وزارت خزانہ

جی ایس ٹی کونسل کی 52ویں میٹنگ کی سفارشات


جی ایس ٹی کونسل نے اہلیت اور عمر سے متعلق مجوزہ جی ایس ٹی اپیلٹ ٹربیونلز کے صدر اور ممبر کی تقرری کی شرائط میں ترمیم کی سفارش کی ہے

جی ایس ٹی کونسل نے جوار کے آٹے کو پاؤڈر کی شکل میں تیار کرنے اور کھلے طور فروخت کرنے پر وزن میں کم سے کم 70 فیصد جوارہونے پر صفر کی شرح اور پہلے سے پیک شدہ اور لیبل شدہ شکل میں فروخت کرنے پر پانچ فیصد شرح کی سفارش کی ہے

جی ایس ٹی کونسل نے انسانی کھپت کیلئے الکوحل شامل شراب کی تیاری میں استعمال ہونے والے ایکسٹرا نیوٹرل الکوحل (ای این اے) کو جی ایس ٹی سے باہر رکھنے کی سفارش کی ہے

جی ایس ٹی کونسل نے گنے کے کاشتکاروں کو راحت دینےکیلئے گڑ پر جی ایس ٹی 28 فیصد سے کم کرکے 5 فیصد کرنے کی سفارش کی تاکہ بقایا رقم کی تیزی سے ادائیگی ہوسکےاور مویشیوں کے چارے کی تیاری کی لاگت کو کم کیا جاسکے

سیاحت کو فروغ دینے کے لیے، جی ایس ٹی کونسل نے غیر ملکی پرچم والے غیر ملکی جہاز کو ساحلی راستوں میں تبدیلی ہونے پر مشروط اور محدود مدت کے لیے آئی جی ایس ٹی میں چھوٹ دینے کی سفارش کی ہے

Posted On: 07 OCT 2023 4:58PM by PIB Delhi

52ویں جی ایس ٹی کونسل کی میٹنگ آج نئی دہلی میں خزانہ اور کارپوریٹ امور کی مرکزی وزیر محترمہ نرملا سیتا رمن کی صدارت میں ہوئی۔ میٹنگ میں خزانہ کے مرکزی وزیر مملکت پنکج چودھری، گوا اور میگھالیہ کے وزرائے اعلیٰ، ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے وزرائے خزانہ نے شرکت کی۔

 

جی ایس ٹی کونسل نے جی ایس ٹی ٹیکس کی شرحوں میں تبدیلی، تجارت کو آسان بنانے کے اقدامات اور جی ایس ٹی میں تعمیل کو آسان بنانے کے اقدامات کے بارے میں درج ذیل سفارشات پیش کیں۔

 

 

  1. اشیاء وخدمات پر جی ایس ٹی شرحوں سے متعلق سفارشات

1. اشیا کے جی ایس ٹی کی شرحوں میں تبدیلی

  1. نوٹیفکیشن کی تاریخ سے نافذ العمل ایچ ایس 1901 کے تحت آنے والے پاؤڈر کی شکل میں باجرے کے آٹے کی خوراک کی تیاری، جس میں وزن کے لحاظ سے کم از کم 70فیصد جوار ہوتے ہیں، پر جی ایس ٹی کی شرحیں  اس طرح مقرر کی گئی ہیں، جو نوٹیفکیشن کی تاریخ سے نافذالعمل ہوں گی:
  • اگر پہلے سے پیک شدہ اور لیبل شدہ شکل کے علاوہ کسی اور میں فروخت کیا جاتا ہےتو صفر فیصد  
  • اگر پہلے سے پیک شدہ اور لیبل شدہ شکل میں فروخت ہوتا ہے تو پانچ فیصد
  1. یہ واضح کرنے کے لیے کہ ایچ ایس 5605 کے تحت دھاتی پالئیےسٹر فلم/پلاسٹک فلم سے بنی نقل زری   دھاگے یا سوت، 5فیصد جی ایس  کی شرح کو راغب کرنے کے ساتھ  نقل والے زری  دھاگے یا دھاگے کے اندراج کے تحت آتے ہیں۔ تاہم، الٹ جانے کی وجہ سے پالئیےسٹر فلم (میٹلائزڈ)/پلاسٹک فلم پر کسی رقم کی واپسی کی اجازت نہیں ہوگی۔
  2. اگر بیرون ملک جانے والے جہازساحلی راستے پر تبدیل ہوتے ہیں تو انہیں 5 فیصد آئی جی ایس ٹی  ادا  کرنی پڑتی ہے۔ جی ایس ٹی کونسل نے  غیر ملکی پرچم والے غیر ملکی جہاز کو ساحلی راستے میں تبدیلی پر مشروط آئی جی ایس ٹی  چھوٹ دینے کی سفارش کی ہے جو  چھ ماہ میں غیر ملکی جانے والے جہاز میں تبدیل ہو جاتا ہے۔

