ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی کی وزارت

جناب بھوپیندر یادو کا کہنا ہے کہ ہندوستان نہ صرف گھریلو محاذ پر آگے بڑھ رہا ہے بلکہ ماحولیاتی تبدیلیوں سے نمٹنے کے لیے مختلف بین الاقوامی اتحاد شروع کرکے بین الاقوامی سطح پر بھی مثالیں قائم کر رہا ہے

Posted On: 10 APR 2023 6:23PM by PIB Delhi

ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی اور محنت و روزگار کے مرکزی وزیر بھوپیندر یادو نے کہا ہے کہ ہندوستان نہ صرف گھریلو محاذ پر آگے بڑھ رہا ہے بلکہ بین الاقوامی سولر الائنس (آئی ایس اے)، کولیشن فار ڈیزاسٹر , لچکدار انفراسٹرکچر(سی ڈی آر آئی) اور لیڈرشپ گروپ فار انڈسٹری ٹرانزیشن (ایل ای اے ڈی آئی ٹی) جیسے بین الاقوامی اتحاد شروع کرکےماحولیاتی تبدیلی کا مقابلہ کرنے کے لیے بین الاقوامی سطح پر بھی مثالیں قائم کر رہا ہے۔

لکھنؤ میں نیشنل کلائمیٹ کنکلیو 2023 کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے، اتر پردیش جناب یادو نے مختلف اقدامات کا خاکہ پیش کیا جو ہندوستان نے موسمیاتی میدان میں شروع کیے ہیں اور مرکزی بجٹ 2023-24 میں سبز ترقی پر توجہ مرکوز کی ہے۔ انہوں نے اس کانکلیو میں گرین کلائمیٹ فنڈ (جی سی ایف) ٹیم کی موجودگی کا اعتراف کیا اور تمام شرکاء سے درخواست کی کہ وہ جی سی ایف کے طریقہ کار کے بارے میں گہری سمجھ حاصل کریں اور ماحولیات اورآب و ہوا پر ٹھوس منصوبے تیار کریں۔ انہوں نے پائیدار طرز زندگی کی حوصلہ افزائی کے لیے موسمیاتی تبدیلی کے مسائل پر نوجوانوں کو مثبت اور فعال طور پر شامل کرنے کی اہمیت پر بھی زور دیا۔

ریاست اترپردیش کے وزیر اعلٰی جناب یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ قدیم زمانے سے تحفظ اور انتظامی طرز عمل ہندوستان کی ثقافتی اقدار کا حصہ رہے ہیں، جو ہمدردی اور بقائے باہمی کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں اور اس بات پر روشنی ڈالی کہ موسمیاتی تبدیلی آج سب سے بڑا چیلنج ہے اور اس کا اثر دنیا میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ان چیلنجوں کے درمیان ہمیں بھی راستہ تلاش کرنا ہوگا۔ انہوں نے ریاست اتر پردیش کی طرف سے لاگو کئے جانے والے کئی کامیاب پروجیکٹوں پر بھی روشنی ڈالی۔

محترمہ لینا نندن، سکریٹری ماحولیات نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ موسمیاتی فنانس کے دائرہ کار، پیمانے اور رفتار کو کافی بڑھنا ہوگا۔ ایک ابھرتی ہوئی ترقی پذیر معیشت کے طور پر جہاں پر امید افزا آب و ہوا کے منصوبے موجود ہیں، کمیونٹی کی سطح سمیت مختلف سطحوں پر مواقع موجود ہیں، انہوں نے کہا کہ ہم توقع کرتے ہیں کہ جی سی ایف بھی موسمیاتی اقدامات کے لیے ہماری تیاری کے مطابق جواب دیتا ہے۔

ڈاکٹر ارون کمار سکسینہ، وزیر مملکت، محکمہ ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی، حکومت ہند اس موقع پر اتر پردیش کی اور محترمہ کیرولینا فوینٹس، ڈائریکٹر، گرین کلائمیٹ فنڈ بھی موجود تھیں۔

یہ کانفرنس کوپ-26 میں وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی طرف سے اعلان کردہ بہتر آب و ہوا کی کارروائی کے خطوط پر موسمیاتی کارروائی کو تیز کرنے کی جاری کوششوں کا حصہ ہے۔ اس کانفرنس کو ’’لایف - طرز زندگی برائے ماحولیات‘‘ کے بارے میں زیادہ سے زیادہ آگاہی پیدا کرنے کے لیے بھی ڈیزائن کیا گیا ہے۔

اس کا مقصد ہندوستان کی ریاستوں/ مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے عہدیداروں کو ایک چھت کے نیچے لانا تھا تاکہ آب و ہوا کے میدان میں درپیش چیلنجوں/مسائل پر توجہ مرکوز کی جا سکے اور اسٹیک ہولڈرز کا ایک متحرک نیٹ ورک بنانے کے ساتھ ساتھ مقامی سطح پر اختراعی حل تلاش کیا جا سکے جو ایک دوسرے کے ساتھ رابطے میں رہیں گے۔ کراس کٹنگ تھیمز جیسے رسک گورننس، ٹیکنالوجیز اور اختراعات کے ساتھ ساتھ ملکی اور بین الاقوامی موسمیاتی فنانس۔

******

ش ح۔   ش ت۔ج

Uno-3954



(Release ID: 1915468) Visitor Counter : 99


Read this release in: English , Marathi , Hindi