وزارت دفاع
azadi ka amrit mahotsav

یومِ جمہوریہ کی پریڈ 2022 – ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کے حصہ کے طور پر راج پتھ پر ہونے والی عظیم الشان پریڈ میں بھارت کی فوجی طاقت اور ثقافتی تنوع کو پیش کرنے کی تمام تیاریاں مکمل

Posted On: 25 JAN 2022 1:09PM by PIB Delhi

صدر جمہوریہ جناب رام ناتھ کووند 26 جنوری، 2022 کو 73ویں یومِ جمہوریہ کا جشن منانے میں ملک کی قیادت کریں گے۔ اس سال کا یومِ جمہوریہ آزادی کے 75ویں سال میں ہونے کی وجہ سے خاص ہے، جسے پورے ملک میں ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کے حصہ کے طور پر منایا جا رہا ہے۔ اس موقع کو یادگار بنانے کے لیے، وزارت دفاع نے 26 جنوری کو راج پتھ پر ہونے والی مرکزی پریڈ اور 29 جنوری کو وجے چوک پر ’بیٹنگ ریٹریٹ‘ کی تقریب کے دوران نئے پروگراموں کی ایک سیریز تیار کی ہے۔ فیصلہ کیا گیا  ہے کہ یومِ جمہوریہ کی تقریبات اب ہر سال 23 جنوری سے 30 جنوری تک، پورے ہفتہ منائی جائیں گی۔ یہ تقریبات 23 جنوری کو، عظیم مجاہد آزادی نیتا جی سبھاش چندر بوس کی سالگرہ پر شروع ہوں گی  اور 30 جنوری کو ، یومِ شہداء کے موقع پر اختتام پذیر ہوں گی۔

منفرد پہل

مرکزی پریڈ کے دوران کئی منفرد پہل کا منصوبہ بنایا گیا ہے جن میں نیشنل کیڈٹ کور کے ذریعے ’شہیدوں کو شت شت نمن‘ پروگرام؛ انڈین ایئر فورس کے 75 طیاروں/ہیلی کاپٹروں کے ذریعے شاندار قلا بازی؛ رقص کے ملک گیر ’وندے بھارتم‘ مقابلہ کے ذریعے منتخب کیے گئے 480 ڈانسرز کے فنون کی پیشکش؛ ’کلا کمبھ‘ پروگرام کے دوران تیار کیے گئے دس اسکرالز کی نمائش جن میں سے ہر ایک کی لمبائی 75 میٹر ہے، اور ناظرین کو بہتر نظارہ دکھانے کے لیے 10 بڑے ایل ای ڈی اسکرین کی تنصیب شامل ہیں۔ ’بیٹنگ ریٹریٹ‘تقریب کے لیے پروجیکشن میپنگ کے ساتھ ہی ایک ڈرون شو کا بھی منصوبہ بنایا گیا ہے، جس میں ملک کے اندر تیار کردہ 1000 ڈرون تعینات کیے جائیں گے۔

پریڈ کے وقت میں تبدیلی

پریڈ اور فلائی پاسٹ (پرواز) کا بہتر نظارہ پیش کرنے کے لیے، راج پتھ پر ہونے والی پریڈ کے وقت کو تبدیل کر دیا گیا ہے۔ اب یہ پریڈ صبح 10 بجے کی بجائے 10 بج کر 30 منٹ پر شروع ہوگی۔

ڈیجیٹل رجسٹریشن

کووڈ-19 کی موجودہ صورتحال کے مدنظر خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔ ناظرین کے لیے سیٹوں کی تعداد کافی کم کر دی گئی ہے اور لوگوں سے اپیل کی جا رہی ہے کہ وہ لائیو تقریبات کو آن لائن دیکھنے کے لیے MyGov پورٹل (https://www.mygov.in/rd2022/) پر اپنا رجسٹریشن کرائیں۔ انہیں مقبول انتخاب کے زمرے میں، مارچ کرنے والے بہترین دستہ اور ٹیبلو کو ووٹ کرنے کا بھی موقع ملے گا۔

