ماحولیات، جنگلات اور موسمیاتی تبدیلی کی وزارت

درخت اگانے کے لئے  معاوضے میں اضافہ کرکے اور جنگلوں کے معیار  کو بہتر بناکر جنگلاتی زمین اور ایکو نظام خدمات کے نقصا ن کی بھر پائی کے لئے درخت اگانے  کے  لئے  معاوضے کے فنڈ کے بندوبست اور پلاننگ اتھارٹی فنڈ  سی اے ایم  پی اے  فنڈز  کا استعمال کیا گیا

Posted On: 13 MAR 2023 4:12PM by PIB Delhi

ماحولیات ، جنگلات  اور آب وہوا میں تبدیلی کے وزیر مملکت  جناب اشونی کمار چوبے نے آج لوک سبھا میں  ایک سوال کے تحریری  جواب میں بتایا کہ 20-2019 سے 22-2021  تک  گزشتہ تین سال کے دوران مختلف ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے لئے اسٹیٹ کمپنسیٹری  اے فاراسٹیشن فنڈ  مینجمنٹ اینڈ  پلاننگ اتھارٹی فنڈ  (اسٹیٹ  سی اے ایم  پی اے فنڈ) کی  حصہ داری کی منتقلی کی تفصیلات کے بارے میں جانکاری دی ۔ تفصیلات ضمیمہ ایک میں  پیش  کی گئی ہیں۔

سی اے ایم  پی اے فنڈ  ز  کومٹی اور پانی کے تحفظ کے اقدامات ، جنگلا ت کے تحفظ ، جنگلات میں  آگ  پرکنٹرول  ، جنگلی حیات  کی  ہیبی ٹیٹ کو بہتر  بنانے  ، حیاتیاتی تنوع کو مالامال کرنے ،قدرتی بحالی کے عمل کے ذریعہ جنگلوں کے معیا ر  کو بہتر بنانے ،درخت  اگانے  کے معاوضے کو بڑھاکر جنگلات کی زمین اورایکو  نظام خدمات  کے نقصان کی بھرپائی کے لئے استعمال کیا گیا ہے۔درخت اگانے کے معاوضے  کے فنڈسی اے ایف قانون  2016  اور ضابطے  2018 سی اے  ایم  پی اے فنڈ کے استعمال کے لئے مناسب رہنما خطوط  اور سرگرمیاں فراہم کرتا ہے۔سی اے ایم  پی اے  مقامی  لحاظ سے پودوں کی موزوں قسموں  کی معیاری شجر کاری میں کئی گنا اضافہ کرنے میں نرسریوں کی  تشکیل میں معاونت بھی کرتا ہے۔سی اے ایم  پی  اے کی سرگرمیوں کی نگرانی اورارتقاء  سی اے ایف قانون   2016  میں فراہم کی گئی ہے۔ریاستوں  اور مرکز کے زیر انتظام علاقوںمیں سی اے ایم  پی کی سرگرمیوں کی نگرانی   اندرونی اور  تیسرے  فریق  کے مانیٹرنگ اور ای  - گرین واچ  ویب  پورٹل کے ذریعہ انجام دی جاتی ہے۔

ریاست اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں سے کہا گیا ہے ک وہ سی اے ایف قانون  2016  کی شقوں  اور ضابطوں  کے مطابق ریاستی سی اے ایم پی  اے ذریعہ تیار کردہ  آپریشن  کا سالانہ منصوبے  (اے پی او) پیش  کریں ۔ نیشنل اتھارٹی کے ذریعہ منظور کئے گئے ریاست کے اعتبار سے  اے پی او ز کی تفصیلات   ضمیمہ  2 میں منسلک ہیں۔

سی اے ایف ایکٹ  2016 کمپٹرولر  اور آڈیٹر جنرل آف انڈیا ( سی اینڈ اے جی )کے ذریعہ قومی اور ریاستی / مرکز کے زیر انتظام علاقوں کی سی اے ایم پی ایز اتھارٹی دونوں کے  کھاتوں کا آڈٹ فراہم کرتا ہے۔گزشتہ  تین مالی سالوں  کے  نیشنل اتھارٹی کے سالانہ کھاتوںکا  سی اینڈ اے جی  آڈٹ  انجام دیا گیا ہے۔یہ آڈٹ 20-2019  ،  21-2020 اور  22-2021 کا ہے۔ریاستوں کے سی اے ایم  پی اے کا آڈٹ  متعلقہ اکاؤنٹنٹ جنرل آفس کے ذریعہ  سی اینڈ اے جی کے ذریعہ کیا جاتا ہے۔ریاست  آندھرا  پردیش کے لئے قومی اتھارٹی کے ذریعہ  سی اے ایم  پی اے فنڈ منتقل کیا گیا جو حسب ذیل ہے:

 

ضمیمہ-1

-

State/UT

Year

Fund Allocated (Rs. in crore)

Andhra Pradesh

2019-20

1,734.81

2021-22

114.05

The share of State CAMPA is transferred to Public Accounts of respective States and Union Territories from time to time after reconciliation of receipts of compensatory levies.

