سائنس اور ٹیکنالوجی کی وزارت

ہند-امریکہ آرٹیفیشل انٹلیجنس (یو ایس آئی اے آئی) پہل لانچ

ماہرین نے  دونوں ملکوں کے مسائل کے حل کے لئے ہندوستان و امریکہ کے درمیان  سائنس و ٹیکنالوجی روابط کو  بڑھائے جانے کی ضرورت پر  زور دیا

Posted On: 18 MAR 2021 5:27PM by PIB Delhi

نئی دہلی،18؍مار چ  :  سائنس و  ٹیکنالوجی محکمہ کے  سکریٹری  پروفیسر آشوتوش شرما نے  ہند -  امریکہ سائنس  و ٹیکنالوجی فورم کے  ہند – امریکہ آرٹیفیشل انٹلیجنس ( ای ایس آئی اے آئی) پہل کے لانچ کے دوران  دونوں ملکوں کے مسائل کے حل کے لئے اور  ترقی میں  رکاوٹوں کو  دور کرنے کے لئے ہندوستان اور امریکہ کے درمیان سائنس و ٹیکنالوجی  کے  روابط کو بڑھانے کی  ضرورت پر  زور دیا۔

17مارچ 2021  کو  ہند – امریکہ  سائنس  و ٹیکنالوجی فورم  (آئی یو  ایس ایس  ٹی ایف)  کے ذریعہ  منعقد لانچ پروگرام  کے  افتتاح کے موقع پر  پروفیسر شرما نے کہا کہ سائنس  و ٹیکنالوجی کے شعبے میں  ہند  امریکہ  تعلقات  کافی پرانے ہیں، جس کے نتیجے میں  دونوں ملکوں کو  بہت فائدہ ہوا ہے۔ ہمیں  ان  روابط کو  دوسرے شعبوں میں  آگے بڑھانے کی ضرورت ہے، اور  آرٹیفیشل انٹلیجنس (اے آئی ) مستقبل میں  اہم  رول ادا کرسکتی ہے۔ ہم نے  ہندوستان میں  ترقی کی  رکاوٹوں کی  شناخت کرلی ہے ، جو  امریکہ کے لئے بھی  سود مند ثابت ہوسکتی ہیں۔

آئی یو ایس ایس ٹی ایف  ایک  دو ملکی  تنظیم  ہے، جس کا فنڈ  حکومت ہند کے سائنس  وٹیکنالوجی کے محکمہ (ڈی ایس ٹی) اور  امریکہ کے  اسٹیٹ  ڈپارٹمنٹ کے ذریعہ کیا جاتا ہے۔ اس پہل کے لانچ کے موقع پر  آن لائن موجود  پروفیسر شرما نے کہا کہ  آرٹیفشل انٹلیجنس نے  تحقیق  و تکنیک کو  کثیر موضوعاتی  سائبر فیزیکل نظم  کے  قومی مشن کے  تحت  قائم کئے گئے  25  تکنیکی ہبوں ، جو   ٹرپل ہیلکس کے طور پر کام کر رہے ہیں، کے ذریعہ ملک میں  لاگو کیا جا رہا ہے، ساتھ ہی انہوں نے  ہندوستان کی  زمینی پالیسیوں کو  نرم بنانے کے لئے  حال کی پالیسیوں پر بھی  گفتگو کی۔

آئی یو ایس ایس ٹی ایف  کی  یو ایس آئی اے آئی  پہل  ، ان اہم شعبوں میں آرٹیفیشل انٹلیجنس کے تعاون پر مرکوز ہے، جو  دونوں ملکوں کی  اولیت میں شامل ہے۔ یو ایس  آئی اے آئی  مواقع  ،  چیلنجوں  اور سہ فریقی  آرٹیفیشل انٹلیجنس کی تحقیق و ترقی کے لئے رکاوٹ پر  غور وخوض کرنے  ، آرٹیفیشل انٹلیجنس اختراعات کو  اہل بنانے ،  آرٹیفیشل انٹلیجنس ورک  فورس  کو فروغ دینے کے لئے  خیالات کو  ساجھا کرنے میں مدد کرنے اور شراکت داری کو  بہتر بنانے کے لئے  عمل اور  تکنیک کی  سفارش کے لئے  ایک پلیٹ فارم کے طور پر کام کرے گا۔