 -II سامان سے متعلق دیگر تبدیلیاں

  1. جی ایس ٹی کونسل نے سفارش کی ہے کہ ایکسٹرا نیوٹرل الکوحل (ای این اے) جو انسانی استعمال کے لیے الکوحل والی شراب کی تیاری میں استعمال ہوتی ہے اسے جی ایس ٹی سے باہر رکھا جائے۔ قانون کمیٹی جی ایس ٹی کے دائرے سے انسانی استعمال کے لیے شراب کی تیاری میں استعمال ہونے والے ای این اے کو خارج کرنے کے لیے قانون میں ایک مناسب ترمیم پر غور کرے گی۔
  2. گڑ پر جی ایس ٹی 28 فیصد سے کم کر کے 5 فیصد کیا جائے۔ اس اقدام سے ملوں کے ساتھ لیکویڈیٹی بڑھے گی اور گنے کے کاشتکاروں کو گنے کے واجبات کی تیزی سے ادائیگی ممکن ہو سکے گی۔ چونکہ اس کی تیاری میں گڑ بھی ایک جزو ہے، اس لیے جانوروں کے چارے کی قیمت بھی کم ہوجائے گی ۔
  3. کسٹمز ٹیرف ایکٹ نے 8 ہندسوں کی سطح پر ایک خصوصی ٹیرف ایچ ایس کوڈ بنایا ہے۔ جی ایس ٹی کی شرح کے نوٹیفکیشن میں ترمیم کی جائے گی تاکہ صنعتی استعمال کے لیے ای این اے کے لیے ایک اندراج تیارکیا جا سکے جو 18فیصد جی ایس ٹی کو راغب کرتا ہے۔

III خدمات کے جی ایس ٹی کی شرحوں میں تبدیلی

  1. نوٹیفکیشن نمبر \201712-سی ٹی آر مورخہ 28.06.2017 کے نمبر 3اور 3اے کے اندراجات میں پنچایت/میونسپلٹی کو تفویض کردہ کسی بھی ذمہ داری کے سلسلے میں مرکزییاست/مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی حکومتوں اور مقامی اداروں کی طرف سے فراہم کردہ خالص اور مربوط خدمات ہندوستان کے آئین کے آرٹیکل 243جی اور 243ڈبلیو کے تحت شامل نہیں ہیں۔ جی ایس ٹی کونسل نے بغیر کسی تبدیلی کے موجودہ استثنیٰ کے اندراجات کو جاری رکھنے کی سفارش کی ہے۔
  2. اس کے علاوہ ، جی ایس کونسل نے پانی کی فراہمی، صحت عامہ، صفائی ستھرائی، سالڈ ویسٹ مینجمنٹ، کچی آبادیوں کی ترقی اور اپ گریڈیشن خدمات کو مستثنی کرنے کی سفارش کی ہے۔