 

ANNEXURE-I

 

Sr. No.

State/UT

Funds transferred to State/UT CAMPAAuthorities (Rs.in crore)

2019-20

2020-21

2021-22

  1.  

Andaman & Nicobar Islands

NIL

16.41

NIL

  1.  

Andhra Pradesh

1,734.81

NIL

114.05

  1.  

Arunachal Pradesh

1,588.72

NIL

612.95

  1.  

Assam

560.81

NIL

NIL

  1.  

Bihar

522.95

NIL

43.64

  1.  

Chandigarh

11.38

NIL

NIL

  1.  

Chhattisgarh

5,791.70

NIL

207.50

  1.  

Dadara& Nagar Haveli

NIL

NIL

22.87

  1.  

Delhi

NIL

NIL

138.17

  1.  

Goa

238.16

NIL

NIL

  1.  

Gujarat

1,484.60

NIL

NIL

  1.  

Haryana

1,282.65

NIL

NIL

  1.  

Himachal Pradesh

1,660.72

NIL

NIL

  1.  

Jammu &Kashmir

408.35

356.20

NIL

  1.  

Jharkhand

4,158.02

NIL

NIL

  1.  

Karnataka

1,350.37

NIL

NIL

  1.  

Kerala

81.59

NIL

NIL

  1.  

Ladakh

NIL

249.27

NIL

  1.  

Madhya Pradesh

5,196.69

NIL

990.83

  1.  

Maharashtra

3,844.24

NIL

285.22

  1.  

Manipur

309.76

NIL

36.44

  1.  

Meghalaya

163.31

NIL

NIL

  1.  

Mizoram

212.98

NIL

NIL

  1.  

Nagaland

NIL

NIL

NIL

  1.  

Orissa

5,933.98

NIL

347.27

  1.  

Puducherry

NIL

NIL

NIL

  1.  

Punjab

1,040.84

NIL

NIL

  1.  

Rajasthan

1,748.26

NIL

NIL

  1.  

Sikkim

392.36

NIL

NIL

  1.  

Tamil Nadu

113.42

NIL

NIL

  1.  

Telangana

3,110.38

NIL

NIL

  1.  

Tripura

183.65

NIL

48.00

  1.  

Uttar Pradesh

1,819.63

NIL

NIL

  1.  

Uttarakhand

2,675.09

NIL

NIL

  1.  

West Bengal

236.48

NIL

NIL

 

TOTAL

47855.9

621.88

2846.94

 

ضمیمہ-2

CAMPA Funds

 

Sl. No.

Name of the State/UT

Annual Plan of Operation (APO) Approved

(Rs. in Crore)

2019-20

2020-21

2021-22

1

Andaman & Nicobar Islands

1.56

2.13

0.00

2

Andhra Pradesh

322.97

330.82

325.00

3

Arunachal Pradesh

0.00

155.46

240.85

4

Assam

NIL

88.34

79.12

5

Bihar

140.18

239.47

106.84

6

Chandigarh

1.87

2.26

3.60

7

Chhattisgarh

848.51

1347.02

1500.75

9

Delhi

0.00

19.55

16.15

10

Goa

17.95

32.68

21.55

11

Gujarat

1484.60

169.85

169.00

12

Haryana

100.97

203.95

317.59

13

Himachal Pradesh

145.82

158.38

138.10

14

Jammu & Kashmir

126.74

184.33

257.16

15

Jharkhand

399.29

376.55

437.60

16

Karnataka

113.69

216.70

321.06

18

Kerala

0.00

15.78

25.13

19

Madhya Pradesh

453.50

500.00

616.88

20

Maharashtra

499.38

599.32

688.27

21

Manipur

30.97

27.79

25.09

22

Meghalaya

0.00

33.97

36.40

23

Mizoram

19.23

32.66

18.08

24

Nagaland

0.00

0.00

0.00

25

Odisha

556.34

773.39

901.03

26

Punjab

102.15

177.85

218.06

27

Rajasthan

265.39

280.70

286.70

28

Sikkim

44.96

47.72

70.00

29

Tamil Nadu

0.56

66.62

0.00

30

Telangana

501.26

483.78

752.71

31

Tripura

20.84

21.51

35.24

32

Uttar Pradesh

285.68

442.01

586.90

33

Uttarakhand

213.11

362.90

726.88

34

West Bengal

74.07

74.00

58.30

 

Total

6771.59

7467.49

8980.04

1

 

*************

 

ش ح۔ح ا ۔ رم

U-2662



(Release ID: 1906696) Visitor Counter : 106


Read this release in: English