کیمیکلز اور فرٹیلائزر کی وزارت

دواسازی کا شعبہ 18اکتوبر 2021 کو ’ڈرگ اینڈ میڈیکل ڈیوائس اسٹارٹ اپ گرینڈ چیلنج‘ کے فاتحین کے لئے ایک اعزازی تقریب کا اہتمام کرے گا

بھارت دوا سازی کے معاملے میں مقدار کے حساب سے تیسرے اور حجم کے حساب سے 14نمبر پر ہے

Posted On: 14 OCT 2021 5:47PM by PIB Delhi

 

نئی دہلی  ، 16اکتوبر،2021

 

 

محکمہ دواسازی ،کیمیکل اور فرٹیلائزر کی وزارت اور انویسٹ انڈیا پیر ،18 اکتوبر 2021 کو شام پانچ بجے سے شام چھ بجے تک ویڈیو کانفرنس کے ذریعہ سے ’ ڈرگ اور میڈیکل ڈیوائس اسٹارٹ اپ گرینڈ چیلنج‘ کے فاتحین  اسٹارٹ اپ کےلئے ایک اعزازی تقریب کا اہتمام کررہے ہیں۔اعزازی تقریب میں نیتی آیوگ کے چیف ایگزی کیوٹو افسر ،مہمان خصوصی  کے طورپر اسٹارٹ اپس کو  ان کی مثالی اختراعات پر حوصلہ افزائی اور مبارکباد دی جا سکے۔ اس تقریب میں انڈسٹری کے قابل ذکر اسٹیک ہولڈرز بھی شرکت کریں گے ، جو ہندوستانی اختراع کاروں کی جانب سے قوم کی تعمیر کے لیے کی جانے والی بے پناہ کوششوں کا جشن  منانے کے لیے موجود ہوں گے۔

دواسازی کے شعبے نے 26 فروری 2021 کو انڈین میڈیسن اینڈ انڈین میڈیکل ڈیوائسز 2021 کانفرنس میں 'دواسازی اور طبی ڈیوائس اسٹارٹ اپ گرینڈ چیلنج 2021' کا ​​آغازکیا تھا تاکہ ان شعبوں میں جدت کو فروغ دیا جاسکے اور معاشی ترقی کو مزید تیز کیا جاسکتا ہے۔ حیدرآباد اور احمد آباد میں نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف فارماسیوٹیکل ایجوکیشن اینڈ ریسرچ (این آئی پی ای آر) ، انویسٹ انڈیا ، اسٹارٹ اپ انڈیا اور فعال شراکت دار لورس لیبز اور بوسٹن سائنٹیفک اسٹارٹ اپ گرینڈ چیلنج کے حکومتی شراکت دار تھے۔

 

 

 

 

 

 

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002OHUB.jpg

 

 

 

 

 

 

 

پروگرام کےلئے درخواست 

www.startupindia.gov.in

 پر طلب کی گئی تھیں۔ادویات اور طبی آلات کے شعبوں میں جدت اور نئی ٹیکنالوجیز کی اہمیت کے بارے میں آگاہی پیدا کرنے کے لیے پروگرام کے ایک حصے کے طور پر ایک ویبینار کا بھی اہتمام کیا گیا۔ اسٹارٹ اپ چیلنج کے لیے موصول ہونے والی 310 اسٹارٹ اپ ایپلی کیشنز میں سے 218 میڈیکل ڈیوائس سیکٹر میں اور 92 فارماسیوٹیکل سیکٹر میں تھیں۔

میڈیکل ڈیوائس سیکٹر سے 17 اور فارماسیوٹیکل سیکٹر سے 5 اسٹارٹ اپس کو دوسرے مرحلے کی تشخیص کے لیے شارٹ لسٹ کیا گیا ، جہاں انہوں نے ایک ویڈیو کانفرنس میں ایک ممتاز جیوری کے سامنے اپنے خیالات پیش کیے۔ ایک سخت دو مرحلے کی تشخیص کے عمل کے بعد ، چار اسٹارٹ اپس کو دونوں شعبوں کے لیے فاتح اور رنر اپ کے طور پر منتخب کیا گیا ہے۔ دو جیتنے والے اسٹارٹ اپس کو 15 لاکھ روپے کی نقد گرانٹ ملے گی ، اور دو رنر اپ کو 7 لاکھ روپے ملیں گے۔ اس کے علاوہ ، چاروں اسٹارٹ اپس کو 6 ماہ کے لیے ایک سرشار سرپرست تفویض کیا جائے گا اور آنے والے مہینوں میں ٹاپ 20+ اسٹارٹ اپس کے لیے ایک ورچوئل ڈیمو ڈے کا اہتمام کیا جائے گا جنہوں نے پروگرام کی تشخیص کے دوسرے دور میں جگہ بنائی۔ حکومتی وزارتوں/محکموں ، کوآپریٹیوز ، کارپوریٹ باڈیز ، سرمایہ کاروں وغیرہ کے عہدیداروں کے سامنے اپنے خیالات پیش کیے۔

ہندوستانی دواسازی اور طبی آلات کا شعبہ ہندوستانی معیشت کی ترقی میں نمایاں کردار ادا کر رہا ہے۔ ملک کو دواسازی کے عالمی شعبے میں ایک اہم مقام حاصل ہے۔ عالمی سطح پر ، دواؤں کی پیداوار کے لحاظ سے بھارت تیسرے نمبر پر ہے اور قیمت کے لحاظ سے 14ویں مقام پر ہے۔ میک ان انڈیا مہم کے تحت ایکابھرتے ہوئے خطے کے طور پر نامزد ، بھارت کا شمار دنیا کی 20 عالمی میڈیکل ڈیوائسز مارکیٹ میں ہوتا ہے اور جاپان ، چین اور جنوبی کوریا کے بعد بھارت ایشیا کی چوتھی بڑی مارکیٹ ہے۔ مزید برآں ، کووڈ-19 وبائی امراض کے دوران ، سرمایہ کاروں کی مضبوط دلچسپی کی وجہ سے بڑی تعداد میں اسٹارٹ اپ اس شعبے میں داخل ہوئے۔

ش ح ۔ا م۔

U:11026

 



(Release ID: 1764449) Visitor Counter : 23


Read this release in: English , Hindi , Marathi