بحری  و  بین الاقوامی ماحولیات  اور  سائنسی امور کے  امریکی بیورو،  امریکی  اسٹیٹ  ڈپارٹمنٹ کے  ایکٹنگ  ڈپٹی اسسٹنٹ  سکریٹری جوناتھن مارگولس نے  اس موقع پر  کہا کہ ہندوستان اور امریکہ کے درمیان تعاون  کھلے پن ، شفافیت  اور  باہمی نوعیت کی   مشترکہ  اقدار پر مبنی ہے اور اختراعات کو بڑھاوا دیتا ہے، جس سے  دونوں ملکوں کو  فائدہ ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ  امریکہ – بھارت کی  حکمت عملی والی شراکت داری  ان اہم شعبوں میں  آرٹیفیشل انٹلیجنس پر  توجہ دے کر  مضبوط کی جاسکتی ہے، جو دونوں ملکوں کی  اولیت میں شامل ہیں۔

نیشنل سائنس فاؤنڈیشن ( این ایس ایف) کے ڈائریکٹر  ڈاکٹر  سیتو رمن  پنچ  پنچ ناتھن نے کہا کہ  دنیا کی دو بڑی  جمہوریتیں   باہمی تال میل اور تعاون  کے ذریعہ  حیرت انگیز  کرشمے کرسکتی ہیں اور اس طرح کی پہل کو  شروع کرنے کے لئے یہ صحیح وقت ہے۔ ہم  دونوں معیشتوں کو  بڑھاوا دینے ،  روز گار پیدا کرنے اور  خوش حالی لانے کے لئے اعلیٰ اثرات والے  تعاون  اور تحقیق کی  امید کر رہے ہیں۔

ایکسیلر وینچرس کے چیئرمین  کرس گوپال کرشنن  نے کہا کہ دنیا کی  20  فیصد آبادی  جو کہ ہندوستان میں ہے، اگر  تحقیق  کا حصہ نہیں ہے تو یہ تحقیق ادھوری ہے۔ ہندوستان میں  تنوع ہے اور  تحقیق کے لئے تنوع بہت اہم ہے۔ ہندوستان  دونوں ملکوں کی بنیاد پر  ڈاٹا  اور  بینکنگ میں مضبوط ہے ۔ یہ عالمی تعاون  دونوں کی  معاونت کرتا ہے۔

آئی یو ایس ایس ٹی ایف کی  ایگزیکٹیو ڈائریکٹر  ڈاکٹر نندنی کنن نے کہا کہ  آرٹیفیشل انٹلیجنس  پہل ہندوستان اور امریکہ کے درمیان  سائنس  وٹیکنالوجی کے شعبے میں  تعاون کو  بڑھاوا دینے میں  آئی یو ایس ایس ٹی ایف کے اہم  رول کی  ایک اور مثال ہے۔

یہ  امریکی  - ہندوستانی پہل  تمام اہم  اسٹیک ہولڈرس گروپوں کو  اپنے تجربات  ساجھا کرنے، باہمی سرگرمیوں سے  فائدہ حاصل کرنے والے  نئے تحقیقی اور  ترقیاتی شعبوں و  مواقع  کی شناخت کرنے ، آرٹیفیشل انٹلیجنس کے  ابھرتے پس منظر پر  بحث ومباحثہ کرنے اور  آرٹیفیشل انٹلیجنس ورک فورس  کی ترقی میں چیلنجوں سے  نمٹنے کے  مواقع  مہیا کرے گی۔

 الوالعزم فلیک شپ پہل یو ایس آئی اے  آئی  ہندوستان اورامریکہ کے اہم اسٹیک ہولڈرس کو  ساتھ لانے کے لئے آئی یو ایس ایس ٹی ایف کی  غیر معمولی صلاحیت کا فائدہ اٹھا تا ہے تاکہ سائنس  ،تکنیک اور سماج کے انٹر فیس پر  چیلنجوں اور  مواقع کو  نمٹانے  کے لئے تال میل بنایا جاسکے۔  اگلے سال  آئی یو ایس ایس ٹی ایف  مختلف  اسٹیک ہولڈرس برادریوں سے  معلومات اکٹھا کرنے کے لئے گول میز میٹنگوں  کا ایک سلسلہ اور  ورک شاپ کا  انعقاد کرے گا۔ ساتھ ہی  وہائٹ پیپر  تیار کرے گا، جو تکنیک ، تحقیق ، بنیادی ڈھانچے اور ورک فورس  مواقع  و چیلنجوں اور  صحت شعبے میں تحقیق و ترقی کے لئے ڈومین -  اسپیسفک مواقع  ، اسمارٹ شہروں، مواد ، زراعت، توانائی  اور  مینوفیکچرنگ کی  شناخت کریں گے۔


https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image0018ONP.jpg https://static.pib.gov.in/WriteReadData/userfiles/image/image002SRF4.jpg

 

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

 

(ش ح-ج ق- ق ر)

U-2766



(Release ID: 1706023) Visitor Counter : 4


Read this release in: English , Hindi