کامرس اور صنعت کی وزارتہ

گورنمنٹ ای-مارکیٹ پلیس نے "SWAYAT" کی کامیابی کا جشن منانے کے لیے ایک تقریب کا اہتمام کیا، جو جی ای ایم پر ای ٹرانسیکشن کے ذریعے اسٹارٹ اپ، خواتین اور نوجوانوں کی حوصلہ افزائی کے لیے ایک پہل ہے


گورنمنٹ ای-مارکیٹ پلیس جی ای ایم پورٹل پر 8.5 لاکھ سے زیادہ مائیکرو اور سمال انٹرپرائزز (ایم ایس ایز) نے جی ای ایم پر 1.87 لاکھ سے زیادہ کا کاروبار کیا اور 68 لاکھ سے زیادہ آرڈرز دیے گئے

Posted On: 01 MAR 2023 6:34PM by PIB Delhi

نئی دہلی میں آج "SWAYAT" کی کامیابی کے موقع پر ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا، جو کہ گورنمنٹ ای-مارکیٹ پلیس (جی ای ایم) پر ای ٹرانزیکشنز کے ذریعے اسٹارٹ اپس، خواتین اور نوجوانوں کی حوصلہ افزائی کے لیے ایک پہل ہے۔ عملہ اور تربیت کی وزارت کے سکریٹری جناب رادھا ایس۔ چوہان اس پروگرام میں مہمان خصوصی تھے۔ اس کے علاوہ، محترمہ مرسی اپاؤ، جوائنٹ سکریٹری، مائیکرو، سمال اینڈ میڈیم انٹرپرائزز(ایم ایس ایم ایز) ، حکومت ہند اور جناب سنجیو گوتم، ڈائریکٹر (فارمر پروڈیوسر آرگنائزیشنز)، ایس ایف اے سی نے اس تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔

اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جی ای ایم کے سی ای او  پی کے۔ سنگھ نے جی ای ایم پورٹل پر 8.5 لاکھ سے زیادہ مائیکرو اور سمال انٹرپرائزز (ایم ایس ای) کے رجسٹریشن کے ذریعے سماجی اور مالی شمولیت کو فروغ دینے میں اب تک کی پیشرفت پر روشنی ڈالی، جس میں 68 لاکھ سے زیادہ آرڈرز کے ساتھ 1.87 لاکھ سے زیادہ کا کاروبار ہوا ہے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ 1.45 لاکھ سے زیادہ خواتین ایم ایس ایز نے 15,922 کروڑ روپے کے 7.32 لاکھ آرڈر پورے کیے ہیں اور تقریباً 43 ہزار ایس سی/ایس ٹی ایم ایس ایز نے جی ای ایم پورٹل پر اب تک 2,592 کروڑ روپے کے 1.35 لاکھ سے زیادہ آرڈرز فراہم کیے ہیں۔

اس موقع پر مہمان خصوصی محترمہ رادھا ایس۔ چوہان نے ایم ایس ای، خواتین، دیویانگجن اور قبائلی صنعت کاروں، اسٹارٹ اپس، سیلف ہیلپ گروپس، کاریگروں اور بُنکروں جیسے کم خدمت والے وینڈر گروپس کی موجودگی میں اضافہ کرنے اور انہیں سرکاری خریداری تک براہ راست رسائی فراہم کرنے میں جی ای ایم کی کوششوں کی تعریف کی۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ جی ای ایم آرڈر بک کا 2016-17 میں 422 کروڑ روپے سے 1.70 لاکھ کروڑ روپے (فروری 2023 تک) تک کا سفر کسی معجزے سے کم نہیں ہے اور یہ جی ای ایم کی پوری ٹیم کی انتھک محنت کی وجہ سے ہے۔

مہمان خصوصی کے طور پر خطاب کرتے ہوئے محترمہ مرسی اپاؤ نے وزارت ایم ایس ایم ای کی خواتین، ایم ایس ایز، ایس سی/ایس ٹی کو فائدہ پہنچانے والی مختلف اسکیموں کے بارے میں بتایا اور اسکی اسکیموں کے مقاصد کو حاصل کرنے میں جی ای ایم کے اہم کردار پر روشنی ڈالی۔ ایس ایف اے سی کے ڈائریکٹر شری سنجیو گوتم نے 105 فارمر پروڈیوسر آرگنائزیشنز (ایف پی او) کو سہولت فراہم کرنے میں جی ای ایم کا شکریہ ادا کیا جو اب براہ راست حکومت کو 200 سے زیادہ زرعی مصنوعات فروخت کر سکتے ہیں۔

اس تقریب میں سیلف ایمپلائیڈ ویمنز ایسوسی ایشن (ایس ای ڈبلیو اے- انڈیا) ، نیشنل کوآپریٹو یونین آف انڈیا (این سی یو اے) اور اسمال فارمرز ایگریکلچر فیڈریشن(ایس ایف اے سی) کے نمائندوں، اسٹارٹ اپ سیکٹر کی نمائندگی کرنے والے وینڈرز،  ایف پی اوز، خواتین کاروباریوں اور نوجوانوں اور جی ای ایم کے اعلی افسران نے بھی نے شرکت کی۔

جی ای ایم پر "اسٹارٹ اپس، ویمن اینڈ یوتھ ایڈوانٹیج بذریعہ ای ٹرانزیکشنز" (خود مختار) کو فروغ دینے کی پہل پہلی بار فروری 2019 میں شروع کی گئی تھی۔ خود مختار 2019 کا مقصد پورٹل پر مختلف قسم کے وینڈرز اور سروس فراہم کنندگان کی شمولیت کو فروغ دینا ہے تاکہ ایسے مخصوص قسم کے مینوفیکچررز اور وینڈرز کی تربیت اور رجسٹریشن میں سہولت فراہم کرنے، خواتین کی کاروباری ترقی اور ایم ایس ایم ای سیکٹر کو پبلک پروکیورمنٹ اور اسٹارٹ اپس کی شرکت میں سہولت فراہم کرنے کے لیے فعال اقدامات کیے جائیں۔

گورنمنٹ ای-مارکیٹ پلیس (جی ای ایم) ایک سیکشن 8 کمپنی ہے جو مرکزی وزارتوں، ریاستی محکموں، پی ایس ایز اور خود مختار اداروں کے ذریعے سامان اور خدمات کی خریداری کے لیے محکمہ تجارت، وزارت تجارت اور صنعت کے انتظامی کنٹرول کے تحت قائم کی گئی ہے۔ جی ای ایم میں سماجی شمولیت کو اولین اہمیت دی گئی ہے اور عوامی خریداری میں چیلنجوں کا سامنا کرنے والے کمزور دکانداروں کی شرکت کو بڑھانے پر توجہ دی گئی ہے۔

*****

ش ح۔   ش ت۔ج

Uno-2216



(Release ID: 1903527) Visitor Counter : 155


Read this release in: English , Marathi , Hindi