کووڈ سے متعلق احتیاط

دونوں ٹیکہ لگوا چکے بالغ افراد/ٹیکہ کی ایک خوراک لے چکے 15 سال کے بچوں کو ہی پریڈ دیکھنے کی اجازت ملے گی۔ 15 سال سے کم عمر کے بچوں کو یہاں آنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ سماجی دوری بنا کر رکھنے کے تمام ضابطوں پر عمل کیا جائے گا اور ماسک پہننا لازمی ہوگا۔ وبائی مرض کی وجہ سے اس سال کسی بھی غیر ملکی دستہ کو پریڈ میں شامل نہیں کیا گیا ہے۔

خصوصی ناظرین

معاشرہ کے جن طبقوں کو پریڈ دیکھنے کا موقع عموماً نہیں ملتا، ان کے لیے خصوصی انتظامات کیے گئے ہیں۔ آٹو رکشہ ڈرائیوروں، تعمیراتی کارکنوں، صفائی ملازمین اور صف اول کے صحت کارکنوں کے کچھ طبقوں کو یوم جمہوریہ کی پریڈ کے ساتھ ساتھ ’بیٹنگ ریٹریٹ‘ تقریب دیکھنے کے لیے مدعو کیا جائے گا۔

پریڈ

یوم جمہوریہ پریڈ کی تقریب کا آغاز وزیر اعظم جناب نریندر مودی کے نیشنل وار میموریل پر جانے کے ساتھ ہوگا۔ وہ پھولوں کا گلدستہ چڑھا کر شہید ہونے والے جانبازوں کو خراج عقیدت پیش کرنے میں ملک کی قیادت کریں گے۔ اس کے بعد، وزیر اعظم اور دیگر معزز شخصیات پریڈ دیکھنے کے لیے راج پتھ کے سلامی منچ کی طرف روانہ ہوں گی۔

روایت کے مطابق، سب سے پہلے قومی پرچم لہرایا جائے گا، اس کے بعد قومی ترانہ، پھر 21 توپوں کی سلامی پیش کی جائے گی۔ پریڈ کا آغاز صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند کے سلامی لینے کے ساتھ ہوگا۔ پریڈ کی کمانڈنگ اتی وششٹھ سیوا میڈل، دوسری نسل کے فوجی افسر، پریڈ کمانڈر، لیفٹیننٹ جنرل وجے کمار مشرا کریں گے۔ چیف آف اسٹاف، دہلی ایریا میجر جنرل آلوک کاکر پریڈ کے سیکنڈ ان کمانڈ ہوں گے۔

اپنی بہادری کے لیے اعلیٰ ترین ایوارڈز حاصل کرنے والے قابل فخر فاتحین ان کے پیچھے مارچ کریں گے۔ ان میں پرم ویر چکر اور اشوک چکر کے فاتحین شامل ہیں۔ پرم ویر چکر کے فاتحین صوبیدار میجر (اعزازی کیپٹن) یوگیندر سنگھ یادو، 18 گرینیڈیئرز (ریٹائرڈ) اور صوبیدار (اعزازی لیفٹیننٹ) سنجے کمار، 13 جے اے کے رائفلز اور اشوک چکر کے فاتح کرنل ڈی شری رام کمار جیپ سے ڈپٹی پریڈ کمانڈر کے پیچھے چلیں  گے۔ ’پرم ویر چکر‘ دشمن کے سامنے مثالی بہادری کا مظاہرہ کرنے اور اپنی قربانی پیش کرنے جیسے سب سے نمایاں کام کے لیے دیا جاتا ہے۔ ’اشوک چکر‘ بھی اسی طرح کی بہادری اور قربانی کے لیے دیا جاتا ہے، لیکن اس سے تھوڑا سا مختلف ہے۔

