بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی راستوں کی وزارت

چابہار پورٹ کو آئی این ایس ٹی سی سے جوڑنے کےموضوع پرورکشاپ کا انعقاد

Posted On: 19 JAN 2023 4:53PM by PIB Delhi

نئی دلی، 19 جنوری، 2023 / بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں کی مرکزی وزارت، حکومت ہند نے انڈیا پورٹس گلوبل لمیٹڈ کے اشتراک سے آج ممبئی میں 'چابہار بندرگاہ کو آئی این ایس ٹی سی کے ساتھ جوڑنے' پر ایک ورکشاپ کا انعقاد کیا۔  انٹرنیشنل نارتھ-ساؤتھ ٹرانسپورٹ کوریڈور (آئی این ایس ٹی سی) ایک کثیر موڈل ٹرانسپورٹ روٹ ہے جو بحر ہند اور خلیج فارس کو بحیرہ کیسپین بحیرہ ایران اور شمالی یورپ کے راستے روس میں سینٹ پیٹرزبرگ سے ملاتا ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/imageOZQ6.png

ورکشاپ کے دوران، ایم ڈی-آئی پی جی ایل نے آئی این ایس ٹی سی پر ایک پریزنٹیشن دیا اور ایف ایف ایف اے آئی نے آئی این ایس ٹی سی کی مطالعاتی رپورٹ پر ایک پریزنٹیشن دیا۔ ایران کے پی ایم او کے ڈی جی (ٹرانزٹ، لاجسٹکس اینڈ ایگریمنٹس) خسرو سرائے نے ورکشاپ سے خطاب کیا۔ اس کے بعد سکریٹری،  ایم او پی ایس ڈبلیو کا خطاب ہوا۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001N05Z.jpg

ورکشاپ کے دوران مقررین نے آئی این ایس ٹی سی کے ممبئی (انڈیا) سے شاہد بہشتی بندرگاہ چابہار بذریعہ سمندر، چابہار سے بندر انجلی (بحیرہ کیسپین پر ایک ایرانی بندرگاہ) بذریعہ سڑک، اور پھر جہاز کے ذریعے بحیرہ کیسپین میں چابہار بندرگاہ  تک کے سفر کا ذکر کیا۔  انجلی سے استرخان (روس کی ایک کیسپین بندرگاہ) تک سامان کی نقل و حرکت کا تصور پیش کیا ۔

چابہار کا اسٹریٹجک مقام اسے نقل و حمل کے مرکز کے طور پر ترقی کے لیے موزوں بناتا ہے۔ بندرگاہ کا 16 میٹر گہرا مسودہ بڑی کھیپ کے جہازوں کو سنبھالنے کے لیے موزوں ہے۔ یہ بندرگاہ دنیا کے مصروف ترین تجارتی راستوں کے قریب واقع ہے۔ یہ خطہ ایشیا-یورپ، ایشیا-ایشیاء تجارتی راستوں کے تحت آتا ہے جہاں سے بڑی مقدار میں کارگو منتقل ہوتا ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002UD7P.jpg

آئی این ایس ٹی سی (انٹرنیشنل نارتھ-ساؤتھ ٹرانسپورٹ کوریڈور) روس، یورپ اور وسطی ایشیائی منڈیوں تک ای ایکس آئی ایم کی ترسیل کے لیے لگنے والے وقت کو کم کرنے کے لیے بھارت کا وژن اور پہل ہے۔ راہداری کے کامیاب افتتاح سے بھارت کو روس اور وسطی ایشیائی ممالک سے جوڑنے میں مدد ملے گی۔ چابہار بندرگاہ ایران میں واقع ہے، جو خطے بالخصوص وسطی ایشیا کے لیے تجارتی راہداری کا مرکز ہے۔

ورکشاپ کا اختتام آئی پی جی ایل کے ڈائریکٹر (آپریشنز) کے شکریہ کے ساتھ ہوا۔

.................

ش ح ۔ ا س ۔ ت ح

U - 724

 



(Release ID: 1892770) Visitor Counter : 148


Read this release in: Hindi , English