ریلوے کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

بھارتی  ریلوے کے لیے امرت بھارت اسٹیشن اسکیم


امرت بھارت اسٹیشن اسکیم طویل مدتی وژن کے ساتھ مسلسل بنیادوں پر اسٹیشنوں کی ترقی کا تصور پیش کرتی ہے

اس اسکیم کا مقصد ریلوے اسٹیشنوں کے ماسٹر پلان کی تیاری اور سہولیات کو بڑھانے کے لیے مرحلہ وار ماسٹر پلان پر عمل درآمد کرنا ہے

مختلف گریڈز/ قسم کے ویٹنگ ہالز کو  یکجا  کرنے کی کوشش کی جائے گی اور جہاں تک ممکن ہو اچھی کیفے ٹیریا /خوردہ سہولیات فراہم کی جائیں گی

تمام زمروں کے اسٹیشنوں پر اعلیٰ سطح کے پلیٹ فارم  (760-840 مل میٹر) فراہم کیے جائیں گے؛ سڑکوں کو چوڑا کرنے، ناپسندیدہ ڈھانچے کو ہٹانے، مناسب طریقے سے ڈیزائن کیے گئے نشانات، پیدل چلنے والوں کے لیے مخصوص راستے، اچھی طرح سے منصوبہ بند پارکنگ ایریاز، بہتر روشنی وغیرہ کے ذریعے ہموار رسائی کو یقینی بنانے کے لیے اسٹیشن نقطہ نظر کو بہتر بنایا جائے گا

اسٹیشنوں پر دیویانگ جنوں کے لیے سہولیات ریلوے بورڈ کی طرف سے جاری کردہ وقتاً فوقتاً رہنما خطوط کے مطابق ہوں گی

Posted On: 27 DEC 2022 4:33PM by PIB Delhi

نئی دلی،27 دسمبر، 2022/ ریلوے کی وزارت نے "امرت بھارت اسٹیشن" اسکیم کے نام سے اسٹیشنوں کی جدید کاری کے لیے ایک نئی پالیسی تیار کی ہے۔ امرت بھارت اسٹیشن اسکیم طویل مدتی وژن کے ساتھ مسلسل بنیادوں پر اسٹیشنوں کی ترقی کا تصور کرتی ہے۔ یہ طویل مدتی ماسٹر پلاننگ اور اسٹیشن کی ضروریات اور سرپرستی کے لیے ماسٹر پلان کے مطابق مختلف عناصر کے نفاذ پر مبنی ہے۔

وسیع مقاصد:

  • اس اسکیم کا مقصد ریلوے اسٹیشنوں کے ماسٹر پلان کی تیاری اور ماسٹر پلان کو مرحلہ وار نافذ کرنا ہے تاکہ سہولیات کو بڑھایا جا سکے جس میں کم از کم ضروری سہولیات (ایم ای اے) شامل ہیں اور طویل مدت میں اسٹیشن پر روف  پلازہ اور سٹی سینٹر قائم کرنا ہے۔
  • اس اسکیم کا مقصد متعلقہ فریقوں   کی ضروریات کو پورا کرنا، دستیاب فنڈ اور ترجیح کی بنیاد پر اسٹیشن کے استعمال کے لیے  مطالعہ کرنا ہے۔
  • یہ اسکیم نئی سہولتوں کو متعارف کرانے کے ساتھ ساتھ موجودہ سہولیات کی اپ گریڈیشن اور تبدیلی کے لیے بھی کام کرے گی۔
  • یہ اسکیم ان اسٹیشنوں کا بھی احاطہ کرے گی جہاں تکنیکی  اقتصادی طور پر قابل عمل ہونے کے مطالعات کیے گئے ہیں یا کیے جا رہے ہیں لیکن ابھی تک روف پلازوں کی تعمیر کا کام شروع نہیں کیا گیا ہے، جس سے ماسٹر پلان کے مرحلہ وار مناسب طریقے سے عمل درآمد کو یقینی بنایا جاسکے  اور ڈھانچے کی منتقلی اور فیزنگ منصوبوں میں افادیت پر زیادہ زور دیا جا سکے۔

مندرجہ بالا مقاصد کو پورا کرنے کے لیے، امرت بھارت اسٹیشن اسکیم کے تحت منتخب کیے گئے اسٹیشنوں کے لیے درج ذیل وسیع دائرہ کار کا تصور کیا گیا ہے:

  • ماسٹر پلانز  کی ابتدائی تفصیلات کے مطابق مستقبل میں روف پلازہ  کی تعمیر کے لیے یہ سب سے موزوں  مقام ہے ۔
  • اس اسکیم میں اگواڑے کی لاگت سے موثر بہتری، وسیع، اچھی طرح سے روشن جمالیاتی طور پر خوشنما داخلی دروازے کی فراہمی کا تصور کیا گیا ہے۔
  • عمارت کے موجودہ استعمال پر نظر ثانی کی جائے گی اور اور اسٹیشنوں  کے داخلی راستوں کے قریب مسافروں کے حق میں زیادہ رقبہ جاری کیا جائے گا اور ریلوے کے دفاتر کو مناسب طریقے سے منتقل کیا جائے گا۔
  • اس اسکیم کا مقصد فالتو/ پرانی عمارتوں کو لاگت کے موثر طریقے سے منتقل کرنا ہے تاکہ مسافروں سے متعلق اعلیٰ ترجیحی سرگرمیوں کے لیے جگہ چھوڑی جائے اور مستقبل کی ترقی کو آسانی سے انجام دیا جاسکے۔ نئی عمارتوں کی تخلیق سے عام طور پر پرانے ڈھانچے کی منتقلی یا گردش کو بہتر بنانے کے لیے ڈھانچے کی منتقلی یا انتظار گاہوں کے سائز کو بہتر بنانے کے لیے ڈھانچے کی فراہمی کے علاوہ دیگر چیزوں سے گریز کیا جانا چاہیے۔
  • مختلف درجات / اقسام کے ویٹنگ ہالز کو یکجا کرنے اور جہاں تک ممکن ہو اچھی کیفے ٹیریا/ خوردہ سہولیات فراہم کرنے کی کوشش کی جائے گی۔ ویٹنگ ہالز میں مناسب نچلی سطح کی پارٹیشنز کی جا سکتی ہیں۔
  • ایک اسٹیشن ایک پروڈکٹ کے لیے کم از کم دو اسٹالز کا انتظام کیا جائے گا۔
  • ایگزیکٹو لاؤنجز اور چھوٹی کاروباری میٹنگز کے لیے جگہ بھی بنائی جائے گی۔
  • ایک نمایاں مقام پر گردش کرنے والے علاقے کے ہر طرف کم از کم ایک جمالیاتی طور پر ڈیزائن کردہ ہورڈنگ (سائنیج) اہم معلومات وغیرہ کی نمائش کے لیے کھڑی کی جائے گی۔ اس طرح کے ہورڈنگ کا سائز 10m x 20 m سے کم نہیں ہونا چاہیے۔
  • سڑکوں کو چوڑا کرنے، ناپسندیدہ ڈھانچے کو ہٹانے، مناسب طریقے سے ڈیزائن کیے گئے اشارے، پیدل چلنے والوں کے لیے مخصوص راستے، اچھی طرح سے منصوبہ بند پارکنگ ایریاز، بہتر روشنی وغیرہ کے ذریعے ہموار رسائی کو یقینی بنانے کے لیے اسٹیشن کے نقطہ نظر کو بہتر بنایا جائے گا۔ ضروری بہتری کے لیے مقامی حکام کے ساتھ ضروری رابطہ قائم کیا جانا چاہیے۔
  • لینڈ اسکیپنگ، گرین پیچ اور مقامی فن و ثقافت کے عناصر کو اسٹیشن استعمال کرنے والوں کے لیے ایک خوشگوار تجربہ فراہم کرنے کے لیے استعمال کیا جانا چاہیے۔  مناسب پیشہ ور افراد کی مدد سے کی جانی چاہیے ۔
  • سیکنڈ انٹری اسٹیشن کی عمارت اور گردش کرنے والے علاقے کو اسٹیشن کی ضروریات کے مطابق بہتر بنایا جائے گا۔ جہاں بھی فی الحال دوسری داخلی عمارت فراہم نہیں کی جا رہی ہے وہاں گردش کرنے والے علاقے کے لیے اچھی طرح سے منصوبہ بندی کی جائے گی اور مقامی اداروں کے ساتھ رابطہ قائم کیا جائے گا تاکہ شہر کے ماسٹر پلان میں دوسرے داخلے کے لیے اپروچ سڑکیں رکھی جائیں اور اسٹیشن کے ارد گرد کی ترقی کو مناسب طریقے سے کنٹرول کیا جائے۔
  • ہر زمرے کے اسٹیشنوں پر اعلیٰ سطحی پلیٹ فارم (760-840  ایم ایم)  فراہم کیے جائیں گے۔ پلیٹ فارم کی لمبائی عام طور پر 600 میٹر ہوگی۔
  • پلیٹ فارم شیلٹرز کی لمبائی، محل وقوع اور فیزنگ کا فیصلہ اسٹیشن کے استعمال کی بنیاد پر کیا جائے گا۔
  • پلیٹ فارم لائنوں اور لائنوں پر ٹرین کی دیکھ بھال کی سہولیات کے ساتھ بیلسٹ لیس ٹریک فراہم کیے جائیں گے۔
