الیکٹرانکس اور اطلاعات تکنالوجی کی وزارت
azadi ka amrit mahotsav g20-india-2023

ہندوستانی سیمی کنڈکٹر مشن

Posted On: 03 FEB 2023 4:08PM by PIB Delhi

انڈیا سیمی کنڈکٹر مشن (آئی ایس ایم) کو ڈیجیٹل انڈیا کارپوریشن کے اندر ایک آزاد کاروباری ڈویژن کے طور پر قائم کیا گیا ہے جس میں سیمی کنڈکٹرز اور ڈسپلے مینوفیکچرنگ کی سہولیات اور سیمی کنڈکٹر ڈیزائن ماحولیاتی نظام کی ترقی کے لیے ہندوستان کی طویل مدتی حکمت عملیوں کو تشکیل دینے اور چلانے کے لیے انتظامی اور مالی خود مختاری  کا اختیار ہے۔ سیمی کنڈکٹر اور ڈسپلے انڈسٹری میں عالمی ماہرین کی قیادت میں آئی ایس ایم ہندوستان میں سیمی کنڈکٹر اور مینوفیکچرنگ ماحولیاتی نظام کی ترقی کے پروگرام کے موثر، مربوط اور ہموار نفاذ کے لیے نوڈل ایجنسی کے طور پر کام کر رہی ہے۔

آئی ایس ایم کے مقاصد درج ذیل ہیں:

  1. حکومتی وزارتوں/محکموں/ایجنسیوں، صنعت اور تعلیمی اداروں کے ساتھ مشاورت سے ملک میں پائیدار سیمی کنڈکٹرز اور ڈسپلے مینوفیکچرنگ کی سہولیات اور سیمی کنڈکٹر ڈیزائن ایکو سسٹم کی ترقی کے لیے ایک جامع طویل مدتی حکمت عملی تیار کریں۔
  2. محفوظ مائیکرو الیکٹرانکس کو اپنانے اور قابل اعتماد سیمی کنڈکٹر سپلائی چین تیار کرنے میں سہولت فراہم کریں، بشمول خام مال، خاص کیمیکل، گیسیں، اور مینوفیکچرنگ کا سامان۔
  • iii. الیکٹرانک ڈیزائن آٹومیشن (ای ڈی اے) ٹولز، فاؤنڈری سروسز اور ابتدائی مرحلے کے اسٹارٹ اپس کے لیے دیگر مناسب میکانزم کی شکل میں مطلوبہ تعاون فراہم کرکے ہندوستانی سیمی کنڈکٹر ڈیزائن انڈسٹری کی کئی گنا ترقی کو قابل بنائیں۔
  • iv. مقامی دانشورانہ املاک (آئی پی) کی نسل کو فروغ دینا اور سہولت فراہم کرنا۔
  1. ٹیکنالوجیز کی منتقلی( ٹی او ٹی) کے لئے اہل، فعال اور حوصلہ افزائی کریں۔
  • vi. ہندوستانی سیمی کنڈکٹر اور ڈسپلے انڈسٹری میں پیمانے کی معیشتوں کو بروئے کار لانے کے لیے مناسب میکانزم قائم کریں۔

آئی ایس ایم سیمی کان انڈیا پروگرام کے تحت منظور شدہ اسکیموں کے لیے نوڈل ایجنسی کے طور پر کام کر رہی ہے۔ درخواستیں آئی ایس ایم کو موصول ہوئی ہیں اور آئی ایس ایم کے ذریعہ ان کی جانچ کی جارہی ہے۔ آئی ایس ایم ہندوستان میں سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لیے سیمی کنڈکٹرز اور ڈسپلے ایکو سسٹم کے مختلف اسٹیک ہولڈرز کے ساتھ بھی مشغول عمل ہے۔ آئی ایس ایم کو اب تک آئی این آر  13 کروڑ جاری کیے جا چکے ہیں۔

سیمی کنڈکٹرز اور ڈسپلے انڈسٹری میں گرانٹس، عالمی تعاون اور اکیڈمیاں/تحقیقاتی اداروں، صنعت میں، اور سینٹرز آف ایکسیلنس(سی او ای ایس) کے قیام کے ذریعے ارتقائی اور انقلابی ٹیکنالوجیز سمیت جدید ترین تحقیق کو فعال کریں۔

قومی اور بین الاقوامی ایجنسیوں، صنعتوں اور اداروں کے ساتھ تعاون اور شراکتی پروگراموں کو فعال کریں تاکہ باہمی تعاون پر مبنی تحقیق، تجارت سازی اور ہنر کی ترقی کو متحرک کریں۔