ہندوستانی فوج کے دستے

سابقہ ​​گوالیار لانسرز کی وردی میں پہلا دستہ 61 کیولری (گھڑ سوار دستہ) کا ہوگا، جس کی قیادت میجر مرتیونجے سنگھ چوہان کریں گے۔ 61 کیولری دنیا کی واحد فعال گھڑسوار دستہ پر مبنی رجمنٹ ہے۔ اسے یکم اگست 1953 کو چھ ریاستی افواج کی گھڑسوار اکائیوں کے انضمام کے ساتھ کھڑا کیا گیا تھا۔

ہندوستانی فوج کی نمائندگی 61 کیولری کے گھڑ سواروں کی قطار، 14 میکانائزڈ قطار، چھ مارچنگ دستے اور آرمی ایوی ایشن کے ایڈوانسڈ لائٹ ہیلی کاپٹر (اے ایل ایچ) کے فلائی پاسٹ کے ذریعے کی جائے گی۔ میکا نائزڈ قطار میں ایک ٹینک پی ٹی-76 اور سینچورین (ٹینک ٹرانسپورٹرز پر) اور دو ایم بی ٹی ارجن ایم کے-1، ایک اے پی سی ٹوپاس اور بی ایم پی-1 (آن ٹینک ٹرانسپورٹر پر) اور دو بی ایم پی-2، ایک 24/75 ٹوڈ گن (گاڑی پر) اور دو دھنش گن سسٹم، ایک پی ایم ایس برج اور دو سروتر برج سسٹم، ایک ایچ ٹی-16 (گاڑی پر) اور دو ترنگ شکتی الیکٹرانک وارفیئر سسٹم، ایک ٹائیگر کیٹ میزائل اور دو آکاش میزائل سسٹم مرکزی توجہ کا مرکز ہوں گے۔

فوج کے کل چھ مارچ کرنے والے دستے ہوں گے جن میں راجپوت رجمنٹ، آسام رجمنٹ، جموں و کشمیر لائٹ رجمنٹ، سکھ لائٹ رجمنٹ، آرمی آرڈیننس کور اور پیرا شوٹ رجمنٹ شامل ہیں۔ مدراس رجمنٹل سینٹر، کماؤں رجمنٹل سینٹر، مراٹھا لائٹ رجمنٹل سینٹر، جموں و کشمیر لائٹ رجمنٹل سینٹر، آرمی میڈیکل کور سینٹر اینڈ اسکول، 14 گورکھا ٹریننگ سینٹر، آرمی سپلائی کور سینٹر اینڈ کالج، بہار رجمنٹل سینٹر اور آرمی آرڈیننس کور سنٹر کا مشترکہ بینڈ بھی سلامی منچ سے مارچ پاسٹ کرے گا۔

ماضی تا حال: فوجیوں کی وردی اور اسلحوں کے ارتقاء کی نمائش

مارچ کرنے والے دستے کا تھیم پچھلے 75 سالوں میں ہندوستانی فوج کی وردی اور ہتھیاروں کے ارتقاء کی نمائش ہوگی۔ راجپوت رجمنٹ کا دستہ 1947 میں استعمال ہونے والی ہندوستانی فوج کی وردی پہنے گا اور 0.303 رائفل لے کر چلے گا۔ آسام رجمنٹ کے پاس 1962 کی وردی اور 0.303 رائفلیں ہوں گی۔ جموں و کشمیر لائٹ رجمنٹ کے پاس 1971 کے دوران پہنی جانے والی وردی اور 7.62 ایم ایم سیلف لوڈنگ رائفل ہوگی۔ سکھ لائٹ رجمنٹ اور آرمی آرڈیننس کور کا دستہ موجودہ یونیفارم میں 5.56 ایم ایم انساس رائفل کے ساتھ ہوگا۔ پیرا شوٹ رجمنٹ کا دستہ 15 جنوری 2022 کو ہندوستانی فوج کو عطا کیا جانے والا نیا جنگی یونیفارم پہنے گا اور اس کے پاس 5.56 ایم ایم بائی 45 ایم ایم ٹیور رائفل ہوگی۔

