ کرتے ہوئے کہ بھارت اور عمان 5000 سال سے زیادہ عرصے سے دوستی اور بھائی چارے اور انتہائی گرمجوش اور عوام سے عوام کے درمیان مضبوط تعلقات کے ذریعے جڑے ہوئے ہیں۔ وزیر موصوف نے کہا کہ اتنے قریبی تعلقات کے باوجود دونوں ممالک میں باہمی تجارت اور سرمایہ کاری ابھی تک نہیں ہوئی ہے. جناب گوئل نے اس بات پر زور دیا کہ جے سی ایم میں ہونے والی تمام مصروفیات، ان کی اور عمان میں ان کے ہم منصب کے درمیان دوستی، دونوں ممالک کے سربراہان کی دور اندیش قیادت اور دونوں ممالک کے لوگوں کے درمیان گرمجوش تعلقات کو نمایاں طور پر بڑھانے کا باعث بننا چاہیے۔

مرحوم ایچ ایم سلطان قابوس کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے جناب پیوش گوئل نے کہا کہ ہندوستان میں ان کی بہت عزت کی جاتی تھی اور انہیں گاندھی امن انعام سے نوازا گیا تھا۔ وزیر موصوف نے مزید کہا کہ وہ ہندوستان اور عمان کے قریبی دو طرفہ تعلقات کے معماروں میں سے ایک تھے۔ وزیر موصوف نے کہا کہ ہم ان کے مرہون منت ہیں کہ وہ اپنے وژن کو حقیقت میں بدلنے کی کوشش کریں اور ہندوستان اور عمان کے درمیان شراکت داری کو ان بلندیوں تک لے جائیں جس کا وہ واقعی مستحق ہے۔

انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ مشترکہ تجارتی کونسل (جے بی سی) دونوں ممالک کی حکومتوں کی طرف سے روابط کو گہرا کرنے کی کوششوں میں معاونت کرے گی۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ یہ معاہدے صرف اپنی حقیقی صلاحیت تک پہنچیں گے اگر کاروبار اس جوش کا مظاہرہ کریں جس کے نتیجے میں سیاسی قیادت کو جرات مندانہ فیصلے کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے دونوں ممالک کے کاروباری اداروں پر زور دیا کہ وہ نئے مواقع کو دیکھیں، خاص طور پر خدمات، سرمایہ کاری، خوراک کی حفاظت، پائیداری، قابل تجدید توانائی اور اسٹارٹ اپس میں مواقع تلاش کریں۔

وزیر موصوف نے اس دیکھ بھال، تشویش اور محبت کا اعتراف کیا جو عمان کے لوگوں نے خاص طور پر وبائی مرض کے دوران تارکین وطن ہندوستانیوں پر ظاہر کی تھی۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمان جی سی سی کا پہلا ملک تھا جس نے ہندوستان میں تیار کردہ کوویکسین کے استعمال کی اجازت دی۔ دونوں ممالک کے درمیان ثقافتی اور پاکیزہ تعلقات کا ذکر کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ ان تعلقات نے دونوں ممالک کے لوگوں کو مزید قریب لایا ہے۔

وزیر موصوف نے حکومت عمان کو ہندوستان کے ساتھ دواؤں کی تجارت بڑھانے کی دعوت دی۔ دواسازی سیکٹر میں تعاون کے بارے میں بازار کے مطالعہ کا ذکر کرتے ہوئے جس کی کل جے سی ایم میں نقاب کشائی کی گئی تھی، وزیر موصوف نے یقین ظاہر کیا کہ یہ رپورٹ عمانی بازار میں داخل ہونے کی خواہشمند ہندوستانی کمپنیوں کے لیے انمول ثابت ہوگی۔ انہوں نے یقین دلایا کہ ہماری فارما کمپنیاں عمان میں صارفین کے لیے مسابقتی قیمتوں پر معیاری مصنوعات لائیں گی اور صحت کی دیکھ بھال کی لاگت کو کم کرنے میں مدد کریں گی۔ انہوں نے ہندوستانی ادویات کے لیے تیز رفتار منظوری پر رضامندی کے لیے عمان کا بھی شکریہ ادا کیا جسے پہلے ہی برطانیہ، یورپی یونین اور امریکہ جیسے مضبوط ریگولیٹری ماحول سے منظوری مل چکی ہے۔

وزیر موصوف نے دونوں ممالک پر زور دیا کہ جب ہندوستان اور عمان میں لوگوں کی زندگیوں کو بہتر بنانے کے لیے مل کر کام کرنے کی بات آتی ہے تو وہ کوئی کسر نہیں چھوڑیں۔

سلطنت عمان کے تجارت، صنعت اور سرمایہ کاری کے فروغ کے وزیر عالی مرتبت قیس بن محمد الیوسف نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان مشترکہ کمیشن کی کامیاب میٹنگ ہوئی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہندوستان اور عمان کو ایک دوسرے پر بہت اعتماد اور بھروسہ ہے۔ انہوں نے ہندوستانی کمپنیوں کو عمان میں سرمایہ کاری اور کاروبار کرنے کی بھی دعوت دی۔

سلطنت عمان کے تجارت، صنعت اور سرمایہ کاری کے فروغ کے وزیر عالی مرتبت قیس بن محمد الیوسف، شیخ حماد بن سیف بن عبدالعزیز الرواہی، سفیر غیر معمولی اور مکمل پوٹینٹری، سلطنت عمان، جناب امیت نارنگ، عمان میں ہندوستانی سفیر، ہندوستانی اور عمانی صنعت کے کپتان اور دیگر معززین اس موقع پر موجود تھے۔

 

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

 

ش ح۔م ع۔ع ن

                                                                                                                                      (U: 5304)



(Release ID: 1824945) Visitor Counter : 29