وزارت ماہی پروری، مویشی پروری و ڈیری

ساگرپریکرما مرحلہ 9 پہل قدمی ماہی گیروں کی دہلیز تک  پہنچنے، ان کی مشکلات اور شکایات سننے، گاؤں کی سطح پر زمینی حقائق کا مشاہدہ کرنے، پائیدار ماہی پروری کی حوصلہ افزائی کرنے اور اس امر کو یقینی بنانے میں مدد فراہم کرے گی کہ سرکاری اقدامات آخری میل پر ماہی گیروں تک پہنچیں


جناب پرشوتم روپالا نے افزوں مطالبات کو پورا کرنے میں ماہی پروری کے اہم کردار اور ہمارے ماہی گیروں اور مچھلی پالن کرنے والوں کے بیش قیمتی تعاون کو تسلیم کیا جو انتھک محنت کرتے ہیں

جناب پرشوتم روپالا نے ماہی گیروں، مچھلی پالن کرنے والوں اور دیگر متعلقہ فریقوں کو کسان کریڈٹ کارڈس فراہم کیے

Posted On: 08 OCT 2023 8:02PM by PIB Delhi

جناب پرشوتم روپالا نے ، ماہی پروری، مویشی پالن اور ڈیری کی صنعت کے وزیر مملکت کے ساتھ، ڈی او ایف کی جوائنٹ سکریٹری محترمہ نیتو کماری پرساد، قومی ماہی پروری ترقیاتی بورڈ  کے چیف اگزیکیوٹیو ڈاکٹر ایل این مورتی ، فشر مین ویلفیئر، حکومت تمل ناڈو، مرکز کے زیر انتظام علاقے پڈوچیری، اور ساحلی دستے کی موجودگی میں ، ساگر پریکرما مرحلہ 9 کے دوسرے دن کی تقریب کی قیادت کی۔ساگر پریکرما مرحلہ 9 کے دوسرے دن کا پروگرام ترن گمبدی فش لینڈنگ سینٹر میں ماہی گیروں اور خواتین کے ذریعہ وزراء اور دیگر سینئر معززین کے پرتپاک استقبال کے ساتھ شروع ہوا۔

جناب پرشوتم روپالا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ماہی گیروں کو درپیش چنوتیوں پر ضروری اقدامات کیے جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک بھر کے ماہی گیروں کے جناب سے ان کی روزی روٹی کو بہتر بنانے میں مدد کرنے کے لیے بہت زیادہ مانگ کی وجہ سے وزیر اعظم نے ماہی پروری کا علیحدہ محکمہ تشکیل دیا۔زمینی حقائق کو سمجھ کر ترقی کے لیے ماہی گیری کے شعبے میں 30000 کروڑ روپئے سے زائد کی سرمایہ کاری کی گئی ہے۔

ڈاکٹر ایل مروگن نے ساگر پریکرما کے حالیہ آٹھ مرحلوں پر روشنی ڈالی جسے ماہی گیروں اور خواتین اور دیگر اسٹیک ہولڈرز خو پذیرائی حاصل ہوئی۔ انہوں نے مزید روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ تمل ناڈو ملک میں سمندری ماہی گیری کے لیے بہت زیادہ صلاحیت رکھتا ہے اور ساتھ ہی سمندری ماہی گیری کے مناسب ضابطوں، سمندری مچھلیوں کی لینڈنگ میں مناسب حفظانِ صحت اور صفائی ستھرائی اور تکنالوجی کے استعمال میں ایک رہنما کی حیثیت رکھتا ہے۔

اس پہل قدمی سے ماہی گیروں کو ان کے گھر تک پہنچنے، ان کی مشکلات اور شکایات سننے، گاؤں کی سطح پر زمینی حقائق کا مشاہدہ کرنے، پائیدار ماہی گیری کی حوصلہ افزائی اور اس بات کو یقینی بنانے میں مدد ملے گی کہ حکومتی اقدامات آخری میل پر ماہی گیروں تک پہنچیں۔