ہندوستانی بحریہ کا دستہ

بحریہ کا دستہ 96 نوجوان کشتی بانوں اور چار افسروں پر مشتمل ہوگا، جس کی قیادت لیفٹیننٹ کمانڈر آنچل شرما کریں گی۔ اس کے بعد بحریہ کا ٹیبلو پیش کیا جائے گا، جس کا مقصد ہندوستانی بحریہ کی کثیر جہتی صلاحیتوں کو نمایاں کرنا اور ’آتم نربھر بھارت‘ کے تحت اہم شمولیتوں کو اجاگر کرنا ہے۔ ٹیبلو میں ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کا بھی خاص ذکر ہوگا۔

ٹیبلو کا اگلا حصہ 1946 کی بحریہ کی بغاوت پر مبنی ہے، جس نے ہندوستان کی جدوجہد آزادی میں اہم کردار ادا کیا تھا۔ پچھلا حصہ 1983 سے 2021 تک ہندوستانی بحریہ کے ’میک ان انڈیا‘ سے متعلق اقدامات کی عکاسی کرتا ہے۔ ایل سی اے نیوی کے ساتھ نیو وکرانت کا ماڈل، جس میں مقامی طور پر ڈیزائن کیے گئے اور بنائے گئے جنگی جہازوں کے ماڈل شامل ہیں۔ ٹریلر کے اطراف کے فریموں میں بھارت میں ہندوستانی بحریہ کے پلیٹ فارم کی تعمیر کو دکھایا گیا ہے۔

ہندوستانی فضائیہ کا دستہ

ہندوستانی فضائیہ کے دستے میں 96 ایئر مین اور چار افسران شامل ہیں اور اس کی قیادت اسکواڈرن لیڈر پرشانت سوامیا ناتھن کریں گے۔ فضائیہ کی جھانکی کا عنوان ’انڈین ایئر فورس، ٹرانسفارمنگ فار دی فیوچر‘ ہے۔ ٹیبلو میں مگ-21، جی نیٹ، ہلکے جنگی ہیلی کاپٹر اور رافیل طیاروں کے ساتھ ساتھ اسلیشا راڈار کے چھوٹے چھوٹے ماڈل دکھائے گئے ہیں۔

ڈی آر ڈی او ٹیبلو

ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ آرگنائزیشن (ڈی آر ڈی او) ملک کی دفاعی تکنیکی ترقی کی نشاندہی کرتے ہوئے دو ٹیبلو دکھائے گا۔ ٹیبلو کا عنوان ہے ’ایل سی اے تیجس کے لیے مقامی طور پر تیار کیے گئے سنسرز، اسلحے اور الیکٹرانک جنگی نظام کا سوٹ‘ اور ’ہوا سے آزاد پروپلزن سسٹم’ جو ہندوستانی بحریہ کی آبدوزوں کے لیے تیار کیا گیا ہے۔

پہلی جھانکی میں مقامی طور پر تیار کردہ ایڈوانسڈ الیکٹرانک اسکینڈ ارے راڈار؛ چوتھی نسل کے ایل سی اے (ہلکے جنگی طیارہ) تیجس کی صلاحیتوں کو مزید بڑھانے کے لیے فضائی طور پر لانچ کیے گئے پانچ مختلف ہتھیار اور ایک الیکٹرانک وارفیئر جیمر دکھائے جائیں گے۔  دوسری جھانکی میں ہندوستانی بحریہ کی آبدوزوں کو پانی کے اندر چلانے کے لیے مقامی طور پر تیار کردہ اے آئی پی سسٹم کی نمائش کی گئی ہے۔ اے آئی پی سسٹم ایک نئے آن بورڈ ہائیڈروجن جنریٹر کے ساتھ مقامی طور پر تیار کردہ ایندھن کے خلیوں سے چلتا ہے۔