.IVسروسز میں دیگر تبدیلیاں

  1. یہ واضح کیاجاتا ہے کہ   مالٹ میں جَو کی پروسیسنگ کے لیے جاب ورک سروسز پر 5 فیصد جی ایس ٹی لاگوہو گا جیسا کہ 18 فیصد کی بجائے کھانے پینے کی اشیاء کے کام پر لاگو ہوتا ہے۔
  2. 1 جنوری، 2022 سے، الیکٹرانک کامرس آپریٹرز (ای سی اوز) کے ذریعے فراہم کردہ بس ٹرانسپورٹ سروسز پرجی ایس ٹی ادا کرنے کی ذمہ داری سی جی ایس ٹی ایکٹ، 2017 کے سیکشن 9(5) کے تحت ای کوز پر ڈال دی گئی ہے۔ تجارتی سہولت کاری کا یہ اقدام  صنعتی ادارے کی نمائندگی پر اٹھایا گیا کہ اکو کے ذریعے خدمات انجام دینے والے زیادہ تر بس آپریٹرز کے پاس ایک یا دو بسیں ہیں اور وہ رجسٹریشن حاصل کرنے اور جی ایس ٹی کی شرط کو پورا کرنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں۔ کاروبار کرنے میں آسانی کے لیے چھوٹے آپریٹرز کی ضرورت اور آئی ٹی سی لینے کے لیے بڑی منظم فرموں کی ضرورت کے درمیان توازن قائم کرنے کے لیے، جی ایس ٹی کونسل نے سفارش کی ہے کہ کمپنیوں کے طور پر کام کرنے والے بس آپریٹرز کو سی جی ایس ٹی ایکٹ، 2017کے سیکشن 9(5) کے دائرے سے مستثنیٰ قرار دیا جائے۔  لہذا وہ اپنے آئی ٹی سی کا استعمال کرتے ہوئے اپنی سپلائیز پر جی ایس ٹی ادا کر سکتے ہیں۔
  3. یہ واضح کیا گیا ہے کہ ملک بھر میں ریاستی حکومتوں کے ذریعہ معدنی کان کنی والے علاقوں میں قائم کردہ ڈسٹرکٹ منرل فاؤنڈیشن ٹرسٹ (ڈی ایم ایف ٹیز) عوامی اتھارٹی ہیں اور اس وجہ سے دیگر سرکاری اتھارٹیز کو دستیاب جی ایس ٹی چھوٹ کے اہل ہیں۔ .
  4. ہندوستانی ریلوے کی طرف سے فراہم کردہ تمام سامان اور خدمات پر فارورڈ چارج میکانزم کے تحت ٹیکس لگایا جاتا ہے، اس طرح وہ آئی ٹی سی کا فائدہ اٹھانے کے قابل ہوتے ہیں۔ اس سے ہندوستانی ریلوے کی لاگت میں کمی آئے گی۔

B. تجارتی سہولت کے لیے اقدامات:

i) ڈیمانڈ آرڈرز کے خلاف اپیلیں دائر کرنے کے لیے ایمنسٹی اسکیم ایسے معاملات میں جہاں اپیلیں منظور شدہ وقت کے اندر دائر نہیں کی جاسکتی ہیں:

کونسل نے ٹیکس کے قابل افراد کو خصوصی عمل کے ذریعے ایمنسٹی اسکیم فراہم کرنے کی سفارش کی جو 31 مارچ کو یا اس سے پہلے جاری کردہ سی جی ایس ٹی ایکٹ 2017 کے سیکشن 73 یا 74 کے تحت مذکورہ  ایکٹ کے سیکشن 107 کے تحت اپیل دائر نہیں کر سکتے۔ مارچ 2023، یا اس حکم کے خلاف اپیل کو اس بنیاد پر خارج کر دیا جاتا ہے کہ سیکشن 107 کے ذیلی دفعہ (1) میں بیان کردہ وقت کی حد کے اندر اپیل دائر نہیں کی گئی ہے۔ ایسے تمام معاملات میں، ٹیکس دہندگان کو 31 جنوری 2024 تک ایسے احکامات کے خلاف اپیل دائر کرنے کی اجازت ہے، جو کہ تنازعہ میں ٹیکس کا 12.5 فیصد قبل از جمع رقم ادا کرنے کی شرط سے مشروط ہے، جس میں سے کم از کم 20 فیصد (یعنی متنازعہ ٹیکس کا 2.5 فیصد) الیکٹرانک کیش لیجر سے ڈیبٹ کیا جاتا ہے۔ اس سے ٹیکس دہندگان کی ایک بڑی تعداد کو ریلیف ملے گا جو پہلے مقررہ مدت میں اپیل دائر کرنے سے قاصر تھے۔

       ii) ڈائریکٹرز کی جانب سے کمپنی کو دی جانے والی کریڈٹ کی حدوں/ قرضوں کے خلاف بینک کو دی جانے والی ذاتی گارنٹی پر ٹیکس لگانے سے متعلق وضاحتیں متعلقہ افراد کو دی جانے والی کارپوریٹ گارنٹی پر ٹیکس لگانے سے متعلق وضاحتیں سمیت ایک ہولڈنگ کمپنی کی طرف سے اس کی ذیلی کمپنی کو دی گئی کارپوریٹ گارنٹی شامل ہے: کونسل کی سفارش کہ:

(a) ایک سرکلر جاری کرتے ہوئے واضح کیا کہ جب کسی کمپنی کا ڈائریکٹر، بالواسطہ یا بلاواسطہ، کسی بھی شکل میں غور کیے بغیر کسی بینک/مالیاتی ادارے کو اپنی طرف سے ذاتی گارنٹی فراہم کرتا ہے، تو اس طرح کے لین دین/سپلائی کی اوپن مارکیٹ ویلیو کسمجھا جائے گا اور اس وجہ سے ایسی خدمات کی فراہمی کے سلسلے میں کوئی ٹیکس قابل ادائیگی نہیں ہوگا۔

(b) سی جی ایس ٹی  رولز، 2017 کےضابطہ 28 میں ذیلی قاعدہ (2) کا اندراج یہ فراہم کرتا ہے کہ متعلقہ فریقوں کے درمیان دی گئی کارپوریٹ گارنٹی کی فراہمی کی قابل ٹیکس قیمت ایسی گارنٹی کی رقم کا ایک فیصد ہو گی ۔

(c) مذکورہ ذیلی قاعدے کے اندراج کے بعد، سرکلر یہ فراہم کرتا ہے کہ متعلقہ فریقوں کے درمیان فراہم کی جانے والی کارپوریٹ گارنٹی خدمات کی فراہمی کی قیمت، اس بات سے قطع نظر کہ آیا خدمات کے وصول کنندہ کے لیے مکمل آئی ٹی سی  دستیاب ہے یانہیں، سی جی ایس ٹی  رولز، 2017 کے قاعدہ 28 کا قاعدہ (2)مجوزہ ذیلی ضابطہ کے تحت چلایا جائے گا۔

iii) ایک سال کی تکمیل کے بعد عارضی طور پر منسلک جائیداد کی خود بخود بحالی کا انتظام: کونسل نےسی جی ایس ٹی رولز 2017 کے قاعدہ 159 کے ذیلی قاعدہ (2) اورفارم جی ایس ٹی - 22  میں ترمیم کی سفارش کی ہے تاکہ یہ التزام کیا جاسکے کہ مذکورہ آرڈر کی تاریخ سے ایک سال کی میعاد ختم ہونے کے بعد، فارم جی ایس ٹی - 22  میں جائیداد کی عارضی اٹیچمنٹ کا آرڈر درست نہیں ہوگا۔ یہ کمشنر کے علیحدہ تحریری حکم کی ضرورت کے بغیر، ایک سال کی مدت ختم ہونے کے بعد عارضی طور پر منسلک جائیدادوں کی بحالی میں سہولت فراہم کرے گا۔

 

iv) سپلائی کی جگہ سے متعلق مختلف مسائل پر وضاحت: کونسل نے مندرجہ ذیل خدمات کی فراہمی کے سلسلے میں سپلائی کی جگہ کو واضح کرنے کے لیے ایک سرکلر جاری کرنے کی سفارش کی ہے۔

ایسے معاملوں میں جہاں سپلائرکی جگہ یا خد مات حاصل کرنے والے کا مقام بھارت کے باہر ہے، وہاں میل یا کوریئر کے ذریعہ مال کی نقل و حمل کی خدمات کی فراہمی:

اشتہاری خدمات کی فراہمی؛

شریک مقام کی خدمات کی فراہمی۔

v) خدمات کی برآمد سے متعلق وضاحتیں جاری کرنے کے بارے میں: کونسل نے ایک سرکلر جاری کرنے کی سفارش کی ہے تاکہ  آئی جی ایس ٹی ایکٹ ، 2017 کی دفعہ 2 کی شق (6) کی ذیلی شق (iv) کی دفعات کے مطابق خدمات کی فراہمی کو برآمدی ترسیلات کے طور پر سپلائی کو اہل بنانے کے مقصد سے آر بی آئی کی اجازت کے مطابق خصوصی آئی این آر ووسٹرو کھاتے میں موصول ہونے والی برآمدی ترسیلات کی قبولیت کوواضح کیا جاسکے۔