حکومت مجموعی طور پر سیمی کنڈکٹر ماحولیاتی نظام کی تعمیر کے اپنے اہم مقصد پر بہت زیادہ توجہ مرکوز کر رہی ہے اور اس بات کو یقینی بناتی ہے کہ یہ بدلے میں ہندوستان کے تیزی سے پھیلتے ہوئے الیکٹرانکس مینوفیکچرنگ اور اختراعی ماحولیاتی نظام کو متحرک کرتا ہے۔ حکومت نے ملک میں سیمی کنڈکٹر اور ڈسپلے مینوفیکچرنگ ماحولیاتی نظام کی ترقی کے لیے 76,000 کروڑ روپے کے مجموعی اخراجات کے ساتھ سیمی کان انڈیا پروگرام کو منظوری دی ہے۔ پروگرام میں مزید ترمیم کی گئی ہے ان ممالک کی طرف سے پیش کردہ جارحانہ ترغیبات کے پیش نظر جن کے پاس پہلے سے قائم سیمی کنڈکٹر ایکو سسٹم ہے اور محدود تعداد میں کمپنیاں جو جدید نوڈ ٹیکنالوجیز کی مالک ہیں۔ ترمیم شدہ پروگرام کا مقصد سیمی کنڈکٹرز، ڈسپلے مینوفیکچرنگ اور ڈیزائن ماحولیاتی نظام میں سرمایہ کاری کرنے والی کمپنیوں کو مالی مدد فراہم کرنا ہے۔

مذکورہ پروگرام کے تحت درج ذیل چار اسکیمیں متعارف کرائی گئی ہیں:

الیکٹرانکس مینوفیکچرنگ ایکو سسٹم کو مضبوط بنانے اور ایک قابل اعتماد ویلیو چین قائم کرنے میں مدد کے لیے ملک میں سیمی کنڈکٹر ویفر فیبریکیشن کی سہولیات کے قیام کے لیے بڑی سرمایہ کاری کو راغب کرنے کے لیے ہندوستان میں سیمی کنڈکٹر فیبس کے قیام کے لیے ترمیم شدہ اسکیم۔ یہ اسکیم ہندوستان میں سیلیکون سی ایم او ایس پر مبنی سیمی کنڈکٹر فیب کے قیام کے لیے پاری پاسو کی بنیاد پر پروجیکٹ کی لاگت کے 50فیصد کی مالی مدد فراہم کرتی ہے۔

ہندوستان میں کمپاؤنڈ سیمی کنڈکٹرز / سلیکان فوٹوونکس / سینسرز فیب / ڈسکریٹ سیمی کنڈکٹرز فیب اور سیمی کنڈکٹر اسمبلی، ٹیسٹنگ، مارکنگ اور پیکجنگ (اے ٹی ایم پی) / او ایس اے ٹی کی سہولیات کے قیام کے لیے ترمیم شدہ اسکیم' سرمایہ کاری کے اخراجات کے 50فیصد کی مالی امداد میں توسیع کرے گی۔ ہندوستان میں کمپاؤنڈ سیمی کنڈکٹرز / سیلیکان فوٹوونکس ./ سینسر (بشمول ایم ای ایم ایس) فیب/ڈسکریٹ سیمی کنڈکٹر فیب اور سیمی کنڈکٹر اے ٹی ایم پی/او ایس اے ٹی سہولیات کے قیام کے لیے پری -پاسو کی بنیاد۔

’سیمیکون انڈیا فیوچر ڈیزائن: ڈیزائن لنکڈ انسینٹیو (ڈی ایل آئی) اسکیم' مالی ترغیبات، ترقی کے مختلف مراحل میں بنیادی ڈھانچے کو ڈیزائن کرنے اور انٹیگریٹڈ سرکٹس(آئی سی ایس) ، چپ سیٹس، سسٹم آن چپس (ایس او سی ایس) ، سسٹمز اور آئی پی کے لیے سیمی کنڈکٹر ڈیزائن کی تعیناتی کر اور سیمی کنڈکٹر سے منسلک ڈیزائن۔ کی پیشکش کرتی ہے۔ اسکیم اہل اخراجات کے 50فیصد تک کا "پروڈکٹ ڈیزائن لنکڈ انسینٹیو" فراہم کرتی ہے جس کی حد فی درخواست 15 کروڑروپے ہے اور "تعیناتی لنکڈ مراعات" 5 سال کے دوران خالص فروخت کے ٹرن اوور کے 6فیصد سے 4فیصد تک فراہم کرتی ہے۔ فی درخواست30 کروڑ  روپے کی حد۔

حکومت نے غیر ملکی سیمی کنڈکٹر کمپنیوں سے رابطہ کیا ہے اور انہیں ملک میں سیمی کنڈکٹر اور ڈسپلے مینوفیکچرنگ سہولیات قائم کرنے کی دعوت دی ہے۔ اس کے نتیجے میں، انڈیا سیمی کنڈکٹر مشن، پروگرام کے نفاذ کے لیے ایک نوڈل ایجنسی سیٹ اپ کو تمام اسکیموں کے تحت تجاویز موصول ہوئی ہیں جو فی الحال زیر غور ہیں۔

یہ اطلاع الیکٹرانکس اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے وزیر مملکت جناب راجیو چندر شیکھر نے آج راجیہ سبھا میں ایک سوال کے تحریری جواب میں دی۔

****

ش ح۔   ش ت۔ج

Uno-1182



(Release ID: 1896212) Visitor Counter : 87


Read this release in: English