انڈین کوسٹ گارڈ کا دستہ

انڈین کوسٹ گارڈ (آئی سی جی) دستے کی قیادت ڈپٹی کمانڈنٹ ایچ ٹی منجوناتھ کریں گے۔ جنوری 2021 میں ’تیار، مفید اور ذمہ دار‘، آئی سی جی نے سری لنکا کے ساحل پر ایم وی ایکس-پریس آبی جہاز میں لگنے والی ایک بڑی آگ کو بجھانے کے لیے، غیر ملکی پانیوں میں آگ بجھانے کا ایک بڑا آپریشن ’ساگر آراکشا-II‘ شروع کیا تھا۔ آئی سی جی کے بحری جہازوں اور ہوائی جہازوں نے 150 گھنٹے سے زیادہ وقت میں آگ پر قابو پالیا اور خطے میں ایک بڑی ماحولیاتی تباہی سے بچنے کے لیے اسے کامیابی سے بجھایا۔ آئی سی جی کا نصب العین ہے ’ویم رکشامہ‘ جس کا مطلب ہے ’ہم حفاظت کرتے ہیں‘۔

سی اے پی ایف اور دہلی پولیس کے دستے

اسسٹنٹ کمانڈنٹ اجے ملک کی قیادت میں سینٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) کے مارچ کرنے والے دستے؛ اسسٹنٹ کمشنر آف پولیس وویک بھگت کی قیادت میں دہلی پولیس کا دستہ، جسے 15 بار بہترین مارچ کرنے والے دستے کا انعام مل چکا ہے؛ اسسٹنٹ کمانڈنٹ موہنیش باگری کی رہنمائی میں سنٹرل انڈسٹریل سیکورٹی فورس (سی آئی ایس ایف)؛ڈپٹی کمانڈنٹ نروپیش کمار کی قیادت میں سشستر سیما بل (ایس ایس بی) اور ڈپٹی کمانڈنٹ منوہر سنگھ کھیچی کی قیادت میں بارڈر سیکورٹی فورس (بی ایس ایف) کا اونٹوں پر سوار  دستہ بھی سلامی منچ سے مارچ پاسٹ کرے گا۔

این سی سی کے دستے

لڑکوں پر مبنی نیشنل کیڈٹ کور (این سی سی) کا مارچنگ دستہ، جس میں سینئر ڈویژن کے 100 کیڈٹس شامل ہیں، کی قیادت پنجاب ڈائریکٹوریٹ کے سینئر انڈر آفیسر روپیندر سنگھ چوہان کریں گے۔ کرناٹک ڈائریکٹوریٹ کی سینئر انڈر آفیسر پرمیلا، لڑکیوں پر مشتمل این سی سی کے مارچنگ دستے کی سربراہی کریں گی، جس میں تمام 17 ڈائریکٹوریٹ کی 100 سینئر ونگ کیڈٹس شامل ہیں۔ 100 رضاکاروں پر مشتمل نیشنل سروس اسکیم (این ایس ایس) کے مارچ کرنے والے دستے کی قیادت، مرکزی حکومت کے زیر انتظام علاقہ دیو، احمد آباد ڈائریکٹوریٹ کے باریا سدھی رمیش کریں گے۔

ٹیبلو (جھلکی)

اس کے بعد 12 ریاستوں/مرکز کے زیر انتظام علاقوں اور نو وزارتوں/محکموں کی جھلکیاں پیش کی جائیں گی، جنہیں ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کے تحت مختلف موضوعات پر تیار کیا گیا ہے۔ ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی جھلکیوں کی فہرست درج ذیل ہے:

