وزارت دفاع

ڈی آر ڈی او نے اڈیشہ کے ساحل سے درمیانے فاصلے کے زمین سے فضا میں مار کرنے والے میزائل کے بھارتی فوج کے ورژن کا کامیاب تجربہ کیا

Posted On: 27 MAR 2022 4:58PM by PIB Delhi

نئی دہلی:27؍مارچ2022: دفاعی تحقیق و ترقی کے ادارے (ڈی آر ڈی او) نے 27 مارچ 2022 کو اڈیشہ کے ساحل سے دور چاندی پور میں انٹیگریٹڈ ٹیسٹ رینج میں میڈیم رینج سرفیس ٹو ایئر میزائل (ایم آر ایس اے ایم) کے انڈین آرمی ورژن کے دو کامیاب تجربے کئے۔ فلائٹ ٹیسٹ تیز رفتار فضائی اہداف کے خلاف براہ راست فائرنگ کے ٹرائلز کے حصے کے طور پر کیے گئے تھے۔ میزائلوں نے ہوائی اہداف کو روکا اور انہیں مکمل طور پر تباہ کر دیا، دونوں رینجوں پر براہ راست حملے درج کیے گئے۔ پہلا لانچ درمیانی اونچائی والے طویل فاصلے کے ہدف کو روکنا تھا اور دوسرا کم اونچائی والے مختصر فاصلے کے ہدف کی صلاحیت کو ثابت کرنا تھا۔

یہ ایم آر ایس اے ایم ویرینٹ ایک سطح سے ہوا میں مار کرنے والا میزائل ہے جسے مشترکہ طور پر ڈی آر ڈی او اور اسرائیل ایرو اسپیس انڈسٹریز (آئی اے آئی)، اسرائیل نے ہندوستانی فوج کے استعمال کے لیے تیار کیا ہے۔ ایم آر ایس اے ایم آرمی ویپن سسٹم میں ملٹی فنکشن راڈار، موبائل لانچر سسٹم اور دیگر گاڑیاں شامل ہیں۔ پرواز کے ٹیسٹ ہتھیاروں کے نظام کے ساتھ ڈیلیوریبل اعداد و شمار میں کئے گئے تھے۔ ہتھیاروں کے نظام کی کارکردگی کی توثیق رینج آلات جیسے راڈار، الیکٹرو آپٹیکل ٹریکنگ سسٹم اور آئی ٹی آر، چاندی پور کی طرف سے تعینات ٹیلی میٹری کے ذریعے کی گئی پرواز کے ڈیٹا کے ذریعے کی گئی۔ فلائٹ ٹیسٹ ڈی آر ڈی او اور ہندوستانی فوج کے سینئر عہدیداروں کی موجودگی میں کیا گیا۔

وزیر دفاع جناب راج ناتھ سنگھ نے ایم آر ایس اے ایم- آرمی کے کامیاب فلائٹ ٹرائلز کے لیے ،ڈی آر ڈی او، ہندوستانی فوج اور صنعت کو مبارکباد دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ’’دونوں کامیاب تجربات سے ہتھیاروں کے نظام کی قابلیت کا پتہ چلتا ہے کہ وہ اہم فاصلے پر اہداف کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔‘‘

ڈاکٹر جی ستیش ریڈی، سکریٹری، ڈپارٹمنٹ آف ڈیفنس ریسرچ اینڈ ڈیولپمنٹ اور چیئرمین، ڈی آر ڈی او نے ایم آر ایس اے ایم کے آرمی ورژن کے کامیاب فلائٹ ٹیسٹ میں شامل ٹیموں کی ستائش کی اور کہا کہ یہ ٹیسٹ ’آتم نر بھر بھارت‘ کے لیے بڑی کامیابیاں ہیں۔

 

https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/PIC11ZM8.jpeg

 

************

ش ح۔م ع۔ع ن

(U: 3303)



(Release ID: 1810344) Visitor Counter : 181