ساگر پریکرما مرحلہ 9، پہلے دن کا پروگرام 7 اکتوبر 2023 کو تمل ناڈو کے ضلع رام ناتھ پورم کے ترووننت پورم سے شروع اور پڈوچیری کے مرکز کے زیر انتظام علاقے کرائیکل فش لینڈنگ سینٹر پر ختم ہوا۔

پرکرما تھرنگمبادی فش لینڈنگ سنٹر سے جاری رہی، پڈوچیری کے ضلع مائیلادوتھرائی میں ماہی گیروں، مچھلی کاشتکاروں اور ماہی گیری برادری کے نمائندوں کی مشترکہ کوششوں کا مشاہدہ ہوا۔

پریکرما ترن گمبدی  فش لینڈنگ سینٹر سے جاری رہی، پڈوچیری کے ضلع مائیلا دوترائی میں ماہی گیروں، مچھلی کاشتکاروں اور ماہی گیر برادری کے نمائندوں کی مشترکہ کوششیں ملاحظہ کی گئیں۔

جناب پرشوتم روپالا نے ڈاکٹر ایل مروگن اور دیگر معززین کے ساتھ تقریب کے دوران استفادہ کنندگان کے ساتھ عملی طور پر اور ذاتی طور پر بات چیت کی، ماہی گیری کے شعبے میں چنوتیوں اور مواقع پر تبادلہ خیال اور حکومتی اقدامات کو پھیلایا۔

 

آگے بڑھتے ہوئے، ساگر پریکرما مرحلہ 9 تمل ناڈو کے کڈلور ضلع کے کڈلور فشنگ ہاربر پہنچا۔ اسٹیج  پروگرام کا آغاز ماہی گیروں اور ماہی گیروں کی جانب سے وزراء اور سینئر معززین کے پرتپاک استقبال سے ہوا۔

پروگرام کے موقع پر ڈاکٹر ابھیلکش لکھی نے آج اتھور فش سیڈر ریئرنگ سینٹر، چنگل پٹو ضلع، تمل ناڈو کا دورہ کیا اور مچھلی پالن کرنے والوں، ایف سی ایس کے اراکین سے بات چیت کی اور بتایا کہ اس مرکز کی جدید کاری کے لیے حکومت کی ایف آئی ڈی ایف اسکیم کے تحت فنڈ فراہم کیا گیا ہے۔

تقریباً چاروں طرف 10700 ماہی گیروں، ماہی پروری سے متعلق مختلف فریقوں، اور اسکالر حضرات نے ساگر پریکرما کے مرحلہ 9 پروگرام میں مختلف مقامات سے تشریف لاکر شرکت کی۔

دن کے بقیہ حصے میں،  پروگرام جاری رہے گا اور پڈوچیری میں اسٹیج پروگرام کا منصوبہ وضع کیا گیا ہے جہاں شری پرشوتم روپالا، دیگر معززین کے ساتھ مستحقین سے بات چیت کریں گے، متعدد فوائد تقسیم کریں گے، پروجیکٹوں کا بھومی پوجن / افتتاح کریں گے اور اجتماع سے خطاب کریں گے۔

آگے بڑھتے ہوئے، ساگر پریکرما مرحلہ 9 پومپو ہر فشنگ ہاربر پر پہنچا۔ اس موقع پر محترمہ نیتو کماری پرساد کے ذریعہ تعارفی خطاب کیا گیا جس میں انہوں نے ساگر پریکرما مرحلہ 9 کے بارے میں بتایا اور ماہی گیروں، خواتین، مچھلی پالن کرنے والوں اور دیگر متعلقہ فریقوں کے اہم کردار کا اعتراف کیا۔

**********

 

 

 (ش ح –ا ب ن۔ م ف)

U.No:10535



(Release ID: 1965836) Visitor Counter : 67


Read this release in: English , Hindi