نمبر شمار

ریاست/مرکز کے زیر انتظام علاقہ

تھیم

1

اروناچل پردیش

اینگلو-ایبور (آدی) جنگیں

2

ہریانہ

ہریانہ: کھیل میں نمبر ایک

3

چھتیس گڑھ

گودھن نیائے یوجنا: خوشحالی کی ایک نئی راہ

4

گوا

گوا کی وراثت کی علامتیں

5

گجرات

گجرات کے آدیواسی انقلاب پسند

6

جموں و کشمیر

جموں و کشمیر کا بدلتا منظر نامہ

7

کرناٹک

کرناٹک: روایتی دستکاری کا گہوارہ

8

مہاراشٹر

مہاراشٹر کی حیاتیاتی تنوع اور ریاستی حیاتیاتی علامات

9

میگھالیہ

میگھالیہ کو ریاست کا درجہ ملنے کے 50 سال اور خواتین کی قیادت والی کوآپریٹو سوسائٹیز اور ایس ایچ جی کو اس کی جانب سے خراج عقیدت

10

پنجاب

جدوجہد آزادی میں پنجاب کا کردار

11

اتر پردیش

او ڈی او پی اور کاشی وشوناتھ دھام

12

اتراکھنڈ

پرگتی کی اور بڑھتا اتراکھنڈ

 

 

وزارتوں/محکموں کی جھلکیوں کی فہرست درج ذیل ہے:

نمبر شمار

وزارت/محکمہ

تھیم

1

وزارت تعلیم اور ہنرمندی کے فروغ اور صنعت کاری کی وزارت

قومی تعلیمی پالیسی

2

شہری ہوا بازی کی وزارت

اڑان – اڑے دیش کا عام ناگرک

3

وزارت مواصلات/محکمہ ڈاک

ہندوستانی ڈاک: ذمہ داری کے 75 سال – خواتین کی با اختیاری

4

وزارت داخلہ (سی آر پی ایف)

سی آر پی ایف: شجاعت و قربانی کی داستان

5

مکان اور شہری امور کی وزارت (سی پی ڈبلیو ڈی)

سبھاش @ 125

6

کپڑے کی وزارت

مستقبل پر نظر

7

قانون اور انصاف کی وزارت، محکمہ انصاف

ایک مٹھی آسماں: لوک عدالت، شمولیتی قانونی نظام

8

جل شکتی کی وزارت، پینے کے پانی اور صفائی کا محکمہ

جل جیون مشن: بدلتی زندگیاں

9

وزارت ثقافت

شری آروبندو کے 150 سال

 

 

ٹیبلو کے بعد 480 ڈانسرز کے ذریعے ثقافتی پیشکش ہوگی، جنہیں رقص کے ملک گیر مقابلہ ’وندے بھارتم‘ کے تحت منتخب کیا گیا ہے۔ ایسا پہلی بار ہو رہا ہے، جب پریڈ کے دوران رقص پیش کرنے والے گروپس کا انتخاب کل ہند سطح پر منعقد کیے گئے مقابلہ کے تحت کیا گیا ہے۔ اس کے بعد بی ایس ایف کی سیما بھوانی موٹر سائیکل ٹیم اور انڈو-تبتن بارڈر پولیس (آئی ٹی بی پی) کے ہم ویروں کے ذریعے موٹر سائیکل پر کی جانے والی قلا بازی دکھائی جائے گی۔