vi) مورخہ 31.07.2023 کی  نوٹیفکیشن نمبر 2023-01 مربوط ٹیکس ترمیم کے ذریعے آئی جی ایس ٹی ریفنڈ روٹ کے ذریعے مجاز آپریشنز کے لیےایس ای زیڈ یونٹس/ڈیولپرز کو سپلائی کی اجازت: کونسل نے تاریخ 31.07.2023  کی نوٹیفکیشن نمبر -1\2023امربوط ٹیکس میں ترمیم کرنے کی سفارش کی  ہے جو کہ 01.10.2023 سے لاگو ہو گی، جس کے تحت خصوصی اقتصادی زون کے ڈویلپر یاخصوصی اقتصادی زون کی یونٹ کو اشیاء یاخدمات (مورخہ 31.07.2023 کی نوٹیفکیشن نمبر 1\2023 مربوط ٹیکس میں مذکورہ پان مسالہ، تمباکو، گٹکھا وغیرہ اشیاء کو چھوڑکر)کی فراہمی کی جاسکے اور وہ ادا کئے گئے ٹیکس پر ریفنڈ کا دعوی کرسکے۔

C. قانون اور طریقہ کار سے متعلق دیگر اقدامات:

i) مجوزہ جی ایس ٹی اپیلٹ ٹربیونلز کے صدر اور ممبر کی تقرری کے سلسلے میں سی جی ایس ٹی ایکٹ، 2017 کی دفعات کو ٹربیونلز ریفارم ایکٹ، 2021 کی دفعات کے ساتھ ہم آہنگ کرنا: کونسل نے سی جی ایس ٹی ایکٹ،2017 کے سیکشن 110 میں ترمیم کی سفارش کی ہےجس میں انتظام  یہ ہوگا کہ:

دس برسوں سے وکیل جسے اپیلی ٹریبیونل ،مرکزی مصنوعات فیس اور خدمات ٹیکس ٹربیونل،  اسٹیٹ وی اے ٹی ٹربیونلز، یا  دیگر ناموں سے جانے والے ٹریبونلز،ہائی کورٹ یا سپریم کورٹ میں بالواسطہ ٹیکس قوانین میں قانونی چارہ جوئی کامناسب تجربہ ہے، وہ عدالتی رکن کے طو پر تقرری کیلئے اہل ہوں گے ؛

  • چیئرپرسن اور ممبر کے طور پر تقرری کے لیے اہل ہونے کی کم از کم عمر 50 سال ہوگی؛
  • چیئرپرسن اور ممبران کی میعاد بالترتیب زیادہ سے زیادہ 70 سال اور 67 سال تک ہوگی۔

ii) آئی ایس ڈی میں قانون میں ترامیم، جیسا کہ جی ایس ٹی کونسل نے اپنی 50ویں میٹنگ میں سفارش  کی تھی: جی ایس ٹی کونسل نے اپنی 50ویں میٹنگ میں سفارش کی تھی کہ سی جی ایس ٹی ایکٹ، 2017 کے سیکشن 20 میں تجویز کردہ آئی ایس ڈی (ان پٹ سروس ڈسٹری بیوٹر) کے عمل کو مستقبل میں ضروری کردیا جائے گا  جو کہ  کسی تیسرے فریق سے ہیڈ آفس (ایچ او) کی طرف سے خریدی گئی ان پٹ خدمات کے سلسلے میں آئی ٹی سی کی تقسیم کے لئے ہوگی لیکن یہ ہیڈ آفس (ایچ او) اور برانچ آفس (بی او) دونوں یاخاص طور پر ایک یا زیادہ برانچ دفاتر کی ذمہ داری ہوگی ۔ اس سلسلے میں، کونسل نے اب سی جی ایس ٹی ایکٹ 2017 کے سیکشن 2(61) اور سیکشن 20 میں ترمیم کے ساتھ ساتھ سی جی ایس ٹی رولز 2017 کے ضابطہ 39 میں ترمیم کی سفارش کی ہے۔

نوٹ: اس ریلیز میں جی ایس ٹی کونسل کی سفارشات اسٹیک ہولڈرز کی معلومات کے لیے آسان زبان میں اہم فیصلوں کے ساتھ پیش کی گئی ہیں۔ انہیں متعلقہ سرکلرز/اطلاعات/قانون میں ترمیم کے ذریعے نافذ کیا جائے گا، اور صرف وہی قانونی طور پر اہل ہوں گے۔

 

(ش ح ۔ ع ح (

10512



(Release ID: 1965637) Visitor Counter : 112