بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی راستوں کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav

بھارت-ناروے نے ماحول کے لئے سازگار بحری سیکٹر کے لیے ہاتھ ملایا


بندرگاہوں، جہازرانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت بحری سیکٹر میں ماحولیات کے موافق حل تلاش کر رہی ہے

پائیدار اور ماحول دوست جہاز کی ری سائیکلنگ کے لیے بھارت-ناروے کی مشترکہ کوشش

وقت کی ضرورت: سمندری صنعت میں صنفی مساوات

Posted On: 17 NOV 2022 7:45PM by PIB Delhi

بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت (ایم او پی ایس ڈبلیو) ایم آئی وی 2030 کے ہدف کے طور پر بحری سیکٹر کو ترقی دینے کے لیے تندہی سے کام کر رہی ہے۔ اس سلسلے میں 17 نومبر 2022 کو ممبئی میں ناروے-بھارت مشترکہ ورکنگ گروپ بحری میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ اس میٹنگ کی مشترکہ صدارت جناب راجیش کمار سنہا، ایڈیشنل سکریٹری، بندرگاہوں، شاہراہوں اور آبی گزرگاہوں کی وزارت (ایم او پی ایس ڈبلیو) نے جناب امیتابھ کمار، ڈائریکٹر جنرل آف شپنگ، ڈائریکٹوریٹ جنرل آف شپنگ، جناب کمار سنجے بریار، ایڈیشنل جنرل، ڈائریکٹر جنرل آف شپنگ، ڈائریکٹوریٹ جنرل آف شپنگ جناب اجیت سوکمارن، چیف سرویئر (آزادانہ چارج)، ڈائریکٹوریٹ جنرل آف شپنگ جناب مدھو نائر، کوچین شپ یارڈ لمیٹڈ کے چیئرمین اور ایم ڈی، بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت کے دیگر سینئر افسران کی موجودگی میں کی۔ ناروے کے وفد کی قیادت وزارت تجارت، صنعت اور ماہی پروری کے ڈائریکٹر جنرل جناب اوتار اوسٹنیس نے کی۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image001AN2C.jpg

ماحولیات کے لئے سازگار سمندری مستقبل پر ناروے-بھارت باہمی تعاون پر نتیجہ خیز بات چیت ہوئی۔ دونوں حکومتوں نے ماحولیات کے لئے سازگار بحری سیکٹر کے لیے اپنے اپنے وژن اور منصوبے پیش کیے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002SYF4.jpg

بندرگاہوں، جہازرانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت کے ایڈیشنل سکریٹری نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ ناروے کے ساتھ سمندری تجارت 1600 سے پرانی ہے۔ جب کہ ناروے کے پاس بحری سیکٹر میں تکنیکی مہارت حاصل ہے اور ہندوستان کے پاس بحری سیکٹر کی ترقی اور تربیت یافتہ بحری جہازوں کی بڑی تعداد ہے، جو دونوں ممالک کو فطری طور پر تکمیلی شراکت دار بناتی ہے۔

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image003W51L.jpg

سمندر سے متعلق بھارت-ناروے مشترکہ ورکنگ گروپ کی میٹنگیں مستقل بنیادوں پر منعقد کی جا رہی ہیں۔ سمندر سے متعلق 7ویں مشترکہ ورکنگ گروپ کی میٹنگ نومبر 2019 میں اوسلو میں منعقد ہوئی۔ 7ویں میٹنگ کے دوران جہاز سازی میں تعاون، سمندری جہازوں کی مہارتوں کو بڑھانے اور ماحول دوست جہازوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

18نومبر2022 کو منعقدہ 8ویں مشترکہ ورکنگ گروپ کی میٹنگ میں مستقبل کی ترسیل کے لیے متبادل ایندھن جیسے سبز امونیا اور ہائیڈروجن کے استعمال پر بحث ہوئی۔ ناروے کا گرین شپنگ پروگرام کامیاب رہا ہے اور اجلاس میں تجربہ اور مہارت کا تبادلہ کیا گیا۔ ناروے نے کہا کہ وہ کاربن کے صفر اخراج کے حل کے لیے بھارت کے ساتھ پابند عہد ہے۔