فلائی پاسٹ

شاندار اختتام اور پریڈ کے سب سے زیادہ انتظار کیے جانے والے فلائی پاسٹ میں، پہلی بار، ’آزادی کا امرت مہوتسو‘ کے حصے کے طور پر، ہندوستانی فضائیہ کے 75 ہوائی جہاز/ہیلی کاپٹر مختلف قسم کی قلا بازیاں دکھائیں گے۔ ونٹیج کے ساتھ ساتھ موجودہ جدید طیارے/ہیلی کاپٹر جیسے رافیل، سخوئی، جگوار، ایم آئی-17، سارنگ، اپاچے اور ڈکوٹا بشمول راحت، میگھنا، ایکلویہ، ترشول، ترنگا، وجے اور امرت مختلف قسم کی ترتیب پیش  کریں گے۔ تقریب کا اختتام قومی ترانہ اور سہ رنگی غبارے چھوڑنے سے ہوگا۔ پہلی بار انڈین ایئر فورس نے فلائی پاسٹ کے دوران کاک پٹ ویڈیوز دکھانے کے لیے دوردرشن کے ساتھ تعاون کیا ہے۔

یوم جمہوریہ کی پریڈ کے دوران نئے اقدامات کی تفصیلات درج ذیل ہیں:

شہیدوں کو شت شت نمن

26 جنوری کو این سی سی کا ایک ملک گیر فلیگ شپ پروگرام ’شہیدوں کو شت شت نمن‘ شروع کیا جائے گا تاکہ قوم کے دفاع میں شہید ہونے والے جانبازوں کی عظیم قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا جا سکے۔ وزیر اعظم جناب نریندر مودی جس وقت نئی دہلی کے نیشنل وار میموریل پر ملک کے بہادروں کو خراج عقیدت پیش کر یں گے، ٹھیک اسی وقت این سی سی کیڈٹس پورے ملک میں تقریباً 5000 شہداء کے رشتہ داروں (این او کے) کو تشکر نامہ پیش کر رہے ہوں گے۔ یہ پروگرام 15 اگست، 2022 تک چلے گا۔ اس دوران، این سی سی کے کیڈٹس، این سی سی افسران/ اسٹیٹ ڈائریکٹوریٹ کے مستقل انسٹرکٹر کے ہمراہ، تمام 26466 شہداء (جن کے نام نیشنل وار میمورل پر نقش ہیں) کے رشتہ داروں کو خراج تحسین پیش کریں گے۔

کلا کمبھ – راج پتھ کو سجانے کے لیے بڑی اسکرول پینٹنگز

پریڈ کے دوران راج پتھ پر دس اسکرولز کی نمائش کی جائے گی جن میں سے ہر ایک کی لمبائی 75 میٹر اور اونچائی 15 فٹ ہے۔ انہیں وزارت دفاع اور وزارت ثقافت کی طرف سے مشترکہ طور پر منعقدہ ’کلا کمبھ‘ تقریب کے دوران تیار کیا گیا تھا۔ اسکرولز کو دو مرحلوں میں – بھونیشور اور چنڈی گڑھ میں – ملک بھر کے 600 سے زیادہ نامور فنکاروں اور نوجوانوں نے پینٹ کیا تھا۔ یہ تحریک آزادی کے ان گمنام ہیروز سے حاصل کی گئی تھی، جو مقامی اور عصری بصری فن کے طریقوں کے بھرپور ثقافتی ورثے کی نمائش کرتے ہیں۔

وندے بھارتم نرتیہ اتسو

پہلی بار، پریڈ میں ثقافتی پروگرام کے دوران پرفارم کرنے والے ڈانسرز کا انتخاب ملک گیر’وندے بھارتم‘ مقابلے کے ذریعے کیا گیا ہے، جس کا اہتمام مشترکہ طور پر وزارت دفاع اور وزارت ثقافت نے کیا تھا۔ یہ مقابلہ جو ضلعی سطح پر 323 گروپوں میں تقریباً 3870 ڈانسرز کی شرکت کے ساتھ شروع ہوا تھا، نومبر اور دسمبر میں دو ماہ کے عرصے کے دوران ریاستی اور ژونل سطح تک پہنچ گیا تھا۔ آخر میں 480 ڈانسرز کا انتخاب کیا گیا۔ وہ راج پتھ پر ہونے والی پریڈ کے دوران اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کریں گے۔

