وزارتِ تعلیم

مرکزی وزیر تعلیم جناب دھرمیندر پردھان نے جی-20  ایجوکیشن ورکنگ گروپ کے اجلاس کے تحت مستقبل کے کام کی اپنی نوعیت کی ایک نمائش کا افتتاح کیا


ہندوستان اکیسویں صدی کی عالمی امنگوں کو پورا کرنے میں اہم کردار ادا کرنے جا رہا ہے : دھرمیندر پردھان

ہندوستان کی زیر صدارت جی 20  کے ساتھ ساتھ تیسرے ایجوکیشن ورکنگ گروپ کے اجلاس کے بارے میں تجسس پیدا کرنے کے لیے ایک  لاکھ سے زیادہ نوجوانوں نے ایک ماہ طویل  جی 20سے متعلق  پروگرام میں حصہ لیا ہے: جناب دھرمیندر پردھان

نمائش  دیکھنے والوں نےزبردست ردعمل کا اظہار کیا ،  پہلے ہی  دن 10 ہزارافراد نمائش دیکھنے پہنچے

Posted On: 23 APR 2023 6:06PM by PIB Delhi

تعلیم، ہنرمندی کے فروغ  اور صنعت کاری کے مرکزی وزیر جناب دھرمیندر پردھان نے آج تیسرے ایجوکیشن ورکنگ گروپ (ای ڈی ڈبلیو جی) اجلاس کے تحت مستقبل کے کام کے بارے میں  اپنی نوعیت کی ایک منفرد نمائش کا افتتاح کیا۔ افتتاحی تقریب میں ہنر مندی کے فروغ اور صنعت کاری  (ایم ایس ڈی ای  )کی وزارت میں سکریٹری جناب اتل کمار تیواری  نے شرکت کی۔ ، ہند-امریکہ تجارتی کونسل  (یو ایس آئی بی سی)  کے صدر اور جنوبی ایشیا میں یو ایس چیمبر آف کامرس کے سینئر نائب صدر سفیر اتل کیشپ، سی آئی آئی کے ڈائریکٹر جنرل جناب چندرجیت بنرجی،  سی آئی آئی مشن آن ٹیک انوویشن اینڈ ریسرچ اینڈ فیوچر موبلٹی  کے چیئرمین اور اشوک لی لینڈ اور جے سی بی انڈیا کے سابق منیجنگ ڈائریکٹر جناب وپن سوندھی اور ایکسینچر ریسرچ کے منیجنگ ڈائریکٹر جناب راگھو نرسلے موجود تھے۔

وزیر  موصوف نے گہری دلچسپی کے ساتھ تقریباً 70 نمائش کنندگان کی نمائشوں کا  مشاہدہ کیا اور ان کی کوششوں کی ستائش کی ۔ نمائش کنندگان میں این آئی ٹی روورکیلا، آئی آئی ٹی بھونیشور، آئی آئی ایم سنبل پور، مائیکروسافٹ، میٹا، یونیسیف، این سی ای آر ٹی اور بہت سے دیگر جیسے مختلف شعبوں کے اعلیٰ ادارے اور تنظیمیں شامل تھیں، جو ایسی ٹیکنالوجیوں کی نمائش کرتی ہیں جو ماڈرن ورک پلیس ،  مستقبل کے اختراعات اور مہارتوں کی فراہمی  کے ماڈل  میں مستقل اختراعات کے ساتھ کام کے مستقبل کو آگے بڑھائے گا۔ نمائش  دیکھنے والوں نےزبردست ردعمل کا اظہار کیا  اور   پہلے ہی  دن 10 ہزارافراد نمائش دیکھنے پہنچے۔

