وزارت دفاع

وزیردفاع جناب راج ناتھ سنگھ نے دفاعی اتاشیوں کو ہندوستان اور دوست بیرونی ممالک کے باہمی دفاعی تعاون کے درمیان پل قرار دیا


اُن سےآتم نربھر بھارت کے تحت ہندوستانی دفاعی پیداواری صلاحیتوں کو فروغ دینے کی درخواست کی

Posted On: 13 OCT 2022 6:20PM by PIB Delhi

وزیر دفاع جناب راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ دفاعی اتاشی (ڈی اے) ہندوستان اور دوست بیرونی ممالک کے درمیان باہمی دفاعی تعاون کے لیے پل ہیں، انہوں نے ان سے درخواست کی کہ وہ آتم نربھر بھارت کے تحت ہندوستانی دفاعی پیداواری صلاحیتوں کو فروغ دیں اور پبلک اور پرائیویٹ دونوں شعبوں میں ہندوستانی دفاعی پیداوار کے شعبے میں ہونے والی تکنیکی اختراعات کو سمجھیں تاکہ ان کی منظوری والے ممالک میں ان کی نمائش کی جا سکے اور ان کو فروغ دیا جا سکے۔ وہ 13 اکتوبر 2022 کو نئی دہلی میں منعقد ہونے والی دو روزہ چوتھی ڈی اےکانفرنس میں افتتاحی خطاب کر رہے تھے۔

 

ڈی اے کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے، وزیر دفاع نے کہا کہ دفاعی اتاشی بین الاقوامی تعاون کو مضبوط بناکر اور مسلح افواج کی صلاحیتوں اور تیاریوں کو بڑھاکر خارجہ پالیسی کے مطابق قومی مفادات کے تحفظ میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔ ۔ انہوں نے ان پر زور دیا کہ وہ خود انحصاری کے حصول کے حکومت کے وژن کو آگے بڑھائیں۔انہوں نے اسےمسلسل بدلتے ہوئے عالمی سلامتی کے منظر نامے کے درمیان  عالمی سطح پر ہندوستان کو مضبوط اور باعزت بنانے کا واحد راستہ قرار دیا ۔ تاہم، انہوں نے کہا کہ 'آتم نربھربھارت' کا مطلب باقی دنیا سے الگ تھلگ ہونا  نہیں  بلکہ جدید فوج کے ذریعے قومی سلامتی اور اسٹریٹجک خود مختاری کو یقینی بنانا ہے۔

 

اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ ہندوستان کو درآمدات پر انحصار نہیں کرنا چاہئے اور نہ ہی وہ ایسا کرسکتا ہے، جناب راج ناتھ سنگھ نے مستقبل کے سیکورٹی چیلنجوں سے نمٹنے کے لئے تیار رہنے کی خاطردفاعی مینوفیکچرنگ میں خود انحصاری حاصل کرنے کے لئے حکومت کے عزم کا اعادہ کیا۔ انہوں نے دفاعی اتاشیوں کو دفاع  کے شعبے میں ''آتم نر بھربھارت'' کا پیش خیمہ قرار دیا۔

 

وزیر دفاع  نے خود انحصاری حاصل کرنے کے لیے وزارت دفاع کی طرف سے اٹھائے گئے اقدامات کا ذکر کیاجن میں نجی شعبے کی شراکت داری کی حوصلہ افزائی؛ مثبت مقامی فہرستوں کا اجرا؛ اتر پردیش اور تمل ناڈو میں دفاعی راہداریوں کا قیام؛ نئی پیداوار اور برآمدی پالیسیوں کا نفاذ؛ جدت کو فروغ دینا اور ایف ڈی آئی کی حد بڑھانا شامل ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ دفاعی اتاشی مختلف ممالک میں ان فیصلوں کے بارے میں بیداری پیدا کرکے ہندوستان میں سرمایہ کاری لاسکتے ہیں۔ انہیں ایک پل قرار دیتے ہوئے، انہوں نے زور دیا کہ دفاعی اتاشی اپنے اپنے ممالک کے ساتھ رابطہ کرسکتے ہیں اور دونوں اطراف کی ضروریات کو پورا کرنے میں مدد کرسکتے ہیں۔

 

جناب راجناتھ سنگھ نے کہا کہ "ہندوستان عالمی معیار کے اور کم لاگت والے ہتھیار، آلات اور پلیٹ فارم تیار کر رہا ہے، جسے بین الاقوامی سطح پر تسلیم کیا جا رہا ہے۔ ہماری دفاعی مصنوعات نہ صرف عالمی معیار کی اور قابل اعتماد ہیں بلکہ نسبتاً سستی  بھی ہیں۔'' ۔

 

دو روزہ کانفرنس میں مختلف بریفنگ سیشن ہوں گے جس میں چیف آف سروسز، سیکرٹری خارجہ اور وزارت دفاع کے دیگر معززین ،دفاعی تعاون سے متعلق مختلف سفارتی، اسٹریٹجک اور فعال امور پر ڈی اے سے خطاب کریں گے۔

 

اس کانکلیو کے بعد ڈی اے  ،ڈیف ایکسپو-22 میں شرکت کرنے والے دوست غیر ملکی ممالک کے وفود کے ساتھ بھی جائیں گے ۔یہ ایکسپو 17 اکتوبر سے گجرات کے گاندھی نگر میں شروع ہو رہا ہے۔

****

 

ش ح ۔ م م ۔  م ر

U.NO: 11382



(Release ID: 1867567) Visitor Counter : 139


Read this release in: English , Hindi