امور صارفین، خوراک اور عوامی تقسیم کی وزارت

موجودہ ربیع مارکٹنگ  سیزن کے دوران گذشتہ سال کی اسی مدت کے مقابلہ میں تقریبا 65 فیصد زیادہ گندم خریدی گئی

مرکزی خریداری ایجنسیوں نے اب تک 299.16 ایل ایم ٹی سے زیادہ گندم ایم ایس پی پر حاصل کی ہے۔ 29.46 لاکھ کسانوں نے ربیع مارکٹنگ سیزن خریداری  کارروائیوں سے فائدہ اٹھایا


جاری  خریف مارکیٹنگ سیزن 2021-2020اور آر ایم ایس میں 721.97 ایل ایم ٹی سے زیادہ دھان خریدا گیا۔ تقریبا 108.37 لاکھ کسانوں نے کے ایم ایس کی جاری خریداری کارروائیوں سے فائدہ اٹھایا

حکومت نے اپنی نوڈل ایجنسیوں کے ذریعے 6،27،276.56 ایم ٹی  دالوں اور تلہن کی خریداری کی

Posted On: 04 MAY 2021 8:12PM by PIB Delhi

نئی دہلی ، 04مئی۔ 2021/

جیسا کہ پچھلے سیزن میں کیا گیا تھا، جاری آر ایم ایس 2021-22 میں گندم کی خریداری ریاست ، پنجاب ، ہریانہ ، اترپردیش ، مدھیہ پردیش ، راجستھان ، اتراکھنڈ ، چندی گڑھ ، ہماچل پردیش ، دہلی ، گجرات جموں وکشمیر اور بہار کی ایم ایس پی میں خریداری کرنے والی ریاستوں میں خوش اسلوبی سے جاری ہے اور اب تک (03.05.2021 تک) گندم کے 299.16  ایل ایم ٹی سے زیادہ کی گندم خریدی گئی ہے جبکہ گزشتہ سال اسی مدت 181.37 ایل ایم ٹی خریداری ہوئی تھی۔ تقریبا 29.46 لاکھ کسانوں کو پہلے سے ہی جاریہ  آر ایم ایس حصولی کارروائیوں سے فائدہ اٹھایا جا چکا ہے ، جس کی قیمت ایم ایس پی قیمت ہے۔ 59،083.37 کروڑ ہے۔

2.jpg 1.jpg

 

گذشتہ سال اسی مدت کے دوران  665.02 ایل ایم ٹی کی خریداری کے مقابلہ میں رواں سال خریف 2020-21 میں دھان کی خریداری کا حصول آسانی سے جاری  ہے۔721.97 ایل ایم ٹی سے زیادہ دھان (خریف فصل 705.27) ایل ایم ٹی اور ربیع فصل 16.70 ایل ایم ٹی بھی شامل ہے). کی خریداری کی گئی۔ تقریبا  108.37 لاکھ کسانوں کو پہلے ہی سے کے ایم ایس خریداری سے فائدہ   ہوچکا ہے۔ جس کی ایم ایس پی قیمت  1،36،307.90 کروڑ روپے ہے۔

 

1.png

 

 مزید یہ کہ ریاستوں کی طرف سے دی گئی تجویز کی بنیاد پر ، تامل ناڈو ، کرناٹک ، مہاراشٹر ، تلنگانہ ، گجرات ، ہریانہ، مدھیہ پردیش ، اترپردیش ، اوڈیشہ ، راجستھان اور آندھرا پردیش ریاستوں کے لئے خریف مارکیٹنگ سیزن 2021-2020اور ربیع مارکیٹنگ سیزن 2021 کی  107.08 لاکھ میٹرک ٹن دال اور تلہن کی خریداری کے لئے منظوری دی گئی۔ ، پرائس سپورٹ اسکیم (پی ایس ایس) کے تحت  آندھرا پردیش ، کرناٹک ، تمل ناڈو اور کیرالہ ریاستوں کے لئے  1.23  ایل ایم ٹی کھوپرا   (بارہ  ماسی فصل) کی خریداری کے لئے بھی منظوری دے دی گئی تھی۔ دوسری ریاستوں / رکز کے زیر انتظام علاقوں کے لئے ، پی ایس ایس کے تحت دالوں ، تلہن اورکھوپرا کی خریداری کے لئے تجاویز کی وصولی پر بھی منظوری دی جائے گی تاکہ ان فصلوں کے عمومی سوالنامہ گریڈ کی خریداری براہ راست رجسٹرڈ کسانوں سے سال2021-2020 کے لئے مشتہر کردہ ایم ایس پی پر کی جاسکے۔ اگر ریاست کی نامزد خریداری ایجنسیوں کے ذریعہ مرکزی نوڈل ایجنسیوں کے ذریعہ متعلقہ ریاستوں / ریاستوں کی خطوں میں باضابطہ کٹائی کی مدت کے دوران مارکیٹ کا نرخ MSP سے نیچے جاتا ہے۔

 

03.05.2021 تک ، حکومت نے اپنی نوڈل ایجنسیوں کے ذریعہ مونگ ، اورد ، تور ، چنا، مسور ، مونگ پھلیوں ، سرسوں کے بیج اور سویابین کی 6،27،276.56 ایم ٹی  خریداری کی ہے جس کی ایم ایس پی3289.01کروڑ روپے ہے۔ خریف2021-202 اور ربیع 2021 کے تحت تامل ناڈو ، کرناٹک ، آندھرا پردیش ، مدھیہ پردیش ، مہاراشٹرا ، گجرات ، اترپردیش ، تلنگانہ ، ہریانہ اور راجستھان میں 3،98،050 کروڑ کسانوں کو فائدہ پہنچا رہا ہے۔

 

اسی طرح ، 5089 ایم ٹی کھوپرا (بارہ ماسی فصل) جس کی ایم ایس پی ویلیو 5.2.40 کروڑ روپے ہے  خریدا گیاجس میں 03.05.2021 تک کرناٹک اور تمل ناڈو میں 3961 کسانوں کو فائدہ پہنچایا گیا ہے۔ متعلقہ ریاستوں / مرکز کے زیر انتظام علاقے کی حکومتیں دالوں اور تلہن کی دالوں کی آمد کی بنیاد پر متعلقہ ریاستوں کے فیصلہ کے مطابق تاریخ سے خریداری شروع کرنے کے لئے ضروری انتظامات کر رہی ہیں۔

7.jpg 6.jpg

 

****

 ( ش ح ۔س ب ۔رض)

U- 4199

 



(Release ID: 1716429) Visitor Counter : 8


Read this release in: English , Hindi , Punjabi