الیکٹرانکس اور اطلاعات تکنالوجی کی وزارت

پہلی انڈیا اسٹیک ڈیولپر کانفرنس 25 جنوری 2023 کو منعقد ہوئی


ایک قوم کے طور پر مشن دنیا بھر کے ان کاروباری اداروں اور ممالک کو انڈیا اسٹیک کی پیشکش کرنا ہے جو اختراعات اور مزید مربوط عمل درآمد، اور ڈیجیٹل تبدیلی کو نافذ کرنا چاہتے ہیں: وزیر مملکت جناب راجیو چندر شیکھر

ڈیجیٹل ذرائع کا استعمال کرتے ہوئے ہندوستان نے 46 سال کے متوقع اعداد و شمار کے مقابلے 6 سالوں میں 80 فیصد آبادی کے لیے مالی شمولیت حاصل کی ہے: محترمہ دیبجانی گھوش، صدر، ناسکام

انڈسٹری ایسوسی ایشنز، انڈسٹری، سسٹم انٹیگریٹرز اور اسٹارٹ اپس کے 100 سے زیادہ ڈیجیٹل لیڈروں نے شرکت کی اور اسے مزید بہتر بنانے اور اسے عالمی بنانے کے طریقوں پر غور کیا

جی20 ممالک کے مندوبین نے جسمانی اور ورچوئل طور پر شرکت کی

Posted On: 25 JAN 2023 6:36PM by PIB Delhi

پہلی انڈیا اسٹیک ڈیولپر کانفرنس کا افتتاح الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹکنالوجی اور ہنرمندی کی ترقی اور صنعت کاری کے وزیر مملکت جناب راجیو چندر شیکھر نے میٹی وائی کے سکریٹری جناب الکیش کمار شرما، محترمہ دیبجانی گھوش، صدر، ناسکام اور جناب ابھیشیک سنگھ، پی اینڈ سی ای او، نی جی ڈی کی میں موجودگی میں کیا۔ تقریب میں انڈسٹری ایسوسی ایشنز، انڈسٹری، سسٹم انٹیگریٹرز اور اسٹارٹ اپس کے 100 سے زیادہ ڈیجیٹل لیڈروں نے شرکت کی۔ تقریب میں جی20 ممالک کے مندوبین نے بھی شرکت کی۔

 

 

جناب راجیو چندر شیکھر نے اپنے خطاب میں کہا کہ کانفرنس کا مقصد انڈیا اسٹیک تک رسائی اور اسے اپنانے میں اضافہ کرنا ہے- ان ممالک کے لیے جو اسے اپنی ضروریات کے مطابق اپنانے اور انضمام کرنے کے خواہشمند ہیں اور اسٹارٹ اپس، ڈیولپرز اور ایک مضبوط ماحولیاتی نظام تشکیل دینا ہے۔ سسٹم انٹیگریٹرز اس کے ارد گرد اگلی نسل کی جدت پر کام کر رہے ہیں۔ ”ایک قوم کے طور پر ہمارا مشن دنیا بھر کے ان کاروباری اداروں اور ممالک کو انڈیا اسٹیک کا حصہ بنانا ہے جو ڈیجیٹل تبدیلی کو مزید مربوط کرنا، اس پر عمل درآمد کرنا اور لاگو کرنا چاہتے ہیں“، وزیر نے کہا۔

 

 

یہ بتاتے ہوئے کہ انڈیا اسٹیک جامد نہیں ہے، وزیر موصوف نے کہا، ”آج ہمارے پاس #انڈیا اسٹیک 1.0 ہے۔ یہ زیادہ مؤثر، اور نفیس بن جائے گا، اور وقت کے ساتھ ساتھ ترقی کرتا رہے گا۔ ڈیٹا سیٹ اور مصنوعی ذہانت کا استعمال انڈیا اسٹیک کے اختراعی سفر کا حصہ ہوگا۔

 

 

قبل ازیں، جناب ابھیشیک سنگھ، پی اینڈ سی ای او، NeGD نے حاضرین کا خیر مقدم کیا اور کانفرنس کا سیاق و سباق طے کیا اور اس بات پر زور دیا کہ صنعت کے ساتھ بات چیت کا مقصد یہ ہے کہ وہاں جو کچھ ہے اس میں جدت پیدا کی جائے اور اسے سب کے فائدے کے لیے عالمی سطح پر لے جایا جائے۔ محترمہ دیبجانی گھوش، صدر، NASSCOM نے کہا کہ انڈیا اسٹیک نے ملک میں ڈیجیٹل تبدیلی لائی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ڈیجیٹل ذرائع کا استعمال کرتے ہوئے ہندوستان نے 46 سال کے متوقع اعداد و شمار کے مقابلے 6 سالوں میں 80 فیصد آبادی کے لیے مالی شمولیت حاصل کی ہے۔ جناب الکیش کمار شرما، سکریٹری، MeitY نے کہا کہ ڈیجیٹل انڈیا نے صحیح معنوں میں ہندوستانی سماج کو با اختیار بنایا ہے اور علمی معیشت بنانے میں اپنا تعاون کیا ہے۔

 

Graphical user interface, textDescription automatically generated

 

انڈیا اسٹیک سلوشنز یعنی آدھار، نیشنل ڈیجیٹل ہیلتھ مشن (NDHM)، یونیفائیڈ پیمنٹ انٹرفیس (UPI)، DigiLocker، امنگ، API  سیتو، دکشا، ای سنجیونی، گورنمنٹ ای مارکیٹ پلیس (GeM) پر متعلقہ تنظیم کے سربراہ اور/یا ان کے نمائندوں کے ذریعے پریزنٹیشنز دی گئیں۔ پریزنٹیشن کی ایک کاپی https://indiastack.global پر اپ لوڈ کی گئی ہے۔

 

                                             **************

ش ح۔ ف ش ع- م ف

U: 853



(Release ID: 1893827) Visitor Counter : 113


Read this release in: English , Hindi , Marathi , Telugu