  • پلیٹ فارم کے علاقوں کی نکاسی انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔ جہاں تک ممکن ہو نالیوں کی خود صفائی کرنے پر خصوصی زور دیا جائے گا۔ مناسب کراس ڈرین، سمپ اور پمپ کا انتظام فراہم کیا جا سکتا ہے جہاں قدرتی ڈھلوانیں کافی نہیں ہیں۔ نالیوں کو جمالیاتی طور پر ڈیزائن کیے گئے چوری مزاحم کور سے ڈھانپ دیا جا سکتا ہے۔
  • کیبلز کو جمالیاتی طور پر ڈیزائن کردہ ڈکٹ میں ڈھانپنا چاہیے اور مستقبل کی کیبلز کے لیے بھی انتظام ہونا چاہیے۔
  • ماسٹر پلان پارسل ہینڈلنگ اسپرس، اسٹوریج اور ہینڈلنگ کی سہولیات وغیرہ کے لیے جگہ کو نشان زد کرے گا۔
  • ایسے انتظامات کیے جا سکتے ہیں کہ جہاں تک ممکن ہو اسٹیشن اپنے صارفین کو مفت وائی فائی تک رسائی فراہم کرے۔ ماسٹر پلان میں جی  5  ٹاورز کے لیے مناسب جگہیں مختص ہونی چاہئیں۔
  • اسٹیشن کے عوامی مقامات کے اندر عناصر جیسے فرش، دیواریں، ڈھانچے، فرنیچر، سینیٹری کی متعلقہ اشیاء وغیرہ کی مٹیریل فنشز جہاں سطحیں یا تو مسافروں کے براہ راست جسمانی رابطے میں آتی ہیں یا انہیں نظر آتی ہیں انتہائی پائیدار ہونی چاہئیں (ترجیحی طور پر دھونے کے قابل) ، عام طور پر ڈسٹ پروف اور دیکھ بھال کے کم ضرورت ہوالی ہونی چاہئیں۔
  • ویٹنگ ہالز، پلیٹ فارمز، ریٹائرنگ رومز، دفاتر پر دستیاب فرنیچر کا جائزہ لیا جائے گا اور اس علاقے کے ریلوے اسٹیشنوں کے لیے زیادہ آرام دہ اور پائیدار فرنیچر کے لیے اقدامات کی منصوبہ بندی کی جائے گی۔ مرحلہ وار، ملٹی ڈیزائن فرنیچر کو ختم کرنے کی منصوبہ بندی کی جائے گی۔
  • علامات کو  دلچسپی انداز میں ڈیزائن کیا جانا چاہیے اور انہیں خوبصورت اور اچھی جگہ پر لگایا جانا چاہیے تاکہ جمالیاتی لحاظ سے خوش کن ہونا چاہیے۔
  • این ایس جی/1-4 اور ایس جی/1-2 کیٹیگری اسٹیشنوں پر مسافروں کی تعداد کے قطع نظر ایسکلیٹر فراہم کیے جا نے چاہئیں ۔
  • اسٹیشنوں پر دیویانگجن کے لیے سہولیات ریلوے بورڈ کی طرف سے وقتاً فوقتاً جاری کردہ رہنما خطوط کے مطابق ہونے چاہئیں ۔
  • اسٹیشن میں مناسب جگہ پر رسمی جھنڈے فراہم کیے جا نے چاہئیں ۔
  • اسٹیشن سے گزرنے والی ٹرینوں کے مسافروں کے لیے کم از کم دو اسٹیشن کے نام کے بورڈز  ایل ای ڈی پر مبنی ہونے چاہئیں۔
  • گردش کرنے والے علاقے کی باؤنڈری وال کو عام طور پر باہر سے اسٹیشن کا نظارہ نہیں روکنا چاہیے۔ رسائی کو لوہے/اسٹیل کی گرل باڑ سے کنٹرول کیا جا نا چاہیے۔
  • تمام زمروں کے اسٹیشنوں پر خواتین اور دیویانگجن کے لیے علیحدہ انتظامات کے ساتھ کافی تعداد میں بیت الخلاء فراہم کیے جائیں گے۔ بیت الخلا کی جگہ اسٹیشن کے استعمال کے لیے موزوں، آسانی سے نظر آنے والی اور قابل رسائی ہونی چاہیے۔
  • فنڈز کی دستیابی اور موجودہ اثاثوں کی حالت کے مطابق پائیدار اور ماحول دوست حل کے لیے رفتہ رفتہ منتقل کیا جانا چاہیے۔

فراہم کی جانے والی سہولیات اور سہولیات کا پیمانہ اوپر دیے گئے وسیع رہنما اصولوں، اسٹیشن پر لوگوں کی تعداد، صارفین، مختلف محکموں اور مقامی حکام سمیت متعلقہ فریقوں کی مشاورت اور ڈی آر ایم کی منظوری کے ساتھ طے کیا جائے گا۔

۔۔۔
 

ش ح۔و ا ۔ ع ا                                                   

U14421



(Release ID: 1886947) Visitor Counter : 167