سائنس اور ٹیکنالوجی کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav

مرکزی وزیر ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ سائنسی ایپلی کیشنز اور تکنیکی حل کے لئے 33 لائن وزارتوں/ محکموں سے 134 تجاویز/ ضروریات موصول ہوئی ہیں

ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے نئی دہلی میں سائنس کی تمام وزارتوں اور محکموں کے تیسرے مشترکہ اجلاس سے خطاب کیا

زراعت، خوراک، تعلیم، ہنرمندی، ریلوے، سڑکیں، جل شکتی، بجلی اور کوئلہ جیسے شعبوں کے لئے سائنسی اپلی کیشنز مانگی گئی ہیں: ڈاکٹر جتیندر سنگھ

Posted On: 10 NOV 2021 4:19PM by PIB Delhi

نئی دہلی:10  نومبر،2021۔سائنس اور ٹیکنالوجی کے مرکزی وزیر مملکت (آزادانہ چارج)، ارضیاتی سائنسز کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج)، نیز وزیراعظم کے دفتر، عملہ، عوامی شکایات، پنشن، جوہری توانائی اور خلا کے وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے آج مطلع کیا کہ سی ایس آئی آر کے تعاون سے تمام چھ سائنس اور ٹیکنالوجی کے محکموں کی طرف سے سائنسی ایپلی کیشنز اور تکنیکی حل کے لئے 33 لائن وزارتوں/محکموں سے 134 تجاویز/ضروریات موصول ہوئی ہیں۔

آج یہاں تمام سائنس کی وزارتوں اور محکموں کی تیسری مشترکہ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ زراعت، خوراک، تعلیم، ہنر، ریلوے، سڑکیں، جل شکتی، بجلی اور کوئلہ جیسے شعبوں کے لئے مختلف سائنسی ایپلی کیشنز کے استعمال کے لئے ستمبر میں شروع کی گئی پہل کے دو ماہ کے اندر لائن وزارتوں سے اتنی بڑی تعداد میں تجاویز موصول ہوئیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ اس بات کو ذہن میں رکھتے ہوئے ہے کہ آج ہر شعبہ زیادہ تر سائنسی ٹیکنالوجی پر منحصر ہو چکا ہے۔

 

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/JS-1QZY3.jpg

اس نئی پہل کا آغاز اس سال ستمبر کے وسط میں ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کیا تھا، جہاں سائنس اور ٹیکنالوجی، ارضیاتی سائنسز، جوہری توانائی، اسپیس/اسرو، سی ایس آئی آر، اور بایو ٹیکنالوجی سمیت سائنس کی تمام وزارتوں کے نمائندے حکومت ہند کی مختلف وزارتوں کے ساتھ الگ الگ اس فکر میں مصروف تھے، کہ کس شعبے میں سائنسی ایپلی کیشنز کا استعمال کیا جا سکتا ہے۔ وزیر موصوف نے اس میٹنگ میں کسی خاص وزارت پر مبنی یا محکمہ پر مبنی منصوبوں کے بجائے مربوط تھیم پر مبنی منصوبوں کی ضرورت پر زور دیا تھا۔

ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ آؤٹ آف باکس آئیڈیا وزیر اعظم نریندر مودی کی طرف سے تجویز کیا گیا تھا، جو نہ صرف سائنس کے لئے فطری رجحان رکھتے ہیں بلکہ سائنس اور ٹکنالوجی پر مبنی اقدامات اور منصوبوں کی حمایت اور فروغ میں بھی آگے آگے رہتے ہیں۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/JS-2SO7U.jpg

ڈاکٹر جتیندر سنگھ کی ہدایت پر حکومت ہند کے پرنسپل سائنسی مشیر پروفیسر کے۔ وجے راگھون نے لائن ڈپارٹمنٹس/وزارتوں اور سائنس و ٹیکنالوجی محکموں کے ساتھ اب تک 13 میٹنگوں کی صدارت کی اور میٹنگ کے پانچ موضوعات کی نشاندہی کی۔

  1.  توانائی اور موسمیاتی تبدیلی کی تخفیف،
  2. انفراسٹرکچر اور صنعتیں،
  3. زراعت، خوراک اور غذائیت،
  4. تعلیم، ہنر مندی اور سماج کو بااختیار بنانا،
  5. صحت۔

میٹنگوں میں حل پر مبنی تحقیق، سرکاری تحقیق و ترقی نظام، لائن وزارتوں کے چیلنجز کو پورا کرنے، صنعتوں کی اقتصادی مسابقت کو بہتر بنانے اور شہریوں کو سرکاری خدمات کی فراہمی پر زور دیا گیا۔ اسی طرح متعلقہ وزارتوں سے کہا گیا کہ وہ ضروریات کی نشاندہی کریں اور اپنے تحقیق و ترقی بجٹ کو سائنس و ٹیکنالوجی کے محکموں کے تال میل کے ساتھ مقصد پر مبنی تحقیق کے لئے استعمال کریں۔

حکومت ہند کے پرنسپل سائنسی مشیر پروفیسر کے۔ وجے راگھون، ڈی جی، سی ایس آئی آر اور سکریٹری ڈی ایس آئی آر، سائنس اور ٹیکنالوجی کے سکریٹریز، ارتھ سائنسز، بایو ٹکنالوجی کے شعبہ اور دیگر سینئر سائنسدانوں نے آج کی میٹنگ میں شرکت کی۔ اسرو کے چیئرمین اور سکریٹری محکمہ خلائی ڈاکٹر کے سیون اور ڈاکٹر کے این ویاس، چیئرمین، جوہری توانائی کمیشن نے عملی طور پر میٹنگ میں شمولیت اختیار کی۔

 

 

-----------------------

ش ح۔م ع۔ ع ن

U NO: 12718



(Release ID: 1770808) Visitor Counter : 57


Read this release in: English , Hindi , Tamil , Telugu