مہمانوں اور نمائش دیکھنے کے لیے آنے والوں نے 3 شعبوں - زراعت، نقل و حرکت اور  حفظان صحت ، میٹاورس، ریورس انجینئرنگ اور خودکار ڈیزائن سلوشن، ڈرون ٹیکنالوجی، ایڈ ٹیک سلوشن ،صنعت 4.0 مہارتیں، مقامی زبان سیکھنے کی   کشش، مستقبل کے نمائشی کام  پر مبنی تکنیکی حل، ورچوئل انٹرن شپ سلوشن، اور معاون ٹیکنالوجی اور معاون ٹیکنالوجی کی جدت طرازی کے لائیو ڈیمو کو شامل کرنے کے لیے ٹیکٹائل ڈسپلے سے محظوظ ہوئے ۔ یہ خصوصی نمائش 23 سے 28 اپریل تک -انسٹی ٹیوٹ آف منرلز اینڈ میٹریلز ٹیکنالوجی (سی ایس آئی آر)- انسٹی ٹیوٹ آف منرلز اینڈ میٹریل ٹیکنالوجی (آئی ایم ایم ٹی) بھونیشور، اڈیشہ میں ہندوستان کی زیر صدارت جی 20  میں تیسرے ایجوکیشن ورکنگ گروپ (ای ڈی ڈبلیو جی) کے اجلاس کے موقع پر ایک ساتھ منعقد کی جا رہی ہے۔

افتتاح کے بعد، جناب پردھان نے بھونیشور کے آئی ایم ایم ٹی آڈیٹوریم میں کام کے مستقبل میں جدید ٹیکنالوجی پر توجہ دینے کے ساتھ ڈیپ ٹیک پر ایک سیمینار، تیسرے ای ڈی ڈبلیو جی اجلاس کے پہلے پیشگی پروگرام سے خطاب کیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے جناب پردھان نے کہا کہ اڈیشہ ہنر کی سرزمین ہے۔ اس کے فن اور تعمیراتی کمالات اور قدیم تجارتی روابط اس کا ایک روشن ثبوت ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اکیسویں صدی علم پر مبنی اور ٹیکنالوجی پر مبنی ہوگی۔ مرکزی وزیر نے کہا  کہ اپنی تہذیبی اخلاقیات اور ہنر کے قدرتی مرکز، اسیر بازار اور وسائل سے کارفرما، ہندوستان اکیسویں صدی کی عالمی امنگوں کو پورا کرنے میں ایک اہم کردار ادا کرنے کے لیے تیار ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈگریوں کے بجائے ہنر اور قابلیت مستقبل کو آگے بڑھائے گی۔

وزیر موصوف  نے کہا کہ وزیر اعظم جناب نریندر مودی نے ہندوستان کی یووا شکتی کو ملازمت کے متلاشیوں کے بجائے نوکری پیدا کرنے والوں میں تبدیل کرنے کا تصور کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ٹیکنالوجی کی وجہ سے پیدا ہونے والی رکاوٹوں کے ساتھ، ہمیں نوجوانوں کو ہنر مند بنانے کے نئے طریقوں پر غور کرنا چاہیے تاکہ وہ مستقبل کی ملازمتوں کے لیے تیار ہوں۔جناب پردھان نے کہا کہ  انٹرنیٹ، نقل و حرکت، اور عالمی رابطہ ہمیں عالمی ضروریات کے بارے میں سوچنے کا موقع فراہم کرتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں ہندوستان کے نوجوانوں کے ساتھ ساتھ عالمی جنوب سے تعلق رکھنے والوں کے لیے اس موقع کو تبدیل کرنے کے لیے اکٹھا ہونا چاہیے۔ وزیر موصوف نے اس بات پر خوشی کا اظہار کیا کہ آج اکشے ترتیہ کے پرمسرت موقع پر صنعت، اکیڈمی، اسٹارٹ اپ ایکو سسٹم اور تمام شراکت دار جی 20 فیوچرآف ورک فریم ورک کے تحت صنعت ، تعلیم ، اسٹارٹ اپ ایکو سسٹم اور  تمام شراکت دار  ہنر مندی کے ماحولیاتی نظام کا ازسرنو تصور کرنے، مستقبل کے لیے تیار عالمی شہری بنانے اور بنانے کے لیے بھونیشور میں جمع ہوئے ہیں۔  مرکزی وزیر نے کہا کہ ہندوستان ہنر مند افرادی قوت کا عالمی مرکز ہے۔ انہوں نے اوڈیشہ کے لوگوں کی عوامی شراکت داری کے جذبے کو  بھی  سراہا اور ان کی ستائش کی۔