ویر گاتھا  – اسکول کے بچوں کی بہادری کی کہانیاں

اسی قسم کی ایک اور پہل کے تحت، وزارت دفاع نے وزارت تعلیم کے ساتھ مل کر ملک گیر ’ویر گاتھا‘ مقابلے کا انعقاد کیا تاکہ اسکولی طلباء کو بہادری ایوارڈ یافتہ افراد پر پروجیکٹ بنانے کی ترغیب دی جائے۔ ملک بھر کے تقریباً 4800 اسکولوں کے آٹھ لاکھ سے زیادہ طلباء نے اس میں حصہ لیا اور مضامین، نظموں، ڈرائنگ اور ملٹی میڈیا پریزنٹیشنز کے ذریعے اپنی متاثر کن کہانیاں شیئر کیں۔ کئی مراحل پر مبنی جائزے کے بعد، ان میں سے 25 کو منتخب کیا گیا اور انہیں فاتح قرار دیا گیا۔ انہیں 10 ہزار  روپے کا نقد انعام اور یوم جمہوریہ کی پریڈ دیکھنے کا موقع ملے گا۔

سی اے پی ایف کی طرف سے اسٹیٹک بینڈ کی پیشکش

پریڈ کے آغاز سے پہلے، مرکزی مسلح پولیس فورسز کے دستے راج پتھ پر بیٹھنے والے انکلوژر میں اسٹیٹک بینڈ پیش کریں گے۔

ایل ای ڈی اسکرین

پریڈ کو دیکھنے کے تجربے کو بہتر بنانے کے لیے، 10 بڑی ایل ای ڈی  اسکرینیں –  راج پتھ کے ہر طرف پانچ  –  نصب کی جائیں گی۔ پریڈ سے پہلے پچھلی یوم جمہوریہ پریڈ کی فوٹیج، مسلح افواج پر مبنی مختصر فلمیں اور آر ڈی سی 2022 کے دوران ہونے والے مختلف واقعات سے متعلق کہانیوں کو ملا کر تیار کردہ فلمیں دکھائی جائیں گی۔ اس کے بعد، ان اسکرینوں پر لائیو ایونٹ دکھایا جائے گا۔

بیٹنگ ریٹریٹ تقریب

مارشل ٹون پرفارم کرنے والے ملٹری بینڈ کے علاوہ، 29 جنوری 2022 کو وجے چوک پر بیٹنگ ریٹریٹ تقریب کے دوران کچھ نئی سرگرمیوں کا منصوبہ تیار کیا گیا ہے۔ ان میں ڈرون شو اور پروجیکشن میپنگ شامل ہے۔

ڈرون شو

ملک کے اندر ایک نئے ’ڈرون شو‘ کا تصور، ڈیزائن، پیشکش اور کوریوگراف کیا گیا ہے۔ ’میک ان انڈیا‘ پہل کا اہتمام اسٹارٹ اپ ’بوٹلیب ڈائنامکس‘ نے کیا ہے، جسے انڈین انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی (آئی آئی ٹی) دہلی اور محکمہ سائنس اور ٹیکنالوجی کی مدد حاصل ہے۔ یہ شو 10 منٹ کا ہوگا، جس میں تقریباً 1000 ڈرون شامل ہوں گے جو مقامی ٹیکنالوجی کے ذریعے تیار کیے گئے ہیں۔ ڈرون شو کے دوران سنکرونائز بیک گراؤنڈ میوزک بھی چلایا جائے گا۔

پروجیکشن میپنگ

پروجیکشن میپنگ شو آزادی کے 75 سال کی یاد میں تقریباً 3-4 منٹ کے دورانیے کے لیے ’بیٹنگ ریٹریٹ‘ تقریب کے اختتام سے قبل نارتھ اور ساؤتھ بلاک کی دیواروں پر دکھایا جائے گا۔

*****

ش ح – ق ت – ت ع

U: 718



(Release ID: 1792573) Visitor Counter : 208