بجلی کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

این ٹی پی سی اور این پی سی آئی ایل نے نیوکلیائی توانائی کے پلانٹوں کی مشترکہ ترقی کے لئے معاہدے پر دستخط کئے


جوائنٹ وینچر کمپنی 2x700 میگاواٹ کا چٹکا مدھیہ پردیش ایٹمی توانئی پروجیکٹ اور 4x700 میگاواٹ کا ماہی بانسواڑہ راجستھان ایٹمی توانائی پروجیکٹ تیار کرے گی

Posted On: 01 MAY 2023 6:21PM by PIB Delhi
 
 

این ٹی پی سی لمٹیڈ نے نیوکلیائی توانائی کے پروجیکٹوں کی ترقی کے لئے آج نئی دہلی میں نیوکلیئر پاور کارپوریشن آف انڈیا لمٹیڈ(این پی سی آئی ایل)کے ساتھ ایک عبوری مشترکہ کاروباری معاہدے پر دستخط کئے۔معاہدے پر این ٹی پی سی لمٹیڈ کے پروجیکٹ ڈائریکٹر جناب اُجول کانتی بھٹاچاریہ اور این پی سی آئی ایل کے پروجیکٹ ڈائریکٹر جناب رنجے شرن نے بجلی ، نئی اور قابل تجدید توانائی کے وزیر جناب آر کے سنگھ ، ڈی اے ای کے سیکریٹری اور ایٹمی انرجی کمیشن کے سربراہ جناب کے این ویاس، بجلی کی وزارت میں سیکریٹری جناب آلوک کمار، این ٹی پی سی کے سی ایم ڈی جناب گُردیپ سنگھ، این پی سی آئی ایل کے سی ایم ڈی جناب بی سی پاٹھک اور وزارت توانائی و ایٹمی انرجی کے محکمے کے اعلیٰ افسران کی موجودگی میں اس معاہدے پر دستخط کئے۔

ابتداء میں مشترکہ کاروباری کمپنی دو پریشزائزڈ  ہیوی واٹر ری ایکٹر(پی ایچ ڈبلیو آر)پروجیکٹوں چُٹکا مدھیہ پردیش ایٹمی توانائی پروجیکٹ 2x700  میگا واٹ اور ماہی  بانسواڑہ راجستھان ایٹمی توانائی پروجیکٹ4x700  میگا واٹ ، کو تیار کرے گی، جنہیں فلیٹ موٹ بیو کلیائی پروجیکٹوں کے ایک حصے کی شکل میں پہچانا گیا ہے۔

یہ عبوری مشترکہ کاروباری معاہدہ این ٹی پی سی لمٹیڈ اور این پی سی آئی ایل کے لئے ایٹمی توانائی کے پروجیکٹوں کی ترقی کے شعبے میں تعاون اور اشتراک کے لئے ایک اہم قدم ہے، جو ملک کو 2070 تک خالص صفر گیس اخراج کے ہدف کو حاصل کرنے کے لئے اپنے شفاف توانائی کے عہد کو پورا کرنے میں مدد کرے گا۔

 

************

 

ش ح۔ج ق۔ن ع

(U: 4707)



(Release ID: 1921243) Visitor Counter : 76


Read this release in: English , Marathi , Hindi