وزیر موصوف نے بتایا کہ ایک  لاکھ سے زیادہ نوجوانوں نےہندوستان کی زیر صدارت جی 20 کے ساتھ ساتھ بھونیشور تیسرے ایجوکیشن ورکنگ گروپ اجلاس کے بارے میں تجسس پیدا کرنے اور اسے فروغ دینے کے لیے ایک ماہ طویل جی 20 سے متعلق پروگراموں میں حصہ لیا ہے۔

ہنرمندی کے فروغ  اور صنعت کاری کی وزارت   (ایم ایس ڈی ای) اور وزارت تعلیم (ایم او ای) 23 اور 24 اپریل کو پیشگی پروگراموں کی میزبانی کر رہی ہیں۔ اور پہلے دن کا موضوع ہے 'کام کے مستقبل میں جدید ٹیکنالوجی پر توجہ مرکوز کرنے  والی گہری ٹکنالوجی' کے بارے میں ہے۔ ڈیپ ٹیک کی آمد اور کام کے مستقبل پر اس کے اثرات کے ارد گرد موضوع کو مزید گہرائی میں جاننے کے لیے، آج متعدد پینل مباحثے ہوئے، جن میں عالمی سیمی کنڈکٹر ایکو سسٹم میں ہندوستان کے امکانات، ڈیجیٹلائزیشن کی دنیا اور نئے دور کے آغاز شامل ہیں۔ پینل کے مقررین میں  فیبریکیشن (سیمی کنڈکٹر)، ٹاٹا الیکٹرانکس  کے سی ای او ڈاکٹر چرن گرومورتی ؛ گورنمنٹ اینڈ ریگولیٹری افیئرز، آئی بی ایم ساؤتھ ایشیا  کے ایگزیکٹو ڈائریکٹرجناب مسٹر کشور بلال جی ؛ آئی آئی ٹی بھونیشور  کے ڈائریکٹر، پروفیسر شریپد کرمالکر؛  آئی آئی ایم احمد آباد کے  چیف ایڈمنسٹریٹو آفیسر کرنل امیت ورما ؛ حکومت ہندکی وزارت  الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت کے سائنسداں –ای جناب نشیت گپتا؛ پبلک پالیسی اینڈ گورنمنٹ افیئرز، مائیکروسافٹ انڈیا کے ڈائریکٹر اور کنٹری ہیڈ، ڈاکٹر آشوتوش چڈھا ؛ یووا، (جنریشن اَن لمیٹڈ) یونیسیف کے  چیف آپریٹنگ آفیسر،جناب ابھیشیک گپتا ؛ سی ایس آئی آر - انسٹی ٹیوٹ آف منرلز اینڈ میٹریلز ٹیکنالوجی (آئی ایم ایم ٹی) کے ڈائریکٹر ، ڈاکٹر جی نارہاری شاستری اور  اٹل انوویشن مشن، نیتی آیوگ  کےپروگرام ڈائریکٹر جناب روہت گپتا شامل تھے۔

 کام کے تجربے کے زون کا ایک ایسا  منفرد مستقبل قائم کیا گیا ہے  جس کا کا مقصد نوجوانوں کو یہ  دکھانا ہے کہ اس تجربے والے زون میں مارکیٹ سے متعلقہ رہنے کے لیے مطلوبہ جدید تکنیکی مہارتوں اور آسانی سے قابل منتقلی مہارتوں کا پیش نظارہ حاصل کر کے کام کا مستقبل کس طرح تیار ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ 

(ش ح ۔ رض  ۔ ج ا  (

4396



(Release ID: 1919027) Visitor Counter : 129