وزارت خزانہ
azadi ka amrit mahotsav

خوردنی تیلوں، پیتل کی کترن، چھالیہ، سونا اور چاندی کے ٹیرف ویلیو کے تعین سے متعلق ٹیرف نوٹیفکیشن نمبر 41/2022- کسٹمز (این ٹی)

Posted On: 13 MAY 2022 8:47PM by PIB Delhi

کسٹمز قانون 1962 (1962 کی 52) کی دفعہ 14 کی ذیلی دفعہ (2) کے ذریعے حاصل شدہ اختیارات کا استعمال کرتے ہوئے بالواسطہ ٹیکسوں اور کسٹمز کے مرکزی بورڈ نے ضروری خیال کرتے ہوئے وزارت خزانہ (محکمہ ریوینیو) میں بھارت سرکار کے نوٹیفکیشن نمبر 36/2001- کسٹمز (این ٹی)، مورخہ 3 اگست 2001، جسے بھارت کے گزٹ میں غیرمعمولی، ایس او 748 (ای) کے نام سے پارٹ-II، سیکشن-3 سب – سیکشن (ii) میں مورخہ 3 اگست 2001 کو شائع کیا گیا ہے، میں درجہ ذیل ترمیمات کی ہیں:

مذکورہ نوٹیفکیشن میں جدول-1، جدول-2، اور جدول-3 کو درج ذیل جدول سے تبدیل کیا جائے گا:

’’جدول- 1

نمبر شمار

باب / سرخی / ذیلی سرخی / ٹیرف آئیٹم

اشیاء کی تفصیل

ٹیرف ویلیو

(فی میٹرک ٹن امریکی ڈالر میں)

(1)

(2)

(3)

(4)

1

1511 10 00

خام پام آئل

1703

2

1511 90 10

آر بی ڈی پام آئل

1765

3

1511 90 90

دیگر – پام آئل

1734

4

1511 10 00

خام پامولین

1768

5

1511 90 20

آر بی ڈی پامولین

1771

6

1511 90 90

دیگر – پامولین

1770

7

1507 10 00

خام سویابین آئل

1827

8

7404 00 22

پیتل کا کترن (سبھی گریڈ)

5738

 

’’جدول-2

نمبر شمار

باب / سرخی / ذیلی سرخی / ٹیرف آئیٹم

اشیاء کی تفصیل

ٹیرف ویلیو

(امریکی ڈالر میں)

(1)

(2)

(3)

(4)

 

1.

71 or 98

کسی بھی شکل میں سونا، جس کے تناظر میں نوٹیفکیشن نمبر 50/2017- کسٹمز مورخہ 30.06.2017 کے نمبرشمار 356 میں درج اندراجات کا فائدہ اٹھایا  جاتا ہے

592  فی  10 گرام

 

2.

71 or 98

کسی بھی شکل میں چاندی، جس کے تناظر میں نوٹیفکیشن نمبر 50/2017- کسٹمز مورخہ 30.06.2017 کے نمبرشمار 357 میں درج اندراجات کا فائدہ اٹھایا  جاتا ہے

687  فی کلوگرام

 

 

 

 

 

3.

71

(i) تمغوں اور چاندی کے سکوں کو چھوڑکر کسی بھی شکل میں چاندی، جس میں چاندی کی مقدار 99.9 فیصد سے کم نہ ہو، یا چاندی کی ایسی سیمی – مینوفیکچرڈ شکل جو ذیلی عنوان 710692 کے تحت آتے ہوں۔

(ii) تمغے و چاندی کے سکے، جن میں چاندی کی مقدار 99.9 فیصد سے کم نہ ہو یا چاندی کی ایسی سیمی – مینوفیکچرڈ شکل جو 710692 کے تحت آتے ہوں، ڈاک یا کوریئر یا مسافر سامان کے ذریعے اس طرح کی اشیاء کی درآمدات کے علاوہ ۔

وضاحت – اس اندراج کے مقصد کے لئے کسی بھی شکل میں چاندی میں غیر ملکی کرنسی والے سکے، چاندی کے بنے زیورات یا چاندی سے تیار اشیاء شامل نہیں ہوں گی۔

687 فی کلوگرام

 

 

 

4.

71

(i) تولہ بار کو چھوڑ کر سونے کی چھڑ (گولڈ بار)، جن میں مینوفیکچرر یا ریفائنر کا درج کردہ نمبر شمار اور میٹرک یونٹ میں ظاہر کیا گیا وزن درج ہو،

(ii) سونے کے سکے، جن میں سونے کی مقدار 99.5 فیصد سے کم نہ ہو اور گولڈ فائنڈنگس، ڈاک یا کوریئر یا مسافر سامان کے ذریعے اس طرح کی اشیاء کی درآمدات کے علاوہ۔

وضاحت – اس اندراج کے مقصد کے لئے ’گولڈ فائنڈنگس‘ سے مراد ایک ایسا چھوٹا آلہ جیسے ہک، بکلس، کلیمپ، پن، کیچ، اسکریو بیک سے ہے، جس کا استعمال پورے زیور یا اس کے ایک حصے کو آپس میں جوڑے رکھنے کے لئے کیا جاتا ہے۔

592  فی  10 گرام

 

جدول - 3

نمبر شمار

باب / سرخی / ذیلی سرخی / ٹیرف آئیٹم

اشیاء کی تفصیل

ٹیرف ویلیو

(فی میٹرک ٹن امریکی ڈالر میں)

(1)

(2)

(3)

(4)

1

080280

چھلیا

5477(کوئی تبدیلی نہیں )‘‘

 

 

یہ نوٹیفکیشن 14 مئی 2022 سے نافذ ہوگا۔

نوٹ:- اصل نوٹیفکیشن بھارت کے گزٹ، غیر معمولی، پارٹ-II، سیکشن- 3، سب- سیکشن (ii) میں نوٹیفکیشن نمبر 36/2001 – کسٹمز (این ٹی)، مورخہ 3 اگست 2001، نمبر شمار ایس او 748 (ای)، مورخہ 3 اگست 2001 کے ذریعے شائع کیا گیا تھا اور آخری ترمیم نوٹیفکیشن نمبر 37/2022 – کسٹمز (این ٹی)، مورخہ 29  اپریل 2022 کے ذریعے دی گئی تھی اور جسے بھارت کے گزٹ میں غیرمعمولی، پارٹ – II، سیکشن – 3، سب- سیکشن (ii)، بذریعہ نمبر ایس او2030 (ای)، مورخہ 29 اپریل  2022 کو شائع کیا گیا تھا۔

 

******

 

ش ح۔س ب۔ ف ر

U-NO. 5644



(Release ID: 1827546) Visitor Counter : 21


Read this release in: English , Urdu , Hindi