انڈیا ناروے گرین وویاج 2050 پروجیکٹ کا حصہ ہے، دونوں فریقوں نے مشترکہ مقاصد کے حصول کے لیے رضامندی، لگن، شراکت داری اور صلاحیت سازی پر اتفاق کیا۔

ہندوستان جہازوں کی ری سائیکلنگ کے لیے ہانگ کانگ کنونشن کا دستخط کنندہ ہے۔ آج کی میٹنگ میں ہندوستان نے درخواست کی کہ یورپی یونین کے ضابطے کو غیر یورپی ممالک کی ری سائیکلنگ میں رکاوٹ نہیں بننی چاہیے جو بین الاقوامی کنونشن کے مطابق ہے۔ ناروے سے درخواست کی گئی تھی کہ وہ ہندوستان میں جہاز کی ری سائیکلنگ کو طول نہ دے کیونکہ ہندوستانی ری سائیکلرز نے بہت زیادہ سرمایہ کاری کی ہے۔

ہندوستان نے جدید ترین بحری ٹیکنالوجی جیسے میری ٹائم ٹریننگ کے دائرہ کارایم اے ایس ایس وغیرہ میں تعاون پر زور دیا ہے۔ ہندوستانی فریق نے ناروے سے پولر واٹر نیویگیشن کے علاقے میں شپ بورڈ ٹریننگ اور شپ بورڈ ٹریننگ کو بڑھانے کی درخواست کی ہے۔

ممبئی میں ناروے کے قونصل جنرل جناب آرنے جان فلو نے مزید کہا کہ ‘‘ہم نے اس بات پر بھی تبادلہ خیال کیا کہ کس طرح سمندری جہازوں کی تربیت اور بھرتی کو مزید فروغ دیا جائے۔ ہمیں اپنے بحری جہازوں کو چلانے کے لیے ہنر مند اور حوصلہ افزا بحری جہازوں کی ضرورت ہے اور ہمیں خواتین کو سوار کرنے کی ضرورت ہے۔’’

بندرگاہوں، جہازرانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت کے سکریٹری نے کہا کہ بندرگاہوں، جہازرانی اور آبی گزرگاہوں کی وزارت نے میری ٹائم انڈیا ویژن 2030 تیار کیا ہے جس میں مختلف سمندری شعبوں جیسے بندرگاہوں، جہاز رانی اور آبی گزرگاہوں میں 150 سے زیادہ اقدامات کی نشاندہی کی گئی ہے جو صلاحیت میں اضافہ، آپریشنل کارکردگی میں بہتری، جہاز کی تعمیر، ری سائیکلنگ اور مرمت سے متعلق شعبوں میں ترقی، معیار، بحری تعلیم اور ملک میں کروز ٹورزم جیسے نئے شعبوں کی ترقی میں بھی معاونت پر توجہ مرکوز کرتے ہیں۔ 

ناروے کا وفد انمارکو، گرین شپنگ کنکلیو اور میری ٹائم شیو کانفرنس میں بھی حصہ لے گا۔ میری ٹائم ایس ایچ ای او کانفرنس کو ناروے کی حمایت حاصل ہے اور اس کی توجہ سمندری تنوع اور پائیداری بشمول میری ٹائم انڈسٹری میں صنفی مساوات پر مرکوز ہے۔

جناب اوتار اوسٹنیس ڈائریکٹر جنرل، میری ٹائم پالیسی اور ساحلی ترقی کے محکمے نے ہندوستانی وفد کو اگلے مجوزہ 9ویں جوائنٹ ورکنگ گروپ کی میٹنگ کے لیے ناروے مدعو کیا۔

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

ش ح۔ م ع۔ع ن

 (U: 12655)



(Release ID: 1876910) Visitor Counter : 33


Read this release in: English , Hindi