امور داخلہ کی وزارت

تحقیق و ترقی کے پولیس بیورو نے 01.01.2020 کو پولیس تنظیموں سے متعلق اعداد و شمار جاری کیے

Posted On: 29 DEC 2020 4:31PM by PIB Delhi

 

نئی دہلی،29دسمبر ،2020   /تحقیق و ترقی کے پولیس بیورو بی پی آر اینڈ ڈی نے آج   پولیس تنظیموں سے متعلق اعداد و شمار آن لائن جاری کیے۔

بی پی آر اینڈ ڈی  1986 سے سالانہ طور پر پولیس تنظیموں سے متعلق اعداد و شمار کی اشاعت کرتی رہی ہے۔  01.01.2019  سے متعلق ڈی او پی او،  مرکزی وزیر داخلہ جناب امت شاہ نے  29 جنوری 2020 کو جاری کیے تھے۔ یہ بی پی آر اینڈ ڈی کی تاریخ میں پہلی بار ہے کہ کسی مخصوص سال کےلیےڈی او پی او اسی سال کے دوران ہی  جاری کیے گیے ہوں۔ ان اعداد و شمار کی توثیق کے لیے کافی کوشش کی گئی ہے۔

01.01.2020 کو ڈی او پی او کی خاص باتیں مندرجہ ذیل ہیں:

 

A.

1.

ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں میں کل منظور شدہ پولیس فورس  (سول + ڈی اے آر + خصوصی مسلح + آئی آر بی)

26,23,225

 

2

کل اصل پولیس فورس (سول + ڈی اے آر + خصوصی مسلح + آئی آر بی)

20,91,488

 

3

خالی آسامی

5,31,737

 

4

پولیس فورس میں خواتین  کی تعداد (سول + ڈی اے آر + خصوصی مسلح + آئی آر بی) / فیصد

2,15,504/

10.30%

 

5

پچھلے سال خواتین پولیس کے اضافے کا فیصد

16.05%

B.

6

سی اے پی ایف کی تعداد کی کل منظوری

11,09,511

 

7

سی اے پی ایف کی کل اصل تعداد

9,82,391

 

8

سی اے پی ایف / فیصد میں خاتون پولیس کی تعداد

29,249/

2.98%

C.

9

پولیس اضلاع کی تعداد

800

 

10

منظور شدہ پولیس اسٹیشنوں کی تعداد

16,955

 

11

ریاستی مسلح پولیس بٹالینوں کی تعداد

318

 

12

پولیس کمشنریٹس کی تعداد

63

 

13

2019 میں پولیس عملے کے تقرر کی تعداد

1,19,069

 

14

پولیس تربیت پر اخراجات : مالی 20-2019 (کروڑ روپے میں)

1,566.85

D.

15

فی پولیس شخص پر آبادی (پی پی پی ) – منظور شدہ

511.81

 

16

پولیس آبادی کا تناسب (پی پی آر) (فی لاکھ آبادی پر پولیس عملہ) -  منظور شدہ

195.39

 

17

پولیس ایریا ریشیو (پی اے آر) (فی 100 مربع کلو میٹر) – منظور شدہ

79.80

 

18

ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی پولیس کو دستیاب پولیس گاڑیاں

2,02,925

 

19

ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی پولیس کو دستیاب سی سی ٹی وی کیمرے

4,60,220

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

 

دستاویز دیکھنے کےلیے یہاں کلک کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

                                                                       

م ن ۔ اس۔ ت ح ۔                                               

U –8510



(Release ID: 1684538) Visitor Counter : 103